Skip to main content

Due to a planned power outage, our services will be reduced today (June 15) starting at 8:30am PDT until the work is complete. We apologize for the inconvenience.

Full text of "Tauhfa Muhammadiyah ( Sallallhu Alaihi Waslam) By Allama Abu Asim Ghulam Hussain Matureedi تحفہ محمدیہ ﷺ درودوسلام کے فضائل و فوائد"

See other formats


کر رج 7- 
انا انت متا صَلوا عَليْ موا یما 
ا ایمان وا مچھی ان پردرونجچواورخوب سلا م جو( سور ہ7۱ اب ۵۷) 


تحفهەمحمدیەۃ 
40ف نے ص2 
(درودوسلام کے فضائل وفواد) 


تالیف 


اب ھا خلا حم مین ماتر ری 


نار حاگینھ لٹ ںکری)صاحب 
٣٢۷۲۳۱٢۶6‏ ×× 
لا ٣١۱٥١١٥, ١٥٥اہ۱٢ہ 889 7×۱۰, ٢[۷٥3٥١.,‏ ٥۱٥3ا1ہ‏ ۹ 120-130 
۲۳۱۱٢ ١٥۷٢٣٣: 004476064‏ 


ھاہتق ئن ناش رتفویط ہیں 
ا تاب فائل درودوسلام(خمذئے) 
لیف ایام فلا مم مین مات ری 
اجام الا تاذالقاری فاام سی 
کیوزنگ علیہ رسعد یہ ہش حبدالڈشمحبدالظا ہنی 
من اشاعت خبانمعظم وس اح :اپ یل ۸ایا 


خحسونی تھاون : حضرت علامہقارکی ارخن تم ووصاحب(امام ونطیب مد ین سحیرہکون لنکا شائرء لو کے )کی 
دساطت پجح یک اورحتزم ایاج بین سک رب صاحب( نان لنکا شا ئرء ہو کے ) کےنص نی تواون سے 
تاب پرنٹ ہو لی ءال تی علا مارگ صاحب اور جنا ھنم حا گی صاح بکوایمالن دجالن داولاد 
ساللاسائيھزے سالقلءوقبا ب گار ہی کرںماے۔ 
مولف معاولن او ناش کے لئ صدرقہ جار یہ بنائے ۔ او رنہ یکم صلی مکی شفاعحت لیب فرماۓ- 
ٹین ہیا دای الک ریم الا ین سی ایی رولش و یآلہواصھا ہراجا صین- 


سضلۓے کے نے 
اداارہ رضاۓے صش فی چوک دارالسلا مکوج ان الہ پاکستان 
:نشی صٹفی منزگ ء۸۵ بی بلا کمشیرکالونی لم پاکتان 
ککتییمچرد رجا مت النو رشن اندرااگن ما تچشتر کو کے 
تو ید انان اکیڈی دائیت یکین ٹم چسٹرروڈنلسن :یھ کے 
مک اصطفی ۸ کل سٹریٹ پرائزفیلڈانا شائزۂ بے 


4 


ہہرسہت 


تارق تس رتا ہے فطل 
7ناآناز 
باب او لآمتعلايک ھت تا 
آیتصلااغان ول 
آیت صلاميد میں شان “ش٣‏ کامیان ے 
آیتصلاتید شی دوخ ری اوردی میں 
یت صلاحیہ کے تلق چندزیات 
درودشریف کے نین فاص ہیں 
ان مرف مشبہ پافع لکااستعال 
ا جلاات2(ائل کی جامصت 
مايکئ اس غرم 
فرشتوں ‏ ےکام 
لوق کیامی میں اخلاف ے 
صلوۃ کے معا ی 

اٹک د میں ہیں 
صلوۃ غاص 
صاوڑمام, 


۲۳ 


۲٤ے‎ 


۳٣۴ 


۲۰۳ 


۴۰۶۳ 


۳۳٣ 


۳" 


صل تیم ری 

آلگین کسی 

صلوق وسلام دونوں کے پڑ اعد ماگیا 

امت مس کودرودوسلام پٹ ح کا اھر ہی ںکیاحدت 
ملا مکا س 

رکف لدزب تر 2کت 
پقھروں اورد رت کا آپ سی مکوسلا کر نا 


٣‏ سیت 


تی سے کرت ےا 

مجموعە‌دوردشریف 

ورورورما اضافیئی لکنا جاہے 

درودوسلام ک ےی نقول وما نو رسیقول کے پڑ سح ےکا جواز 

باب( وم درودپڑ ےغ کے ضا نل وفوادر 

ایک مت درودیڑ سن ک ےون شی رظن کا نزول ہوا ے 

ایک مت درود رت ک ےشن ری 

ایک مت درود رت 2 چارناتڑدے 

دروپر ۓےوالا و مت کے دن رسول ال صلأب ینام کک ر یب ہوا 
درودروسلام دونوں کے پڑ سے کی فضیلت 


۲۰۵ 


۲۸ 


.غ0 


"۲ 


۳ 


9ۃ 


ے۲ 


09 


ے۵ 


۹ھ 


۳ھ 


٦ّ٭‎ 


٭ّ 


٦ 


٦ 


1 


7 


۲ 


وروش ریف مخفرت مشش اورقمام دکھوں اورٹموں ےنا کا ز لورے ٦٦‏ 


کوشا میں مر درودجیے ولا تن شفاعت ہے 
درووشرلی کی ہریت سےگناہ ماد ۓ جاتے ہیں 
رتچ عبرالوھا شی علی ال رح ارشاد 

الیک مرج ردرودپڑ ھن کے ستزفو ند 

ححضرت بغ ھی رص اکا وا تع 

حد بیٹ ( می ری قش رن فکوع یرنہ بنا 2 کا مطلب 

بارگا درسالت ]پالم سے سلا کا جو ابد با جا تا سے 
فرش بارگا درسالت مشش ددودوسلا شریف ماہچیاتے ہیں 
ٹرش نکی ماعت 

مفاہرداۃمال امت 

رعول ال ساٹ شا کی حیات دسماععت 

ودروروطا ٠‏ کے وا 

درووشریف مخ رکا مل کا فا ندودیتاے 

با ب٣‏ درودپڑ ےکا رہ( اوراس سے مسمون الفاط وصیخ ) 
ورووش رر لک .َ توں کاتحراد 

درودششریف پیٹ کال ببقادراس کے چنرسییے 

لام پڑ ےکا ظ ربق اوراس کے چن نے 


٦ 


٦ے‎ 


٦ے‎ 


1۸ 


ےے 


٭+ے 


اے 


۸ھ 


ےے 


۸ے 


۸۸ 


۸۹ 


۸۹ 


۸۹ 


۹۹9۹ 


اصحا ب مہ انم پردرودپڑعنا ۰. 
جو صلوۃ ٍ۰ 
کراوررح کودورکر نے یی دما لا 
کیا صلو ۃ فی سام کے پپڑ ہنا رو سے ۵ 
کیا آپ یلم کے لے دعارحمت ودعاء ِ تک نا جانتڑے ۴۳۸ 
اما بح پرنماز وں یل درودکیو ںیا پڑھاجاتا ۸ 
۱ نع بیت رسول ص فیا جا تک می او ریما ہیوت کے سنارے ہیں 7ت 
ہدیس فطا بکیامت ٣‏ 


طف ند ایا کا ا ستعا ل قریب بعیردوٹوں کے لے سے ۸ 

(نظرت ) ع پارڈ رابینمسسودرشی ارڈدع فک ا چنا دونفرد 2 

باب چہارم دروداورسلام کے پڑ صن کے متقا مات ۸ 
آ7ذان کے حدم ذو ںکاصلوتوسلام پڑھنا 

رین اف ل جو تے او رلک وت ررورصضلام پڑعنا ۲ 

کر بس داشل ہوۓ وت ورودوسلام پڑھنا ٢۱‏ 

صفاومردہ کے درمیان درود پڑھنا 2ص 

نے کے اورروڑ بے رروںدعنا ۴۴۳ 


آپ فی کے اعم با کفک نکرسا تع درود یڑ ھنا ۴۳ 
اع شرریف کےس ول وا مک کا آخا رکب ے ہوا م۴۴۳۴( 


20 تل میں می رےے جردرورصضلام ککۓم روان‌ 
کا مال میں درودوسلام کٹ کا اب 

مل ما و ں کا ہیں میں ما ا ت کے وقت درود پڑعنا 
گی ہیں درود پڑھنا 

متام او سنوی می درودشریف پڑ ےکا اب 
مو اج ‌شریف کے پا درودسلام پڑعنا 

ری مود ہیازیارت کےموج پردرودپڑعنا 
چنردداوقات دمقا مات می درود پڑھناھروہ ہیں 
گیادورا ان حلاوتٹٹ رآن یردروش رر لف پڑعناجا ڑے 
ابئم دروو ہے مت 

من اش اج فررکی 1: 

درودش ریف شہ پڑ ۓ والا جنت راس تبھول جا ۓگا 
دروو کے لخب ردما تم ول کیں ہوٹی 

درودشریف نہ پڑ نے والاػیل ے 

درودنہ پڑ ھنا پش اسان ف را مو یکی علامت ے 

ا ب شش درودشریف میس پڑ سھ جانے وا نے الا کیتش رجح 
لور کیفضیلت 


صَل ٢م‏ 


2 


۵۵ 


۵ 


اگل 


گنا 


٢ے‎ 


۲۸ 


گا 


کیک 


ام 


"۳ 


"۳ 


"۳ 


"۳ 


۳ھ 


اعم رسالت( )کی خو لی 

ل مر یز 

درووشریف میں لفظا سرن کا اضافہ 
وازواجہ آپ لی سادا 
ازواج م“ظہرات کے ا سا شرینہ 

ذریته آ پگ اولاد 

آل 1را شی علیاللام 

تی دی ےکی حکمت اوراس کے اقسام 
حخر تام م اب ریم 

برک تکامصعی 

الخ می 

ال اض 

گی تراما ورل پردرودپڑ عنادرست ے 
کیا علیہ السلا خی رانجیاء پر اولنا لکنا از ہے؟ 
درودوسلا مج دعاواستغفارسب کے لے جئڑ سے 
اغذعران 


ےُ۴ 


ے۴ 


٦ے‎ 


٦٢۸ 


"۳ 


"۳ 


۳َ 


۸7۸ 


ے۵ 


٥۸ 


۹۳ 


۹۳ 


۹۳ 


۹ 


ےےا 


ےےا 


تارف ضضرہ 
جحخرت موا ناو اص خاش ین مات ری مکل اددالعا لک ن نیف اطیف ے جوورود 
لام کے م وضو گی بمملہاححاث اورداال وبرائڑی نکا ےآ کےا تا بکوچھ 
ررے ‏ نھو باب می درودوسلام کےتمن پہاووں شی ن نیل سے جراخ 
رڈشنف رما ٹیں۔ 
اب ادلل:آیت ص لات کے7 جم دشر ھت اقمیری ثیات پشقل ہے۔ 
باب دوم :یل ددووشریف پیٹ نے کے فضائ لکتب اعاد یث درودوش ریف سے بیا نکر 
کے(٢٠)عررفضال‏ دروروسلام پیا ن کے گے ہیں اوررسول صأ این کی حیات دساععت 
کرد لائل دیے ہیں۔ 
بابسوم :ٹل درودشریف کےسیقو ںکی نحداد رپ کی ہے اوردرودش ریف کےمسنون 
(۲۱) صینے رم کے ہیں ۔آ خ میس سلام کے(۱۱)مسنون ضیف بیان کے ہیں ۔درودوسلام 
ےکی ٹین طلب سوالات کے جوا با تبھ یکیے ہیں۔ 
باب پچہارم :شش درودوسلام پڑ نے کے(٣٢۴)‏ مقامات داوقا تکو با نکر کش 
طاب مقاما تکی تق رپ شکی ے۔ 
ابچ :شش ددودد پاک نیج کی ہمت اعاد ی کی ر فی بس بیا نکی ے۔ 
اب شش : درووشریف کے الفا وک ٹر شقل ے۔ 
اشقردرودوسلام کے چملہبپہلونوں پر ایک جا مع او خیتی تاب ے اور صن کی بل 
تصانی کی ط رع ھی وقاراورمنتقانشان سآ راسننروراستہ ہے ۔آ پک دوسر کنب 


۹ 


کی را لک بھی جلد بندیی ءکا نم اور یرگ ا معیارکی سے مصنف کے ساتح وس تج 
عای شی سکریم صاحب(5 )ا رنج الین )بھی کر یہ کے مغ ہیں کان کے 
اون تق کاب منظرعام پرآکی۔(صفیات )٣۰٢:‏ 

ملک پید :مت الرنضمی بمصعفی منزل ء۸۵ بی جلاک کشیرکالوٹی لم ء پاکستان 

ذوالججہ ٣9‏ جات اکست ۰۱۵۸ء 


7ف1آناز 

تم تذل مل رش لہ الگریجر وع لآلہ وا خایِہ آخَئِن. 

پشّم الوالؤٹی الؤحِیٔھ 
ہدافرسلی علانی اوح رولس ضف 
المذنبین امام الئبییز ر سراجقلوب ال محبین :سید نالپ القاسم “فی ءا 
یٹلا کی بارکا یس بر یلو 2 وسلا کین اورفض ال لور وساام کے م وضو پرصرجا 
0(9" رک یکئی یش نکااحصاء دشار بہت دشوار ہے ۔ اوران می ہرمک روا یا تکوش یم 
ک گیا ے نا حادبیث مرفو :موق فہ مرسسلات اورضعاف بلہ وضوعات روایاتگگی 
بثزت پائی جاتی ہیں ۔ااس لے ضردرتگ یک یک الیمارسال رج بکیا جا ےجس یش 
ضرصلے وساام کیو ںکا بیان ہو فضائل وفوان رش نکش وت میں پپڑ ھنابھی 
سان ہواورجوش نکھت ردایات سے ناٹی +ھ۔ااس لے الس رسالیرییں نہ یت بیقر 
صلوزوسلم کے صینفل کے گے ہیں ۔اورغیمنقو لتحقردرودوسام کیبھی لہ 
نے )درج کے ہیں( کہ پڑ ھن والاصلے وسلام کنل یخوں اورنک رات سے 
فا دو عاصم لک ے )۔ اور نکتب ورسائل سے استتفادہک گیا سے الن کے نام ماغز و 
مرا می در ہیں ۔ بیرسال فضائ ددودوسلا مآ ےچ لمین یکم ذی ا(۵ ۲ ٣۱د‏ 
٣فروری۵٭٠‏ ۷ء )می تح کی ت رتسب نکیل نکر کا۔ اب بج اتال عزف 
واضافوں کے سا تھ تو لٹ اب وضجات اورامیرشفاععت “فی سای کی خاطربہ 
گل رت درودوسلام ور دب تفہ بارگادرسالت ٹل بصدعمزت وا تام اور عاججز کی اور 


انکسمارکی کےسا تھی ںکیا جار پاے۔ الڈد تا لی سے دعا ےرود ال عحفت ءال پد بیکقیرت 
ظرانیحبتہ بنلدہ سکیان وھ جک یکا شکوشر فقو لیت عطافرمائے_ 

بنا ازع وَلِة اتی وَلِلهذ یوقم بک الیصاٹ (سورہامم)۔ 

کھج :اے ما رے رب پش دے مچھے او رم رے مال با پکواورسب مو منو ںکونڑس 
لِلققن ایا (سعر ہفرقان )جم : اے ہما رے رب تر ا یں ہاری 
یں اورادا دی طرف ےآمعمو ںکی ٹنرک اور ہناگی پر ہیزگاروں کے لے پچوا۔ 
نوا رانک روگ نٹ( )جم ام ہارے پروردگار 
“ہیں بھی بس دےاورہمارے ان بھا نو ںکوشھی جوم سے پچ یمان لآ ئۓ او رنہ 
پییراک ہمارےولوںل می٠‏ ںپشف اٹل ایمان کے لے ۔اے بھاار ےرب بین کتو رک وف 
رتم ہے رَبَتا تَقَبَل ِا ِنَّك انت السَہيْغ الْعلِيْۂْ۔ وَتُبِعَلَيْتَا ِلَكَاَنّك 


الكوَاب ال ہت جم اے ہمارے پروردگا رہ رکی رر خدم ت نول ف رات یقباہر 


7 سی ےںج۔۔ کے ذ 7 َ‫ سی گن لْ ضر مک ہے 6 چ2 
دن صا ب تام ”گا رَبَتَا هب لْنَا ون اَزوَاجتَا وَذْژِیْتِنًا قَرةَاَعْيِ وَاجْعَلَتَا 


پا تا درجا جن وا سے نے تا رے پروردگا رم پرنرک رف ما۔ت بی تو رقول 
مر نے والا اوریکف رما نے والاے 
(ص تی اح ہہ موی لآہ و ضتاِم ورك وَسَلی)۔(آئن)۔ 
ا ہکان ربذاست ززارراہ روز رہیزست 
ند جا زین الو ھا لام مین مات ری 


ربیعالاؤل ۹٤ء‏ نومبرےا۰اء 


پشچ ال الٌكلنِ الرَحِیْ 
اتال فا ےق ال وَمَليِکمهيَْلَويَ ل الین َاأيها الَزْف امٹوا 
وا عَلَييَمَيموْا تس ےجا (-ہ7ب۵۷)۔ 
ترجہ ے شک اللداوراں کفر شنے تی پرددود کیج رت ہیں ۔اے ایممان والقمچھی 
ان پردرودنجھچواورخحوب سسلا م تو 
الأَيز عل وم ورك فن کس 
باب اول: ا یتصلا کا تی ر0 
آیتصلابي) شا نول 
اي النةوَمَلييكَتَهيصَلوتَ کل الگہئ .يَاينا لَرِمَ امَنوا عَلُوا عَليه 
یما ملا( سر۱ 7:اب:۵۷)۔ ال لآ ی تک لوا یت صلاتہکہاجا تا ہے۔ ال 
کےشمان نز ول کے بار ہیی امام جال اللد بین سید یت یرف ماتے می ںکیضرت امن عباس 
شی ال عضرے موک ان بئی اسر ائیل قالوایآموسی عليهالسلام ھل 
یصلى ربك فنادادەربەیاموسی ان‌سالوك1ھل یصلى ربك فقل نعم انا 
اصلىی وملشکتی علی انبیائی ورسلی فائزل الله علی نبیه ان الله وملکته 
یصلون علی الدنی الية(تخیردرینٹور)۔ تر جم :ہنی اس رائیل نے حضرت موی علیہ 
السلام ےہ اکیا تار ب بھی رحمتپھیتتا تو ان ( ہر تم وکیا کوان کے رب نے دا 
کیک روہ تچھ سے ابی ںکیا تارب علوۃ(رحمت ) کچھیما ےت ہنا ہاں ۔ میں اور 
میرےفر شتے انمیااوررسولوں پرصلے کیج ہیں ۔تو ال تعالی نے یآ یت اپنے می صلٹ ہل 


پرنازل فرالی۔ 
امام الو نصورش بن ھب نگم ودالکما تز ری (زمتوٹی ۳۳۳ھ ) ا ںآ یت صلا ت یکی فی رم 
گت ہیں رن تغیں ایز ب اکا لت هزَِالايَةوَيلَلَهيَارسُول اللہ 
هَلَالَكَ قََالَتا فَتزل قَوَْهُهو الَزِی يُصَل عَلَيْکُم وَمَلیِگفه یکم 
ین الكلعاب ال الف (سورہا7:اب:۴۳)۔تر جم :ینف عحدمٹوں میں ا ںکاذکرکیا 
گیا ےکہجب یآ یت نازل ہہو تو آپ بای مکی خدمت میں عون لک یاگیااے الد 
کےرسول ٹین بی( انعام )تو بس لی ۃ کے لے ہد ہمارے ل ےکم( تحفہ ‏ ہے۔ 
تواڈ تما یک ببارشادنازل ہوا( دق ےکرددودیجیا تم پراوراس کےفر شت ہیں 
اندعبروں سے اجا ل ےکی طرف کالما (جاو لات القرآنء جا ابض۳۸۰)۔ 
ینس ردایات ٹیش ےک ہما رے سمل ےکی تفہ ہے؟ اس سوا کے عون سک۷ نے وا لے 
رت الوبکرشی اشرعدہ جے_ 
امام مات یدک ا یآیت کے ما تح تفر ماتے ہیں آنما صَلاۃ وی ال ممَة و الْمَعْفِرَةُو 
صَلو الَليکَ الا سیِعْفَاز وَ لب الحضمَت و اليمَاق(تاویلات القرآن جاا 
۲) تر جمہ :اش تما ی کی صلا ڈودرحمت اورمخقرت ےاورفرشتو ںکی صلا اس تغقاراور 
طل بصمتوطاظت ے۔ 
بی یت شرف ود ہا اب ش لی کے اورسورہ از اب مد ی ےکی دنک بقو لہنضس ىے 
ھے ٹس نازل ہوک یی اما مجن وی ککیتت ہی ںک۔ہ ایک ٹول کے مطا ُش جوم دروروسام 
پڑ ھےکاع مآ یاتھا۔ادرایکقول می٠‏ ںآ یا ےک مرا نکی رات یل ا اع مآ اے۔ 


۴ 

ائن الی الصیفکھنی نے خی رر کےشعبا نکی فضیلت می ںککھا ےک ہہنخ ن ےکہاشعبان 

شممتارس لی پردددپڑ ےکا ہیر ےکیوکمہ یآ یت صلاعی ا ہیں نازل موی 

(التقول البرج )۔اورای ط رح زرقا لی شر مواحبلمدم میں ذکورے_اورخرت 

رع فکلض زع کول ا رگاس امەزل ہگ 
الات رك قَلی ثمَرٍ 

آ یت صلاحیہ یں شان “فی می کا بیان 

اس آ یت صلا ہیی رسول ال سیا کی الیم وظمت اوزشان باندکا ڈک رکا گیا سے۔ 

حضرت اما قاشی عیائ رسمت الڈعلیفرماتے ڈیں الس پپراجما رح ہےکہال لآ بی تک بیمہ 

یں نی علی السا مکی د ہمت وشان بیا نک گا ہے جک دوسریآیت می ںیک یگئی- 

امام اابدادڈش رق ٹچ یککھت بی ںکہ برا یآ یت ہے شس کے سا تاد تاٹی نے اپنے رسول 

کرک سی کپ لیا کی حیات او رآ پ سی کی مو تکی حالت می بھی شرف 

کنفا_اوراشتما ی کی بارگاہ یآ پکا جو مظام ومرتبہ ہے ا کا ذک ہکیا۔اوراس کے ساتھ 

ہا لآ دی کے بر ےل سے پاکیزہ ناد یا جح ن ےآ پ ‏ ٹین تلق یا آ پ 

نکی از دا شع رات کے بارے بی ری سو ابذائی اس ط رع کاکوگی معاطہ 

کیاہو_ 

اشنا یکی ذا تک طرف جب انناصلو کی سب تک جا ےت و اس سے ممرادائ ںکی رت 

اوررضاے فرشمتو ںکی طرف جب لسبت ہوم راددعااوراستففار ہے اورامتکی 

جاخب سے +ودعاا ورپ سار کے امرکی لیم ے(تفیتریی) 


۵ 


آپ ای مکی حیات میں لد وسلام پنڑ ھاجا تا تما اور وصا لش ریف کے بحدیھی قرب 
اور بعد صلووسلام پڑھا جار پاے اس ل ےک بیگم ہے۔ بیشرف جنفدتمصفی 
سی مکی دیل ہے۔ 

اورحافظئماداللد بن ای نکش رلک ہی ںکینقصودا ںآیت نے یی ےک حتضورسلا یم 
کی قدرومضزات عز ف اد ریت لوک نکیا گا ہو بن کے ےوہ انل 7ھ 
تع یآ پک شھاخواں ہے اوراس کرش آپ سای پر درد دئیجے رت ہیں۔ 

ملا لاعلیٰ کو رد ےکر اب ز م۲ن والو ںکونھمد یا ےک" ت مج یپ فی پردرود 
وسلام کیہ چاکرو کال رعلوبی ( سان ) اور یا لی (ز ین )کے لوک ںکا اس پراجماں 
ہوجاۓ(تفیراب نکش ر)۔ 

علاءن ھا ےکراس بات پپراممتکا یما ےک ہنی اکر صلی مک مت اورت و قی رکا 
ذکرعیماا لآبیت می لک ایا ویمااویآیت میں پذکوریں ہے(انوار یی کال 
تھا لی ا ںآ یت میس نیک رم صلٹاین یرف فرماجاے۔ 

امن بوسف صاگی شائیٹملمصر ی(التوئی ۹۴۰۲ھ )ا سیت کےۂتحل کین ہیں 
انهانعقں الاجماع علیٰ انی هذ×الآیةمن تعظیم الله تعا یٰللبی َو 
التدویەبەمالیس فی غیرها و مدئیةوالمقصودمتہا اخبارہەتعال 
عبادمنزلة نبیه4عیں ٣ف‏ الہلاأً الاعلیٰبانەاثنی عليهعندالہلائکة 
المقربین‌و ان البلائکة یصلون عليه ثم امر اھل العالم السفلی 
بالصلاۃ عليەو التسلیم لیجتمع الثناء عليهمن اھل العالبین العلوی و 
السفلی جمیعا وقال تعا یٰ یصلون بصیغة البضارع الدالة علی الدوام و 


٢٦ 


الاستمرارلیدل انەهجحأنەو تعا یو جمیع البلائکة یصلون علیٰ تبینا 
ادائما ابںا وغأایةمطلوب الاولین و الآخرین صلاۃواحںۃمن الله 

تع آ یع( سیل الحد کی دالرشاہ ۱۲ض -)٤۴۰۹‏ 

ت جم :اس امم پر( علا مکا)اجما را ےکمہائ ںآ یت یہی درب العزت نے ٹچ یکم 
ای کیم ما نکی ہے اورآپ سای کے منص بکوا تارف کیا ہے ج کی اورآیت 
یبر کئیں ہے۔ بی یت طیب مدکی ہے۔ اس ےئتصودیہ ہےکسدبتعالیٰ اپنے بندوں 
کان عویی بک رک من کےملا ایی یس منصب رٹ سے اکا وکرد پا کرو لاہ 
مین کے پا سآ پک ری فکرتا ہے ۔ ملاک ہآپ کےتضموردرودوسسلام ٹین کر تے 
ہیں ۔ پارڈ ای نے عال فی کے باسسیو ںکوی د کرد وک یآ پ سم پر در ددوسلام 
کے پچھول تھا ورک یکر میں۔سمارےعلوی اوزسفلی عالین کے پاسیو کی شھا اون لیف 
آپ کے لےیےئ ہوجاے ۔القدرب الھزت نے یصلمون ضار کا صید استعا لیا 
ہے جودوام اوراسخمرار پپردلالل تکمرتا ہے ت کہ یہاش امم پپردلاات ہو ےک رب تا لی ال 
کےسارےفرشت بیشہ ہھیش ےآ پ ای پرددوددسلام پڑ ہر ہے یں ۔ا لین 
وآخر بین کے مطلو بک انچناء ری ےک رب تعال یی درگاددالا سے اسیک وف صلوت نصیب 
وجااۓ۔- 

مفسرق ان عل یبدا حقای کین ہی کہا ںآ یت می اتی اپنے ہنرو ںکونمی علیہ 
الو والسلا ماد +مرتب لا ا ے جواسل کے ز کیک اور ملا ءایلی ( بن رم رجف رشتوں )یس 
ےک ال تھا لی ا کی شناءوصفت ملاء ایی یس بیا نکرتا ہے۔اورآپ ہل ْ- 


ےا 


(تص وی )رم ت کیج ارتا ہے۔ اور لان آپ لی کے لے دعاء ترک تے ہیں ۔کییں 
سب کویھی می یکر نا چاہیے (تضیرطاٰ) 
صلی اللةعل حبذبہ محميِءَ کل یہ وَآَغتَابِهِوَسَلَۂم 

مَولَای صَلِ وَسَلّۂ داڑتا ابا عل عبنبت تیر اي كُلْهمٍ 
آ یت صلاضیمیل دوج رم ءدہ 
ا لآ یت صلا یٹ دوق ری اوردوگم ہیں۔ 
آ یت می دو یں :(ا )ا تھا لی ابق شان کے لال اپنے نی پردرود یمیا ے اور 
اپنن نی ساٹ ریف توصیف فر ما ہے(٣‏ )ال کےفر خ بھی نی سی پردرود 
کیج رت ہیں اور بی سلسلہ پیش ے جاارکی ہے اورجارکی ر ےگا 
اورا لآ یت صلاح یش دوام ہیں )١(:‏ ضأو ا عَل ان پردر ہشن (٣)وَمَیّمُوا‏ 
دض اورقم ان پرخوب سلام تو 
علامیجبدالد بیجن لانقو ب فروزآبادیی صاحب القا مو (متو نے اھ ) ککعت ہیں 
حصلفالایة الکریمة امر ان احدھبا اخبار بان‌اللەوملاثئکتەیصلوں 
علی النبی والامر الغانی امر من الله تعا یٰ عبادہ الہ ؤُمنین بالصلوٰۃ 
والتصسلیجر (ااضلاث وا‌پٹر می اصلو :علی خی رالبخرش ٢٣)۔‏ 
تی رین را ایت کک ہی ںک ریت لقن نے ف ما یاکہبلاشبر یی تکر بد 
خمروں ٹفل ےجس طر ع آی تک آخریی حصہ دوب ےگ مکوشائل ہے ۔تودوٹروں 
ےکی خجرجناب رب العزر تک رف سے ہ ج بڑاعالیشمان ہے لہ هو يُضَلع 


۸ 


لی تالق الگ يیجر اددرد خر کہ الل تھا ی اس نکر پردرودیجیتتا ہے( تحریف 
فرماتا ہے )۔اوردوس ربیخ ردوالل کےفرشتقو کی طرف سے ہے بای ںورک رد دنس نیک ریم 
لٹ پرددود یت رتے ہیں تو اکل ى لآ ال يَعَزع عل القِن وَأَنَمَلَاَكد 
صلقَ علی الکیی ےک۔اللتعالی می سوب ۃ سی رم تپھیتا ہے اوراس کے 

فر نکی ان پردرددپڑ ھت ہیں ۔اورا لف یبر( منقررکر نے کا سب دوثوں صلاتو ںکا 
اختلاف ے۔ایک اللدتعا یی لے 3(درود)ے اوردوسری فرشتو ںکیصلوج(ورور) 
ہے۔اورفرشتوں کے دروداور اتال کی صلے کے درمیا نکوکی منا سبت یں ے۔اورتہ 
ثرعال یکیصلو کے مل اورمشا یکا درود وکا ہے۔بہرعا ل جس نے اتی کے 
ال فان یلق علی الد یکول تال اوراس کےیفرشو کین رای کخرقراردیا و 
یم باب اطلاقی شنرک سے لف اف ادکے ون ےکی وج سے ایک میا ز کے باب 
سے انان بلاقول ز یادواغ ہے۔اورلوگوں کے می ملف براحب ہیں ۔اوردونوں 
صورتوں میس الڈدرقا لی ان تام بنروں یس ن یکریم ای مکی فضبیل تکااعلا نف رما تا ے 
اور پکی اس بز ری ومضزات اور پک کرات کا ذکرفرما تا ہے جوڑقن تعالی بعانہ کے 
اں ے۔اور ہراعلان طاء ای یل ف رما تا ہے براعلا نآسانوں والول ٹیل ہوتا سے پچھر 
زین والوں میں ۔اور یباعلا ن تما مکا تجات می لکریا جا ماے او رکا تجات کے جات پرشان 
مصٹ لیکو لا یا جا تا ہے او را ہرکیا جا تا ہ ےکن یکم سو الہک عمز یم کے رب کے 
ورک بڑیاشھالن اور بڑام تہ ہے(الصڈابہعلی ای سی ادکامھا فضاککھا نواترعابکش 
۸)) 


2ٌ 


بردم زماصرورودوصرسام بررہول وآل وا ما یمام 
آیتصلا ہے نعل چنرزکات 
ا ںآ یت میس بش نات ہیں ( نف کا یہاں ذکہکیاجا تا ہے ): 
پہلاکگنت یر ےک الڈدتالی نے لفظ اق تآ بی تکا آنما زکیا۔ او راز با عحرب بی ال 
کلام یل استا لکرتے ہی جم سکوںوک وش سے پا کک ناتصودہو۔ بیہا بھی (حرف ) 
ان لاک راس با تکو بنا نامفصود ےک الشد پاک اور لامک جن یک یم صلی کےاو پر درود 
کیج ہیں اس می ںبھ کوک عتک وشینئیس ہے۔ 
دوس انت ا ںآیت پاک میس یہ جکاللہپاک تل ن١ل‏ مضار کا صیض لا یا جھ 
زمانرحال اوراشتتبال دوفول پرولال تک ارتا سے بش ل مار کا حیف لاکراس با تک 
رف اشظارءکیا ےکن یکر یح صلی پرخداون رک ری اور ماگ کا درو دکییناصی ز ماشہ پڑت 
نی ہوتابلکہقام تک ککیاء او ایک( بھیشہ بمیشہ ‏ ک یت ہیں گے۔اورسی وقت 
ساس یش نیس ہوگا۔ من ححت شیْقا ا فک رذ کڑکا جی حصحعب تکرتاے ا ںکا 
اکر ذکرکرتاے۔بار باردروروسلام پڑ ھا جب تک علامت ے- 
تم رامکتہ ا سںآیت ٹیں بر ےکرلفو ںکا مل فعلیہ سے بھلہاسم کی طرفعدول(ہچچیر۱) 
کیاہے لین ال میس ضبق ال (ا درد دیھتتاہے )ویک يض ون (اوراں ے 
فر نے درد دئییے یں ) اس تر تیب ےتھا۔ اور بل فعلیہ ے اسم کی طرف اس وقت 
عدو لکرتے ہیں ٹس وقت اح ل کا وی اور مغ مو ٰشنی بے بعددکرےترارد ینا 


٢۰ 


مطلوب ہوحبی اک سورہ فا تم یل یش سے نی چم فعلی سے ات کی طرف ین جملہ 
اس یہک ططرف عدو لکیاے۔ا لآ یت میں بھی عدو ل۷ کے یہ بات بای ہج ےکہانڈدتھال 
اراس کے ملاک کا مر ق بعد ہر قہلگا تا رہ دائم نیکم فی پرددود ہو تار ےگا۔ 
چوٹھاکتہ ےک خداون گرم ان سآ یت میں لنذفاصلوقاورسلام دوفو ںکولا پاے اورصلوۃ ک ےی 
لت میں شک دھا کے ہیں ۔ اورسلام اس دعاکو کے ہی سکس دعائیس داگ کی کس خماص 
آ مال ببات سے بیط ےذکوگجنی ٹس کے لئ دع ارتا ےتفو ظا رکھنا ہوٰی ے۔ یہاں 
خمدراونرک ریم دونو ں‌خسطوں وسیخو کو لاک ہہ لا جا ےکرجمت ند اوندی اور استغفاراور 

ملاکک عرش فیا تضو رسیم یرسیلائعز سان بل علاوداز سک دیاو اور 
سای دونوں با نوں سےتفوطا رکھ بھی مطلوب ہے(وعننظیر رش ۱۵) 

مھ کشا یں اففاسلام می کی ر کے لے مصدر کک استجا لک امیا ےلین فصلوۃ 
یں مصدرکا ؤکریکی سک یامگ ا کین لا تا اد کڈ کیا سر 
سےم دی نکیگیا۔اورسلام ٹ یکر بای کی امت کے لے خائ ت ماک 2ی ںعم 

و یتم خوب سا مچیہچاکرو)م کرک یامگیا(افل اللہ تع سیر المادات ) 

در وش لگ ک ےکن ٹا صل ہیں یں 

اس ایج تک بیم می ددددش ریف کےنٹین فائل ہیں (ا)ارلدتعای )٣(‏ فرش (۳)ایمان 
دار جب درو دک ی بت ال کی ط رف ہو سی ہوتا ہے انتا کی فرشتوں می ںآ پک 
ریف اورشاء یا نکرتاے- 

تھا ی فرماتا ےو رَف>غتَالك ذْكَرَك(-ردقراں )7چ اوریھم نے نے اپ 


کرو بلندگیا_ 
ال تعا یف اتا سے ول يمَأح>الك ون الڈول(ح رہانی:م)تم: اورالبنۃ 
آفخرت دییاےمجترے۔ 
اورجبفرشتو ںکی رف نسبت ہوتوصلو ۃ اتی دا ے۔اورجب درودکینسبت ایمان 
والو ںکی طرف ہو معتی استغفاراورطلب مت ے۔ 

مَولَاى صَلِ وَسَلِّۂ اتا ابا حل عبیبک نر الكَلَي فُلْهیر 

ارم زماصرورودوصرلام بررہول وآل وا ما ہام 
تفوائ ( یٹک )مف مشبہ پان لکاستمال 
چونک ہآ پ سفن کی ان ہر شک وشبہ سے بالات ےتوپ سای مک ینم تکااظہار 
کھرنے کے لے ا سآ ]کر بک ولفظان سے رو حکیا ےچ سکامعئی ‏ : بتک ۔ 
یہ مروف راع ان کل لی لیت لعل ۔ا نتر وف شب با کت ںیشن 
او ما مر را ا نوہ 
ہیں ش لک ما نفد بجی خلاٹی اورربائی ہدتے ہیں ۔آخ ریس ان بد یفقہ ُا ہے۔ اق اور 
آع فل یڑ 2اک ۷ا درف( بواگ گیا )سے پالئل ماب ہیں ۔آیت بال لس 
کے یی اہے۔ پیقروف اپنے ا مکونصب دینے ہیں اورج رورض دیتے ہیں۔ 
علامہناشھم نے اس شع میس ان رو فکوٹع کرد ا 
لت تَا لَي تک لی ناصبامنددران دخ رضدماولا 

ا لآ یک بک ک رف ام سے شرد فر مایا کرد ناد الو ںکو پنا ئل جات ےک الڈد تا کی 


۲۳ 


زا کے بعر زسو لک رگ ع ای ار توق سے انل اوراعلی ہیں۔ 
ضعلا کھت ہی ںکہآپ سای نے منانین سے پچمودل خر ال اتی نیس جن سےآپ 
کادگل رتجیدہہوااوردک یپا تو اید نے ال رخ اور دک وک ےا وی دید کے 
بآ رج تک بی نازل فر ما یخس میس بتا اگ اک ہآ پکاشان بہت بلنداور الا ے- 
بعدازغد اک وی ٠ف‏ 

اَلَو صِلَوَمَلِم وَزِكغل یڑ 
اع جلاات (الل )کی جامعیت 
ا ںآ بی تک می اق کے بعد امم جلالت(ادل) کاذکرآ یا ے۔ 
علا می اوس ف چھالی (متوئی د۵ لا افخ اارصارغ ککیھاے سای ںآرال تال 
نے ا ںآیت می ام جلالت ذکرف ما ہے اوراسا نے تی بیس ےکوی او راس مگ را ھی کہ 
یس فرمایا۔ لابو ںیل ف مایا ان لت یع یراس ل ےکا جلالت (الل کی 
تام اساءوصفات کا جائع ‏ ےکیوکہ ج بت کے ہوادڈ یوقم ےی طور پر بہاحترا فکرلیا 
کرددایک دی معبود ہے فردہ بے نیاز ہی (ھلا کی کر نے والاءک ری ء بہت گیا یم 
رووف اور ریم وی رہ ہے ۔ اب اگر او تھاگی اہناکوٹی فی نام ذکرفرمامتاٴس سے اس کے 
عجیب پا کے لے رحمت وننلمت ثابت ہوٹی تو یدام پیر ہوت اک ہآپ پرصلا رھت 
صرف ای ام فیک وج سے ےاوردو مم ےا سا صفامیکااس ےکوی پند نہ چتا 
خلا ف ام ذاپی (اش کرت کا اتی ےکرصلوت وسلام ارتا کی ذات اورصفات 
دوفو کی طرف سے ہے۔ اور رچھی معلوم ہوتا ےک الڈداتھالی نے نی کر پررحمت اور 


ض۲۳ 


تل ان تماماسماتے فی کے سا تم گی ہے اد راس کے ہراس مارک نے اپنے عیب 
کے لئ رجمت ون ماق مکیا ے۔ اور نی ای کے متام بلند کال عزت ڈکنت 
کےاظہار کے لے بیاندازز یادوطون سے گو یافر مان بار یکا مطلب ہو اک رد بکا نات 
بھی (ا پنے عیب نی سای ) رصل ۃ کت ہے :یش نبھی اپ می پرصلۃ جتچا ےہ 
الیک الد یان اپتنے عیب این لے کا ےکر ابی مز زتر بی لوق پردرود 
پیا ے؟ نیمز ین وآسمان والوں کے رسول سای رصلو جا سے معلوم ون معلوم 
تام اسم ےس فی ای طط رح ڈعونڈ عون رک رکال لے جا کمیں او راس مجلاات ( اید )ٹس ان 
س بکوئ کرلیاجاۓ ۔اس سے دوفامکرے ہو :اول ایپاز واختقارء دو تضورعلیہ 
اسلا مکی لیم ڈیم و بز دگی (سعادت ادا بین بج اے) 
امم جلالت ربکا ات کا ذالی نام ہے ججوقمام صفا مال یکا جا ہے اور بای سب 
اما صا ی ہیں ۔ائی لئ اس مجلاات(اولیہ کوائم ذات سے ہیں وَادلهُ لگ عَی 
الْمَعْبُودہ بی( جاین) ۔اورلفظہ الڈمتبود بر نیکانام ہے۔ 
َرلُعَلمٌَدَ لس لے یکرت ء رسای لاسیانھدز 
الَنِْیْلَاالة الةَإلَاهُو مِفَةوَالوَظن رن ال چیم مقَکَانِِلهمَالقَ ون الَخَةِ 
س تد ےت . 
تمامآنے وانے ناموں کے ما پی کے لے جا ہے اور الن تی کا ال ة ال و( یں سے 
کول معبودااس کےسوا) ا سکیا صفت ہے او رآ شحلرن ال یر مبالغہ کے لے دونوں 
میں رحعت سےںشتقق ہیں ]نی بہت مہ ان بمیش رک رفرمانے والا۔ 


۲۳ 

اورج بن تعالی اپقی ذات یل توم ےآ امم ذا ت کا اطلاقی ایی پردرست اور رق ے۔ 
علام مین الد من صاحب معار انب تفر ماتے خی ا غلنھ 0 ْهَهُوإِتللْمَوجُوْدٍ 
لت ا ِا ِصِقَات الَلهِقَةِيِتَعتِ بِتََتِ الوَُّوٍ ِكة الْمْكَقَرِذياَ مود التقيقن قَانَ 
و دياش تق لو جو دبا 3 (نض یراس رارالفاق)۔ت جم جانا 
چاہیے ےك لفظط العٹداکل موجودب ری انا ے جوتاممعبودی کیپمفتو ںکا ىا ےد لوی تک 
صفت کےساتحہ وجوڈشیقی میس مکنا سے .سو بلاشبہال ذات کے سواہ رموجودا بت ذات مل 
موجودہونے کے الف کیں ہے( بلہا کا تنا نے )۔ 

صا بی راسرار الات بھرالنقا لن کے جال تج یرف ماتے ہیلا نٌ الَّامُمَتوْعَان إِمُمْ 


۸4 
ثَ 


000 ہے 


7 


5 - 


ہوا الْکَتْمَاء الا ا ال لات ٥‏ علق الات والنڈاٹ لَيْمثُبنَاخْلَة 
الضِنا تا تاد ناب کرو کاحِلڈُ ورڈ اللَا بل اتکی قَللَ 
گن ال نَا أم رما 5ا خِلة اش الو وی اش الات (تخ یراس ررض ۴۲) 
تر جمہ: بے نگ اس مکی د میں ہیں ۔ایک اسم ذات اوردوص کی اح رصفت گت اسم ذات 
زیادوزرگ وانفل ےا صفت سے ۔لفظاللدائم ذات ہے تخلاف دوسرے :ا موں کے 
دورد وسرکی دجام ذات کے انل ہون ےکی یہ ےک یتما نٹ ذات میس داشل ہیں ۔ اس 
کے پیک یں ۔لہذ اتمام اسم ءصفات اسم ایڈٹٹس داخل ہیں اوردہی اسم ذات ےشن لف 
الد 

الله عَلَہ لللّات ال اچپ الو مود اتنج تیج الضقاب الإليتة(ءاثی 
لیم پتعل ).تر جم :لفظ ال ذات واجب الوج دنام ہے جوقام صفات الیکا حائع ہے۔ 


سے 


۱ 


۲۰۵ 


ا دی عَلَ لاب الو اجب ال جُود ال نضتَخیچ ہنع الطِقّاب الْکمَلِبَة 
تو تنج مار (حاشرن: امن )۔ت جم :لفظاللذات داجب الو ج ںام 

ہے جوقمام صفا تکمال یکا جائ تما ٹھرلیفوں کے لال ہے۔ 

ورام الْجلَلَةِ هو الَاعْطْۂ لِأنَةالاَضل فی الا نمَاِ الس ل٦ك‏ مَاىيرَمَامصَاف 
لَیي( نا لیریس ۰۳ج ١)۔تر‏ جمہ:اور اح جلالت (لف ایی وجی اسم پنشم س ےکیونہ وہ 
امام یش ال ہے ال ل ےک ہام اسا فی ای اسم جال تکی طرفمطسوب ہی کیہ دہ 
سبکاجامٌٛے۔ 


- 


علام یی تقاری علیہ ال رن الباری فرماتے ہیں ٥ال‏ انتک لْغْلَا فی تذ یق اشم 
اڈ و کہا تب الْعَفَائفی تق مسبَا مُنَا من حتف ات( 615ا كش٥)‏ 
تر جمہ:جان می ےک لا ءال کے نا مکی باریییوں یس جج ران ہیں جیسے عارششن اہ کی (نام 
والے )کین جس تیران ہیں ۔ پاک ہے دہج سک ذات یفلیس تیران ہیں۔ 
حضرت ئن سعدی ف مات ہیں 

اے بت ازقاس دخیال دلان در م دز ہرپفتہاندویشنی ری دفو انردا م 

وف تما رکشت د بپایال ریرگر انال دراول وص تو مانردائم 

(گلتان) 
تر ججمہ:اے ووذات جو نال قاس ممان اور دم سے بالات ے اوراس بھی جولوگوں 
نےکہاے اودہم نے سناادرپڑھاے۔دفترقام ہوگیااورعمرآخرہہوٹی اور ھم ای ط رح تی کی 
ابنقرا ریف میں گے ہہوۓ ہیں۔ 
۷ رك ظلی ثم 


۲۲ 


اعم جلاات کےخوا 

تفی کی ریف میں مسم ایی مل ف رما اک لفطانڈرش چن زم میں ہیں۔ ایک بیکہ 
فا ار بک ذات پرداال تک نے می مرف ںکا تا کی ۔ال لوگ راد وتوہ رتاے 
دہنجی ذا تک تار اے۔ 

کون تعالی فرباماے ول ےنوہ امب وَالازض(-ر۳:7ء)-7مم:اوراشدی 
کے یکر ہی ںآسمانوں اور زنبیتوں میں _ 

گرا سکیا پہلا لا جج یگرادوو هی نل مر بتاے۔ بیکگی ذا تکو بتار پاے۔ 

اش تما لی فرما نا ےآ اث ای( سورة تقابن :)تر جم :ای کے لے بادشاہی اور 
ای کے ےحریف سے۔ 

اگردوسرالا پچ یراد یتو فقائ با ٹیر بتاے اورد ہی ذا تک تار پا ے- 

ال تعا مات ہے خی ادلة ال یلال الو( سور ہتشر )تر جمہ: دی اش ےکا 
کےسواکوکی معبدوکییں۔ یی یں وا زاند ےکیونک تیجح مگ رعائی سے جیے متا کو 
تو بخاصیت لفظ انڈر موجود ہے دوس ےتنام ایموں میں یں سے جج سطر نکاس کا 
نامخرو فک نا جع فڑیں ایی ہی ا کی ذا تک کی تا یں - 

دڈسرکی نما یت پہ ےکہ دا کے دس رےاسماء شا نا ٹفئوں پرد ال تکرتے ینان 
لف ال سارییپھختوں پر سس نے ال ہکہ۔کم کال یااس ن ےگ سا ری ھمغتوں سے پکارا 

کین ذظ اہی ےجس میں سار یمیس موجود ہیں ۔ 

تیسری خوصییت بی ےکک علی بیس لفظ اتی دائل ےس سکو بڑ ہوک رکا فرم ون بڑاے۔ 


٢۲٤ے‎ 


4س 
1 


اک رکوکی الا الخ نکہردے پا اس کے دیکرسارےاسموں سےکگمہ پڑت نے 
من نہہو اگ رآ الال اٹ کے ہی دولت ابیمان سے مالا مال ہوجا تا ے( تی ٗی ) 
اش ا اک کے بٹیشحارفییش دبرکات ہیں ۔ بجی نام سلو ای یکا موجب او ہنی نام با عث 
ہرکت اورذر یعبات ہے۔ بی ام پاک دددو لک دداے اورزتُو لکاعلا رع ے۔ 
اللرالتا ین اپنے امش رلی کا ہکت سے می رکید ناد خر ت مہف رما۔ ارب العالین 
میرے نہر د ہاشن یکنا و محاف نر ما۔ یا نمی رید بٹی ود یاوگی سب عاجئی پودری فرماء 
مکی ںآ سان فرا۔ ارب العامین مب ریی ظاہرکی و باضفی بار یو ںکودورفرباہخموم وحموم سے 
شا تفریا۔ 
یب مااورا پٹ کی حبت عطافر باج سک عبت تیر نیک ےل رے( آمین ) 
اعل تا وراائن فئز 
ملميکتذ(اوراس حر شتے) 
ا لآ ی تک بی مَلا کش ذکک ایا ےکرال کےفر ش بھی درو دیج ہیں ۔ 
صَلَایِکة تل یئ ےاورتلث أأ کا سے ما خوذہشتق ےجس سکامتی پام دسانی 
ےاور بآ کالفنف یم فرشنہ یافرتتادہ کے ہیں ۔اورا نکوم اراس لے کلت ہی ںکہا نکا 
ام ال کا پا منحکو کک لا نا ے_ 
لہ سا بن تن الما وَمُۂ زشل الالَیب آؤکالژشل یہہ 
دواللداوراش کے بنرول کے درمیائن واسطہ( دسا یا )ٹیش اودداائش کےا صد ہیں یو ںی 


۱ 
اللَهُمٌ ازَژْقی مر کت وَ ضبن بقع مه نآ اے ا ےار بت 


۲۱۸ 


رف با تقاصدو ںکی رب ہیں- 

فرشتے مرکو اوت ماد دکیوگگ ہا پرکئی ول وارڈییس ہوکی اور تل اس شبات رق 

ہے۔اورج بت پرستوں کہا ےکرف رشن اتال کی نیڈیاں ہیں ہام ال دعحال ے 

اورعد سے بڑھنا سے فرش انسالی شل میس ظا ہ ہو سک ہیں یس حضرت ابر ائیم اور 

رت لو اما اصلا والسلا مکی رت بی حاض ہو ۓے تے اور تر ت نیل علی السلام 

ورای کی بارگا ہی لگئی مرتتہانمالٰی شکل بیس حاض ہو ۓ- 

امم الد ین انف س عم فی (متونی ے ۳٣۵ھ‏ ) رح الف بات ہیں وَالْمليِكَة يِمَاداللہِ 

تا لاَلْعَا لو تفر ولا يْصغ تب و رَق ول اوت (ا ھا نغے )۔ جم:اور 

فرشت ار تھاٹی کے نیک ہنرے ہیں اورالل تھا لی کےعم ےکا ممکرتے ہیں اورا نکی کر 

(خمر)اورموخث(مادد) ہو نے کے سا تتحریف وتوصی کی سکیا جات گیا 

خیال ار ےکفرشحتے نہ مک ہیں اورشہموضث ۔بجن سورتوں بیل مویت کے صینے استعال ہے 
ہیں دہاں شتو ںی انی مرادہیں اورلفظا جماععت موشث سے شکیفرشتے موت ہیں- 

اد رق رآن یرایل عرب کے محاددہ میس نازل ہوا ہے اورائل عرب فرشتقوں کے لک ےموت 

کےصینے استعالکمرتے تے۔ 

فرش اجسا فور ہیں ال تھالی نے ا نکو بیطافت دی ےک جوشحل چا ہیں جن جانکیں- 

بھی دوانسا نکیشکل میس ہوتے ہیں اورھی دو ریکل میں ۔ دہشم ک ےجو ٹے بڑے 

گناہوں سے پاک ییں- 

عقیدہ کسی ف رشن کےساتحدادنی می گمتا یکر کذرہے۔. جال لوک اپنے سیا ھن ام کو 


۲9۹ 


دک کے ہی کلک الموت(یاعزرابنل ) آگیا۔ بیقر ی بکذرے۔اسی ط رس فرشتوں 

کے وجودکاا کا رک رنامچھ یکذرے۔ 

حضرت عائشرشی اوڈرینہا سے مروکی ہے مرا الْمَلَاکک ون نر وق لاق 

شن فا جن گار خی اکٹ جا ؤح یک لگن (م )7ج :فرش نورے 

پیدا ٢‏ ےگئی ہیں اور جنات خالم لآ گ سے پیدرا گے گے اور وم اس سے پیدرا کے گے جھ 

یں میا نک یاگیا(یچنی جچنے والیٰمٹی سے پیداگیاگیا)۔ 

ا نکی تحداوکو اہی جانا ہے ۔۔الڈدتعا یراتا سے وَمَا بَعلَّمْ جُتُوْدَرَتِك الا مُو(سرہ 

رڈ:ا 7)۳ جے:اورگال جانا آپ کےرب سکرو ںکوگر وی (رب جانناے )۔ 

سب سے یادہشپورفرشتے ار ہیں : 

()حضرت چ یل علی الام . ( ۴ حضرت یکا تل علی السلام 

(۳)حضرت اص اٹیل علی السلام (م)حفرتکز را٘یل علیہ العلام ل( مک الموت ) 
اللَيٰۃٌعَلوَسَلْمَوََارِكَ مل لگن 

فرشتو ںی یں 

رن یی فرشتوں کےمتنحدداوصاف بکور یں : 

(١)خیوں‏ اوررسولوں کے درمیان وی لانا-۔ 

اشتقاٰۂ ١٤ے‏ اَلفیَضطلؤع من الْملیگززشلا(-ر٥4:ہء)7ء:اش(زی‏ 

کاکام ےک دہ )جن لیا ےفرشخوں یس سے رسولو ںکو( جوٹریوں اوررسولو ںکی طرف 

انتا یکا پغام ادددٹی لاتے ہیں )۔ 


۲٢۳۰۰ 


(۴)منہیات سے دودر ہنا اورادام پش لکرنا_ 

فان ای ےل يَغض ون اللةمامَرَمۂ و تَفعلونَ ما يمَزون(س رہ ترم:۷) 
ترض: وو ال لک ویج ہیں ٹا لے اورو یکا کرت ہیں س کا عم ہو 

(۳) دہ برای دنتعال یکی اطا عتک.ر تے ہیں- 

اتال( ۲۱ ےِلَا يَستَکُإزوْ تعن جات وَلَایَمْتَخیز ون يُمَبْعُونَ 
ال وَالكَا لبون( سورۃالانمیاء:۲۰۰۱۹)۔ تر جمہ:دہاا کی عبادت سے شی 
یکر تے اورندد کت ہیں ۔رات اودردن ال کی ایا ہا کرت ہیں اور (ذ را سی 
ہس 

اتال فرا ا لا يَنبِقُ تَذِالقولِ مخ مہ يَغمَکت(-ر3لنیاء:+٢)۔‏ 
تر جم کیا بات ٹل اس سے سیق تنا لکرتے اورد دای کےعم کے مطا بی > ٭ 
ہیں۔ 

(۴) ار تتحالی سے پھیشہ ڈرتے ہیں۔ 

فرمان ال ےو مہ شن کب مہيِکون(سدۃالانیاء:۲۸)۔تجمہ:اوردہاں 
کے ریب وجلال سے ڈرتے ہیں۔ 

(۵) ا نکا اٹ تھا یکی بارگاد مس بڑاقرب اور بلند مر ے- 

اتا یمر مات ہے بل جبَا ےہ کمن( سد ۃالانیاء:٢۲)۔ت‏ جمہ :باب فر مت 
ان کین ہز ےفحت ا نے 

)٦(‏ فرش :توم رد ہیں اورنکورت مت ا نکوبرکروموشث ہو ےکی ھمختوں سے منصف 


۳ 


نی ںکیاجاکتا۔ 
ارشاد باری تال ےو جَعَلواالْمَلیِكة الَيْمَْهُمْ ِبَاذالزٌح !اتا اَهَهدُوْا 
۶ی ( سور زشرف:۱۹)۔تر جھہ:اورانہوں نے فرشتو ںکوجورشسکن تنالی سے بنرے ہیں 
( ا سکیا ) ڈیا قر ارد یا ۔کما ا نکی پیدائشی کے وفت حا ضر تے؟ جچوئ کذا رف شتو ںکو 
الاث( عو ری ) کے ےون تھالی نے ان کے عقادکا انا رکیاے۔ دوج ب کور 
یں بہیںتوان می مردجھ یی سذ اا نکوان سے وصو نمی سکیا جا ا 

اه مل وملَمَواِك کن ئں 
فرشتوں کے نام 
فرشتقوں کےکپردہت سےکام ہیں ان میس سےپنضس مہکریں : 
)١(‏ دوفر شتتے جوعرش شکوا ٹھانے وانے ہیں ۔ 
ا تھا فرماتا سے کٹل عزش رڑ ت كَوْكَهُم يَؤمَيْلِقيبَق(-ر7ق:ےا)۔ 
تمہ :اور آپ کے رب کےعمی لکواس دن اپنے اد رآ ٹف رت انٹھا میں گے۔ 
(۴)ودفر شے جوعرشش کے اروگ وطوا فک نے وا نے ہیں ۔ 
اشتعالٰۂ ۲١‏ ےو تری الْمَليِكَة عَأَيْلِیَ دن عؤلِ الْعَزش يُمَبْعُوْ نیک 
خر (سودۃالزم:۵ے)۔تر جمہ:اود(اےعیب ) آپ فرشتو ںکودکھیں گے عرش ال ی 
کے سس پااس علقہ با ند ھھے اپنے در بکیج کے سا تق ھا کی گر یں 
(۳) اکا برفرشتوں میں حضرت ج یل اورضرت مکاح لکا ذک رق رآآن می سآ باے۔اور 
ححضرت ع زرائیل اورضحقرت اع را کا وک رھد یٹ ٹب ویش ہے( ہم الصلا والسلام) 


۳٣ 
(7)ووفرش جال کے دنو نکی ددرت می ون کے نو نکو دض کرت بین‎ 
یی اک غزدہبدددغی رو ٹیش مسلمانو ںکی مددگیا۔‎ 

وف .را وی ہے کے کو کو کر ےؤۓ ےت 

فر انا ے ِذ نول ِليوْمیین الن يَكُفْبَکُۂ ان تیم فو رَبُگُم يقَلقَة 
ال شن المَليکے مم ری( سر آ ل ھران:٣۱۲)ت‏ جمہ:ج بآ پفرمارے تے 
مومنوں کیا ہیں کاٹ کی لکتہاری مددغر ما ےتہارا پر وردگا رین بنرارفشتوں ے 
جوامارے گے ہیں ۔اورا نکا ذکرسوردانفال شی لچھ یآ یا ے۔ 

()ووفر شت جوجت پرمقرر کے گ ےکہایماان دالوں پر ہردرواز دے داخل نول گے-_ 
تھا فر اتا ے وَالم يک وت عَلَِْخ شن شب( - را رھ: ۲۳)۔ 

تر ججمہ:اورف رش ان پر ہرددوازے سے داشل ہوں 3.- 

(٦)ووفرشن‏ جودوز" پرمفررڑیں۔ 

اشتعالی خر اتا سے عَلنَا نک کر (سورۃال :۰ ۳)۔ت ججمہ :اس پرا مس (فرشت) 
گرری۔ 

اش تھا فرما تا سم غالبا (سورۃالق":۱۸)۔ت جم : ۴م( بھی )دوزغ مقر 
کے ہوۓ طا تھے رفرشتو ںکواکھی ہایس گے_ 

(ے)ووفرشے جو یآ دم پرمرریں- 

تھا ف٣‏ ےمَا بل من قولِ لَالَدَيْ روب عَيب(س:ق:۸)۔7م: 
دہز پان ےلوگ با تما ںکچنان راس کے اس( ا کا مہپان کین کے لے تیارہوتا 


س_سے۔ 
0 


۳۳ 
(۸)فرختے جو ہنیدم کےاعما لککھت ہیں۔ 

اشتا لی( ٣١‏ سے وَاِنَ عَلَيکُمللفطئی کِراما تَا تین َعْلَمَوْكَمَاتَفْعلوْنَ 
(سور الا نفطار:٭۱۱۱١٢٣)۔‏ ترجہ :اور ب یکم پرضردرکہبان ( مقر ) ہیں ۔محزز 
(مرمۓ) ین دانے دو جات ہیں جوقم کرت ہو۔مہ چارفر ھن ہیں جودن رات میں 
آۓ با یں۔ 

(۹)ووفر شتے جوقب یل مردوں سےسوا لک تے ہیں شی عد بی شرلیف می سآ یا سے یی 
مگ راورگیر_ 

(۱۰)ووفر مت جوم مادری چار باج سکھھت ہیں ]نی رزق بل می کش بابش وظیرہ۔ 
مز نف لے ری نر کرت ہں۔ 
اشتقایٰۂ ٣١‏ ےوَلَو کڑی ِذیکوئٌ الَزنْی كَقُزُواالْمَلِيِكَةيَْرِبُونَؤُجُوْعَهِمْ 
متا موا عَلَّاب ا تر یی ( سور الانقال:۵۰) تر جم :اور( ا ےخاطب ) 
اگرتقود بے جب رخ مت کافرو ںکی جان کا لے ہیں ارت ڈیں لن کے چچپروں اورا نکی 
یٹھوں پراور( کے ہیں ) سو ککاعزاب۔ 

(٣۱)ووف‏ رش جیما لاس ذکرطلاش لکرتے ہیں اورااس یس حاض ہو تے ہیں مم ) 

(۳) ور" خشت جوانسا نکوفں اور بلاکوں سےطفاظ تکرنے پر مامور کے گے ہیں ا 
یں ء پوڑڑھوں اورکھزوروں پراورجن کے تلق اد رام ہوا ہے ا نکی تفا ظ تکمرتے 
ہیں ا نکوحفظہ کے ہیں۔ 

الدتعایط راتس و یزیمل عَلَيکخ حَقَقَکزسرۃالانعام:۱۷٦)۔ت‏ جم اورکھیتا ےنم 


۶7۳ 


پبگہبان (فر خے )ٹنیک ز یی ہےلحدیث ول ظز ے ول پالئزمینت 
گ000 کہایمانداروں پرایکسونوےفر نے مقر ر کے گے ہیں ۔اور 
رشن اپمانداروں کے لئ دھا تی ںکر تے ہیں اور ال نکی تفا لت کرت ہیں ۔ 

اتال ف راتا ہےران ن فی لا عَلََا کان (سرۃاطارق :7)۴ جمہ:برجان 
پرایکمعافظررے۔ 

خمرضیل فرشم ںاوختلف غدر میں بردہوٹی ہیں یینن کے ذ مہ نحضرات انا مرا مکی خدمت 
:وی لا :ای ک ےعلق پان برسا نی کےتحلق بدن انساٹی کے اندرتصر فکرزائمی 
ک علق ذ اک ری ن کا شع حا لک کےاس میں حاضرہونا رس یکالکام نا ماما لکنا ہہتوں 
اور پاررساات یں حاضرہونا ہی کے تلق سرک رس ایل مکی با رگا :می لو ووسلام باپیانا 
کی ںکسروس ےو لک ہر چان کزان نا یک 
ز صورپھونگنا_ 

ان کےعلادہ ہت سے ای ےکام ہیں جو امہ انام دی ہیں تق رآ نک ریم میں فرشت ںکی 
یں کر نک سن ان کیک یں یتم زوس افاٹ :ارات اور 
سورہناز عات وظرہ- 

آ یت صلاحیہمیں فرما گیا ےلہادلد کےف رشن می سلیہن پرددو دیج رت ہیں اور 
عدیث می سآ یا ےکہائل ایما نکادرودوسلام نیکم سای مکی بارگا ہیس مور بین 
رج ے۔ 


7 
لق صَلِ وم ايك عل مم 


۲۵ 


لو کی ریش اتلاف ے 

کل ٣س‏ ععقال کل۶۷ سان کے مکل 
آ ہے۔ یلو ھھ تیب رکے مرق مش انتلاف ہے۔اداورفرشتو کی طرف 
را ہے پاصرف ای ککیط فضراق ے۔ 

امام امام نت رسلا ٹی کھت ٹیں فقیل هو خبر عن الله وملائکته بناءعلی جواز 
الاشتراك ث الضہیر اوعلی ان الہرادمن صلاةالقدر الہشترك بین 
الرحمةوالاستغفار وھو العنایة بحال المصل عليەوتعظیہه وتوقیرك۔ 
وقیل خبر عن الہلائكۃفقط وخبر ا جلالة ثحنوف بناء علی تغایر معنی 
الصلاتین لان صلاته تعا یٰ غیر صلاتہم فلا بجوز الاشتراك ث الضہیر۔ 
والحقدیژ انال ة یی لات یلو( سا تک اعفا ءلی مشارغ اصلاہعل 
اصفضء۵)۔ 

تر ججمہ: ھکہاگیا ےکا اشداوراس کے فرشتق لکی طرف سے تر ےکی میس اشت ا کک بناء 
پرکرایٹداورفشقو لک در ود( ینا )یا اس بناء کہ یک مراد یی ےک صلا ٭مضت رک ے 
رتتقوں اوراستغفار کے درمیان ۔اور یکس پردرودکیہچا جا جا ہے اس کے عاالی کے مرج کے 
مطا ای اورا سک ینیم وت تی رک ناے۔ اود ریگ ہا گیا ےک ریف رشن کی طرف سے 
صرفنمرہےاو درا جلال تکیخرمحخزوف ہے اس بناء یکل کمن می سی (ذرق ) 
ےس مل ےک ہار تھا یکی جوصلا ‏ ے ووفرشتو کی صلا کے علادہ ے تو جا یں سے 
تی ریس اشتراک ہون اکم ہیک ب یی را تھا یکی طرف راع ہو(اورفرشتو کی جانب 
بھی رائع )۔اورائل یوں ہے اق اللهيْصىوَمَلَ يك بُصَلوْنَ یٹک انردرود 


۳ 


پیا ےاوراس فرش بھی درو دئیجتے ہیں۔ 

ضرت امام قاشی ع ماخ کھت ہیں وقں اختلف المغفسر ون واصحاب المعای ٹی 
قوله تعال اق ال وَمَلانِكَكهيْضَُوْنَعَل اتی (-:7اب:٥٥)ھل‏ یصلون 
راجعةعلی اللەوملائکتهجمیعا ام لا واجازۃبعضهم ومنع اخرون‌لعلة 
التشر یك وخصوا الضمیر بالہلائکة وقدروا ان‌اللەیصلى وملائکته 
یپصلون( اثفاء نا ك٦ )٥۵‏ 

علامیی قارکی کھت ٹژں والمحققون مجعلون من باب موم المجاز ویقولون 
الله وملائکتە یُعظمون الب یکل ہما یناسبە من انواع التعظیم و 
الاتصاف بالتکریم والاول عندی ان یقال الضمیر راجع ا ی الکل(ش 
اففاء6اشے۵) اکیجمو از کےطور یرس بک طرفرا کہے۔ 

اوت یبر ہج دوفو لک طرف:ا شی ےس رح در ذ یل دو ہتوں مم ںآ یا 
سے 

اتھال یف رباج ے وَمَانَقُُوْا االّاانْ آح لم اللهُوَرَسولَەمِن فَضل(-٭رڈہ 
)تر جمہ :اوران منافقتو ںاوصرف ینا ہو وو کو 
تی کرات ںوت ام مل کس اس ارےعاشفرسول 

دو ںکی رف راج ے۔ 

الشتعا لی فرما تا ےوَارلة و ہا أَحَقی ا ان قط و5( س روہ )تر جمہ:الڈداوراا ںکا 
رعول اس کےز یادہ شی ہی کا نکوراش یکیاجاے ۔ ا لآ یت ش نل یر ض ودک 
اور تغل رش لکنا شی ے۔ائیطر اودری شال ہیں 


۳ 
صلو: ےمعا لی 

اہشاد ار تقالی ےت لو نع دو درد د کے ہیں ۔ یہ ص لوق سے بناے اور ص لو کے 
تعددمعانی ران کے گے ہیں:(۱ )یم (عظمت۵۸)۔ الم صَل اےالل 

می ای کی شنان بلندغرمابنشمت میں اضاففرما(٣)دعا( ٣‏ ذکر(۴)ماز(۵ )مر 
عبادتگاہ۔الدتعا یف رماتا سے یئ صَلوَات و مَس اج( حرہنٌ:٭ ۳)(خفاء 
انقتلیب ۸۸ ختمر١)_‏ 

(۱)حبادرت(۴) تل( )استغفار( ٣‏ )خرات(۵ )تج ریک(٦)رحت‏ (ے) مففرتے 
(مسا لک امعنا)(۸ )تی فکرنا(۹ میم وک ری مکرنا۔ 

علا ےگپرالعز یز پرھارویی صلو ‏ کے معاٹی بیا نک۷رتے ہہوۓے کھت ہ ں اس مں چنرقول 
ڈیں:(۱)دعاورحعت کے درمیان مشترک ہے۔ بنلد ہکی طرف سے دعااو رای دی جاب 
سے جمت (۲)الغداء الکامل (عملآحریف ) جی شرب تو ملات مات ید یٹس ے 
()دنیا می س لیم اورآخرت میس درجا کی بندیی (منصب شفاعت پانا )لان راس جش 
ے) غرضیک لو ؟ ایک جا لنیڑے جومنلف موائحع پرفنلن معنوں میں استعال ہوجاے۔ 
علامرمجددالد بین فروزآ بد ا کاستف ہوں ان فراتے یں الله عَقم محمد 
انی يِإِغَلَاءذکرەواظھارِ دَعوتەوابقاءشریعتەوف الاخرة 
بتشفیعەث امتەواجزال اجر5ەومثوبتەواظھار فضلەللاولیں 
والاخرین بالہقام البحبودوتقدیمەعلی جمیع البقدمین‌واھل 
الشھو د(ااصلا ڈوالیشمض٦ش۵٦)‏ 


۲۰۸۸ 


امام اوالعالی رف یھ ران ر بادی مصری (تو نی ۹۰ھ )فرماتے ہیں صَلوٌادو تما 
وَصَل وڈ المَایي کت الث ما (ہخار تاب تیر ج دو کے ے )تر جم : الک صلو کا 
میتی ہے اش یز دیج ل کا فرشتوں کےسا ےآ پ سی کی تاعکر نااو دی فکرنا۔ اور 
فرشت ںی صلاۃدماے- 

حضرت اما قاشی عیائ رح اف ماتے ہیں ات اد تَا فَضْل تہ نَا بِصَلارہ 
عَلَيْ تم يصَلَاوِمَلَايِگيہ وَأَمَر بَا دەيالصّلَاوٌوَالتَسْلِیْمِ عَلَيْهٍ وقں 

حی ابوبکر بن فورك ان بعض العلہاء اول قولەعليه السلام وجعلت 
قرةعینی ف الصلاۃع لی ھذا ای ی صلاةاللهتعا یٰ عليەوملائکتەوامرہ 
الامةبذلك یوم القیامة۔ والصلاۃمس الہلائکة استغفار ومنالەدعاء 
وممن ال عزوجل رح ے(شفاء ایک ۸٦)۔‏ ا لآ بی تک بی میس الد تعالی نے ایق 
صلو ۃ کےسما تر ان ععی بک فضیلت خاصکاانھارف مایا سے اوراس کےسا تج بی اپنے 
بنرو ںکوآپ پرصلو 2 وسلا مکی کا مطلقی گر یا ے۔ ال ومن فو رک رحمت الڈ علیہ نے 
نیعلا ء سے <کا یڈ ریا نکیا ےک فرمان رسالت ُجلَت قُرَةٌعَیین فی الطّلوٰة 

ریرۓے ۓآ و لکی ٹنرک نم ز می رک یگئی ہے ) سے مرا دا وڈ تھا لی اوراس کے 
فرش آپ پرصل قۃ نے ہیں اورامتئھ بییگ یج دیاگیا ےل دہ قیام تک ک تج رددعالم 
سلین مکی بارگاد ھی شش درودوسلام کےکلد تے س اک ری کر تے ہکم میں فرشتقو ںکی 
اور ما ری لو ق ای کس مکی دعراے اورالل تھا یکاصللے ة جھینااپنے عیب پرخائک بارالن 
رحس تک نزول نر ماناہے( کتاب التذاء ہل )٠٠١‏ 

صاح با نیرت ہیں شی ون الو الرحَةوَالزِضو ان وَهن الْمَليِگةّاللُعَاء 


۰ 
َال شیِففاز وَمن الأمَةِذُعَاءَتغیلیۂ لِلئِن عَلَالهُعَلَيووَملَ (تم 
شیج )۲٢‏ ۔کہ ارڈ ری طرف سے لوت سے مرا ہنی رحمت اورضشنودبی ے اورفرشتوں 
کی رف سے دعااوراستتغفارکر نا ہے اوراص تکی طرف سے دع اک نا او نی ص ای کی 
و ہے 
صلوۃرڑیتمیں 
جب انفاصلو کی نسبت اتارک وتعال کیا جان بک جائ تو ا سکی د میں ہیں : 
(۱)صلوۃ ما (۲)اورصلوة خاص 
صلوۃ امہ وہ ےچ س کا نزول الڈدتعال یی جانب سے اس کے ون بندول پر ہوتااے_ 
شال <١‏ حم لَزِىيُعَ عَلَکُۂ وَمَلَارككذِيْفِ جک من 
الب ال لور وَ تا بالمُذ زج رین ا(سر:ا7اب:۴۳)۔ت جمرندی 
الشدے جم پر رم تپھیچاے اوراس فرش بھی ما اَم کو زرکفرکی )ا ندعروں ے 
اکا لکرایما نکی روش میس لا اورددایمان والول پبربڑ امہریان ے۔- 
اشعا لی ۂ ١ے‏ أولبيك عَلَيْۂ صَلوٹ ون رہم وَرختت- رەقر:ےہ)۔ 
ڑج :ان پرددود ہے الع کے ر بک طرف سے اور رمت- 
ابی ط راگ ری اکر ٹپ نے سی بندموسن کے _ل ےو کی دع کیتوو ھی ام ایل 
سے ہے تی ےآ پ لمکا اداد یا کے اللْهْمٌ صلی عحکی آ آذٹی(بخاری تاب 


الکو )۔تھ جم : اے الڈدا لی اوکٹیٰ پررحمت نازل فرا- 


٭.غمأ 


ظرت چابرہ نعبرالٹ سے ددایت ےل ای کعورت ن کہا ََرمُزل اللوصَل علع 

َحیرَْجی کَقال ض اللہ يك وَعَلی رون (فضل لصلو چعی نی ش۹. 

عدبیشنے ے)۔ تر جم :اے اید کے رسو لآ پل ہل بکھ پرادرمی ر ےو پر پر درود 

پڑھیس(ہمارے لے دعاکر میں )۔ت وآ پ ٹفل نے فر مایا صلی الله عَلَيكِ وَعَى 

رَوْجكجِ اھ پراد رت ر ےش ہر پر مکرے۔ اعد یث سے صل اللہ علي “نا 

شثابت ہنا سے اور بعد یث الوداودییل ہے( ااوداودءحر یٹ : ۱۵۳۳)- 

صلوتخاصہ وہ ےچ سکانزول الڈدتبارک وتعال یکی جاخب سےنیوں اوررسولوں پر 

ان ناقم الا یا ء ول ران ححفرت ئھرسلفایك پر ہودنا ہے( حتوق ای )۔علا 7 خاص سے 

مرادرسمت بیس بہ ارڈ تھا لی این نویوں اوررسولو ںک ریف فرما جا اورلمت بیان 

رتا یں 

والٹوع الغانی صلاته تعا یٰ ا مخاصة على انبیائەورسلەخصوصاعیل 

خاتمھم وسیدھم نبینا می ِ2( سالک اسنا وش ۴۴)۔اوردوس کیم ال 

تما ی کی دوصلا ,اص جو اپ ول اوررسولوں پرکیا سے نما ح صکرنیوں کے نا ٹم وسر دار 

ہار ے بیشن پرمہتتاے۔ 

بہرعال لذطصلو و ہشترک لسن ہے۔ اس کے مان مخلف موشع پرذکر کے جاتے ہیں۔ 
پردم از ماصرورودوصرسام برہول وآل دا صھا تام 


٢ 


صلو زم 

صلوۃ سے مرادن یک ریم سی کی تی مکنا ہے۔ 

امام ای بدانڈ ش انارک قیفر ماتے ہیں وَشی منًا ذُعَاء ون او رَخمَة ومن 
الْمَليِگة تَتاء و قَل قَیِل اق صَلو اللہ عل تَہِيِوِتتاء عَلَيْوِحِئنَ الْمَلِگة 
(تقی رق ری )۔ ترجہ :اورددودجمارکی طرف سے دعاے اورائڈکی طرف سے تھی رت 
اورفرشتو لک رف تل ری فک نا ہے۔ اور با شب ہاگھیا ےک ار رک صلے فرشتوں 
کے پا اپنے ن تھی کنا ہے۔ 

علا یی ار رحمدائڈف ماتے ہیں ان الله َمَلايِکَتَۂ یْکَيمُون التِق ا بکُل 
مَا یا یبُەمن نوا ع النَعْظِیْج وَآضتافِ النَْکری یر (شرخاء نا ے٥)‏ 
کہ بے شک انڈدتقالی اوراس سےفرشن می سای کیانظیلرکرت ہیں ہرانطتوں کے 
ساتھ جوا نکی شان کے لا ہیں لی مکی تموں او نگ ریم کے اقسام سے۔ 

صلی تقاری علیال رح اہ وت اي کہ یْضلَون لی الگ کے اتتف بات ہیں 
ای یعظمونہبالششاء علیہ (ششر خفاءءج ٢‏ بش ہ۱۰)۔ لن الداوراں رش 
رسول الس بای کی تحریف کے سا ت تل مکرتے ہیں۔ 

تقاضی عیائص نے ابو لیر کیا سے بیا نکیا ےک ارڈ تھا یکی طرف سےصلوہعلی ال 
سے مرا دی یکر سای کے ات رام می ز دی ادراضا فک نے اور فی صلی کے علادہ 
می اورانسانع رلاڈ الٹ سے مرادرمت ے۔ 

اس سے ہی اود ہاتی مومنوں کے درمیالن فرق دا ہوجا تا ہےحیی اک سوروات: اب میں 


۴۳۲ 


رسول اٹ ای کے بارے میں ارشادہہتاے اق اه وم کک یصو کی 
الگ کہ بے گنک اللداورا کے ف رشن نی پرددود شیج رٹ ہیں ۔اورای سورت میں 

۱ س سے جج پیل یا یت زار هو الَْلِق يُصَ عَلَيِکُم وَمَليِكَفۂُ دی ے 
جورم تکتتا کم پرادرائس کےفرشت ۔اورظاہر ےک اس لفناصلو کا ہوم نسی 
صلی کے کے موزوں سے دداسں ےی ای وازخٌ ہے چجودوسروں کے لے موزوں 
ے۔ 

امام الو بدرانڈشم انا ریت رٹھی ( من دا لزھ )فرماتے یں والصلوةمن الله 
رمته ورضوانەو من الملائکة الدعا والاستغفار ومن الامة الں‌عا 
والتعظیم لامر 5ا( تیریخ ۷۳ضص۹٣)‏ 

لی قا ری علی ا رحم نی سا پردرو دی کاممی میا نکرتے ہی لعج 
ماوق بزمَاتَه وا فرأمكه وَاظهزمِلكوَازقَعمرَجَکشرحخاست 
۷س ۱۰۵)۔ نیز ھا کےہوالہ ےکھت ہیں آئی عَقمْهُفی الذنْيَاأَغلَاِذ قُرن 


ع8اھ] >> 2ےےرے اد ئ٢‏ >> 2ص رےەے۔ه کے ںہ ء غد اگ لہ 5 
وَاظِهَار دَعُوَتِهِوَإِبْقاء شر يْعَيِه وی الَآخِرَةنمْفْيَعهؤ مه تَضْعِیْغ 


‫َ 


و 


أَجْر یََثْ تی (م 8ء ۳ ٢)۔اےاللداپنے‏ رسول الل سن کی شا نکوبڑھا 
کر ذکرکو ہلندفر مااس کے دم نکوخلہ عط اکم نے اورا نکش ایح تکو بائی رھ سے اس دنیا 
یس او رآخرت می ال نکی امت کن یش شفاععت کے سا قح اوران کےتے اب واج کو 
زادمکرے جن 


ینا مکی صادیی(مو نی اھ ) کھت ہں و الصلاۃمن اللە رمته المقرونة 


("|۴۳ 


بالتعظیم. ومن غیر5التضرع والں‌عاء ولو من الہلائکةلقوله تعا یٰ 
الَيْيَْتَْہلُوْنَ الَْرِشٌوَمَنْ عَوْلَةُ یتو تِكَمِْرَیہم وَيْومِکُونَبه 
وَيَمتَفْفْزُوِتَلِلَزَِْ امنڑا رزتا َیغت فُلَ کن , رخ وَوِلَمَافَاغْفز 
لیم کانو َاتّمَعُوْا سَيِهْلَكَوَقِهِمْ ات ا جج (۷رلن:ے)الآیە 
الیل قولهوَقِهِمٌ المّيْنَاتِ ولا بجوز الدعاءللببی عليهالصلاۃو 
اعد الوارد(کر مەالله) بل المتاسب واللائق ثیحق 
الانبیاء الدعاء بالصلا8والسلام (ش ر٣‏ اصاو یگل ۶م:ا2یرك٦۵۷)‏ 

ترجہ :صا اڈ تھا یکی طرف سےا سک رمت ے جوٹی ہوٹی سے تیم کےسما تاور 
دوسر ےکی طرف سے عابجمز کی اوردعاکرنا ےاگر جفرشتوں سے ہوا لن ےکای تا یکا 
مان ے جفر خق ت یر یراول کا گررزظل رن اںن۔ 
ودج کرت کیج کے ساتحداپے ر بک اورا یمان رکتے یں اس پراورامتخذارکیا 
کرت کی ماع دالون کے لئے جار ےر کے ہے عون کو( پٹ 
مت او لم سے )لی بش رے انیس جنہوں ن ےکف رتو کی اور یرد کا تیرے 
راستگی۔اور ہیا نے انیس عزا ب نم سے( سور الفافر؛الھون :نے )۔ اورکیں سے جات دعا 
کمرنانھی علیہالصلا قوالسلام کے لئ خی روارددھا ول کے سا تج جیے رج اڈ بل مزا سب 
اورڑ ادہ ای امیا شیہم ااصلا والسلام کے میں صلو 2ا ورسلا مکی صورت ٹیل دعا اکنا 


_ے۔ 
0 


بی علیالسلام پردرودوسلام پڑ عناصرف دما یں سے پآ پ سیا کی نیم اور قیر 


فو 


کرنا ہے اوتق قی س٦‏ فی صلی مس سے ایک تن اد اکنا ے اورلو ت وسلام می لکنا 
آپ ای ینیم وک ریم اور ز رگ یکا نہ رکرناے اورصل ۃدسلام پڑ ھن جس اللد 
تعال یکا قرب عاص لک ٴے۔ 

اںآیتش ینمی اللہ تال یکاذ ای نام اسم جلالت ( اللہ )ذکرک گیا اورصفاکی ناموں 
یس ےکی نامک کی سک یاگیااورا ی رب یرم ہہ کےذ انی ناموں بیں یمر 
اورا مر کرک سکیا۔ بلہ علی الدہ فرماباے جو پ یلم کےصفائی ناموں یس سے 
ایک بڑ کی شان دالا نام ہے۔اورآ پالم کے شبورتز ین صفالی ناموں میں سے 
لقن ہے۔ میا مبا رک ق رآن ید تقر ییاگیاروسورتوں میس ۵٣م‏ ت بآ اے۔اور 
یمام پربڑے پیارےانداز سے ندافرمائی ے۔ 

(١)اشتالٰۂ ۲٢‏ ےِاليِی آؤل بِألْمُوْمِيِزْنَ هن اَنْقيهِخ (-.7۷5اب:٦)۔‏ 
ت جم نی ایمانداروں کے ال نکی جافول ےئھی ز یاددفریب ہیں- 

(۳)ا شتعالٰ( ٣ے‏ يَيها ا لق اِلَااَرَسَلَلكَ شا متا وَمُبَيْر وَنَيْنڑا(ء: 


) مھ مھ 


غ 


الاب :۴۵)۔ تر جمہ:اے نی بے پیک ہم ن ےآ پکوگواداورخ ترک دی والا اور 
ڈرانے الا اکرجیچا ے_ 

(۳)/شعاٰ ١٠ے‏ بنا اليِنْ عزض الْمَوْيِيزْی عَل الَيِعَاِ(-:اڈل: 
۵) جم اے نی اما نداارو ںکو چمادکی ترخیپ دو- 


(۴۵ 


(۳)/شتاٰ ٤١‏ ے بنا اليِينْ ضبْك اللهُوَمَي الَمَعَك ون الْبژْمِبْثیَ 
(سوروانفال :۷۴)۔ تر جم :اے نہ یکا فی ےآ پکوالشدادرجھآپ کےفرمابردار ہیں 
انمانداروں ۔ے۔ 

(۵ )انتا ف راتا ہے انا لقن جاہیں الْکقار(سور:اترم:۹)۔ جم :اے ی 
کافروں ےبھاد کے _ 

عا ‏ یش اوس ھا ی تزۃ الا خیارنی ااصلو علی ای ا گار ےحوال ےکھت ہی ںکہ 
جار تی لیڈ بت سان ےا سا مزا دک او رات عالی ہیں کک ببہان ال 
فرمایاءالرسول وی رکیل فرمایا۔اس یس بہرا زمر ےکہ ہمارے نی سی کی سب 
سے عامضصفت ےس سے الد تالی ن ےآ پ کشر فف را یا ادنگ ران نیو ںکوآپ 
کےساتحدش ری ککیااود اتا ۓکرام کے دوس ےسیکوعطا ین فر می ۔ ددے الد 
تال یکا آ پکواپن غیب پ لع اود باخجرکرناادراپنے اسرارورموز ےآ پکو گا وکرنا۔ 
سو لی تعالی ن ےآ پکواس بارے میں اتنا بح وعطاغ مایا جسی اور کے جے می ھی سآ یا یم 
نل اورٹہم داد راک ا لکاانداز کر نے سے اص ہے ۔گو بارب الحزت ا لحقیق تکی 
رف اشھار:فر مار پا ےک یس ط رب ا ن ےآ چنا بکوعلوملدشی اور عطاۓ ر بامیرے 
موی ف رما اک ہآ پک شرف مقام ظا ہرہو ای ط رح ال ن ےآ پکوددودش ریف کے ساتھ 
رن اک یمعلوم ہوک ام سکی بارگا می شتضورعل السلا مکاکیامرتبرومتقام ہے۔ اس 
میس ایک اورانشارہگھی ہے اوردد یک شی رب تھا لی ن ےآپ پراپنے ایم ذالی (اللد کے 
ذ راد درودکچیا ‏ اک خمام اساء وصفات اس می شائل ہو جائ٠یں‏ ای ط رح ادڈدتقالی نے 


۴٦ 


آپ کے اس ا مکاذکرفرمایاجوس بکوعامءسب پشفمل اورجائمع ہے گگ و یافرما تا ےکہ 
اشدتعا لی اپنے نی پرددودچتیتاےءاپنے رسول پرددودیجییتتا ےء ینک ارک ریم ذات پ 
درود کیا ے اور بتک اد روف ورتعم پرصلو تکپمیتنا کوک صفات لفظا سی پر ای 
طرح ار ہولٹی ہیں جییے الیل کی صفات اح جلاات ( ال پر ار ہیں ۔تحفہالرصا کی 
ار تم (سحادت الدار بن یج اےءاردنل -)۱2١‏ 
علامہسی ود لی بفرادکی رجم ائڈدف مات ہیں وعبر بألنبی دون اسمە لعل 
خلاف الغالب ٹیحکایته تعا یٰ من انبیائەعلیہم السلام اشعار ما 
اختص بەه من مزیں الفحامةوالکرامة وعلو القدر (رہں‌العا یگ 
راگ 

مَوْلای صَلِوَسَيّمْ دَالگا ابنا عل عبِنبك بر اي تُلهمٍ 
لگن کات ناکیاے 
مو شس کشر رت 
مَاحُوْكَقَمِنَ التَمَآء وَخُو التَبْزوَقَذلایل مل کت لکاوزل کمونلا 
جو سو وی کی وَأغلد اتد تِيِه یگنت 
ُتثأَفَبْلمغلی مَنْغول راع را ۶اط کال مھرنیا 
تا اظلَعَةاللهُعَلَيهقَعِبلتغلی قَاِل وَتکَوْ تل لم لکن 
تو وه مَاإِز تَفْعهِن ألَازض مَعْتَاداَنَلَهُ . كرِیِفَةُوَمَكَانَةُ 


تبِيْنَةعِنْدَمَوْل كُمْیِيفَةفَالَیَهْمان فی عَقّومُ ۲ن ' رر 


سے جم 


ےم۲ۃ 


نبوت اللفت کے اعتبارے چنرہ سے پڑت تباء سے ما خوذ سے چس کے جنی قب رکے 
ہیں اوریی ا اختپاروتاویل می تحفیف ہوا تکیلے ھن نیس دی جا تا۔ الس صورت 

مس نبوت کے عیب ول ک ےکہاڈ تھا لی لن ےآ پ سأ ہام کو اپنن فیوب و اگیااوران 
کو بتاد ماک ہآ پ بل اس کے نی ہیں ۔ نی کے فی باتوٹرد ہے ہو ۓ لصیف مفعول ہوگا 
ارد ین وا لے( بصیف ہام فاصل مان چیزو لکی جن کے سا تاد تھی ن ےآپ 
سا مک بحو تفر مایا ہے اوران چو کی الا د ینان پرآپ سای مکش کیا 
ہے۔اس وف تی بروزن یل کیم نعل ہوا ۔اورخبوت اس لغفت کے اعاتہارے جو ایر 
جهرہ( ماد کے پڑت میں نو ڈے ما وذ ہوگا ننس کے تی ہیں :زی نکابلند ارح حصہ۔ 
قو اب خبوت کے( اصطلا تی )مخ بی ہوں گےکہ انتا یکا جناب می سآ پ لمکا 
رت آ پک شرافت ومنزات بلند ہے بدوفوں (خمررفعت ‏ وص فآپ ٹف کےےتن 
ںوت ای 

امام رافخب اصفھا لی لیت ہی سک ہن یکونی اس لن ےکہاجا نا ےکرددان باتو لک نجرد تا سے 
جن پیحقول لی لمکن ہوثی ہیں (مفردات) 

صلوقوسلام پڑ ھےکاعمد ایا ے 

درا تھا لی نے اپنے بندو ںکوش رد کال تھا لی ادراس کےفر شتآ پ لیم پردرود 
کیج ہی ںتوایماندارو ںکوتطا ب ف رما اک ددجھی دروداو رسلا مکھی اکم بی ۔ الا تکا 
مر پش ے اورائس مس خنطا بکی لازت حکگافت اورلای فلودو رک رن مت رے_ 
اتال فرما جا ے ایا ترھ انت ۱ 0 ا حَليْ دوس لم وا تس( ەرہ7اب: 


۴۸ۃ( 


)تر جمہ: اے ایمائن دلقم ددوونجچوان پپراورخوب سلا میجو۔ الڈدتالی اپنے ہنرو کو 
اےایماان دا ھک کر ندافر ما تا ہے۔ بہا با تک دیل ہ ےکہابما ندارالل تی کے 
دوست ڑل -اورتراے إعرورود پڑ ھن اورسلا مجیج کا مد ۱ ہے۔اود پیم اہی امت 
شم بیعلیرااصلا ‏ والسلام کے ساتھ خمائ ہے۔ 

علا مود لی بفرادیی (متوٹی ے ٢ات‏ )فرماتے ہیں و فی نداء المؤمنین بہذا 
الاسلوب من مغہم علیٰ امتغال الامر ما لا بخفی و الامر بالصلوۃو 
التسلیم من خواص ھذ٥الامةفلم‏ تؤمر امةغیره ا بالصلاۃو 
التسلیم علی نیڈ" (تخمیررہںالعا ی ۶ج ۲۱ص۵۷ ۳)۔ت جمہ:ایماندارو لکوائں 
طمر یق سے ند اک ناا نکورقبت د ینا ےا ر9 کو مانۓے کا جو شیروکییں ے۔اوردرودوسلام 
اعد ینااس امت کےتصوصیات شیل سے ہے۔اس امت کے سو ای اور ام کو اپنے 
ھی پردرودوسلام پڑ ه کاحھ میس د یاگیا۔ 

ںآ یتپ لکرتے لابو ۷كق صلی عل سنا تل وَسيّماوںکہا 
جاۓ تی الہ ےل کہا جاے یلو ںکباجاےاللَْة صَل عل سینا 
امام اب نام فرماتے ہی ںکہ یبہاں پبرامرکا یہ استعال ہواہے وگ رلوکیس چاہتا۔ اس 
وج سے امام ابوخطیفراورامام ما ف مر مات یں 29 یس اگ ایک مرج یھی درود پڑولیا 
جا ےتوآیت پیل ہوجا گا ہاں می بات الگ ےکہج ببھ یآ پک نا مار کآ ئۓے 
ہرصربردرود پڑھنا اچچ ال ہوگا(روضیۃ ااصاشین ) 


ا 


ا ںآ یت میں لا سلام میں تا اکر کے لے مصد کا استعا لیا میا ین صلوۃمیں 
مصدرکا کی استما لک اگ یا ینک لا ة ران اك لیک (اللدتعالی اورفذشتوں) 
ےم کدڑھی۔ اس لے مصدرسےم کی نکیاگیا۔ 

اور یق سلام وی سے جوشہدرمیں ھا دیاکیاےںپنی الم وں عف کر ولگ اھ 
عَلَيْكَأَيُا اك وَرَخيَةاللووَتَرَكَاتَةُ کہآپ پرلام ہو اے نی اور ال کی رحمت 
اوزاآانی نر رھ بی ذکمرک یکئی ہیں : لام ءرحمت اور برکت۔ 

ع الکن مورث (علوی فماتے ہیں وا رہناجابیےک نیک بل پردرودوسلام 


ہہ مه 


عوکر نے کے وجوب ک ےکن یس بای تک با لک اگل وبنیارے۔ 

اشتعالٰۂ :ا ے اِي الہ وَملَِتهيْضلَوَْ عَل الگ يِها الم آمَٹوا 
ضَلوْا عَلَيْ سیئاتس ما( ۳ه7اب7)۵۷جم: ے ںیک الٹداورائس کے 
فرخشت ‏ یریم سای پصلے ‏ کے ہیں ۔اے ایمان والقمبھی ان پرتپدرووسام 
تھچ ۔آ گا ور ہنا چا کال ںآ تک ہمیق تعالی نے صلو کی نسبت ابی ذات 
کر بی اوران فرشتو ںکی طرف خر ماکی سے اوریمسلرانو ںکوتضوری ےب لوت وسلام 
عون رن کا شع د یا ہے( بدارج اوت ) 

تی رمواصب الین یس ےکن (حضرت ) سایق پردرودیناایان‌ل وظینرے 
کہ وا کرای عز ٹل کےکوکی اس کے نل معاوم یں ہواکیوک لا ای نے آن 
ریش اپنے ذکرکاحگ د یاے۔الل بر کافرمان ے اذ کرو الله ذ گرا كَفنالا یت 
تم اکا بہت ذکرک اکر و)۔ادرددونشریفکاگم دیا۔الل بر تکاف ران ہے جَلُوَْا 


۵+ 


عَلَيْيِوَسَ موا تنا ہس تی راکوی وظیفیمعلوم ہیں ہوتاججس کے اس ای ان 
ہو۔یشنی درودشریف ایک اعلی وظیف ےجس کے بے شا رفضائل وف اد اورتمرات ہیں- 
ام تکوورودوسا مکا 7 مکیوں؟ 
انتا لی نے ائل ایمان چا ےتجن ہو باانس س بکوددودشری فاعم اس لف رما یاکرائل 
ایا نآپ پرددددش ری ف کے کے قاع ہیں ۔دہااس لیک مو رعلی امسلام نے ال 
اما نکوؤوٹی دی نوا ںکاتنم اداکرنا ضرو ری تھا۔ ان لک اذا کڈ لیے 
ہوئی۔دفسریی وج یکیتقورصرورعا سز جلہائل ایمان کے دروعاٹی باپ ڈیں۔آپ 
نے اٹل ایما نکی پت بین تر بی تفر مکی اوراس نعل لی سے انی سے دارشما وف مایا بل کہت 
زیاد شفقت ورمتر ائی۔ا 01 پ رض ر ورییا ہوا امت٦‏ پ وم پردروش رر لف 
تی ےکیونکہقا عدد ےک شاگرد پراستا دک یتحریف داجب ہے ۔ا یی بے پر ا پکاشگر 
ضرورگی- 

مان بارغ چان اززلا لم عیب نھالل جان ھراصد بٹرارشووخماست 
تر جمہ:چجان کے بارغ شی نی عیب کے پالی سے میرک جا نکوہترار بارنخوفرانصیب ہولی 
ے۔ 
تضوررورعالم سیل پردرود شی کے اشارہ ےکمابل ایھان پیر درک ہےکہدہ 
یک ش رک یک ہیں انل ال ین ن کی سی کامتی بنا گیا ران کےکشیل نیس 
ال الام مک خطا بنصیب ہوا نیز ددودشرلیف سے ائل ایا نک یقن شفاع تکی ادا جگی 
بھی ہوگی اس لی ےک درودشری فگو پاشفاع تکائ٢ن(قمت‏ ہے ۔اب دناٹش جبنین 


۵۱ 


اد اکر میں گ بل قیا مت میں ا سکا شر( پیل ) حاص لکرمسں کے 

بذاع تی چعاکآری ری اگ رنشلی خدسارک ری 
تر جمہ:جننی گی لا گے اتا مان پا ئوگے_ گر مفلس ہو شرمسا رہ گے۔ 
الا آيھَا لخ ان صلَوا سوا عل الۂضطفی پش قب وَسم اع 
ا _َصَلَاهَالْيَامّین مل مُنینءن الأَخْوالِ یَوم اليباء 
ترجہ :اے وا تو الو 2 وسلام پڑھو مکی علیہ السلام پر ہروقت اور ہرکھڑرکی۔ اس لیے 
کہ پانی شی کا درودخ ام تک ہولناکیوں سےشجات بخشا سے( فیپ الین ء یا رہ ۲٢‏ 
|٦ش٦ص۳۸٦)‏ 


چ ۱ 


صلّ الله قل خبِیبہ ثُحميِ وگ لاہ وَتايِہِوَسَلَمْ 

اش ےصلوڈوسلام سے یی در واست گے کی اعت 

حم پر نی لفن کے بیےےشا رق اوراحسانات ہیں ۔ کم ہرگنرکھا حقہ ا نکا بد لیس دے 
کت ۔اپپر این موق واصما نکی دای کے لے پ سی لوت وسلام پڑ نے ام 
ید یاکاے۔ادرہ م کت الله صَلِ وَسَيّم قل تحت( ا٣ٌّاے‏ 
انڈ شی پرددودادرسلا ح حا لامک اس کے ہیا پھر خود چد ببددودن کر تے ہیں۔ 
این کے تعکقیش نبرا ںککعت ہیں و ان حق الامتغال ان نقول صلیناعلٰ 
النبی وسلمنانما الکتة فی ذلك ‏ قلت فيە نکتةشریفة کأُننا نقول 
یاربنا امرتنابالصلوۃعليهە و لیس ف وسعنا ان نصلی صلوۃتلیق 
جنابەلانالانقدر قد رما انت عالم بقدرہٹا؟فانت تقدر ان‌تصلىی 


۵۳ 


عليه صلوۃڈتلیق بجداآبہ(عاشیبراں گ۸ کالٹرح‌ ا6 )- 

اریم مان کا سی بر تھا اکم می کچ ہم نے بی پرددددپڑھااودکحم نے سلاممجیا تو اس 
می سک اککتہ ہے( م ال کی بارگاہ یٹ سلا مین کے لع کر تے ہیں ۔ می سکنانہوں 
اس بس ایک شریف تد ےگو اکم سکتے ہیں اے ہما رے ر بآ نے“ می ںآ پ لالم 
پردرودپڑ ےکا نھد یاے۔اورہماری طاقت اورقدرت م۲ ئن پیک ہم جنا بک شان 
کے لال درو یں اس ل ےک جھ نیس طاقت رت ا نکی شان کے مطا بی توب یآپ 
سڈ کی تدروشا نکوجاہتا سے ۔توتوپی طافت رکتتاے بیکتد درو دی ان پرجھآپ 
سی کی جناب کے اکن ہو(ای لیے بم اللک بارگا وٹ ع! کرت ہیں الگ 
صلِ و أّخ عمل تی لآ فی شاب ححتي)۔ 

ع :یف شریف می اس با تک طرف اشھار+ ےکقم ال بات سے عاجز ہکم رشان 
ونام کے مطا بن می رب یٹیمک سو لہذ اقم اتا لی عزوٹل سے بی درخواس تکرو روہ 
آپ الیم پہمآپ ایم کیشان کے مطا لی صصلوہورمت کڑھب اتب مامت 
بھی معلوم ہوئ یک جن اوڈی زوشل سےآخخضر ت ای پردرودجی ےکی درشواس تکرتا 
ہے درتقیقت و وآ پ سی کی اھچا ئی در جک ینیم الا ا ےکیونکہ ال ن ےآ پ ‏ یہ 
یت کے ایم سے اپنے کا ظہارکیا سے (اجکام القران. ع ٣ض‏ ۳۹۸) 

امام اایمنصورش مات ری حر نر یکھت ں‌لہا امروابالصلاة عليەوش الغایة 
من الفداءعليهلم یر ثی وسعھم وطاقۃتہم القیام بغایةما امروابە 
من الغناءعليه ۔امرھم ان‌یکلوا ذلك ا ی اللەیفوضوا الیەوان 


۵۳ 


یسالوەلیتول ذلك هو دونہم لہالم یر ی وسعھم القیام بغایة 
الداءعلیەوالالیس فی ظاھر الایةسوال الرب ان یصلی هو عليه 
ولکن فیہا الامر ان‌صلوا انتم عليه ۔واللهاعلج (٦دیلات‏ اقرانء تال 
۸۱)۔ 

ام یش ودک کہا ےکہ ضأنیث شی خےی(یئش ن ےج پرصلا ہشیپ کان ینس 
کول پنر ے ےکا مر راس سے اص ہے بلک ہراس ال سوا لکن چا ےکآ پ ٹہ 
پرصلو: نازل فرماے_لیں اس وقت تا صلا ق یت دالا الڈدتتعالی ہوگا اور بن ےکوصلوۃ 
کین وا اکہنا میا ہوگااورصلے کی نسبت بن ےکی طرف جح اس لے ہوک یک دوارل تی 
ےآپ پرصلو یت کا سوا لکرر پاے۔صل الله عليه وعلیٰ وآلە وصحبه 
وسلم (عادتالدارٍی) 

خلاصہ یہہ واکہائل ایمان و لوق وسلام بطور بی تفہ بارگادرسالت میں شا ن اص 
سین کے مطا نی کچ سکتے ۔اس لئ یلیم دئ یگ یکم اٹل این انی بارگادٹش 
عف کم یں اے الیل این نیک ریم فی پروەدرو ڈگ جوانع کے شان رفعت کے ران 
ہو۔ اور سر ال تھی ایم خودط راتا ہ کہا نے ات یج کے لف رمایا ول 
لی لو (سورۃ انل :۵۹)۔ت جم کہ دوک رسب تریس ال تا لی کے لے ہیں۔ ای 
ہیما ری مآپ پاددھل یں 

یریم صلٹفاہا نے این لے اذ ان کے بد دعاء وسیا کن کا مد پااوردروداورسلام 
پڑ نکی ترغیب اورفضیلت بیا نکی ےچس رام تکائل ہے۔اورامی طر ںآپ 


۵۳ 
ٹف نے یک مو پر جب تفر تگھرشی اڈ عنہ ن ےعمرہکمر نے کے لے احجازت 
طل بکیت وپ نےفرا بای ابق دعائیل ثر کی ککرنا۔معلوم ہواکہ بڑ ےکیھوٹوں 

سے دھا کے سن کہ کت یں کو ای طر تچھوئے ہڑوں سے بدررچ راو گی دعاکی درخ است 

کر سکتے ہیں۔ 
لیر متخ فان 
ملاس ای 

علام یحبرالد رین لیتقوب یرد زآبادیی (متو فی اھ ) کت میں فی السلام علی 
البی ٹڈ الہشھور من اقوال المفسرین ان التسلیم ث الایةھوما 

یقال فی التشھں السلام علیك!یہا النبی ور مة الله وہر کاتہ(اسلات 
ولپٹر نیاصلا عل خی رالبشرب ١٠۱)۔‏ نی صلف پرسلا مکی کے بارہ می مفس ری نکی 
اقوال میس سے شبورقول ےک لیم ل(سلا ینا )ا سآ یت میس دی ہے جوش ہی سکہا 

جا نا : مسلام وآپ پر اے ناِی اودالرکی رحمت اور کی برکیں۔ 

اون یکم ٹا پرسلا من کر نے کےسلسلہ مس ین وج ہبیا نک یکئی ہیں : 

(۱) آپ ٹا مکی ذات مقر ادرآپ کے رفقاء پرسامتی ہو۔ ائ سم یکواگرمراولیا 
جا ےےتوساا مت مصررضو رگ کے للاذادرلل‌اذق- 

( ۳ سلا مکا مت وکا اکسلا مآ پک تفاظت اوررعایہت رےسیظلتل 
ہے۔ایسعفی کے مطا لق لام سے رادذات پاریی ہوک ینک سلام الڈ ای کے اسمار 
طاسان سے۔ 


۵ھ 


(۳)سلام اق کے می میں سمل ہے۔اس وق تعن اطاععت دغ ماخ ردارکی کے 
ہوگے۔آ یت|/ مشاہرے۔ 
اشتعال ف٣‏ سے فلا وریتلا يؤمنون عَقی مُتَذْمَوْك عم مَمَبَیتہۂ تم 
ا تا اَنفهي سخ عَرَمَّا شا قَصيت وَ يسلُو لق (حرضاء:۵١(۔‏ 
تجمہ: سٹو بآپ کےر بک اکم ددااس وش ت کک مس مان نہہولں گے ج بت کک 
پکواپن جنگٹڑوں یس حاکم نہ یناد یی ۔ پل رآپ کےعھم کے مطا بن اپنے ولوں می ںکوئی 
خیال لا میں اورصدق دلل ےل ارشا وک ں(الشفاء) 

ال صَلِوَسلّم اك علبَيٍ 
سلا مکی نسبت ال تال یی طرف شک رن ےکی حست 
سلا مکی نسبت ال رکی طرف کر نے می سکیا حکرت سے؟ صلو کی اضافت (ضبت )الد 
تل شانہاورفرشتو ںکی طر کی ہے اورسلا مکی اضاف تی کی ھا لامک ابل اما نحکوصلو 
وسلام دولو کا اعم ہوا۔ ا کا جواب ا رر 7 یا جاسکنا ےک اففاسلام دومعنوں بشقتل 
ہے:(ا) لام تی( دعا)اور(٣)‏ دوس اسلام انقیاد( جک نا رف رما بردار کر نا)۔ 
ایماندارو ںگوا کا اعم اس لے ہواکران سے ا کا صدورچ ہے۔ ال تھالی اوراں کے 
فرشتوں کے لے مہاتقیادجا میں ۔اپذرااس و مکودورکر نے کے لئے اہ سکی رف 
اضاف کی سکیاگئی(التول البرلج ءالرراحضو ر٦ش۱٤)‏ 
السلام ال تھاٹی کے نا موں میں سے ایک نام ہے( سسلاصتی عطافمانے ول )ینعی 


میس الڈدتھا لی اپنے بندوں پرسلامقی ناز لف ماما ے-۔ 


ھ٦‎ 


اش تھا فرماج ے مار شی جبَا داي اضکلفی (سورل:۵۹)۔ جم :سام 
ازلہواشررے ہرز یدوبندول پ رش نکوائد نے من لیا۔ 

اشتھالی فر اتا لاہ علی نوج العلہينی( سر اصاات:۹ء)۔7 جم : 
چہانوں ہیں ٹوب علی السلام پرسلاقی ٭- 

انتھاٹی فربا تا سے وَمس لاہ لی المو می( سر7 الصافات:۱۸۱)۔ت جم :اورسلام 
ہورسولوںل پہ- 

اتال ف راتا لاہ صلی ات ایج (سورۃااصافات :۱۸۱)۔تر جج :ابر ایم علیہ 
الام پرسلام ہ۔ 

تھا فرما جا ہے مم لاگ لی اٹ این (سور7ااصافات:۰٭ ۱۳)۔ تر جمہ: امیا علیہ 
العلام پرسلائقی ہو۔ 

اش تھا فرماج ے مسلائ وشن رٹ7 نج (سرہیش:۵۸) جم مہربان 

ر بکاسلا مکہنا۔ 

اوراتھای جنتکودارا لا ٢٤ے‏ لَهُم داز المّلوٍ عِنْتَرَیٍہم وَهُوَوَلِقْنُمْ 
یا نُا عون (سورۃالانعام:ے ٣۱)۔تر‏ جم : ان کے لے امت یکاگھصرے ان کے 
رب کے نزدک -۔اورو یا لکاووست ہے ان یک اتما 7 وجرے چو د ہکرت _ 
اتال ف راتا وَالل هی موا لی دار ال وی صن کال م۶ۃ اط 


4 


مُمَتقیہ (سورولأص:۲۵)۔تر جم :ا ودرا رسلا متی کےگھ کی طرف بلا تا ے ا وزج سکو 


2 


اتا ےرا ٹن مکی طرف راجنمائی فرمادتاے۔ 


ے۵ 


فرش وت ین ان زوا ہے نت داش وت ہے میں کے سلامر 
غلیگھ تم پرسلام ہو۔ 

پروں اورد رت کا آ پکوسلا مکنا 

حخرت چابررشی الڈرعنغر ماتے ہی ںکمیش نے رسحول ادص مکوپیفرماتے سنا ےل 
جس رات بھی و ک اگ یتو میں جس درشت اور یھ رگ رتاد وا انم عَلَي كيا 
رش نول الو( آپ پرسلام ہواے الل کےرسول ) ہتا۔ 

اورعد یٹ یی این مرۃ شف مس ےک ہم رسول الس لی مکی مسعیت میں بل ر ہے 
تے۔کم نے ایک جچلہ ڑا وڈالا حور ن یکر مم سای نواستراحت ہو گے ۔ ایک 
درخت ز نک چرتے ہو ےآ یا اور پا پرسا لکن ہوگیا۔ چرتھو کی د بر کے بعد 
ایق دائوں چلاگمیا۔ جب رسول اش لف بیارار ہو ئۓےتو بس نے درخن تکا لور اما را 
عم کیا ت ھپ سٹِبقم نے فر مایا یایمادرخخت تھا چس نے اتی سے بجھ پرسلا من 
کر کی اجاز تطل بکی۔اجازت کیا( قو ال نے ایباکیا)- 

نت جا مرن رہ زشھی ال عفر دوایت ے ےرسول ال الیم 2 ماق 
بسک یچ ایم عَل لیا نْحغث لاعف الات (جان 7 ذیاہجاب 

اناتب باب علامات نبوت )تجح : مکیرشیل ایل پھر سے جو بے بعشتکی راتوں میں سلام 
کیاکرتا تھا۔ یل اسے ا بکھی با ضا ہوں۔ 

خر ت لی این الی طااب رش الشرعن سے ددایت ہے سف مات ہیں می س کر مہیس نی 
رن پت ےم راوقا رو طرا فک طرف اج پاڈاد پش رآپ ول 


۵۸ 
کےسات ےآ الم لان عَلَيت با مل ادڈو (اےالل کےرسول سی آپ پر 
لام ہو )کتا(جا مم 7 زى) 
درخل اورپچھرو ںکا آ پکوسلا مک نا پک نھوت کے چا ہون ےکی دی لی ۔ پچ رآ پکو 
صحا یی سلامکر تے تے۔نماز می لبھی اور با بھی اور قیام تک کآ پ تن پرائل 
ایمان لام یج رڈیں گے_ 

مَوْلَایَ حَلِ وَسَلِمْ داڑا ابا مَل عَبِیِكک ّبر ا قلَي فُلْهم 
یلست لیت وسلام شی سکرو 
اتال فرا تا تا علي ُا کن لت ان پر دوہ پنحواوران نب 
سلام کیچ )۔ امام اوس نکی داحدی پت ہیں یں رك را صلی عکی کل 
اےالڈشحھ ہی برع تتج۔ 
اَلمَلَام عَلَيْكَایُنا الین (نفیروسا ءەج ۴۸۱۷۳ )آپ پ لام ہو اے ہیا۔ 
ام جلال ال نکی رح الا سآ ی تکای رم فرماتوائتاالَزن آمَنو ا صَلُوْا 
تم و ںکہواے الشدضرت سی پردحمت اورسلامتی ناز ل فرما۔ 
علا مہقاضشحی ناصرالد بین با دکی رحمنۃ الڈ تما لی ا لآ یت کے مات فرماتے ڈیں وَسلُمُوْا 
قَسے و فُولُوا الکسلاک عَلَيک اکا الگ (تخی بیغادںءج ۲٣ص۴۹‏ )کن مکپوسلام 
ہوآپ پراے می سای ۔ یا عر پڑمنچاے الو صَلٍ وَسَِّخ وتَارِك 
َلىسَيْيِتا یں اےالٹددرودوسلام اورریم تک ہما رے سر دارم سك یر۔ 


۹ھ 


سب ےا 00 جے 

ال یل ذقول بی ںکیکون سادرودسب سے انل ے(جزب اقلرب ) 

جودرودکا صی آتحضرتسٹ ایق با صا رشی اہم سےمنقول ہے اس کے تل بہرمشابہ 
مناس بکھ کسی دوسرےکابنایاہوانئیں ہوسا ہے۔اگر چردوکھی جانزوقھ اب ہو(تخیر 
مواہب الین )۔درودنقو لک ال درودخیرمنقو لکہیں ہوکا_ 

تی عبدائن یرٹ وتعلوبی رجم ادرک ہی سک درودشریف کے ددالغاظ جواحاديیٹ مل 
آۓ بی ںکوکی شن کی ےکا نکاپنڑ ھنااس اعتپار کرد ولفظا ی صف کی ز بان 
مارک سے کے ہوۓ ہیں انل سے ۔ٹجن علماث ےکا ےک تام درودوں می ال وہ 
درودے جو التحیأت(تعححد کے بعدنماز بس پپڑی جائی ےاوروہدرودج عد یل 
می فص سکیدتوں کےساق کی ےچ س کا ذک رکیاجا گا ہ رای کتصمول مقصدر کے لے 
کاٹیّے۔ 

سب سے مشبوربردردشریف ہے اللهة صلی علی تحتَي وق یآلِ مب کم 
صَلَيْےَ قل برا هِيم وق لآلِ ابر هِیۃ وَبَارِك قل می وگ آلِ ضّيٍ 
گَمَا بَا رکشل ابا هِیم وَع'یٰ آل برا هِيۃ اك کیل تچیل۔ 

علا گی جوعلا ئے شا ہے ہیں فرماتے ہیں ینس التا ت کے بعروا نے ورودو 

شریف چنب رخداصإٹ فا پر بڑ تھے بے شنک اس نے اس ط راہ پردردد یڑ ھا جیما ایا 
یا سے اور یقاس نے دون اب حاصم لکرلیا جس کااس درودشریف پروعدہگیاگیا 
سے۔ اگوی 12 ھا 2 کی رسول ان ی٥ی‏ یلعا ےلم بن رین درود عو ںکاتو 


٠ 


دو کم ےنمازدانےدرودشریف پڑحھدینے سے بریی ہوسکتاے۔ 

جھوے وورشریف 

اما نو دکی رم ال علیفر مات ہیں کرددود پٹ ھن دا لن کو چا ےکر اعاد ی کل 
کیفیا تئخصموص نئآ کی ہیں سب کو کرے اور پڑ تھے نکتمام الفاظ مان رداور جملہ 
صھیخہاۓ درودکا نو اب حاصل ہواوردہ جوم بے 


۔ 


هي صَل عل ئحِيِعَبِيك ور هك الئین الأفي و لآلِ ٤ٍَ‏ 
آزوَا جِد أَمَيَاتِ الَمُوْمِيِبتَ٥َكُزِلَيوَاَمْل/َ‏ َو کا عَلَيْكََل 
برا هِيْمَ وَکَ لآلِبْرَاه جن یٰ الْعالَہزَْ(ِلَّك کید فی اللْهْمٌ 
برک عَلی تحتمَيِعَبْيِكَوَرسُوَلِك القیی الا وَءَر یلوج 
أقَيَّاتِ الَمُوْمِيٍثىَوَكُزِييْهَوَاَمْل؟ َيْيِِ کَمَا بَا رک عَل(ِبْرَامِیْم 

ان كت ڈیڈ وکیا سہیھہ سی 
یف فی وت طٰىلَهُعَنَذمَغْلَوْمَا تِك وَمنَادِقَمَاتِكَوَرِمَا 
تَفْك وَزِنَةَعَزِضْك اَفْضل صَلوقٌوَآ تَمَلَيا وکیا لجا ٤‏ کرک 

الا کرت وَحَقَلَعَن ذكٌرَك الَْافلْنَ وَسَلْم تَسيْقا كُزَالِكَوَعَلَيتَا 
مم ۔(جزب القلو بس ۲۹۲ مط و عترالرر حضوضش۰٦)‏ 

ا کمال الین من جا می ر ارات می ںک تما مکیفیات جوعد یٹ مس واردیی 
دواس درودی موجودیں الله َلِاَبَنَ بنا افص صَلَوَاتِكَ عَلی سای 
عَيَلكَوَنَید تَيِِكَوَرَسُوْلِك تحمَرِوَآیه وَسَلِم تَسيِ وَزِهْهَتَغِرِیِفًا 


ےے۔ 


وَتَکرِئتا وَآترلَهُ المَنلَةالمْقَوب عِثتَك یَوم الَقِيمَةِ 

علامہان تیم جوز ,یی زضعلما ۓ شا فعہ کے ہی ںک ہبتر یہ سے جتے لف آۓ ہیں 
جراج راہ رای ککوخاصس وفت یں پڑ ھے تا کیج نزاففوں سے وہعد بی ثآلی ےس بکا 
عائل ہوجاۓ اورس بکویگچاک ردنا بیجم وگ صصورت کے اعاتبار سے ایک نے درودکوا اد 
کر ےکےکزم ہے جوسی حدبیث می وار ڈنیل ءا (جزب انلوب فاری بش ۲۴۹۲ء جزب 
نقلوب اردوبش ۸ے ٣)۔‏ ریہ ےراس کے بحدسلا چیپ ھ ےکیونک یق ران مجید میں 
صلا وسلام دونو ںکا عم دیاے 

درودءدعا اور کی اضافیکی لک نا چاہے 

نخرت براعابکن عاز ب شی ای عضرنے حدبیٹ بیال نکی ۔اننہوی تن کہ اکہرسول اید 
سلٹفلم نے میک سےف رما اج تنم استزپ ررقم ایا وضوکر وج نماز کے لئ وضوکرتے 
ہوہ رم دا می ںکروٹ پر لیٹ چاوا ورک لآ لیت تَفي ی ايك وَقوضْثُ 
آثرالَيَك وَالجأ هر ی الَيِكَرَمبةُوَرَعبَلَيكَلَامَلَمَأوَلَمَجا 
ِنك ال اِلَْكَامَنٹ يِوِتَابِك الَيِی اْرلكَ َبَِيِثِك الَزِیاَرِسَلّت. 
تج :اےالیدشیل نے ا قحان تی رے کپ ردکردگی ادر مس اپنامحاملہ تھے سونپ د یا اور 
جس نے ابی بپیشت ت برک ناد دے دکی مھد سے ڈرتے ہو او رتب بی طرف رخبت 
کرت ہوئے۔ نوک وکا نا سے اور گی نبا تکی ملس ۓگ رت رکی بی طرف ۔ میں تی 
ا کاب پرایمائن لا یا سکوٹونے ناز لف مایا ادرتیرے اس نیا پرامان لا باج سکڑو نے 


5و٠٦‎ 


کیا کا نک شک کل الؤِظرَة فَاجْعَلهْمأَِرَمَا تَقُوْلَقَعُلّٹ2ُ 


- 
اتل کِرَهُق وَِرَسُوْلِك الَزِی ازسَلت قَال لا وَِتَيك الَزِیاَزسَلّك. 
تج :یں اگرقم مرح ا ؤتوفطرت پرمرد گے اوران الن دعا نیما تکو اخ ری سکہنا۔ یں 
ٹیس لن کہا اورمیس ال نککرا تکوا لع رح اوک نے والتھااور یل اس ررسول پپرایمان لایا 
ج سکیونےبھیا۔ت وآ پ نے فر ما ایس دا یکہوی اس نیا پرامان لا اج سکوتونے 
جیا( ہار یکتماب ال دعوات۲۳۱۱) 

اس دعاشیل رسول اش س الم نے حضرت برا امن عازب یی الع تک ورس وِِْكَ 
التڑا یو و ا 
یں دی۔ مت الذی ازصلتک(اہرترےا نی پرایمان لا یا” سکتدنے 
جیا ) پڑ یلیم دبی۔ ا سکامطلب رر ےک جودرودوسلام اوردعائول کرات 
نتاۓ گے یں یں بی پڑ نا چا پے اور الا کا اضافرکرنامناسبکئیل سے بل دروداور 
اذکاروفیرہمیں مانو روننقول الفاظ پراکننقاء یکر نالازم ہے۔ 

دعا سی الفاظا جوعد بیث شی وارد یں اع کے پڑ کا ما مک نا چان ۔حافظط اہ نت علیہ 
ارح نکر ایا الفاظ الاذکار توقیفیة ثی تعیین اللفظ و تقدیر الثغواب 
فریما کان ث اللفظ سڑ لیس ف الآخرولو کان یرادفە ‏ الظاھر( م7 
الما کٹ المناسک بی ۱۴۳ گوال ہنا بای ء نا بش ۳۵۸)۔ اذکار کے النفا ین لف اور 
اب کے پانے میں آوٹیفی (ش بیعت کے مرک رد ہیں ۔ بسا ا وقات(دھا یہ )لفظ شش 
راز ہوتا ہے جو اہ کی تک دوسرے الفاظ یسکیس ہوا اکر چہ بظاع را سکا مع ہو۔ 
نجزفرماۓے یں الفاظ الاذکار توقیفیة و لھا خصائص و اسرار لایں‌خلھا 


٣ 


القیاس۔ فتجب المحافظة علی اللفظ الذی وردت به(۴‌ةالا لکن 
ناسک بس ۱۴۴ ءہموال ہن لباریء جا اج ١٣۱)۔‏ اذکار کے الا ات فی (ش ریعت مقر 
ردپ یں اوران کے لے خنصائش وا ار ہیں ۔ ان میں تام سکوکوئی یں ہے۔ ای 
لئے( دعاواذکار کے )انز کی مفاخظت ضر ری ے جوا بارے بی واردہواے_ 
اس لے دواذکاراوردھا یں جوق رآن وحد یث می ہیں انی سے استنفا دو والتجا کر نا جا ۓے 
اوراپئیطرف سے الفاظک بڑ ھااورملاککیں پڑھنا ات ےک جو اید اوراس کے رسول نے 
ا گی الفاظوں ے پ راکیا 
باے۔ 
ما مج ب نج جمزری شافتی (متونی ۸۳۳ن )نےتصسن ائصین میں دعا کے داب بالیس 
بیان کے ہیں۔الن شس سے ادب نم۲۵ کت ژل و اختیار الادعیة الصحیحة 
الباثورۃعن الس َلفآنەلجھ بیترت حا جة ا یٰ غیر5(ص۵۹)۔ یکم 
سی کی (بتائی ہوئ ) دھا کی سکرن جو سندوں سے یلیہ سے مدکی ہی ںکیوکنہ 
آپ نے ال(کے بارے )می شی دوسر کی طرف ضرور تی ں پچ وڑی ( آپ نے 
یپ ھا ات ان 

ات رِلثَلی ط1 
می منتقول ومسفون درودوسلام کے پڑ سے کاجاز 
نس لوک درودابراڈیم پڑ ھن پرز یادوزورد نے ہی ںکیوکمہا سک فضیلت ز یاددد ےک نماز 
جس پڑھاجا تا ےا کی فضیات میس توکوگی شی کی ںگرماز ے باہ رام یڑ ھاجا ن ےتوھ 


افزا 
ناسل سے دک ین یں سلا مکا ذکی سک ا کیا سے نما زیں‌لوورورے یندم سلام 
کا ذک رآ گیا ےاہدانماز سے خارع پڑ ےو سلا مک عمیضہ لاک پڑ تو بچمردرست ہے۔ 
تام مو تین ضر ناورم وش نآ پ ٹیل کے نام نا یا کر ھی کے س ات درود 
ابر ھی نکی ہیں اورنہ پڑت بہیں بک اخقمار کے رص الله عليه وآله 
و سلحر لیت ہیں ۔معلوم ہو اک جوکھی درودوسلام کے صینے پڑ ھے جا میں دو از ہیں- 
اس لک درودوسلام کےنیمنقول ومسنون صینے پڑ نی ئک ہیں یی کٹ ی ارڈ علیٰ 
عبِيرِہ تتَيِِهوَاَسحَارِدوَبَارَكَو مَلَم ‏ صَلَالهعَليْووَکل وَآیہ 
اتا يِہِوَتَارَكَوَمَلَم 
بدا محرت دیلوئی رح الف مات ہیں ددرکلا ماک مابھمأدت ہاگن (حضرت ) علیہ 
ا سلم بمیارد اق امت واوی علی الا والسلام ون لی ال لی ددالہ دس درغایت امیاز 
وسلامت دا شدواست(برارج لوت ء ج اش )۳۳٣‏ ترجہ :اک ڑ ھیوں کلام یں 
تضور یلیم کے نام کے سماتح علیہ السلام بہت دا تع ےمان اولی مل الو ۃوالسلام 
ےاویی اعلی و مکا اک زاب تشظم اور درست وسلامت وا ہواے۔ 
خیالی ردارب لوت فار یز ٭ل ضَلٌّ اللةُعَلَههِوَِهَوَمَلَّم ہرے۔ 
اورمدارجالضوت اردوشش لی اَل وَملَ ہے۔افظ یم کادکیں ے۔ 
وکنا ےک کا بی یو 
اث و الس لاہ عَلَييك رش ول اللہ ا اس درودغیر یتقو لکوبزرگان دربن 
بطوروظیفہ پڑت ر ہے ہیں ۔ چناغ-ضرت خواجرسیدیلی ہعدائی رم الڈدتاٹی علی( موی 


: )اوراوأ یمم سککھعت ہیں‎ “٦ 
الصًلوهُوَالمَلَام عَلَيْكَيَ میق‎ 
دروراورسلا مآپ پراے ما رےےسردار‎ 
اَلصَّلوٰهُوَالمَلَامُ عَلَيْكَتَمیٔری‎ 
دروراورسلا مآپ پراے ہما رےےمردار‎ 
ألصًلوهُوَالمَلَام عَلَيْكَيَ میق‎ 
دروراورسلا مآپ پراے ممارسےےمردار‎ 
اَلصًلوهُوَالمَلَام عَلَيْكَيَ میق‎ 
دروراورسلا مآپ پراے بمارےےمردار‎ 
الصًلوهٌوَالسَلَامُ عَلَيْكََامَیْرِی‎ 
دروراورسلا مآپ پراے ہما رسےےمردار‎ 
اَلصًلوهُوَالمَلَامُ عَلَيْكََامَیْرِیق‎ 
دروراورسلا مآپ پر اے ہما رےےسردار‎ 
اَلصًلوهوَالسلَامُ عَلَيْكَيَامَیْيِی‎ 
دروراورسلا مآپ پر اے ہما رےےسردار‎ 
اَلعّلوهُوَالمَلَامْ عَلَيَكَيَ می‎ 
دروراورسلا مآپ پر اے ہما رےےسردار‎ 
اَلٌلوهوَالمَلَام عَلَْكََمَیْنِی‎ 


درورا درا مآپ پراے مارےبردار 


1۵ 


َأَرسُول الله 

اےالل کےرسول صلی 

يَاَحَيِيب الله 

اے اش کےیوب ایم 

ایل لاہ 

اے الد کے دوست اہم 

يَاتِق اللہ 

اص الله 

اے ال کے بے ہوئے صسلٹ یم 
َاكَيْرَحَلَق الله 

اے ال کی خانقت میں سب سے بت سل اہم 
َامَن احْکَارَۃَاللَةُ 

اےالل کےانخختیار کے ہو ۓ یہہ 
يَأَمَن اَزْمَلَهُاللة 

اے اش کے کی ہو ۓ سام 
يَأَمَِنْرَيَتَهَاللَهُ 


اے اد کے ز بینت دی ہو ے ایم 


٦ 


ألصّلوهُوَالمَلَام عَلَيْكَيَامیْيِی 
دروداورسلا مآپ پر اے ہما رےےسردار 
أَلمٌلوهُوَالكَنَمْ عَلَيْكَيَامَيْری 
دروداورسلا مآپ پراے بمارےےردار 
الصّلوهُوَالمَلَامُ عَلَيْكَيَ میق 
دروداورسلا مآپ پر اے بمارےےبردار 
لصو وَالمَلَامُ عَلَيْكَيَامَیْری 
درورا ورسلا مآپ پراے ہما رےےردار 
ألصّلوهٌوَالمَلَام عَلَيْكَيَامیْيِی 
دروداورسلا مآپ پر اے بمارےےردار 
ألصٌلووَالمَلَامْ عَلَيْكَيَامَیْری 
دروداورسلا مآپ پراے بمارےےردار 
اَلّلوهُوَالمَلَامْ عَلَيكَيَ می 
دروراورسلا مآپ پر اے بمارےےردار 
ألصٌلوهوَالمَلَام عَلَيْكَيَمَيْرِی 
دروداورسلا مآپ پراے بمارےےردار 
ألصّلوهوَالمَلام عَلَيْكَيَمَيْرِی 


درورا ورسلا مآ پ پر اے مارےےردار 


صَلوۃٌاللوتَعَال وَمَايِکتہَوَاَنْبيَآيهِ 


0 2 
مھ سے 


اےالیلد کے برک کے ہو سأ ینم 
امن ره 

اےالل کےمزز کے ہو ےسا ینم 
اے اد مت د بے ہو یم 
اےرسولوں کےسردارصا اہم 
َاِمَام المَکِيْنَ 

اے پرییزگاروں کے امام سام 
اےغپیوں کٹ مر نے وا لے سلفم 
اےگنہگا رو لکی شفاعح تک نے وا لے 
اےوولوں چہالوں اکسلئے رحمت الین 
َارمُوْلَرَب الْعلبنی 

اےدونوں چہالوں کے پروردگا رےے 
کی ہے سن 


َ 


٦ے‎ 


سِک حم وَعَل الہ وَاَخَابِة آنَحِيِن عَلَيْهِوَعَلَْہم المَلام وَرَحَةاللہِ 

الہ یکین ہہووں ال ننمالی کی ا زا کے شو ں۳ زور میں اورسلز نلیاوز 
نس کے ا ھا وا نےےفرشتوں اورسبخلوذات 1 ہعار ےس ردار ضر تمحر لم پرا ور پ 
کیل اودرقام اصحاب پآ تحضرت پراورالن سب پر سلام اور٣ل‏ کی ریس اور ری نازل 
ہوں (اورا رنہ بش ۹۳۲)(تفیرروں البیان نے كص۹ك۲) 

جخرت عا ہت یشمدرامدادالیڈد ہا گی رح الدتھالی نیکم ایال کی زار ت کال بقہ بیان 
کر تے ہے ہی ںکییہشا کی نماز کے بحلد ایی پا کی سے ن ےکپٹرے با نکر نوہ 
لاک٠‏ ادب سے بد بینیمنود ہکی طط رف ٹک کے بے اور خداکی درا ویٹش جمال مبارک 
آحضرت سای مکی ز ارت حاصل ہون ےکی د اکمرے اورد لکوقھام خحیالات سے خالی 
کر کےا تحضرت ای مکی تصورتکا سشییدشغا فکپپڑے اور یکڑ بی اورمنور رہ کے 
ات نو رکرے۔ اور ال لق و الم لان عَلَ]ك تَا ررش ول الیل داگیں اور 
امام عَلَياك تا تن ادل کی ا میں اہ اَلصَلوْفوَالمَلَام عَلَيْكَ 
یا یب اللہ کیاضربادل پرلگاے۔اورمتو ات رج قدرہو کے درووشریف پڑھے_ 
اس کے بعدطاق عددیی جس قدرہو کے الله صَلِ لی ثحب کَمَا اَمَزتَتَا ان 
صن عَلية الله صلِ عل نی ما خوَأخلۂ اَم صَلِ عل مبَيِ 
كَمَا تيث وَتزشا5ء بڑے۔ 

اورسوتے وقت اکینس بارسور؟ نھ یڑ وک رآ پ ایل کے بتسال مار ککا تو رکرے اور 
درووشریف پڑ ھت وشتسرقل بکی طرف اور من قبل کی طرف دامنیکروٹ سصسو نے اور 
الصلوٰۃوالسلام عليیك یارسول اللہ پڑ ھکر دا فی تھی پر مکرےاوسرے 


1۸ 


نچ کوک رسوئے۔ پیک شب بحعہ یادوش نکی را تکوکمرے۔ اگ چند برک ےگا انشاءالڈد 
تقا ہی مقصیدحاصل ہوگا(ضیا ء نقلوب۵۱) 

اورا یع ککھھاسے اط لو قوَالمَلَائم عَلَيْكَيَأرَسُول الہ الطَلوة 
وَالمَّلام عَلَيَكَيَحَِیب اللہ اَلطَلوْهٌوَالسُلام عَلَيْكَيَايٍَیَ ایلو(غیاء 
اتلوب ٦ش۸)‏ 

نی زکیعت ہی ںک دا ہنی طرف پآ شےٹی اود با یں طرف تک اوددل پر تَا رش ول اللہ 
الیک ہتراربار یڑ ھے۔انشاءا ئل بیداری یا خواب میں زیارت ہہوگی (ضیاءالقلوب ضص٣۷٣)‏ 
الید یشیش زک اع ہاج مد لی لیت ہیں اگ بر درودوسلام دوفو لکوش کیا جا ےتو 
زیادہ تر ہے تال ملا عَلَيك ہآ رمُوْل اللہ المٌلام عَلَيَكَتََتِی الله 
کے جا ے الو وَالمَلَائم عَلَيْكیَ رَشُوْل اللہ اَلصّلوۃُوَالکُلانھ 
عَلَتيت تَا تق اللہ ای ضر آخ رک ا مسلائمر سےساتھ الصلو الف بڑھاد ےو 
زیادہ ا چھاے(فضال دروشریفضص۰٣)۔‏ 

الریث سجن ات دی کھت ںکسدا یتر بک مات اما گیا کہ 
اَلصٌلٰوْۃوَالمَلَائ ءَ : عَلَيْكَيَارَ شوگ او کاخ تا خکرتے ہیں اورائل ھ مین پر 
سخ تنفرٹیس اس نداءادرخطاب پبرکرتے ہیں اورا نکااستزاءاٹڑاتے ہیں اورکرات 

ناشا کست ا ستعا لکمر تے ہیں ۔حالانکہ ہما ررےمقدرس بز ران د بن ال صورت اور جملہ 
صورت درووش لی کواگہ رص یض نطاب ونداکہوں زہہوں سب ون جات ہیں اور 
اپنے تلق نکو رس کاام کرت ہیں۔ او را تشحمی لکوخٹل ف تصاخیف وقا کی نیس ڈکرفر ایا 


1۹ 


ہے( الاب الا قب مض )٦۵‏ 
علا مسر فغرازخمان صفدرصاح ب کھت ہیں تم اور ہما رےتمام اکا الو ڈو ال لاتھ 
عَلَيك اش ول اڈ کو لو ردردشریف پٹ ھن کے قائل ہی ںبیونکہ ریش جھداورتفر 
لم پش ے ددددش ریف کے الفاظط ہیں (درودشریف پڑ ےکا شر طریقضش۵ء) 
حضر تچ عدبی علی لرحنۃ نے لے وسلام دونو ںکو ہوم فر نایاے 
سْنَث کَيْغُ حضَآیہ ضلَوَاعَليہوآیہ 
اپتےکما لکی دجے بلندی پر پچ اپنے جال ےتاریکیوںکوررش نکیا 
ا نکی سب می اوت ںجلی ہیں الع پراورا نکی ادلاد ردرود و 
اعت ند یہ 4ا لیک السلام اے نی الو ریا 
سآ پک ند یددنْھریفکیاکروں ‏ اسےےسارنحلوق کے نیآپ پرسلام ہو 
ضف تکنرسعرے ناتھام لیک ااصلو :ےی دااسلام 
ا نحص سعد لآپ یک یانھر یف گازرے االے یآپ پردرودضلام :۶ 


مزلای علِوَسلّم داڑتا ابا قلعت تیر لق کُلْهِ 


2 


باب دوم: درودپڑ ےن کےفضاٗ نل وو ار 

درودسلام پڑ مغ کے با رفضائل لوان ہیں ۔ جہہاں چندفضائل بیانع کے جاتے ہیں 
لوت رك صلی یں 

ایک مریردرودپڑ ھن کے ون وی رتو ںکانزول 
خر ت راد نگمرد بن الحائ رشی شعن سے مدکی ہ ےک رسول سی مکوفرماتے 
ہے امَن ضَلّ عَلٌ صَلوةُضَل اللهُعَلَيْهِ رب پت 
الیک مرترددددکییتا ے ال رجل ششاشراس کے بدلہییش اس پر دس رکمتیسں انز ل فرماجاے۔ 
اس عدیث شی ایک مت ددددشریف پٹ نے پردں باررکتوں کے نزو ل کا ذک رآ یاے۔ 
ال تھا ف مات ہے مرن َء ا تَستَ ےل عَشز اَمقالا(سرہانام:+۷ا)۔ 
تر جمہ: جوکدئی لا ےگا ایک می وا کے لے وہ ایک میکی دی ںککہیوں کے برای گیا 
قاعرے کے مطال کم اک اب یک مک یکا و سکیا یوں کے انم متقام ہے۔ گرا تی 
آ× 
ایک مت درد بڑےے کی ترے 
رت انس شی الڈرعن سے ددایت ےک ہرسول ادص یناہ نےفرابامن صلی لی 
صَلوٰةٌُوَا حِنَةٌَضَل اللهعَلَيْدِعَکَر ضَلوپ وَمقلٹ عَنۂُعَکز عَطقِاپ 
وَرَفْحَتُ فَِتلهعَکر کرجا ت(رداہاسائی )لج بندہ ھپ پرایک باردرودپڑ ھےگااش 
وا پریں ریمٹتیں انز لک ےگااورمٹ جا تلیں گے اس سے و ںگمنا داورااس کے دس 


اے 


درہچ بلنلد کے جاکیں گے 

حضرت تن تی محرث دبلوئ ا لی شر مل فرماتے بل و رفعت‌لەعشر درجات 
الدنیا بتوفیق الطاعات وث القیامةبتثقیل ا حسناتوث ا جىة 
بزیادةالبریات والکر امات(اعاتشأ ء٢‏ ش۷۱). اوراس کے لے دنیامس 
ین 3ین پان نے مافں یاطاخت وڈ ارز کی ے۔ بورقاست ۴ن 
کو متس ا ت7ت کا ا٣ہک‏ 


ار ۶ود 


ایک م2 درود لا کے پاراررے 
رت الو بردہبکند یناررشی الش رعش سے ددایت ےک رسول الس ہق نے فر مایا 
من صَلٰ مل أُمٌن صَلَاةُفْْلِمَامن قَلہہصَل اللهُعَلَیِْيِبَاعَکر 
کر سيمان۔می ری امت می جو مج پرایک بارددود کی اخلائس ےو ال تعالی 
اکس پرڈ باردرودیییچاے اوراس کے دی درجات بلندفرما ا ہے اورااس کے لیے دس 
یا ںود یتاے اوراس کے دو گنا ومعا ففرما ا ے(راصلوت والیش می ااصلو لی ایر 
اابفریكش ۲۸)۔ ال حر مث سےمعلوم ہکایک مرت درود پڑ ےدالا چارفاترےعا اض 
کررتا ہے۔اوگل تھا یی طرف سے ول مرتبردرددہ دوس ارجا تک بلنلدگی ہت را 
نیو ںکیکمابتہ چچوتھاد ںگناءکی معائی- 

الک مَلَتل ور ےکن فان 


"ے2 


درو 22وا مت کے دن رسول ال دالیم ف7 یب ہکا 
ححضرت امینس وی ال عنہ سے روابیت ےک رسول ال ٹنم نے فرما یا وی 
قایس لی توم الام ا تنعل صَلوۃ(7 ذی)۔قیامت کے دن مج ے 
ہے تانب کوولاظ یب تس مکی او ےر 
می ئ القیامةقال فیهبیان ان اولاھم بە ل٤بەاھل‏ امحدیث‌اذ 
لیس منھهذد×الامة قوم ا کثر صلاق عليیه(الف عاتا ایح ٣ش‏ ۳۰۸)- 
وائطین موی نکو یی بو ل ےکک کا موشع ملا ے۔ بھی سی ے۔ 

مل اتد لیر 
درودوسلام دونوں کے پڑ ھ نکی فضیلت 
نر ت الوڑلنرشھی ال رعض سے دوایت ے۔ ووفر مانے یں کر رسول الیم 27 بت 
صحااکراام کے پا آتشریف لاے اراس وق تآپ یه کے رہ پر بشاشتاگی۔ 
آپ فی نے فرما اک رمرے پا رت بت رابل علی السلامتش ریف لاۓ تے۔وہ 
کت سے اي ربَتبَقُزْل آما زحِيكيَا تُب انل يُعَي عَلَيْكَاَعَدُمِن 
اتل صَلَيِھ عَفْزاولَابْعلَمْ علَيْك اَعذِن أمَيكإلا سَلبْثُ 
حَليييي ما (رداہ ای والداریی ) .کال تھالی فرما تا ہے ا ےھ سی مک یا آپ اس 
بات سےاشیئیں ہی ںک ہآ پک امت میس سے جوکو ا آےخ درود ےکا ٹیس اس پریس 
یں ناز لکروںگا۔اورکوٹ یآ پکی امت میں ےآپ پرلام ےگا یش اس ول 
رسلا تو ںگا_ 


ے٣‎ 


معلوم پواکہ ایک مرمردرددپڑ ھن والے پردل کی نازگل ہوٹی ہیں ۔اوراسی طرح 
ایک م رسلا معن کر نے وانے پردں مرج رسلامتی نازل ہہوٹی ہے۔ ال ادرودوسلام 
دوفو کا وردک رن چایے (منکوۃ جوا سائی داریی ) 

حر تکبرالرکن بناکوف شی اللعنفرماتے گی ںکہرسحول الڈ سی ایک روز سے 
کے ودنکو ون کے فی داخ ہے ضط یک ٹیک ہم ےازد یشہ اہ 
ہیں ار ےآ پ لہ لموست یس نک لی ہو عہداارن ب نکوف رضی ارڈ عن کت 
ہیں میس رسول اٹ کی طرف می دج ہاتھاک ہآ پ لالم نے سراٹھایا ادرف ما اکیا 
آ پیم نے ارخاط ا ياإن چِبْريْل عَلَيْهالمُلام 
قال لی الا أبيِرك اي للهَعَرَوَجَلَيَقُوَل لَكَمن صَلٌعَلَيكَصَل٤ً‏ 
صَلَ]ث عَلَْهوَمن سَلم عَلت سَأَنيث مل روا ہام (نففل الس گی ١نی‏ 
عد یف ے)۔ بلک بت کی نے مد س کہا ا ےجح صا مکیا می لآ پکوریک بشارت نہ 
دوں۔ اورک ربا ہے جوٹ سآپ پردرودییے یش اس پردجحت ٹاز لکرو گا ادج 


بات ہے میں نے تا 


آپ پ لام کی ےکا می بھی اس پ رسلا مہو گا ۔ اسے اج نے رواب کیا ہے۔ 

حقرت ال یلما عدکی شی الشرعنہ با نکر تے بی سک رسول ارم صلب ینہ نے ارشادف مایا 
ضیم میں ےی ٹیس داضل ہو وتضور ى اکم سب ایام پردرودوسلام یج ہے ےم 
عشمر اللووَالظٌلوأُوَالكَلَام می رش ل الو الْهْمٌ افخ ابو اب 
رشیّت۔ ال کے نام کےسا تاور درودوسلام ہوں رسول ادف پرہ اے الد 
مہرے لے اقیادہمت کے دروازےکھول ورے_ 


ے٠‎ 


رو اید رھ سس الووَالصٌلوْڈُوَالسُلائم عَلرَسُولِ الله 
اَللَهْوٌ إِقٌَاَستَلكَمِنفَضْلِكَ ۔اش کے نام کےساتھاوردرودوسلام ہول رسول 
الد ا 2 ت انا ہوں (مقکوۃ ہاب السا حبد سن ال داد 
کاب لصو 2)(درووشریف سے مشکاا تکائل ۷ك ۵۷) 
صلاللة قل حبییہ ثحمَيِ وع لآيہوَأخَحَايِۂوَسَلَمم 

درووشر ریف مففرت ,شش او تما م وکھوں اورٹھوں سےنجاتکاذر بعر ے 
رت ال نپ شی الع سے ردایت ہے۔دوریاتے لی کرش نے کیا پا 
رم کت عَلَيِكَ فَكُم اَجْعَلَلَكَمِن مَلَاقفْقَالَمَا 

تہ قلث الوم کال ما نت فان زذت فَيو عَبالّكَ کل الیضفک 
سوہ نَرِذْت تہ عَبزلّت کل لئ قَالمَافِنث 
قَيان رِذْت فَه عَبزلَك قُلْجْعللَك لوت هُنَّھَا ِا تَکُلی مَثّكَء 
يکَمْزلَك تنک گر کالتزیل) 
تجےاسل اه شآ پ نلم پرددودد پڑعتا ہو ںآ وکتتاوردشظررکروں ۔فرما با تا 


٦ 


چا ہو۔ ٹل ن ےکماچہارم(چوتھاحصہ )؟ فر مایا جتناجاہوء اگ ردرود یڑا دڈوتہارے لے 
پر ہے۔ میں ن کہا نصف؟ فر ا ا تنا چا ہکان اکردرود یڑ ھا دو تہارے لئ اہر 

ہے۔ ین ےکہادو ہا ؟ فرما یا تنا چا ہین اگردرود:ڑھادڈقوتہارے لئ بہت ہے۔ 
مس ن ہشیش ساراوفت ددودتی عو ںگا۔آپ نے فرمایاحبتوتھہارےکمو ںکوکائی ہو 


گٌااو ہا رےےگنادمٹ جا ئجیں گے منی رسول الل صلی نے ف رما اجب تم سا راوقت 


۵ 


مھ پردرووش را یف می ضر فکرو گے وتھہارے سل ےکنا 27" ۔اورگفہارےسب 

ا ہربی نی ا گل ہچیج ہکن وبنش دیے جا یں گے(اشعۃ )۔ 

عد بی ٹکامش ہوم یر ےک الیک مب اوت شتین ےتنس میں میس اپنے لے دعا مامتا ہوں _ 
یں اس وت سےکتناوقت مآ بی پردرود پڑ ھن میں صر فکروں تو رسول الد 
لین نے ال سک یکوکی ہشن شفرماکی تاکز یادی کاددداز دبنرضہہوجاے ابی لے 
درودشرنی ف کی ےک یکوکی عدنکیں ہے جتنا ہو کے درودپڑھے_ 

علا شرف الد بن ان ابی (منو نی ےھ )رما بدا عد بی ٹک شرب می سککتت 
ٹل لان الصلاۃعليهەمشتملة علی ذ کر اللەتعا یٰوتعظیم الرسول 
عليهالصلاۃوالسلام.والاشتغال باداء حقهعنں مقأاصد نفسه 
وایغارەبالد‌عاء علی نفسه وما اعظبھا من خلال جلیلة الاخطار, 
واحعمال کریرةےالآثار (شرب ای می مو ۃالصاق. ت٣‏ ضص۸٣۳٣)‏ 

آپ یلم نےف رما اک تہارک تمام دی اورد نیادئی اح مکاموں می تہار یکغایتکی 
جا ےگا۔ ا لک دجہیہ ‏ ےک ہنیک ری مل پر درد پڑ ین میسو ذکرا لی ہے اور 
ال کے بعداپے ذائی مفادات وتقا کون کک کے موق صلی سی کی ادا گی 

یش شغول ہوناے اوران لے دعاکمرنے پرنی سای کے لئ درودپڑ سن کون بد بنا 
سی 

جحخرت حبالن بن متظ الا ار نشی الشرعن سے دوایت ہے ایک نے عو کیاچا 
رَسَول اللوَجْعَل تُلْعَعَلَان عَلَيك قَال تََۂ ان نع قال 


۔ 


فَالثُنفَدِ فَالَ تَعَمْ قَأَل فَصَلان کُلَهَا قَال!ِذا يَكُفْيِك اللمَا اَعَمَك 
مِن اه آئمر ذذ رت (اشرکر عدیث ۱۳). یا رسول الس بیس این 
ماعبشسض ۔آ پ فیا نےفر ایاہالا اگرتوچاہے۔اں 
تن نے عق کیا ٹس دوتھائی ۔آپ سای نےفرمااہاں ۔ اس نے عو کیا و را وت بی 
آپ پرددودپڑہتارہوں۔آپ نے فرمایاحب ئے ال تعا یکا نی ہدگا اس میس جو جم 
میس ڈا لے تیرے دنا دآخرت کے معامموں ے_ 

صلی اللة کل حبیہہ ئحجيِ وع لآیہوَأغحَايِہوَسَلَمْ 
وشام ٹیں مرج درو دی والا فک شذاعت ہوگا 
تفرت ااودرداءکی روایت ےک رسول اللہ ایم نے فر مایا جوشھ ٤ع‏ اورشام دس یں 
مرتبرددود یڑ تھےگاا سکومیری شفاححتیل جا گی (رواوااطبر ال نی کی سی رصن ) 
حضرت الوب رصد کا بیان ےک یس رسول الل سن کے پاس موجودتھا۔ ای کآ دی 
ن ےک رسلا مکیا ۔حضورسأ ا نے ا ںکوسلا مکاجواب د یااورکشماددروئی کے سات ا کو 
اپے پہلویس بڑھالیا۔ جب ووٹ اپناکام و راک کے اش کیاتورسول اللہ یہ نے ف مایا 
اوک اروزان ام ںہن کال باشندگا نز ین کے( سارے )ا عمالی کے برابراٹھا یا جاتا 
ہے۔ی نے عو کیاای اکیوں ہے؟ فرمایاج بکیج ہوٹی ومن دن با بجھ پردرود 
پپڑھتتاے اورال کا ببدرودالیا ہوتا ے گیسےسا ریفو یکا درود۔ ٹیس نے عت سکیا وہکیا 
درددہے۔فرایاء جا ےاللَّهمٌ صَلِ ل تح القِن عَنَدَمَنصَلەِن 


ہے 


و 


عَلَيَك وَصَلِ عل تحت گما ینیع لا ان نُحَي عَلَيوِوَمَلِ َل تی 


ےے 


الکن کا اَمزقما ان تح عَلَيٰ۔اے اح نی پر درو ا سک تعداد کے 
مطا بن جتا ترک ینحلوق یش ےکی نے درودییچیاوردرودگغ مج پر الال ہے ہمارے 
لئے پک ہہ چھتریں درددان پرادرددد دن جم نی پرحیاتو نےپمی جم د یا ےک ہم الن چھ 
رگن 
ال وت2 اتل فان 

درووفش ری کی بات گناو ماد ۓ جاتے ہیں 
ححخرت ابوبگ رد لی رشی ادڈعنہفر مات ہی ںکتضو رن یکر سیل پر درود اک پڑھنا 
ای ک ےآ کو تھا ےکی نسبت ز یادہگنا ہو ںکومٹاد ینا سے جحضمو رہ یک ریم صلی پرسلام 
یی کر ناغظلا مآ ز اوک رنے سے یادہانخل ہے۔اوررسول الل می ےعب تک نا ال کی 
روٹس جا ن تر با نکرنے سے ال ہے۔ یاف ما یاا نی درا( ش نشی رزنی سےزیادہفل 
ہے(ازمفس ریس سر٤‏ )( فیرظ بریی مم حا شی ) 

صَيّاللةغل خہنہہ ئتَيِوَء لہ وَأغتاِموَسَلَمْ 
رت بے عدال وا تی علیال رح کا ارشاد 
ع دن می رت دعلوی لیت ہیں قطب الوفتکبرالد ہاب می رح ایند ضتنا بب رکا تد 
فرمات ہی ںکرددودشریف پڑت وقت بی جاننا چا ےک در ٹخل زیت سک کن 
ےد پاوں میس شنا ور یکر پاے او رکہا ںکہا ںو طزن ے۔الأم ج یکتے ہیں لو 
در یائے زحت لی بی داشل ہوجاتی ہیں۔اورش رما ہی ںک نت جن لصریی رض 
انف را کہ ند جب ال یکرتا وگ یاد ہا تھالی کےتام اس ءال یکو اوک لتا 


۸ے 
ہےادرجب صل علی سیں :ا مہ ںکتا یتو دہ سر عال سای کے در یا پل وکرم 
می فو طہزن ہوجا تا ہے۔اورجب اس کےساتھ وع یآل و اصصآب نادان کے 
فضال دکالات بی رق ہوجا تا ے۔اورجب بند دن لا قناچی در یا ەوں میں شناوریکرتا 
او روط زن ہوتا ہیآو گر روم و ماپوں لکن ےک یکراصورت ہے ۔جس وقت ا یکو( مجن 
0 عق شا بر انی دبلوبی رس الک حضرت چنا تل عبدالوہاب کی رص ال نے یھ 
منورہ کے سف کیج رخ تفر مایاتوارشادف ما یاکقم یادرک وک اس سفرمیس بحدادا نے فررلل 
میک ریم سای کےتضور پرتلو ۃوسلا مکینے سے بلند کوکی عبادت یں ہے جب اس 
سےا نلاقذاؤددیام تیاور ۱ ا مہا لکوٹی تعداد ۲ن یں ہے تنا ہو سے مو 
ای سے رطب الما لن ہہواورا کی کے رنک میں رنک چا 5( ءرار اوت اردطل۲۲۱ءجذب 
انلوب فاری بض۵ے۲) 
ایک رو کے کےسن فو ار 
جحخرتعبدا ڈراہ نھمرورشی الع ف مات ہیں مَن صَلّ عَ الئٌٍی قَأوَاحلَ٤‏ 
صلی اللهُعَلَيد وَمَلَا یکن مین صَلا (معگو الم ص)۔ جو آدی سول 
الد ای پیک م یدرد پڈھتتا ہے اللدتھالی اوراس کےف رشن اس پرسترم بر 7 
ھوؤں۔ 
علا یی قاری لیصت ہیں ال عد بیث ٹل یک مرجبددودشریف پڑ نے پرالشداوفرشتقو کی 
طرف سےسترم ری رتتوں کےچس نزو لکا کوک ایا مین کن ےک رگم جحعہ کے 


۹ے 


دن کےسا تج ان ہہ کی وک مسند رام کی ایک ردابیت می آ متا ےکہ جع کے ون اعما یکا 
و ابس رکنابڑھاد باجااے۔ ای وجر سے اگ لوم کرفہ می گووا ہوجددداپنے اندرسنز 
عر کر کا نو اب رکھنا ے(مرقا وشرح مک اردو رج س بس ۵س ءکتاب الصلا )_ 
سبعین سے لعدا مین م اوکیں سے بل ہکشزت ےک اید تعالی درود یڑ ھن وانے پر 
ہیں :از ل فرما جاہےاورفرشتے اس کے لئ دعا میں ما گت ہیں_۔ 
شعالٰ۸ ٢‏ ےخو الَِی بُعَن عَلَيکُم وَمَليكَفۂلِبفِجَگُۂ ٹن 
اتال الئُو رر( سر ال71 اب:۴۳)۔تر جم : دبی تو ہے جواپننےفرشتوں کے مرا 
تم پرصلے ‏ پھیتا ہے کت مکواندعیروں سے رشن کی رف کال لائے۔ 

اتد ہاو رفکز غ 
رت شی رحمت اللعلیکاوا تد 
ندال بن یرد زآ اد ا نکی سند سے روابی تکرتے ہی ںک ایی نے بیا نکیا ےکہ 
ایک دن بی ا یوک کے پا سآ ے۔ ابوبکرا نکی میم کے لے ا ھکھٹرے ہو ئے اورمحائشہ 
کیا۔ انیپ بوسددیا۔ جس نے عون شک یا کراے می ر ےآ ا آ پاہکی سے الیامعاممہ 
کر تے کہیں عا لامک ہپ اور باشن گان داد نکنل سے ہیں ۔کہا اٹیل نے اڑخود 
وک ارس طط رح سے تق لف مکوخواب میس دمییھائیس نےتو ا طر حکیا۔ 
یس ن ےآنحضرت ای کوخواب میں ویک انج یآپ کے اس حاضرہوے۔آپ اٹھ 
کھرے ہوئے اورا نکوگودییس نے لیا۔ بن یکی بای پر بوسددیا۔ یس نے عون سک اہ 
یا رسول الل یلم آپ نی کےساتحھ ای کیو سکیا۔آپ نے فرماالکرددنماز کے بعد 


ی 


یت ڑا ےِلَقَل جَاء کم رَسُوْلَشِن اَلَفيکُم عَريڑ عَلَيِومَاعَیثم 
کرش علَیگد رالیزبیاع روف 1ي صلب 700مک 
ریف لا یا ہارے پا ایک برکز ید درو ل تم یس سےہگرا ںگمز رتا ہے اس پتہارا 
مشقت میس پڑ نا بہت بی خو اش مندر تہارک بھلائ یکا ءمومنوں کےساتج کی مبربالی 
فرمانے دالاء ہت رکف رمانے دالا ہے ۔اس کے بحلریجھ پردرودیھیتا ہے( جزب القلوب. 
مصیاح الا مء ان ا رالا خی ۵۳ء مسا تک ا حتفا )٦١١‏ 

عَلّ ال قل عہزیہ هي وق لاہ وَاختايِمِوَسَلَمْ 
قبرشری فکوعی رنہ بنا کا مطلب 
رت اوھ یر درشھی ال عن سے ددایت ےک ہیس نے رسول صلی مکوفر مات سنا 
یتَْعلْا بیو تکُۂ فور وا تجعَأوْ کر ق حِمنَا وَصَلْاعَلقَان 
اتک تَبِلون عَيك تی (مککو :اصع باب اصلو ہیی لی واضائی کک تم 
اپ ےگھر و کاٹ یاشہ بنا اد ری ر؟ کی قبرکومیاا گاونہ بنانااو رھ پردر و دیج رہنابا ٹپٹہارا 
درودئج تک پگ ہا ںی بھی تم ہو۔ 
رت سن نکی شی اشن ہما سے ردایت ہے ۔ف رما اک جب سسچ ریس داخل ہواکرو نی 
سی پرسلا مکی اکر وکیونکہرسول ال سفِيخ ےنا يالکَفَخِدُہْ ابی جِيْدًا 
َککجذُرابيوتکُۂ فُبوْرا وِمِلَوا َ عیث تُنکم فَإِيمَلوکگُۂ 
سکَنْلغین یٹ قتشم (انفاء)۔ک مر ےگھر(عزار )مار کاوکید:منا٤اورنہ‏ 
اپ نےگھمرو ںکوقی ریس بنا و تم جہا ںئیں ہومیرےاو پر( جھ پر ددودیھی اکر وکیونکتہارا 


۸۱ 


درود یھ پر سکیا جا جا ہے ججہا ںجھ یتم ہو۔ 

اس عدیث می تین با ٹس بیان کے ہیں : مب ربیاقیرکوحیدمت بنا 5ء اپ ےگھمرو ںکوقبرستان 
نہ بنا کچھ پردردد ہا ںچھ یکنیجو کے وج تہارادردد ےچ جا ۓگا۔ اراس یں ز یادہ 
شقۓ یں پڑ گی ۔اوراس عدیث کے ہوم ٹیل متعددا الات یں۔ 

(۱) یک اخال یی ےکہااس سے مرادن یکر یہ کی یکشقزت سے 
زیارت پر برا فک ناءت خیب دیناادرامادوکر نا ےکتم می اقب کی زیادوز یار تکیاکرو 
اورالں ز ار تکوشیدکی طط رح ممت بنا یککتم میرک قیرکی ز یارت سال ش دوبارکریاعم 
روااریوات: ال کكکظاحادھ ضف دابری نار ت دن 
ہے۔اورعد بیث می گیا ما یا ےک جو می اتکی ذ یادت کے لآ یا ا کی شفاعت 
ضروری ہوگی- 

)۲( اداد یا یکلہ ربالی اور شغقق تک بنا پرفر مایا اک می ری امت ز یادہمخقت 
نہ پڑے۔اورائ کی تائیراس ارشمادے ہوثی ‏ ےکی ددودپڑھ۔ چہا ںئیں ہو 
تہارادرودماچاے- 

() بااس با تکونالپنندرکرتے ہوت ےکی قیرکی تفہ مکر نے می حد سے نہ بڑھ 
جانھیں جی ےک ہج ہکر نےلکیس وغی رہ( شر شفاءطای قا ر٠‏ ح ٣گ‏ ۱۴۴ )۔اورا سکیا 2 
اس حد یف شریف سے ہولی ےجس می ںآ پ للا نے فرمايالنی ادلڈ الكد 
وَالتَضَارٰی! قرو اقب رَآَنَبِيَاؤہمْمَمَاجنتا ۔الیدکی نت ہو یبودونصا رک پر 
ہو نے بنا یااپن یو ںکاقجرد لک سی کا نکی رف ہماز پڑت تے۔ 


۸۲ 


(۴ )کین ام نے میعن ہیا نکیا ےک ہز یارت رسول ایك کے وت سوء 
ادب ھےہمانحعت ہے"شنی واں ابوواہب میں شخول نہ ہوجا وج سط رح عیدول مُ لکیا 
جانا ہے۔ والڈدایم۔ 
رسول ا للہا نے فرمايالَا ]لو ای نگم فی را۔اورناپےگھروںکوقریی 
طاک ان یتو دعائی ران کے ہیں۔ ان شی ایک ىہ ےکر ٹف ا ےگمر 
ہما زنہ پڑھے اس نے اہی ےآ پکومردداورا ےگ رکوقیربنالیا۔ ا لک انید بعد یٹ 
جک ےمَقل لیب ال ین گز الله فَيَدِوَالمَیْ لَيِقَلَايُل گزالۂ 
کل ای وَال بت جم ہج ںکھ رم الل تھا یکا ذکرکیاجاۓ الک اور 
جس میس ارتا یکا ذکرشکیاہجاے ا لک مال زندوادرمردہکئی ہے۔ چوکہبظاہر 
قروں می سکوئی ذکروعاد تئی کی انی اس لج سگھ میس ا دکی عبادت دذک نیا 
جا ۓےگو ارد وقبرستا نکی رح ہے۔اس می اہ ےگھصرو ںکوا دک عبادت اور ال لک یاد 
ےآ باد رک کی تیب دئ یک ہے۔اوردفسرا ا کا ریگ یا نکیا ےک اپنے مردوں 
کوگھروں میں بن زرکرو عام مسلماوں کےقبرستان ٹیش دش نکرو۔ 
محر ٹ شی رعلامریگی قاری امام خطا لی کے عو الہ ےکھت ںآ" مَْعَلوْهَا وَظٌَا لِلنَوِْ 
ققظ لَثصلت یا قَاق الوم الوب وَلْميِ‌لَايُعَلآولا 
ُعَلَمَ قبو را لِمَزتکُم تَنْعَتوْ تم فِا قَال الكَاي وَلَیْىيِميٍِكَفَن 


حُفِنرسول اللولَ تبَيْيہِؤَهفْع ِأنَهَذَا مِن حَطُۂ مات الاَنْبيَاءِ 


بتَل قَؤ لہ عَليْ ا ملا م مَا قب الله تَبِقَا اللافی الْمَوضَع الَذِی تيب 


۸۲۳ 


کت 


انیل فی کہاروادالترمزی عن ا ی بکر (شرعانفاء۲ض۵٥٠)‏ 

اوت بنا وگھرو سکوصرف سو نے کے لے مہ ءان می تم خماز نہ ڑ9 ینک نیدموت 
کی بن ہے۔اور(ھام )مرددنماؤنڑیس پڈھتا۔ یا ہک نہ ب5ا ےگھرو ںکوقرسنان ان 
مردوں کے ل ےکم نک روا نکوکھروں میں ۔امام خطالی ن ےکہابیکوٹی دزن با ت کئال 
ےک رسول الد صلی مکوان ک ےجرد دی میس ؤ نک گیا۔اورال ںکاجواب د یگ کیہ 
نیو ںی تصوصا ت شی سے ہ ےآ پ اَی اس ارشا ہے اہ ےلین 
ادن ےکی نیکوموت عطا عفر ما یگ رای تچگہی سکیضرددی ےکا نکوائی مل ا نکیا 

جا ۓ چیا اکراما مت یی نے ضرت الوب رزشی ال رحنہے رداج تکیا ے_ 

الطبرانٰی وابو یعلىی بسنں‌حس (شح ااٹفاء ۱۲۵ )۔اوم مھ پر ہا گی 

درور 0۶ ر وا سے ہما بی ہو_ 

بارگا و رسمالت صایای ۳ 


حخرت ابوڑھ یرہ رشھی اٹ عن سے روایت ےک رسول ادص انم نےفخر اياِمَاِنآکں 


گے 


پسله حَلکالَا دا اللۂ یع ز جن حَقی اَزك لیو الام ماود 
مھ پرکوئ یخس سا میں بھی تال بجھ پرمیرکی رو( توجمپذول لوثادیتا ےکی 
کیل ا ںکاجواب دیاہوں- 

ملک بین حیاتا ملا نے اس حدبیث سے بیفاذ و الا ےکآ پ مقر 


۸۲ 


شریف(عالم برزغ یٹس بھیش زند ہیں ہیں۔ چنا جع بدالعزیزبن با لف یمر یککعت 
ٹیں لا شك ان الببی ابع ‌وفاتهی حیاۃبرزخیةا کہل منحیاة 
الشھداءولکۂہالیست من جنس حیاتهەقبل البوت ولامن جنس 
حیاتەیوم القیامةبل حیاۃلا یعلم حقیقعہا و کیفیکہا الا الله 
سمحانه۔۔ تقدم فی ا حدںیث الش ریف قوله عليه السلام : مامن احں 
یسلم علی الارداللہ علی روح حقی اردعليهالسلام ۔فغدل ذلك علی 
انەمیت وعلی ان روح قںفارقت جسدەلکنہاتردعلیباعیں 
السلام والنصوص الدالة علی مو ته من القرآن والسنةمعلومة 
وھو امر متفق عليهەبین اھل العلم ولکن ذلك لا منع حیاتءہم 
البرزخیة الہل کور ثی قوله تعا یٰ:ولا تحسین الین قتلوائیسبیل 
اللامواتابل احیاءعند رہم یرزقون( ۶ رہل عران:۹٦۱)(اتشن‏ والایناں 
٦۹۹)۔‏ 

ترجہ :اس میس شی کک سک رسول ار سأ ای ا اقیر یس برزشی زھدگی کےساقھزنددہیں 
جشہداءکی زم سےزر یادہکا ل 0 0720 یں می موت کل گیا اورنہ 
قاامت کےد نکی ز نی ہے بت کی زندگی ایی ہے سک تقیقت وکیفی تکوا تھی 
کے سو اکوٹی یں جاہا۔ اورحد یٹ شا یف می ںآ پکا حر مھ پررسلا متا 
ےتا تعاکی می مس می رک ارد لوثاد ا سے بہاں تک کہ ٹیش اس کے ملا مکا جو اب 
دےد بتا ہو ۔ بعد يیث دلال تک کی ہے اس جات پک ہآ پ ممیت مردہ ہیں 


۸۵ 


ادر پ سا کی رو ں آپ یلم کے عم سے دای ہے ۔ مس صرف سلا کا 
جواب دسینے کے وق تآ پ لف ال پرروں لوٹا لی ای ہے اورپ کی وت کے 
داك لق رآن وسنت سے بہت متروف ہیں ۔ اب لعل کے نز دریک برای ک نف علی تل ے 
کن وت ا نکی ضیات بزڈٹی کے لع ا نکی سج سک دک اجکی نے ان س1آبیت مین 
را اول بی الَيفْ فلا سَیلِ الله أَمواتا بل اَعبَآ: جن ریہۂ 
اي ضر التوادع لک الگ راجٹرل 6اک سینا لآ 
بلنرددلوک زندہ ہیں اپنے پروردگار کےمقرب ہیں ۔اا نکورز بھی متا ے۔ 

ال حد یث ڈور ےآ پ سی مکو( معاذ ال مرد٤قرارد‏ بناغلط ہے اور بیاہناکرٹل 
صرفسلام کے وقت (دو ) آ پا پرلوٹاگی انی ہے۔اگرالیب اہو رو یا ککا 
پان :شریف میں ہار باردائل ہونااود بار بارخارنع ہدنالاز مآ تا ہے اور برا ی تکاسبب ے 
رم اہی جن کہ تکی زندگیا ل اوربہت مون نا ىَ پڑ یل کی اور کنا درستاں 
ل ۓےبھ یی ںکہہروقت ہرکھٹریی اود ہآ پکوسلا مت سکیا جا تاے او رآ پ لم س بکو 
سلامکا جو اب فر مات یجس سےمعلوم ہوتا ےکآ پ سا لمکا ان ش لی کسی وت 
بھی روح سے خالی یس ہوتا ہے۔اىی لۓےحضرت تخ دن میرث دعلوکی اہ کی رح 
یں فرماتے ہی ںکمدو کےلوٹانے سے مراد یڑ ںکردوں بدن سے الگ ہویچھی ہوتی سے 
اور بر نشیف می سلوٹا یا جا ا سے بلراس سے مراد میم ےک ہآ پ سأ ین اس عال مکی طرف 
تو جب پذو لکرتے ہیں اورااس کے لے افا قہ بات ہیں او رآ پا اص تکیاصلوۃ 
وسلام سفے ہی ںکی ون ہآ پ سی لم برز رخ یں حالا ت لکوت میں شقول اوررب 


۸۲ 


الطزت کے مشاححدہ بی مستقر رت ہیں ہس طس دنیایش حالت وئی کے وفنت 

آپ لی مک یکیفیت ہو ینعی تواس مشاحددداستفراقی سےافا قہ پانے اور با رآنے 
کورولوٹا نے ےا رکپا کیا لات الم عات لع ت انت ( 

علام ہیی قاری کھت ہں وظاه رہ الاطلاق الشامل لکل مکان وزمان ومن 
خص الردبوقت الزیارۃوعليه البیان والمعنی ان الله عانە یرد 
روح الشریفعن استغراقه الیٹئیف یرد علی مسلمهجبرا مخاطرہ 
الضعیف (شر الففاءي ٣ض )٣٣٣۳‏ 

علا پورالد ینگ یھو دبی( مت نی !اڈ ھ ‏ فرماتے ہیں او ری رٹ یکمربم اف کی خدمت 
ٹیس ملا مت کر نا دوطر کا ہوتا ہے۔ ایک وو سلام ےپ سک مقصرد یی ےک ہنم اتا ی 
سےدعاکرتے ہی سک آپ ابا رسلا مکییجےخواہ ہم خام بکالخظ بیس یاحاض رکا یی ہم 
ہں/ں صَلٌ الله عَلَيِوَمَلَّم اس اَلطّلوْهُوَالعَلم عَلَيكَيا رم زلالله۔ 
خواہرہالفاظآپ اڈ ای کے ہاں ےکوت فا یٹ کیچ یا آپ سای کے پا سکھڑا 
ہورع لکرے۔اود ہی دہ+بات سے سے امم تکی رف ےآپ بای کے رات 
خصوعیت حاصل ہے مکی اور پرسلام پڑھاجائےتدد+حبت ہوگا۔بذراوں نہ کہاجا گا 
لعل ال اھر ۔اورآپ ای پسلام یلکن کی دوس رک صورت ہیر ےک 
آپ یل مکی خدمت می سلا مک نذ ران شی کے جی ےکوی ز بارس تک نے والا آ پک 
قبرانور پر کرسلام ٹین لکرتا ہے(وفاءالوفا پا خباردا را صضفی ءالیاب لان فی ز ارت لی ء 
6ج۵ٴضص۳۱)۔- 


ء۸2 


اورا یر دو ےاندیاءاوررس مہم الصلا ق والسلام اتی قبرول ٹل زندہ ہیں چنا نچ 
رت اس کن ما لک رشی اڈ عنہدوا یم تک تے ہی سک رسول ال لغم نے فرمایا 
انآ َضبَائ بورغ بصن (حات ااناءلما)لموئی ۸ے عدیٹ 
۵ سن اما ہاقی )۔اخیاءا تق قجروں ٹیل ززندہ ٹیل نماز بیس پڑت ہہیں عبی اک ہب یک رم 
سی نے موی علیہ السا مکوا تق یق یں نماز پڑت ہو دیکھا تھا۔ 

رسول اش ]ینہ نےف رما یاما مِن أَعَِإُملمْ َال رَد اع رُؤجن عقٌی 
َز عَلي ا لئار نی ےکوکی جو تھے سلا مک رتا ےگ ال تال میبری رو ںکوایقی 
جناب سے بجھ پرلوناد بتا ہے سلا مکا جو اب دسینے کے لے بیہا من کک ٹیل سلا مک جواب 
دتاوں۔- 

علا می تقاری علی ال جن امباری کھت ہی ںکمصاحب ازھارتےکہاے امحدیث یدل 
علی بقاءالاروا ح بعں ال وت وعلی بقاء ابدان الانبیاء وعلی ان 
الانبیاءاموات‌ث قبورھم.والصحیح خلافه للاحادیث الصحیحة 
فی“ ۔ بعد بیث اس بات پرد لال تکر می ےم ر نے کے بعدروہوں کے زندہ ہونے اور 
بائی ہہودنے پراددراخیاء کے دن کے پائی رتے راودا پ رکا نمیا ء اپ تبروں یں 
اموات یں۔ اور بات ای کےخلاف سے اس یس عدو کا وجر سے شی رٹک 
صر جح حدیث ٹیش داردای پک رانا وقبردل ٹس ڈندہ یں اپنے در بک عیادت ش 
مشفول ہیں (ل شی نحص نین ج ٣ض )۱۵۷١۵‏ 


مَولَاى صَلِوَسَلَمْ دَامتا ابا لی بی ك تر ال 


ٰ۳ 
و 


۸۸ 


پارگا ورہا لات سام ںہ لت درودو سام اڑا نے یں 

حضرت پرانربکنمسسجودرشی الٹعش ے روا رت سے رسول الیم ے2 ان 
ومَليگة سيا حتف الْاز ض بْمَيُِون من کی الم اکر کہ مادنال 
دای ککہاللد کے پیجوف رش یں جوز بن پرسی روسیاش تک تے ٹیس ھی رکی اعم تکا کلام 
بج ھک جاہھیاتے ہیں۔ 

دوسرکی ردایت می لآ یا ےکیف رت اس ہندے او راس کے با پکا نام ل ےکم بارگاہ نیدی 
مس حا ضر ہوتے ہیں او رع ضکمرتے ہیں یا رسول الڈدفلال ہکن فلا لآ پکی خدممت مل 
درودوساا مع گرا ےے(اشعت ا معات) 

یعنی ان اللہ تعا لی ارسل ملاک صلی وجہ الارض حتی بخبرونی عمن 
صلىی اوسلح علی (الفائ نی شر الصاعء ع۲ ہش ۱۷۳)۔ینی یک الل تھا ی روں 
زین پرف رش کیا سے بیہاں تاکردہ یھ تردینے یں اس کے بارے میں چس نے درود 
پڑھا یا ا نے مبھ پرلا مجچیجا۔ 

رسول الل سای ےا را يافَلً يَسَزم عَلی اَعدال َو الْييَامَةِلَابَلعّق 
یہ اع الا فان بن لان قَ صلی عَلَيات (غیاء ال3 ولا کی دا 
خی رالا نام )کی سکوکی در وکا جھ برقیامت کے و نکتککگمروودرود تا سے جج یئ 
والے کے نام کےساتح|د او رئیئنے وا نے کے پاپ کے نام کے سا تج کہ بیفلال ببنافلا لکا 
ہے۔اکی ن ےآ پ سام پردرودیجیا ہے۔ 


اس ہیں بڑکیاخ تج رکی درو دیج دالامردہو یاقورت ا کا پر یدرودوسلام رسول الد 


۸۹ 


کی بارگادمش چا ہے۔ اور دوس این دا لک نام اوراس کے با پ کا نام لیا 
جا نے جھالن ال ابد بددددش ریف کے وسیلرے ایک اصتق یکا ذکر بارگا درسالت یں 
فرشیکراے۔ 
رت الو ہر یر ورشھی الیڈدعنفر نات ہی ںکرمیش نے رسول الس لکوف مات سنا 
لَتَکَلٰوْا یو نَم کُبُوْرَا ول" فَْعَلء ٤‏ قَيِِیعِیْنَا٤ً‏ ے ذٌوَْا مت 
صَلوتگۂ تَبغع عیث کشر (معکوۃیواضائی )کراپ ےگھرکوقورنہ بنا واوربجھ 
پرددودیی اکر وکیشہارادرودشھے با تم جہا ںی بھی ہو۔ 
رت تسین ب نی رشھی اشنا سے موی ہے۔اننہوں نے ف رما ارول الد صا یکم نے 
فرایاے ضلَو اع وت و ناق حا تو جو تا تحت 
صنیررجص ۵ ۴ )کہ اممان دال وھ پردروروساع پڑھا اکر کینکت ہا رادرودوسلام گے اتا ے 
تم جہا ںی بھی ہو_ 

دررا ہش مرعلقرب وبحدٹیست بل ٢ی‏ ظیمتعیاں ددعام ۓفرسقمت 
ترجہ :راپشق می دورنزد یک کا مرعلنچیں ۔ بیس تتے ہالکل ظا عرد بنا ہوں اوردعائوں 
کے نے جھیتاہوں۔ 
خر ت تن رشھی ارڈرعنہ سے ردایت ےک رسول الش ہق نے ف رما اص اعَلع 
فْالصَلَاتَکُۂ وَتَسلنمَکُن تدأکن عي]لحا فنشج ( کاب اصلد جع یزوین 
امن ای عائممص۱۹)۔ می رکی خرمت مل درودپڈھا ارد بگکتہارادروداورعلام گے 
پچ تم جہا بھی ہو۔ 


۹۰ 


یی تار شر النفاری کی * اپ بارگادرسالت یش ددودشری فک شیجی کے پا جا 
طرےے بان کے ہیں ۔اختقسار کے پش ظا کو أ‌ لک اگیا۔ 
مَوْلَای صَلِ وَسَلْمْ دَايِتا ابَنا علی حبِيبت مر القَلقِ تھی 

ہرد ازماصددرودولام ‏ کل برسول ول واصھا ہل تام (نعطار) 
فرشتو ںکیقوتسماعت 
ااوکرص لچ شی اش عضرےددایت ہے ددفرماتے ہی ںکہ اش کے رسول ال ساہنم 
نےفرمابامیرے او پربکشزت ددودیھیہچاکر واس مل ےک اتارک وا لی نے می ری قب رے 
ا ایک فرش تنا یا نکرد یاہے۔ چنا جب می ری ام تکاکوکی ردھ پردرودیھیتنا تو 
دوفرشنت و ےکنا ےک ا ےحد اہك فلال بن فلاں نے اس وفتکتمہارے لے درود 
کیاے۔ 
حخرتکماربن یا ررشھی نے مدکی ےک ہنیک مم مل یلم نےف رما اش رکا نیک 
فر شعن ےت سکوالل تی نے سا ری ینھاوقا تک با یں سن نکی طافت عطاک ری ہے یہ 
می ری قیرپرقائم ہے ۔ج بکک مھ پردفا تک گی قیامص ت کک مب ریی امت ےو یبھی 
ازائس جو پردرودشن لک ےگم ریف رش تا ںکااوراس کے با پکا نام کیک رتا ہے نے 
شج! آپ پرفلاں بن فااں نے درو یمیا ہے( جلا ءالا ھا مءالقول الپری ) 

الم صَلَوَمَلْم وَزَا رك غل فتئں 

مفاہرداعمال امت 
امت کےاعمال رسول الل سای مکی بارگاہ یس نی کے حباتے ہیں ۔ چنا یضر تجکر 


نبرا مکی رحمہالشد سے ددایت ‏ ےکہرسول الس ای نے فرمايا تا خَن 
لک تلم وَيتلِ ُلَہُۂ فِا اث انت وَفَا ڑا لف ۱ 

ثَغر ضََْإٌٍ أَحمَالَكُوِ. فان رَآيّث خَبڑا مجذث التوَاِن رَآيِث عَبَرَكَك 
جمس وت حم تحت 
لأ ےم با نکرتے +9( مال پو نے )او ( اکا نی تم سے بیا نکرتا ہے۔لییں اگ 
و2 سے مسحت 
جائیں گے۔ یں اگرمی سںبھلاکی دو گان کی تھی فک۷رو لااو راگرمی ںکپھلا کی کے سوا 
ویکھوںگانوتمہارے لئ اس نففارکرو ںگا_ 

رت بر سے ایک روایت لوں ےک رسول الل ہہ نے ۂرایاعیاق خَلڑلگُش 


ووفَايِلَکُم مز رون مس رث مل 
خمالکغ فان نیٹ مبڑا مث الله وَان رَآيِث هَرَا إِستَعْفَرْثُاللة 


گر (زففل ‏ لصد ہعلی فی صء۔٣)‏ 

حضرت اس شی اڈ تھی عن سے روایت ےک رسول الدب ایم نے فرمایا عَيای 

یلکن ت2لفن تَئحث لگن فَاذا اقایث ات وَفَايخَيز الگ 

ثغرَض لع اَشمَالگۂ فان رآنیث مَرنڑا مد الله وَاِن رَأيّث خَبر ذالک 
ک د-حسممعسسس تھا 

رت الس بن مالک رشی الد تالی عنرنے بیا نک اک رسول ال ینہ نےف رما یامیریی 

زندگی تہارے یتر ہے( تن مرحبہ )اورمیری وفاتتمہارے لے کہہے( تین 


۹۳ 


مہ ) ۔قوم خاممو ریت وعمرجن خخطاب دڑشھی اد عنہ نے عٹ کیا مہرے مال با بآپ 
پوفداہوں۔یسطر ؟۔ت وپ ٹا نے رای عیاي َازلَکُۂ يُلزلٰ علق 
اوخ ون السَمَآيقَأغْيَِقُۂْ ا ئل لَکُم وَمَا زم عَلَيْکُم وََؤق 
لن قَللات ماب ثغضعَل اَخمَالہن تل میں کنا کان 
حسن گلث اللهَعَلَيْووَمَا کا مِن کن اِسْتَوْعَبِخُلَکُم ذُوْبَکُمْ 
(رامنار)۔ یر کی زندگ تہارے لے بر ےک یھ پرآسانوں سے وی نازل ہوئی سے 
لوہیں ہیں جرد تاہوں جےہارے لیے عطال ے اور جوقم برا مہرےاری 1 یی مہوت 
تھہارے لیت ہے( تین مرتہ کیج پرتھہارے اعمال ہ مرا تکوٹییی کے جاھیں 
گے مظان پپرمیش اش کی تریفک۷رو ںگااورجگناہ ہواتوتہار ےگناہوں 
یتہارے شش او گا زرنع النار شض ج اع دی ٹ نعل دزمار وی حتتان 
وپ پران احاد ی ٹک یتو ئک یگ ادرسک ری نکا رد ک ایا ہے )۔ 

حفرت تی عبرلئن عورت دبلو کت ہیں (امام کبزا زج لوگوں ےش لکرتے ہوئے 
عپدایڈری نس جودرشھی ایدعف ہے دوایہ تک تے ہی ںکرسول ال نے فر ایا اق خَنْ 
لُگُز حَذِنْزْنَوَأعِغُلگز وَوََانِعَلزلَگۂ تُغر ض‌عَ اَخَالگُ جا 
رَآیث من فَْر جنث اللەعَلَیْوَمَا ََيِك‌مِن کر اَتَفْفزٹ اللةلگُمْ 
مکی زندگیتہارےتن یش بجر ہے تم بد سے( عطال وترام )و چھتے ہو۔ میں ہیں 
(بذر دی )اکا م سنا جا ہہوں۔اورمی رک وفا تپ تار ےق یل کہہے ۔تہارے 
اعمال میرےس ان یی ہو اکر گے میں ا جیلو ںکو یک راد کا شک کرو لگا اور بے 


۹۳ 


مو ںکو یوک رتھہارے واسل مخشرم کی د اک کرو ںگا_ 
سا ومنصور بداو یسک ہیں شقن علا نشین قائل ہی ںکرسول خداص ای وفات 
کے بح زندہ یں ۔آ پ سا اتی اتکی اطااعت سے نون ہوتے ہیں اورا نیا مہم 
السلام کے قب ر کے اندر پوسد یں پہوتے (جزب القلوب اردوبل )۲١٢‏ 

مولای صَلِ وَمي داٹنا ابا شی حبنبت بر ال کُْهمر 
رسول ال سای احیات وم ھت 
رت ابودردا ورشھی اڈ عفر مات ہی ںکرسول ال دصقم نے فر ابا فَْرُوْا الضا٥‏ 


۳.۳ 


یسل عَلإِلأَبلَعَین سَوْثهُعيْث کان قُلَ َبَعُتَوَقَايَك:قَال وَبَعْدَ 
وَقایِ اق اللة حر عی الا زض آن اہ ل اَجساد الئ َء( جلاءالافمام تق 
:ش٦۵‏ حر بی ٹنم ۱۰۸ جلا الا فا عنش بش ۷۹٢۱ء‏ روا ہن ماجہعد یٹ ے )٦۹۳‏ 

تھ جمہ :بح کے دن مھ پرز یادہددرود یڈ ھاکرد۔ ا مل ےکمہ حا ض ریکیادن ےچس میس 
ف رت عاضرہوتے ہیں .کوک ایسابند یں جومھ پردرودپڑ تھےگرا سک یآواز جم وع 
انی دہ ال بھی ہو م نے عوت سکیا آ پک وفات کے بعدالیمائی ہوگافرمایاہال 
مر وفات کے بحدجھی الیماہی ہہوگا۔ ایر نے ز مین پپراجسادانیا اکھاناع ام قراردیا 
ہے۔اس عد یف میں کین ضَن تھے ( مج ا لک یآوازیجپی ہے )کی با ےن نے 
بیع ضَلائے ھا ےہ مج ددودپڑ ھن دا لک درودیچچتا ہے وادلد الم 
ادرک ردایت ٹل( ايلإنَ الله رم عَل الّازض ان تَأكلاَجْسَادَالَنْبيَاءِ 


ص 


۹۰" 


ف>َت لعل کی (ائن ماج )کہ ال تھالی نے ز جن پرمراممکرد یا ےن وداخجیا کے 
اجسا مکوکھاے ۔ چنا غچرالڈدتھالی کے نی( قبرصبارک میس ) زندہ ہیں رزقی دیے جاتے 
ہیں۔ 

عا ریشم ماش تن کی سندیی (متو نی جا ے لاح رحمداڈیوں کے حیا تکا مستلہ با نکر تے 
مد ے گت ہں تَعکَقلاَنالَاَنْبَِاء عَلَیْہِم الطَّلَاَّوَالمَلام آغیاءئی 
َعیا سم ف اللَّنْیا لالم مُنکفُوَْ عَن اَبصَارِتلِنْيقَالِهِۂ عُن 
عَالَو القٌّيَهَوِإل عَالِو الْعَيْب قَاعْيِقاء المَلَايِکَة الْكَرَامِ الْكَاتِبنیَ 
وَعَََهُم وَالزوَا ج شَن اببصَا را( زل القو ون ۶اث ى٣ص۵١)‏ 

ہھمین رت ہیں کہ ینک انی شیہم ااصلا والسلام ابق قیروں یل زندہ ہیں منماز پڑت 
ہیں ء روز و رھت ہیں ء کرت ہیں منلبیہ پڑت ہیں ۔ بلاشبرا نکی حیات تی (دیادی 
عم کےسات ہے جی اکا نکی حیات دنا ضحم کے ساتیڑی کرد ہار یآ گصوں 
سے و شیدہ ہیں ان کےف٦ل‏ ہون کی دجہ سے عاگ شہادت (د ٹیا سے عا فی بک طرف 
حی اک یشحززاعما لین وانےف رشن اوران کےسوااو یل بمار یآ ون ےکی 
ہیں۔ 

رت ابو ہریرہ شی الشرعن سے روایت ےک ۔رسول الڈدس لاہ نے فرايامن صلی 
عَ جن قزری میعن ون صلی شع زا أبیغشه( ملک والشعب لا مان ) 
جج بنار ٥‏ مھ پرمی ریش رے پاش ددود پڑ ھتاس میں اسےستا ہھول اورجودورے مھ پر 


درود پڑھتا ہے دہ تھے پیا جا تا ہے۔ 

حضرت سن شی الم سے ردایت ہ ےک آپ ایم نے فر الا لقن 
صَلَاتگم وَتَس لمکم بنأغی ینحا تشخ (کتاب اصل ہی لی ٹین امن 
لی امم ص۱۹)۔میبریی خدمت میں درود پڑھاکرد۔ ریقہارادرودوسلام گے پاپچتا تم 
ال بھی ہہو۔ان احادیث سےمعلوم ہوک درودز ار ت .یرش رلیف کے ساتھ اص یں 
ہے۔ ہا لگ پڑھاجاۓ ا لکوشی لکیاجا ا ہے ۔دورونز دی ککاکوٹیفرقئیں ہے۔ 
صلی ا رکا کی شرب میس کلت ہیں بی( دہ مٹیا باج تا ہے )بصعت 
الو مک بلَيِيہ الَلَانِکه و رادغ (شرع انفاع ×ش 
۳٣۳)۔-‏ 

نس نے اس حد بی ثکوموضور عکہا ےکہررسول اللد سای کے می سکھٹر یکئی ے۔ 
لس لاگ ا سک یکوئی مکی یس ہے۔حفرتاہہہریردےالوصا ٣‏ اورا سے 
یبد بی ث کئال بیا نکیا ۔اورسن یل وشن م ردان مدکی ہیں ان پرجھو ٹف بچھو لے اور 
روابی گھز نے کاالزام لگا اے۔متہم بالکذب و الوضع (عاشخلاصۃ الوفاء جا 
کے ٣۳)۔اورخلاصیۃ‏ الوفاءییل ےکم رے تال میں جن سدکی کے بارے میں 
اتا ہے(خلاصۃالوفاء)۔اوربیراو ام التب ہے( تقریب الج بب نا کش 
۸۵ء( میزان ااعتزال ٦ب‏ أكض۸٣٦۳)‏ 

حضرت ابو ہربیرورشھی ار عضرے ایک ددایت ےک رسحول الش ]ہق نے فرمایامن 


۔ 


صَلی عَ نت قب تی مغ ومن صلی شعن تب أخِۂکھ(اقول اابرت 


۹1 


ضص۱۴۹)۔, جمہ: جو می ری فی رے 1 2 پردرودٹچیتا سے اس کا درود میں خو وت 
ہوں اورجودورسے پڑھتا ہے دہ مشھے بتایا جا تا ے۔اما عمش ال بن مدکی اس 

حد بیث کے تھلق فرماتے ہیں وین 6ا چہی ںکائ لکیا سد جید ے(التول ابرع) 
علامرائ نتجرگی لت ں اذا صلی وسلم عند قبرہممعه ماع حقیقیاً 
ویردعليهمن غیر واسطة وان صلی وسلم من بعیدلا یسمعەالا 
لواسطة یدل عليهاحادیثٹ مغخیرة(شرو‌محریگ٦٢٥۲۹)‏ 

رھ جب ٤وی‏ درووسا مآپ ٹا کی قب رکے پاس سس پڑھتا تا ےوآ اپ اس ےٹیقی طور پر 
سے ہیں اورسلا مکا جو اب تس اس ڑم وپ 

اۓ یں سن مگ ر( مر ےج اس 
لعل می کھت یںانە صلی اللهعلي وسلم یملغہ الصلٰۃ و 
السلام اذا صدر من بعیں ویسمعھا اذا کان عں قبرالش ریف بلا 
واسطة(ا اع لم ص ۳۲)۔ ت جم : بے کی کتضورس لی کودرودوسلام ایا جا 
ہے جب وہدودر ےآ او رآ پ اود بلاواسطہ سن یں جب پڑ ھن والاآپ 

سٹ ا شرف کے اس ہو۔ 

اما ئن مین سلیمان جزوی (متولی ۸2ھ ) کھت ہیں و قَيِللِرَسُول الہک 
رايت صَلَاة البُصَلينَ عَلَيكَ یی غاب عَنَكُوَمَن 202۶ 
حَالَهَا عِنْتَكَ: فقالأَمْمَعٌ صَلَاةٌ مل تی وَأَعرِفْهُمْ فهُمْ وَثْرَض لم 
ضَلَو ةٌعترهمءَ وچ ہت بھ مھت 


٭ے-۔ 


ے۹ 


الیل ےکر لک یلگ اک ہآ پک بارگاہ سے جونخا تب ہیں اور جھآپ کے بح میں 
کان کے درودشریف کے تلق فرمایے۔آپ کے نز د یک ا نکاکبیاحال ہے؟ آپ 
ایام نےف رما ایل ای عحبت والو کا درودس تم ہہوں اوردوسرو ںکا درو دہ پیک کیا 
نے 

ال ار ےکہدلال اش رات کےجوالہ ے چوروا نأ لکیگئی سےا سکی 2 3 
نی لک ادرقپیل کےساٹھ بیا نکیا ہجوت کی علامت ہے۔ اور جوحد یث ک ستد 
سےثابت نہ وا کی نسبت رسول اللرصلأی یل کی طر فک نا بہت مڑ گناہ سے ۔ اس لے 
روایا تک بیا نکرنے می اع یا طکرنالا زی ہے۔اورد لال اششجرات وظاک کی کاب 
ہے نہک عق مدکی ۔ وا عم با صواب۔ ببرعال بیشن بات ےک درودوسلام پڑ حن 
والو ںکاحد پ لو ۃوسلام بارگا درسمالت سی میس متا ے۔اورآ پ سای ا سکوخود 


ماع تکگیفرماتے ہیں۔ 
ٹواکرورودوسلام 


درودوسلام پڑ نے کے ب ےی شا رفو اد وشمرات میں جوجلا ءالا ھا مءالقول ال بر :جب 
انلوب اورسعادت اللدار بن وفی رہکتب یل مرکو ر ہیں ۔ بیہال صرف چندف ائ رتصول 
برک تک اط تح رر کے جات ہہیں (و با ادلدالت فی ): 

(۱)ا تھا لی کےعھم پیک لکرنا 

(۴ )اث تعالی کےس تھوصلوۃ میں موافخشتکر نا اکر چردوٹوں کے ہوم مل فرقی ہے۔ 


۹۸ 


ہماری صلوق ہل پردعااورسوال ہے۔اورائڈد یلآپ پرصلو شا وتشریف 

(نم مم ے 

(۳) اس میں الیل کے فرشتو ںکی موافنقت 

(۴) ایک مرح پڑ ھن دانے پراول کے فرش تو ںکی دں رقتو ںکانزول ہوا ے 

(۵) ندہ کے درجات میں د لگن اضا رد یاچانا 

(۹)امہءاعمال یس دیس میا ںککددیی جاتی ہیں 

( یس برائاں ماد جائی ہیں 

(۸) جب دعاسے پی یل درودشریف پڑ قد دعا قبول ہولی ہے اوری ط رح دا کےآخ 
می ددوشریف پڑھناچاے 

(۹)درودپڑھناجھ یآ پکی شفاع تکا جقدار بنا تا ے 

(١۱)گناہو‏ ںکی معاث یکا سبب ے 

(۱۱)درود یڑ کی وج سے الپلدتعالی بندوں کےملکرات اورا نکیا پر بیٹانیو ںکودورق ریا 
انا 

)٣(‏ قیامت کے نآ پ سا کی قرب ت کان بنا تا سے 

(۱۳) نک دستوں کے لئ درودکا پڑ ھناصدقہ وخررات کے قائم مقام سے 

)۱٣(‏ ضرورتو ںک کی لکاسبب ے 

(۱)نر وت گی با تکاسبب سے 


(١ا‏ رسول اش یی مک یئشبت دا یکا سبب سے اور نی سال مک محبت ان دا یمان ے 


۹۹9۹ 


(ےا)درودپڑ ھن دا ل کا نام رسول ال الم کے سات یی سکیا جا متا سے جو بڑی 
سحادت ون گج یکی بات ہے۔ 

جالن می درآرزوےقاصدآخ بازگو ہل درک آن نا زین رن ےکہازمامرود 
ت جم :یی جالن دبا ہوں ا سآرزویی سک ہا ا ص روب کےتمفورمی ںکوٹی با تکہہ 
دے جومی رک رف سے سے م]نی ا ےقاصدمی ںآ رز ویش جان دی ےکوتارہوں ۔آخز 
مھ دوبا تی بناٹی چائش جواس ناز نین (محبوب )کیجلس میں ہار تلق ہوئی ہیں۔ 
(۱۸) بی یك پردرددوسلا چنا آپ ین ک ےنت ق میس ےق اد اک نا سے اور 
اتساناتکا بدلرد بنا اس ےکآ پ بل کے بے شا رتقوق واحسانات اعمت پرہیں 
ج نک وا داکرنا من ٹیس ہے۔اس لے درودوسلام کے نے اورنظھرانے یکر نے جاپے 
(۱۹) درودش سط رح رسول الل ای کی محبت میس اضاف ہکا سبب ے ائی طط رح درود 
اتقدلانۓےآق یک کی وج ےاللدتعالی کے رسول الیم یع تکاکھی 
تقرار بن جااے_ 

(۲۰)درودوسلام پڑ ھے کےفو ریش سے ای ک ٹیم فا دو ری ےک جو اب لام کے 

مو لکا شرف حاصل ہہوتا ےکی دنک ووس نت ستقرہ بلہ لازمکردونرنش ہے۔ال سے بڑی 
سعادتکو نىی ہوگ یک تحضوراکرم ای کی سلاستقی وخ کی دعا اس کے شال عال ہوگی۔ 
اک تا ھر ین بیسعادت ایک مرج ییحی ہاج ھا جا ئےتوبرار پک رامتو ں کا موجپ اورے 
ار برق لک باعث ہے ۔ کان ےکیا تی خو بکہاے : 

رسلامکن رتردرجوا بآںاب ٭٭ا سم مصد لا مرائس بے جواب اڑتو 


ھ+ھ٭ 


ہرم ضیرم ےسا مع کرت کے جواب میں ہونو ںلونکرف شود گل یلیر نے و 

مت رسلا م کن می سآ پ ای کا لیک مت جو اب د ینامرک (خجات کے ےکاکی 

ے۔ 

جخرت کچ عطارا ہنی خوٹل اطنقادکی اورحب تکااظہارکرتے ر ہے ۔فرماتے ہیں : 
راز اضرورودظام کل بررسول ول واصحاجنل تام 


مرک یما ری طر کگ گزرن درورا ورسلام رسول ا سز پچ ور پ ال اور 


ام ساپ وراو 
ورورلک پرروا یلؤپاد برا حاب وبرپیردا نلیا در( سم دی) 


راک درودآپ کا روں پرنا زلہآپ کےساخھییویں اوریروول پرنا زلہو_ 
صَلَاللة کل عہيیہ ئحمَيَِگ لآيهِوَاَغتايِہ وَسَلَمْ 

ورو ڈ۱ لق مخرکا ملک فارەدتاے 

دردوش ریف کےفضائل وفوائمربٹس ےیک فائتد ہی ےج سکوم رش درکائل شد لے وودرود 

شریفبکثزت پڑ ھے۔ چنا نیرت مدان مورت دہلو یکتے ہیں ما خرن ماما 

شاذلیقرست اسرارپفماتے ہی ںک رین لوک یل مع رفت اورقرب الہی کے 

صول لئاٹس وق تک او لیا گرا ممکاوچودمفقودہواورٛس ز مان مل وہ موچودہول 

اس وت ظا ہش اعت پر بالات اعم لکر نا ادن یک ریم صلافی ٹم کے ذکرمبارک اورآپ پر 

کثزت درودکو پیش لا ز مک انام رد تر فکاککام د ےگا ۔کثزت درود سے پان میس 

ایک ور پبیراہوجا تا نس سےمنانز گل سلوک تے پاجاتے ہیں ۔اور براو راس تتضور 


ٌ 
اکر سای کی بارگاد سے فیضان داعاخت اوراحدرادحاصل ہوجای ہے( مدارج وت بش 
۲۲) 

ریئی رساغمصدسلام اف ماس یم القیام 

ہرک باشرعا لصلوامرام ا ین دوزغ شودبرو ےترام 
رلماقاسوا٣ئ‏ حعاجتدار ای او ووروا 
ولا مَلِوَسَیِۂ دَاژٹا ابا حَل عَِيبكک نر لقَلي كُلْهیر 
باب-وم:درودوسلام ھ ہے 

وروش لگ کت ہتوں راز 
ما ماس می لی (متو نی ے ۳٢۱ھ‏ )رح الل کت ے واعلم ان الصلوات 
متدوعة ا ی اربعة الاف وف روایة ا ی اثی عشر الفاعلی مانقل من 
الشیخ سعدالدین مہا دو ی(روالبیان نے ض2۹ ۲)۔درددشریف کے 
ضحدوصینے بیان کے گے ہہیں اج نکی تداٰنف نے جار زار بتائی ہے۔اورینن نے پارہ 
ٹرارحینے بتتائۓ ہیں ۔ نما مہا ا سںتنھرادے مراددرووشریف کےمسفون او ری مسنون یی 
ہوں گے اس ل ےک عد بیوں ٹیس جودرودش ریف کے الا ظ اورصینےمنقول ہی ںین نے 
ا نکی نندادگیارہبیا نکی( کتاب الصلا ‏ یل ا فی )۔اورججزب القلوب میں ورورمسنون کے 
یرہ ین بیان کے گے ہیں ۔کتا بن بیددرودشریف می تقر یب یں صن درومسنون 
کے کور ہیں۔اورعلا ریش اوسف بھالی نے مسمون درودشریف کے ایس صینے مع حوالہ 
بین کے یں (سعادت الدار بن ہش ۲۳۳) یھنن علماجو نے دروومسفون کےپریں صن 


- 


اورسلام کےمسخون پندر و صینے (کل چا یس )تیر کے ہیں۔ ہا ںتمو لت اب اور 
اختقاراورآسال یکی خاطرصلوۃسلام کے نیس (٣۳)صینے‏ درجع کے گے ہیں _ 

وروڈ ۱ یف مسمون صیخ 

0 حطر تعبد الکن بن ال ی بھی نشی ال عنف مات ہی ںکہ شےحر تکحب منج دشی 
الشعنہ لو و ل ےک کیا می س "ہیس دوہی( تفہ کنددوں جومیس نے نی صلی سے سنا 
ے۔ 

ٹس تن کہاہگی ال دہع ہی( تحفہ )یضر و رعنا یہ تک میں خر مایا لیک مر یم نے رسول 
اَل سے لیپا او مرن سکیا یارسول اشن الد تی نے (نماز بیس امقیات کے 
ذ ری ) آ پت رسلا کھنا یعاد یاہے۔اب رما ےک مآ پ لالہ پر 
ادرآپ لی مکی ابل میت پر(نغمازیش ‏ درود سط رح بھی اکم بس ۔آپ ٹپ نے 
فرمایالوںکہو 

آل اِتراھیح اک حی قبنل. اللَۃٌ بَا ِك عل تُحمَيِ وك لآلِ تم گا 
کت لاحم و یآ اب احيیۃ تع ےئ( ار تاب الیاء 
حد بی فکہرے ۳۳) ترجہ :اے الٹر! نتم ای اور لحم سان رت سج 
یسیو نے ححفرت اب رای م علیی السلام او رآ ابر ایم علیرالسلام پرکستی ںکیتییں۔ ےن کو 
727 والا ے۔اے الد !تقو کت ناز ل خر ما مس ایا اور له سأ اہن پرحی سد 
نے رجمت از لکی حر تاب رای علی السلام پراورآل اب رای علی السلام پہ۔ بی کتودی 


لان ریف وبز ری والا۔ 

جب آی تک ب۔نازل ”اق ال وَتلیگتە يصَلّويَ کل التِن .جا الَْنَْ 
امَنُوا ضَُو ا حَلَيثوَسَ مُا تنم( ےک المادرااس ک رشن نی پردرودجیتے 
رت ہیں۔اے ایمان ول مبھی ان پپردروونجیچواورخحوب سا مھچو تاس وقت سھا ہہ 
کرام نے عوت کیا آپ لاپین پرنماز یش سلام عون کر نے کاعلم ہے بای ےآپ پر 
درو دکیے ھی تپ ایر نے فربایایوں ددددپڑھ اکر اللہ ری صلی کم 
اخ( رقا×وطیرہ) 

ردایت "ا ےِال اخ لَكَ مَييَة >يِعهُبَ وص الک کیا ہیل وین 
دوں جویس نے رسول اللس ینم سے سنا۔ یشفی د ہام ٹین سکمرول جو بیس نے رسول اد 
سٹلبا سے سنا ہے۔ جو جات رام واکرام کےطور پ یکودی انی ےا لکوحدب شش کہا 
جانا ےخواددوکوئی یز ہو یکو یکلام ہو۔اسی لے درودوسلا کو پدی پجذیی یکہاجاتاے اور 
راوج مر رم ور لی کےطودر پردہی جاۓ دوصدرق وت ہے(مرا3)۔اورکہتر ای 
تنا یں ہیں جن سےد بی فا ند٥‏ حاصل ہوا سے۔خیال ر ےک رسو لکمرمم سأ خود 
ھی اپنے اد پرددددشرلی کنماز یش اورخماز سے باہ کت ے(۱ ام النقرآن ) 

-٭ مفرت ابومی رساعدیی ےروایت ے ےک رلوگوں نع شکیایا رسول الد مآپ پردرود 
کی کی تو رسول الل نیلم نےف مایا یو ںکہو 


۱ اب 
(: )للَهَمٌ صَلل عل حم وآزوَا جو وَهُزِلَيهِ گا عَلَيْت عَلاِرَامِيْم 


کے ہے ےم 


بات عَل تُحمَِوآزوَا جو وَهُزِلَيه کَمَابَارَنٌ مَلِبْراهِیْم اِنّكَ یل 


کس موے مہم 


۰۳ 


ںی (بخار کاب اعادیث الانیاءعد ین )۳٣۲٣‏ 

ترجہ : اے الا رت ھی اورا نکی بیو یوں اورا نکی اولا دپررکت کی 
میں حطر بت ار اتی علیاللام پرناز لکمیں۔اورخرت سای اورا نکی کو لوں اور 
ا نکی اولاد رٹینیس ناز لکریشیئی رن خر ت ابر ایم علیالسلام سداشن۔ 
یی کتو لاکن ھروبزر والااے۔ 

جظر رت الوسعیدخدری ری الٹعشرےروایت ے لوگوں نع کیا اے الد 
کےرسول سای ا مآپ پرددو کی یں ۔آ پ ایم نے فرمایایو ںکہاکرد 
()للْهْمٌ عَلِ عل ُكتيِحَِيك وَرَسُوَلك گا عَلَيْت مل إتراوِیۃ 
وبا عَي مُحهيِ وک لآ فُتديِ کات نت عل تو یم وَگ لآ 
امہ (بخار تاب الرگوات:عد یش م۱۲۵۸) 

ڑھ:اےالٹر! تحضر حر ایہم پردردونا زل ٹر ماج تیرے ہندرے او رج ر ےرسول 
ہیں یکو نے ابرائیم پردرددنازل فرما یا او رتحخرت نح سأفِت پراورآ لح سأ تا پر 
برکت نازل فر ما یسیو نے ححخرت ابر ڈیم اورآل ابرڈیم پر برکت نازل فرمائی- 
0ی ع لغ اضر ال ا گا لیت مل إاراویۃ 
نَا يیيک الک ںی گی (مسا تک اعفاالی مشار مالسلا لی صلی ۵٣‏ ۳) 

تر جمہ:اے الد ادرو یع حض مھ ساےہ پراورآ لی نطخرت سأ ایاپ رحیی ا تو نے 
درو کیا برای علیالسلام پہ۔ یتو ہی مز ری والا لاگ تر لف ہے۔اے!القدیرکت 


۵ 


گج شس ٹن پراو رآ ل سیل ری اکتونے بمکت دی ابر شی علیہ السلام پر- 
بیو تریف کے لال بزرگی والا ہے۔ 

*- حضرت ابوھ یرہ رشھی ال عن سے روایت ےک رسول الڈ الم نے فرمایا سے مہ پبند 
ہوکہاسے اوران اب للےتو سے 

)٥(‏ لق صل عی مکل الگ زوا جو وَأمهَات الْمومِيدی وَکزلٰيه 


2 


يٗ 


وَاَحْلِبَبْيِو جا عَلَّيْتَ عَلِبراحِيم إِتَّكَكيِينَكِيںُ(ہءاہدوں) 

تج :اے اللد ان یش سی پراد رآ پ سی مکی یو یوں اورمسلمان نائول پراورا نکی 
اولاو رت تن یسیون رع ت تی سے مضرت ابرا ٹیم علیہ الام پپر۔ بی ک جم 
وك والا ٘ے۔ 

"٭ حر ت عقہبکن عام شی ال عن کے ہی نک ای کآ دی کے در یاف تر نے پرآپ 
سی نے بیدردد پڑ کاعم دیا 

() اَم صل عل تک لگن الأقن و لآلِ مُگ تَا حَلّيْتَ کل 
بَا همیم وَقی الِ نایم وَارِ ک قَلی میس القین ال وَعَی ال تر 
کََا کت قَ انرام وع ال بجی اتتَ عےبں فک (فتال رد 
۸ و زففل الصلو جع ابی ) 

تج : یاالش !ا ئی بی حطر ت نسہل او رآ لتحخر لاتق پر اسر رجحمت نازل 
فم ا ضسر توونے ابر ایم علیہ السلام اور لاب راشمیم علیہ السلام پپررحمت نازل فر اود 


ای بی حفضرت حھس اہ اور ل رشحم ٹا پر ای رح کت نل ف ماس رح 


تو نے ابر ایم علی السلام او رآ ابرامی علیرالسلام پر کت نازلل ماگی۔ یق ناتواپقی 
ذات می ںٹھودوبزرگ ے_ 

(ع) لعل عل تد ي٤‏ کل آل نگ گما عَلَيت عل !نوا وی ول 
آي بَا حِیْۃ وََارِك عَل ثحبَيِوَهَ یل آلِ ثحب گَمَابَ کت لی ِبرَامِيْم 
وش لآلِ نایم الْدلہی تعن ںی (م لم جزب اقیب)۔ 
ترجمہ:اےالڈرادرو جج جفرت سیا پراورآل تر تراہم جیا درد دیج جا 
ابراشی علی الام او رآ ابراش م ۵ص_ء"۰ء۰۳۶ء" اضر تح لن پراورآل 
تحضر تن انام پر جیا اک ری نازل میں ابرامی علی السلام پراو رآ ابر ایم علیہ 
اعلام پرتمام چہانوں میں ۔ بیککتو لا یت ریف بزر والاے۔ 

*٭عبدالین ب نمی حطر تکحب جن گج رہ روای تکرتے ڈی کمن ےکہاے الیل کے 
رسول سای یم نے ران ل ا ہآ پ سیا کی لا کن شک بیسآ بتایے ہم اب 
آپ ٹا پر درد دکیسے پڑھ ںآ وپ سا ای نے ف رما ابو ںکہو 

(۸)للْه عل عل اگ زم آل کل گنا عَلّیت علابراویز 
وَبَارِك کل ُتمَيِوَ لآ ئُحمٍِ كَمَابَارَنُك لی برا میم وَآلِ ِترَاحِیْم 
ت حزئ قئال سار عَلَيت و رح اد وت کات( افضل اصلو :می 
لی عل الام بش ۲۳)۔ ترجہ : اے الد ادرووشیغ ضر تجج سن پراورآل ثرت 
سایپ جیا تو نے درودیکیچا۱براشحیم علیہ السلام پبراور کت نازل ف رما تر 
سی پرادرآل خر تسین پرییستو نے برکت نا ز لکی اب رای علی السلام پپراور 


923 


٠ے‎ 


آل ابر ای علیرالسلام یر بیککت ون رر یف کےلائن بذرگی دالااے۔اورسلام :وآپ 

سل لاہ پراورا٣ل‏ کی رکتیں اور ا سکی بیتفیں ۔ اس صییقہ درودمی لو سام دونو کیم 
دک گئی ے۔ 

*٭ رت الو رر و ھی لعف سے مردکیا ےکا نہوں نے عم سکیا یارسول الد ہن 
بمآپ یل رکسے درو یں تو رسول اللدس این نےفرمابایو سکب 

(: )الله علِ علبَيوٌعلآل می کا عَلَيْكَعَل برا یم 
بارش عگی حم وآل ثحتںِ گَمَا بَا رك عَل(ِبْرَاجِيْۃ ثُمٌ يْسمَوْنَ ملق 

( قول ابر )تر جم :اے الد ادرو وت ححضرت جج سان پراورآل حضرت سی پر 
یج سطر حتونے درودییا برای علی السلام پراود میں نازل فر اضر حھہبیۃ پر 
اورآل حضرت حھہ ای پر یتو نے بیس ناز لکیں ابر ایم علی السلام پر بی رھ پر 
علام پڑھو۔(آیت نیس درودوسلام پر ھ کی تتی بگھی ای رح سے )۔ 

٭ رت ریف ین خابت شی اللعنہ سے ردایت ےکرسول ال سٹ ہل نے فرمایاجھ 
بنلدوم وشن "خر تمس پردردد لیو عرش لک رتا ہے 

(۰) الله اتل المَفَعَت لْقَرب جن تک یق الام - جمہ:اےاللد 
یں قیامت کے دن ان ق ری بپککھا نے میں اتا رسوَجَبَتلهشفَاعَی اںرے 
لئے می کی شفاعحعتثابت وضروریی ہوگی ( مو ۃ کو ر) 

"تر تکبدانڈرارکن سس حودرشحی ارڈ رتا ی عن سے مروگی ہے رسول ایی ےق ماج 


دروریں رو 


۸ 


(ا)اللٌّ اخعل صَلَوَا يك وَبركَايِك ور ختيِك عل سَیيِالْمرَسَلِثت ٤‏ 
ِماو الَبتَييِی وَمَاتم التَيْيْي تمَيِعَبْيكَوَرَمُوْلِكَ(ِمَاو ار 
ورشولِ الژ خ2 الله ابعَنۂُمَمَاما کنئوْڈ يَفہلهفِيوالاوَلَوَء 
الا زؤت. اَم صَل کل تیوک لآلِ تک كَمَاعَلَيْتَ کل 
غَل(ِبَراحِیْم و لآلِ ِتراحِيْةَاِنَّكَ مم قُِيل. ۶7۔:اےاشانازل/ 
ورورا ناوت ایی او نشین ایق رسولوں کے روآراوز پرہیزگااروں کے امام اور 
نیوں کے مرن وا لے تفر تشھ سی پرجھآپ کے بندہادرآپ کے رسول ہیں 
اورھلاگی کےامام اورخر کے ا ہیں اوررسول مت ہیں اے الیل د امبجوٹ ٹر ماا کو 
متا ممحود پ کرش کک می اس پر پیل اور ہے _ 

* رت سن بصری رشی ادڈعنفر مات ہی ںک جج صن نیہ سے پور ائلی ذا تہ 
دا پالا بناج ہے( تو وہ بھی بگشر تتقلب صانی کےساتھبوں سے 

)ےق صلی عل یع لآیہ و اشحاِہوَاولادہءآزوا جم وَكُزليه 


رھ 2 سک1 د۔ 2 ۔كڈً۔ 7 0“ ہر گے 
وَاهْ لبَيْتِمِوَ ضَهَا رہ وَانصَا روَا شیَاعِهوَ یم وَامُيِمِوَعَلِيْتَامَعَهِمِ 


1 


أنتژت پا آزح الپ اججثی(شر خفاء ء٣‏ بش ۳۲)۔ت جمہ:اے الد ادرو دش 
رت حھ لاہ پرادرا نک یل پر اوران کےھاہ پپرادرا نکی اولا داورا نکی ہو لوں 
اورا نکی ڈر بیت ادرالنع کےگھروالول اوراا نکی سسرال والول اورالنٰ کے بردگاروں 
( ہاج بن داْصار )اورا نکی بیبروئ یکر نیوالوں اوران کےعحبتکر نیوالوں (علا+اخیارو 


۹ 


صلجاءابرار )اور نکی اممت ل(خیک وبدایماندار ۲ پراورانن کے سا تج جم پر اے سب 

ربا نٰ یکر نیدالوں سے یادہ مہ بال یکر نوالا۔ 

>کالیرال ون حر ت ٹیش شی اتال عنرےےمردی ے 

)۳ )اص کل تی وع یآ نمس کَمَاتَا کت برا میم وَعَلی 
آلِ ِِرَاهيْمَ اَِكَ كِيْ كیل. 

)٣(‏ الم با ِ ك غل تحت وڈ لآلِ کُتگ ما تانت کل تراِیۃ 
ول آلِ ثُتبَيِ كَمَاءَ كت لِبَراهيْمَ وَگ لآلِ١ِتَرَاهِيْم‏ إِنّكَ عِيْدُ 


1 د29 

ےل ۲ 

)۱١(‏ اللَهَۃ وَترگ معَل.یآلِ ثحب گا تَرَكَنت عَل١ِبراهِیْۃ‏ وَكَ یآ 
: ۲ 3 5ے 3 7 پ کے کے 

نامع انت ع یں فِں الليق وشن عکّی مکی وک یآ مم گما 


)١(‏ اللَهْمَ وَمَيّۂْ على ئُحبَيِوَع لَآلِ ُیِِ گا مَلَمْت هَلبراوِیۃ 
وَعگیآلِ بای اك عيں قئ. (اضاءئ٢)‏ 

تج :اے الشد !سید نا یم اورل سید نا سأ پردرودنازل فرما ضس طر تو 
نے ححضرت ابرایم اورضضرت ابرای مکی اولادپردرددنازل فرمایا۔ یتو بی قائل 
تھریف مز رک ہے۔اے الد اسیدنا شحھسلأی ای ادرسیدن شح سای کی اولاد یر برکت 
نازل فر ماس طر تو نے سید نا برا ڈیم اورسیدنا براح مکی ادلاد پر برکت نازل فررالی- 
بییکتو اك ریف بزر ے۔اے اللد ارجم تک سید حح رسای اورس نا حح ساہنم 


۰ 


کی ادا یسر تو نے رح ت نمی رت ابرا یم اور تخت ابر ا لی مکی اولاد پر اے 
ابع تآ مز شخقت مح للہا اور لح پرفر مان س ططر تو نے حضرت ای راقیم 
او رخرت ابر پی مکی اولا د رح تآ می شفقتف مائی۔ یتو مقام لٹ ریف بر ند 
اے الا سلا مغ سینا شح سای ادرسیدن مس ٹا کی اولاد یجس ط رح تونے 
رت ابرا ڈیم اورتحخرت ابرائڈی مکی اداد پرسلامکھہھا۔ یتو قام لٹ ریف بر بت 
(١۱)النَيمٌ‏ علِّ عل كت وع .آل كْيِ گا لت َال انرام 
آلِاترَاهِيْم إِنَّكَ یل کُیں۔ 

تج :اے اللاسید نا ملین لے نا زرل فر مااورل سیددن حم سأ پرجیی سو نے 
رت ابرا ڈیم علی السلا مک یکل پرصلے ق نا زل فرماکی۔ بے ںیک توم کیا واب نر ے۔ 
اےالش !سید نا موی پر کت ناز لف رما جیما کیو نے ححضرت ابا ڈیم علی السلا مکی 
آل پر کت نازل فرمالی۔ بے پک وج کیاب زرل ے- 

*٭ حضرت الس حودانصا رک رشھی اللعن سے دوایت ہےر ماتے عہیں نی ارم ہکم 
ہادے پا تشریف لا ۔(اس وفقت )۹ سعدبنعباد ہٹس میس تے۔ بش رین 
سعدر نے وف کیاا لد تالی نےبمی ںآپ پرددودشری ف کی اح د یا( تو بتایے ) مآپ 
کس رح ددددش یی کیگییں۔فر مات ہہیں نی اکر سای ند یرخا مو رہ ےک یکلہ 
بھم نے فیا لکیاانہوں ن ےآپ سے پو چھا یی ررسول اکر لی نےف ما یاائس 
طر حکہو 


(۱۸) اَللَيْ عَل عل کک وقل ال گر گنا عَلّیت علابراِیر 
إََِكَ یں مل (جائ ت بی اہواب وف سور الا زاب )ترجہ :اے الد اضر تر 
سأ ادرآپ سای مک آل پر اس طر رجح تج جس طر تو نے حفرت ابر ڈیم 
علبیرالعلام پررحمت ناز لف ر ایدانرلےٹاز لٹ اجس نکی ادرا نکیل پرعی اک 
نے برکت نازل فرماکی رت ابرائڈیم پر چہافوں میس ۔ بک تو ‌ھریف والا برک وبرز 
ہے۔اورسلام ای طط رح پڑھوی س طر ہیں ککھا گیا۔ 

(۹) الله لعل محْيِعَبِيِكوَرَمُولِك گَمَا عَلَيْتَ کَ لآ 

با یم وَتَارِگ عکی تی تیآ تحت كَمَا بَا كت ََل ١ِبرَاهِیْم‏ (اب 
الو لی لن یساب الدقوا تچ الخاربی )تر جم : اے الیل اسید نا شراب ایت برصلوہنازل 
فرما جو تیرے ہنرے اورتیر سے رسول بہیں یسیو نے اب رئیم علی السلامم پرصلو نازل 

فرماکی ادرسیدن سای پر کت نازل فرمااورآآل سیدن سأ لاہ پر ہرکت نان ل ف رما 
یتو نے ححخرت ابر ا ڈیم پرادرآل ابرا ڈیم پر برکت نازل فر ائی- 

لاٹ بن ال ز برح ال تھا لی عنرنے جودرو ڈنف لکیا سے وویہ ے 

(۲۰)ارأ از ْكُمنَا وآ ثُحبَنَا کہا تَزكَتت عَلاِبْرَاهِيْم (خناء)۔ 

ت ججہ: اے الد ارکفر ما حطر تح اہ پرادرآل حر تح اہ پر جیلو نے رححت 
فرمائی حضرت ابراشیم پراورتحخرت ابراحی مک یل پر 

(۲)اللَهمٌ لعل تُتيِوَآخلِ یہ ما عَلَّيْتَعَلِبراجِیۂ اِلّك 


١ ہے‎ 


٢'۳ 


7 1 7 
ہ9 2,5 طپ+وي ے؟ صگیے ہئۃ الایةہ با ك١‏ ٥ےک‏ 6ےھ 
ہیں ٹہیں اللَهَمٌ صَلِعَلِيْتَا مَعَهِمْ الله مَبَا رك عَلی تحَمْرِوَامْلبَیْیه 


۱ -- ‫َ 7 - 


صَلوةالنو و علوهالَبُزْيِیزق ل تُمَيالتِن الذؾ۔ المَلَامْ عَلَيتا 
وَرَشت اب کان (جزب انلوب بوال دا قلنی ).تر جمہ:اے اللد اح صلی اوران 
کےکگصردالوں پررحمت از ل رما جیا تو نے ابرا ڈیم علیہالسلاام پررمت :ازل فر الی- 
پیکتونآھری فکیگیابز رگی دالاے۔اے الد ہم پران کے ساترحمت ناز لف رما۔ اے 
ادا رکت نا زل نم یی اوران کےگھردالوں ریما ہرکت نازل فرمائی ابر انیم 
علیہ السلام پر بیفکت تر فکیابزرکی کے لان ے۔اے لاہ کت ٹاڑل اف رماپھم پر 
ان کےساھ ای رجمت ایم ندارو کا درو دنچ ا ٹیم پر ہو۔سلام ہویم پراورالڈدی 
رت اود ا کی برکتں۔ 

الو مل ون وَِاتغر تر 
ا لَهَمٌ عَِى وَسَلَمْ عل سَیيناثمَيِةڈ لآ وَأَضحايسَيِزتا ِ۵۵ 
مولاى صَلِوَسَلم دا ابا حَلعبيِتعَبْرالَلَيِ فُْهٍ 
نر کی 
عم خداوندی کے مطا بی درودشرر شیطر لام پڑ ےکا بھ یمر گیا سے اورائسل کے 
بھی متتدددعینے ہیں جونلف الما طوں سے مردیی ہیں ۔ چندمینے یہا ں کیھے جاتے ہیں 
*٭ جفر تعبدارڈربنمسودرشی اللعنہ سے ددایت سے ۔فر مات ہی ںک ہپ ملک جب نی 
سن کےساتنماز پڑت تو کے اڈ کے بنرو کی طرف سے الال پر سلام وہ تی یی 


مك 


پ لام ہو میکا ان پ لام ہو جب کی ٹفل بی رے آپ نے لام چیب را )تو اہن 
چرے پاک سے ہہادی جا ب مت چجہہوے اورقرما یا کہ وکا یلام ہ ہکیلکہ اڈ وخود 
سلام( ناک سے اک سلاٹتی د نے دالا ہے ۔ جب تم میس ےکوٹی نماز جس ٹییتوییں 
کے 

)١(‏ آلتَحِيَا تل ووَالضَلَرث وَالشَيِمَاثَ المَلَام عَلَبْكَاَيْها الكِی 
وَرَعَةُ الو وَبَرَكَأنَةُ المَلام عَلَيَا ول عِبَادالل الطٌاِِثی اَمْهَنُانْ 
لال ال یٹ ان فت را عَْ ہورم ول (یخار تاب اعصل :باب اقب ) 
ت جم :ایی کے لے ہیں تما موی ع با وٹی اور بد کی حا ٹیس اور مالی عباد٘یس ‏ اے 7 
آپ پرسلام ۶ا و کی یناو نون .ہم پپراورائلد کے نیک بندول پرسلام- 
سگوابی دبا ہو ںک اد کےسواکوکی معبووہیں اورمی سگواجی د باہو سک شاب ای اس 
کے بندرے اوراس کے رسول ہیں - 

اس یش ہدکوامامپششمم ابوعذیفہرادراماماجر نے تر بی دکی ہے۔ا سکونشہدبدایندائین سو کت 
یں او ری نماز میں پڑھاجااے۔ 

"رت عبدائش بن عباس رشھی ال عند سے ردایت سے ۔فرماتے ہی ںکرسول انم 
ہیں انقیات اےےکھاتے ت ےجس سط رح ق رآ نکی اسورت تے مے اورفرماتے جے 
(٠)التَجيّاث‏ الْمَمَارَكَةُ الضَلَواث الشَيِمَاغیلہ المَلام عَلَيكَ ایا 
لئ وَرَخيَةُ اللووترَكَائَۂُ اَلمَلَم عَلَیتَا وع تاد الو الطًَا نی 


‫َ 


شی ان لا لها الام اَق تکَلا رش ول اللہ (جخاریؤم)۔ 


۸َ 


ترجہ :ای کے لے ہیں تما و لی ع با وٗی ہ بی عپا اٹ اور مالی عباوٗنس۔اے نی یآپ 
پرسلام ہواورالشی اور ںون ار ورالا کے مات بٹروں پ لام ہہو۔ میں 
اہی اہو لک ال کے و اکوکی مجویگیں اورٹل اگواجیاد باہو ںک شی اس کے 
بنرےاوررسول ہیں۔ امش دکوامام شانہی نے اخقتیارکیا ے۔ 

"ضر تعہ ردام نگھرشی ایل تھالی عنماز یس اس طر حتشہد پڑ تن جے 

اَل اث لوالا ا اللہ الم لان عَلی 
مت اَلمَلَام عَلَيْتَا ول جباد اللہ الضًا یی 


1 1 کے اپ کک 


ثانلتاِلةَالا ال هُوَمَهلْثُ نَا رم ول اللو(۶ط)7 :اللہ 


)٣(‏ پشچ الله الفَحِيّاتٌ 


جو ور غآرتاہوں یما ۰-۰ ات تولبیرااش کے لیے ٹیں ‏ سا ری عیادات ب رم 
الد گے گنی ما ری 7 دعحبادات ال کے لے ٹہیں ۔ لام ہنی یہ پراوراشی 
قستسارا لگ رن ہین ۔سلام ہوم پرادو رای کے ٹیک ہنرو پیر مشش نے ائں 

با تکیگوابی دی یک اید کےسواکوکی مت ووکیں اوریٹیں گوابکی دک یکہ جلاک سیدناتھ 
سٹ الد تتعالی کے رسول ہیں ۔ححضرت امام ما کیک رح اد نے ای سسلا مکوا ختیا کیا ے۔ 
اراس میں انم عَايت ان اق کی جا الم لانھ عَل الب مور ے_ 
-٭؟ حرت ما ا اک بڑھاکرن یتھیں 


ے۔ 
1 


٥(‏ )لتَحيَّاث القلی) 6 0"009ئ"*" 


س- 2۶ 907 اَلمَّلَاتھ 
عَلَيكَ ایا التِقٌ وَرَحمَة اللووََرَكَانَهُ ئٌهُ. المَلَام عغلیکا عَلَيْتَا وَکلی عِبَاداللہ 


ًَ 


۵ا" 


الا تی الس لام لکن( 3ط)۔ت ججمہ: ساد عباداتتولیہءماليءاورعبادت 
بر شیباورسارگی اک گیاں اڈ کے لے ہیں۔ مل شہادت د اہو ںکہالد کےسواکوئی معبود 
72.0 اید تا ہو ںک سید ن ]ایم انڈدتحا لی کے بنرے اورااس کے رسول ہیں ۔ 
سام ھآپ پر ےکی الم اورا نلفعاورا لی ہے ۔سلام ونم پراور 
الیل کے نیک بندول پر- 

(۵)اَلتَجِيات المْمَرَكَاث الطَلوث الليْمَاتيلہ سَلَام عَلَيْكَ ایا 
لتق وَرَخَةادلووَبَرَكَائه. سَلَم عَلَيْنَا ول جِبَاد الو الضَا جن 
اَغْعَلاَنلَ٣الةَال‏ الله وََغهْهَلاَنٌكُمَنَا عَبْلَه وَرَمُؤلَه(نلٌ)۔ 

تر جمہ: سارگی با رک تعبادتتولی عحبادات دالیہ عحبادات برشبہ اگج گال انل کے لیے 
یں ۔ لام :ھآپ پرااے می صلی اورائندکی رھت اوران گی نآ و ۔ لام ھوٹم 
پراوراڈٹد کے نیک بندروں پر ۔ می لگوابید باہو ںکہ بے پیک الد کے سو اک وی مت وڑکڑیں 
اورگواجی د یتاہہو ںکہ یٹک سید نام ہم اد کے ہنرے او راس کے رسول ایام 
ہیں۔ 

*٭ حرت جابررشی ال عنرےردایت سے ۔فرماتے ہیں رسول اہی ںنش ہداس 
طر سکھاتے ے چیتاسی ں تا نکی سورت تے 

(۹) سج الو اللہ الكَحِياث ڈو الضَلواث القَيِبِث.اَلمَلَام عَلَيكَ 
یا لن وََخجَةُ ادلووَبِرَكَائة اَلمَلَام عَلَيْتا ول با دانوالطًا ین 
َمْیَنَاںلَ!ل فلا الا وَاَخْمَنَْنٌكمَنًا عَبْنَُوَرمؤْلۂ مل الله َتَة 


۷٦ 


وَآَوڈ اڈ وین القارِ (ضمائی ).تر جمہ :ال ے نام سے رو اورائش سے ستحیات اور 
ماز یں اور کی گیا ایل کے لئ ہیں۔اے ن یآپ پرسلام پہواورائش کی مت اورال 
کی شون ا وا کے کک بنروں پرسلام ہو- مین اگوابی د باہو ںک اڈ کے 
سواکوکی متبووکییں اورگوابید باہو ںکنخرت سال اللھ کے بنرے اوررسول ہیں- 
ا سے میں جنت مانگما ہوں او رآنگ سےر بک پنادما لگا ہوں _ 

ما مدکی علیہ رحمرنے اپتے اذکارشل فر ما کہ بفادگی وضسا کی نے ف مایا ےک۔رسول الڈ 
یکم سےآ تا میں سم ال کا اضافیعحت ےناب ت نیش ہے(اععۃ ) 


(ع)لتَِيَثَلله الشَيْمَاث الضَلَوثُ لہ المّلامۂ عَلَْكَاَيِيا لئ 


وَرَعيَةُ او وَبَرَکَاثة. اَلمَلَام عَلَيْنَا ول حِباد اللہ الضَّا یی اَهْيَدَان 
لال الله می ان متا عَْکوَرَم ول( نائی)۔ ‏ جمہ: سار عادات 
7 7 حبادت بش عبات مالیدالشد کے لئ ٹیں۔آپ پرسلام اے نی سی ا ورای 
زرل ںول یں لام ونم پپراورائ کے جیک بنلدوں پر میں گواہی 
دبا ہوں انس با تک یکہاللد کے سو اکوکی مع ووییں سے او رگواجی دیتاہو ںکہ کر 
صٹطاقم اد کے بنرے اورااس کے رسول صلا اہ ہیں ۔ 

(۸) لتَحِيَاث ینوالقَيِجَاث الطَلَوَاشُیلہ اَلمَلامۂ عَلَيك اَيَا اليَِن 
ورَحَةُ او وَبَرَکَائه. المَلَام عَلَيتَا ول تاد اللہ الضَّا یں اَهْيَنَانْ 
الال اللهوَحتَ٥ُلَا‏ فَريْكَلَه اَل اَكَكُمََاعَبلُوَرَُولڈ(ن‌ل) 


تج خھا معحباداتتتو لی مالبیہہ بدشی اش دی کے لے یں ۔اے ھی صلفطایلم آپ پرسلام 


ےا 


اورالدگی نخت اورا ںی رس ژل ہوں ۔سعلام پہ ونم پرا براشر ےک بتروںل پہ۔ 
میں شہادتد بت ہو ںک اید کے سواک وی متبودئیں۔دہ ہا ے ا لکاک وی شریک یں ے۔ 
اورشھادتد باہو لیک سب نا حیبق اش کے بننرے اوراس کے رسول صا ہیں۔ 
۳ 8 عَلَيكاَينَا ال وَرَمَةاِلووَ 
7کت . اَلمَلَائرء عَلَتَا عَليْنَا وَقلی جبَادِاللوالصًا یں( حاوی)۔7 مم : نام 
عبا دا ت تولیہہ بر شیا کے لے یں ۔سلام وآ پ پراے ہی سأ اور ای کی رحمت اور 
اںکا 7" ۔ لام پہویکم پرا و راد کے ٹیک بتروںل پر-۔ 
()پسچ اللووَيِاش ہیر المماء و۶ ئٴه8ٴ00ھ+7 اثالله۔ 
0 0ھ+4+ تَهُلَا کر يكَلَةُ وَأَمْهَل أنحُمَنَا عَبْنَڈُو 
وڈ ہت ودَزْڑاؤ اق الماعَةاتِيَةُلَارَیب فِینا۔ 
تت عَلَيك يَالِ كئٌ وَرَخَةُ الو وَبِرَكَأتة اَلمَلَام عَلَيْنَا وَهلی عبَادِ 
کات ئل اغضرل ایق( طرای)۔ت جم :ال کے نام ےٹروں 
کرت ہول اورارد یکیو بی سے جوسمارے نا مو یل سب سے؟بت نام ہے۔ سا کی 
عحبادا ت تو لی ءعبادات مالیہعبادات بدشیبای تی کے لے یں ۔ می لگوابمی دیتانہو ںکہ 
لا ٹیک ال تی کےسواکوکئی ممبو یں دہ تھا ہے ا سکاکوک یش یک میں ۔اورگوائی دا 
ہو ںکہ با شک سینا شم رس الد تعا لی کے ہندرے اوراس کے رسول میں ۔آ پ سأ ہم 
بر و ےا 2د ون کا کے اوران ے16 - کا 
(نافرمائوں کے لج )۔اور یی اس با تک یگوابیبھی دیتاہو ںک قیام ت1آ نے والی ے۔ 


۲۸ 


اں سکوٹی ہنس سے لام وپ تانۓ می ابا اور شیلمدبرانگل 
ہیں ہوں ۔علام ہہ ونم پبراوراد کے شیک بندول پر اے الڈرمی کی مخفر تفر مااو چوک 
پراتدے۔ 

(۱۱پسم الو ار شلیٰ رش ول اڈ( ندرک ما )۔ت جم :ایل کے نام سے 
رو کنا ہوں اورسلام ہوایشد کے رسول صا پر 

ار ےک یرددددوسلام کے صینفے جوتحر یر کے ہیں گر مز کے تحلق یگ رنماز سے 
ہنی ا نکا یڑ مناجاتزاور با عشل اب ے۔ 

علامیی قاری نیف تح عَلَيت کے مات تکتت ہیں وو ملق يَفل عال 
الصَلوۃوَعَترِعَا (شرح شفاءج ٢جس‏ ۲٣۱)۔‏ بیسلاممعشکتینماز یل اورماز ے غارح 
بھی پڑھنا جائڑہے۔ 

سلام کے صیے اورککمات او ری ال کے ےیگ رخماز میں پڑ سح ےکا جس سلا مکاحھم د ایا 
ےد: ے المَلام عَلَيكَ ایا ال وَرَخَة الو وب رَكَاثه الَمَلَامُ عَلَيْنا 
وَعل با داللہ الضا تی (اخاء) 

سام سیصیفوں میں مسعممولی سامفشی اختلاف پا یا جا تا ہے(١)‏ الس لان عَلَبيك ایا 
ال وَرَخَة ابر کان (٥)آ‏ لماع الک وَرَمَة ا وَترَکَاتُ اں 
کوامام ما نک نے ا پیم طایس روای تکیا ہے( ۳ایک اورددایت میں ہے ملا ٹھ 
عَلَيك ایا الک رمک التب اتا سکونسالی نے روای تکیااوراس میں 
الشلام کا مجاۓےسلامرے۔ 


۱۹ 


رت اب ناس وا نکش می سا مکا زکربطورگرہ آ اےاوراں نے 
ااف لام سےسلامز یاد دک ہوجا ا ےکیوکک اس میں لام استنفر؛ ق ینس کے لے 
ہے۔علادداز بس السا مکا ینف فاق رآآن ید کےبجھیز یاددمطابقی ہے اس لےکیق رآنن مجید 
یش ارشادفداوندکی سے وَالكلاٹھ قلی کمن الم ال ی(سرط:ے 7)٤‏ جم:اور 
جھ ہدام تک بات مانے ال ںکوسلام ۔اورفر مان ای ہے الام شک وم وك 
وَيَ مہ اث وَيَ مم أبَث گا (سورہمریم:٣٣۳)۔ت‏ جم :اورسلام ہوئجھ پرنٛس دن 
یں پباراہہوا۔ اورس دن یل ممروں اورٛشس دن می زند اٹھایاجاں- 
اوردرودوسلامم کے سے جواحاد یث مہارکہشیش منقول ہیں ا نکواسی ط رح پڑ ہنا جا ہے_ 
ان می کی ٹن یکر نا درستئیں ے۔ 

موْلای صَلِ وَسَلَم انتا ابا خی حبِیبك حَبر اللقِ كُلهم 
را زیت کودورکر ے کسلئے رما 


-۲ 


لاعت ان عذيت وانن ايك تا مت ييِیك َاض ٥‏ 
أ و أتزَلَكةی ِتابِت آَوَعَلَْتَةاَحتَاِن خَلقِك وا سقَأزت ب فی ویر 
القَيپ عِنْتك ان تْعَل الف ران الْعَيِیْمَ ريغ قَلِیوَتورَبَکَری ولا“ 
خزوَذْعَابَِ مَیی وَغْی _ صَل اللہ کل عَبر حَلَيهِسَيِیِتا ُمَيِوَهَل ايه 
ابمل (حصن نین دیرہ)۔تۃ جم :اےالل دی تیابندہ ہول اورترے 
بنڑرےک بنا بہول اورتیبرکی ہندکیککا بنا ہوں ۔اورمبرکی پپیشا پی تیر ےق ضقررت یں 


۳۲۰ 


ہے تج رافیملہچغیرے بارے میس سے دہ نفد ہے ۔تجےرکی قامیرے بارے میں کرای 
عدل ہے ۔تتیرے ہراس نام کے واسطہ سے میس جھ سے سوا لکراہوں جوا نا نا م تو نے نود 
رکھاء یا جونامبچونے ات کاب میں ناززل فر مایا ا ہق یھو قکوککھایاء یا ےتونے اپنے 
یب میس اپ پا ٹتفوغف ما یا۔ یش موا لکرتاہو ںکیتوق رآ نکومیرے د لک بہار 
بنادے اورمی ری آ نکموں کا ور بنادے اورمر۔ ور کے دورہہونے او رم ر؟ یکریم سے 
گے جان کاذد یہ بنادرے ۔ الڈددجمت ناززل فرماۓ سار تکوش ے ہہت جار ےسردار 
سیت پر ودرا نکی آل گا پراورسلام 

مولای صَلِ وَسلہ دانتا ابا شَلیحِيبك مر القَلق هی 
گیاسلام کے شب ردرود پڑعنا اکھروڑے 
امام نو وگی رجمتت ال علیفرماتے ہیں اذا صلی على النبی ٹا فلیجبع بین الصلاۃ 
والتسلیم فلا یقتصر علی احدھہا فلا یقول صل الله عليەفقط ولا 
عليهالسلام فقط.وھذا الذی قالەمدتزع منھذدالآیةالکریمة 
وھ قولہ بَا ال امَموا صَلُوَا عَلَيْهوَسَيمُوْالَشيْقا فالاول ان 
یقال صل اللہ عليه وسلحر تس لی( تیر ای کشر )حور س فا پردرود 
یی وقت سو سلام دونوں ایک سا تجح یییے جا ہیں ۔صرف ایک پراکتفامرتے ہو نہ 
صرف می ال علیکہنا چا ہے اور تصرف علیہالسلام۔ ریقول ا یآ یت لو اعَلَيْهِ 
ھاٹڑا پا (ق ان پردرودپڑھحواورقوب سلا تھچ اے ماخوذ ہے۔ بت ری سے 
کہ لو ںکہاجاۓضَل اللهُعَلَهْهِوَسَلّم تَشیقا۔ 


٢٢ 


اوردرو کےسیقوں کےساتحوسلام کے مل ما لیے چابیے۔ححضرت تن عبرائلی محرٹ 
دعلو یلت ہیں جودرودسلام کے کر سے نالی ہے اس میس پیم مان ےل لئ عَلَيكَ 
ا اي الكَرِیْموَرَخمَةاللووَتَرَكَانَهُ (سعلام وآ پ پر اے نیک ریم اورالٹرکی 
رت اور سکی برکتیں )اس ل ۓےکرصلوۃ ما ذکراغیرسلام کے !کشعلاء کےنز و یکککروہ 
ہے۔ بی تل ماخ ذ ے الد تھا لی کے ال فرماان سے پا ایا الَينَامَثُوا لوا عَلَيْهِ 
ات اق( اے ایمان وااودروھجوان پراورخوبسلا کیچ )۔ اگ ین للا رو 
ا سک یکراہت می کلام ےن خلاف اولی ہو نات شف علیہ ے۔ 

آنحضرت ینہ نے سلا مکاتنزکرہ یلت درودوں میں لوق کے سا ت ہی ف رما یا سے وہ 
اس لے سےکریصحارشی اتا ی ضحم اس بات کے جات وانے تھے جیا اعد یئل 
آ ا ےک ھا کی ایک جماع تہ تحضرت می مکی خرمت میس حاضرہوٹی اورک لکیایا 
رسول ال کم ن ےآ پ ای پرسلا مکی کال یق سیمدلیا۔ اس سے مرادددسسلام سے جچھ 
تدش پڑت ہیں ۔ا بآپ سای کاو لو ہکس طر حھتزیں .تپ س لیم 
برا کہ ڑء اَللَهْم صَل لی مت 2ق لآ مکیلع یٹث۔او دای طر 
نل سام راہ سکرد یناج یھھردہ سے یا خلاف او لی ہوگا- 

کی مصنفو کا تا عد ود ےک آنحضرت ای کک میس علیالسلام پراکتفاکرتے 
یکن اٹل عر بک یکتب میں یہ بات مہ تگم سے ج نین نین میں ہے۔اور 
متاخ ری نکاانفاقی ہ وکیا ےک د صلی کین ہیں یہابت بینم او رن قصو دک اد اکر 
در والا سے بھ لی رکمرتے ہیں کہاختقار سے مرا دی الیکا ذکرکرنا ہے اورائ لچ کو 


۲۳ 


ہلل میں او رت میں ڑا کرد ینا ہت ابچھااوراوٹی سے جیا رکیل تفہ نمتوں میںگ۷ماہوا 
د یک ھاگیاے اکر آتحضرت لی پرد اکر نا تما مل داسحاب اورگؾ مو ننکوشائل 
ہے( جزب القلوب) 
نس حدریثوں میں صرف عسلوۃ پراکنفاءک گیا ہے۔اورین حدبٹوں می سلا مکاذک رآ یا 
سے وکیا سلام کے بی ردرود یا درود کے بی رسلا یڑ نامھردہ ہے؟ اس باارے میں دو 
ملک ہیں :(۱ )ایک ملک بر ےکرصرفصللو ق یڑ نایا صرف سلام پڑع نارود ے-_ 
دنو لکو اکر پڑھنا چا ہے ۔(٣)‏ دوس ا ملک ہر ےک اف ادی طور پر یڑ ھناعھرو ہیں 
سے ۔لیان سب سے ال ہاو راک لامکمل بھی ےکرل 3 وسلام ملاک پڑھاساے۔ 
طاصی تار یھت و فںل علی اءہہاآ عبادتان مستقلتان‌لایکرہ5انفراد 
احد اہم وان نان الا وی والافضل جم٭٣جآ(‏ جوم رسائل ماعلی تقاریء نج کش 
۹٠)۔د‏ لال اس بات پر ڈی کہ ہیک درودوسلام پڑھنادونوں سخ عماوٹیس ہیں ان 
یں ےکی ای ککاپڑھنااف اد طور پکروہئیں ہے مہخراوراأل دونو کو عکرنا 
ے۔ 
ران الد بین ابراشیم القانی بھی (مت فی یھ کفرماتے ہیں: 

اَلتَمْلِلوعل صَلاتہ تُوَسمَلَام اللومَع صَلاته 

)ول ویر) 

تج : تما ٹھریٹیں ارڈ کے لی ام سک یش او تو کی عطا پرہ یرایل کی رف سے 
علام ہوا کے درود کے سا تح ور تتحه سيا پر۔ 


۲۳ 


اس شع میں صلو ت وسلام دونو ںکوئ کیا سے۔سا کا ذکر پیل اورصل تا کر بعد یں لا یا 
گیا ہے وزن شمھرکیکی وجرے۔ 
عطار پنادنامرییں فرماتے ہیں : 

رم ازماضردرورصرسلام بررسول ول واصھ ہن تام 
ترجہ :ہما ری طرف ےجنگکٹڑوں دروداورسلام رسول ال پراو رآ پ “یلم یل اور 
آپ فی سے تما غاب و 

لم مل رِلَلی ھن 

کیا آپ بل کے لے دعاورحمت اوردھاءمخفر تک نا چان سے 
حضرت لی رشی اڈ عد تقو زصلہ : سےپتض ہسیفوں می سأ کم (اے الد 
بہت ران فر ال از ص حقی می (اے امھ ٹین پت را ال 
تم کا (اے اش لفن پر رف رما کے دع سمیکمات ڈذرکور ہیں وکیا آپ 
سان کے لے درجاۓ مغضرت اوردعاۓ رحم تک نا چا ہے پاییں؟ 
رت قاضی عیائ رحمائلدفرماتے ہی کہا ن لمات کے علاد میمش جورم فوع عد بہٹ 
بیالفاظ کیل ہیں۔ 
امام اور وبکن کبدالہر رم ایشد دنر ہکا نذسحب ہی ےک ہن یریم سام کیل دھاۓ رحمت 
نی ماکنی چاہے بللآپ لایخ کے لےصرف درودد مک تک دعا گنی چابے جک 
رسول الین کے لے نا سے۔ المتن دسر ویں کے لے ررحمت و مضفر کی دعا انی 


چا یے(اشناء) 


م۲۳ 


2 کے ہیں رحمت دمخفر تک دعا آپ کے لل ےکر ناجا ہے۔ ایک تو ا کی 
ماع تی ۔ دوس را یک ریم سای ا ںآیت پر لکرتے ہم وَاستَغفِزلِذَنبِكَ 
(سو ررش )دن میں سر سےز یاددمرتبراستتغفارفرماتے تھے تس روایات می ںآ متا ےل 
سوصرعتہہاسننففارف مات ے(شرں التذامء ع ٣ل‏ ۳۴) 

علامییگی تقارکی گت ہی ںک ہیس نے شال ت ری یس دیکھا اي وَا نا من الطَکَابَة 
قاللەعليه الصلوۃوالسلام غَقَرَ اللهلَكَ وَقَال وَلَكَ(ثرج‌اٹاء۲ء 
مص ۱۳۴ )کہ بین کی سای نے رسول اللس بینم سے عون سکیا لآ پکو نے اورآپ 
صلٹڈیہ نے جواب میں ف مایا اور اہی بھی بن _ 

نعم ھذا هو الاول وَلکن لاجل الٹھی بحتا جا ی دلیل مثبت 

للدعوی (شرب الشفاءءع ٢بج‏ ٣۳٢)۔‏ ہا ۷بت می ےک ہآپ پردرودوسلام بی پڑھا 
جاۓ )و عا شش نہ گی جا ےلین حدم مخفرت ورجح تکی دھا کے تلق بت وی لکی 
عاجت ہے( جوئی پا یگئی )۔ 

علامعلاءالد بن الومرا لکاسالی (متو فی ے ۵۸ھ ) لت ہیں اکر مار کے نز ویک اس 
یس وارحم ھہیں(اورآتحضرت لت قرف ما )کہناھرووئیں ج ب کین نے اسے 
رووا یا ہے ۔اا ن کا خیالی ےک اس سےآحضرت ٹر کے بارے میس وہ ہو 
سا ےک شاب( معاذ ال ) آپ نے اطاعت خداوندی می لکول یکوتاب یکی ہے اس ل ےک 
جب سیکیھیمکا وک رآ تا ہو کے ہیں اللراس پرفریائے۔ 

ت| ئک تقو بی ےکیکرو ناس اس لیےکیب دی خواءکتاہی بلندم جب ہوا دوانڈتعایٰ 


۲۵ 


کی رحمت سے ستطف یں ہوسکتا۔ ا ہفراکہنامھرد ہیی جلی الیک ددایت ےک ایک پار 
نی اکم ای نے بین رما اککوگ نشی اض اپٹیملوں کےساتھ جنت م۲ نویس جاے 
گا او ہا سے الد تھا یکی رعمت عاصمل نہوجاے ۔ بی پچھاگ کیا آ پبھی یارسول 
اش ای ۔فرما اہ اں شی سپھ ینم کاڈ تھالی ای مھ اق ہمت یں ڈھاشپ لے۔ 
ال کام یدشبوت بی ےکرجب نی اکم ایل کے لیے بیکہنا جا ےکراے الد 
حضرستثھ پردرودناز لف رما حالائک درود( صلا )د رتقیقت الل تا یکی جاب ےٹزول 
رحصت سے کی عبارت تےآو بی کہناچھی مز ہوگکہاے ات آحضورس لی رف رما 
(ہدائج الصنا ش کاب الصلو)_ 

علامہسپجودآاوی رنطرازژں وهو اللی امیل الیه وان کان الںعاء بمغفرة 
لا یستلزم وجوب ذنب,بل قدیکون بزیادۃدرجات کہا یشیراليه 
استغفارہعليهالصلاةوالسلام فُ الیوم واللیلةمائةمرۃ وکذا 
الدعاء بپاللبیت الصغیرۃڈٹی صلاۃامجنازۃ ومثل ذلك فما یظھر عفآ 
الله تعا ٰ عنەوان وقع فی القرآن فان الله تعا یٰلە ان بخاطب عبںہیما 
شاھ(روبالعالٰ. ا۲ش ۳٣۴)(والشر‏ م)۔ 

مَوْلَاى صَلِوَسمَلْمْ دَاوْا ابَنا لی حَبِيبت تیر القَلق کُلهچر 
احاب ھ ہت س یمم بر رو2 ھت 

سوال :صلوۃ کےیسیخوں می1 لس ای اورآل ابرایم پر درو دی کاعم د ایانس بہ 
پردرو دی ےکا ذک رکیل مننی وعلی اصص اب مہ ں نمی لآ یا سے ۔عحصرف تی غارح از 


ع 


صلودرود پڑھاجاا ے۔ ا لک یگیاوج ے؟ 
جواب :آ لکالفظظ ا تاجاح ےکا کا اطلا قآل او راہ پردرست ہے اس لے ایک 
می کے اتا ر سے سا ری امت مس کونشائل ‏ ےکی ون ہآال نی د ولیک ہہیں جو نی ہہ 
کی پچےردئ یکرت ہیں او رق رآ نک۷ریم میس لفظطآل ای می می سآ یا ہے۔ ارآ ل مہم 
پرجب درود پڑھاگیاتوسحابہ پیی پڑھاگیاکینگ سال میں دائل ہیں۔ اس لئے 
سحا کرام پرصرا ا درددپڑ ھ کا کی ںکیا گیا۔اورجب روافئُ نے سا ہکرام کو 
صلوۃ سے نار ج مانناش رو غکیاتقوائل سنت نے ا نکی تد یدکی ا رسھا برک رام کے لن کا 
صراضنا اضافہگرد یا۔ ای لے ائلیسنت و جماععت ول درود پڑ ھت ہیں- 

ہرد ازماصددرودوصدسلام جل برسول ول واصحا ہل تام 
علا ےکپرالعز پرہھااروکی رن ال عل گت ہیں 
اي اليْيْعدَرَعَوْا اي ذِ تر الْاخحابِيِنْعَذُلَم يْنقَلَ عيِ الین 5ڈ 
اواب عِنِقی يِوجْهَتي ارہ رات 
الفکَار وَلكِنلَمَا تا ٤ی‏ الْعَامَة تَفيلز الال رآفلِ الْبَيْيِوَالاَوَلادِ 
رون الِْْكَوَِہ سب الصَکاتة ۶2 زع آخل المتِِنِ قرو ل 
القَايَإِقَالضَلوۃَعَلَیْہممْ 7 کال الاتعال غڈمن انولھۂ 
صَتَقَةنِيرهُۂ وَثزيِِْۂ بَا وَصَلِعَلَْہمۂم علخ ِق سك سَگو لم 
(سورہتوب:۰۳). شی حَمْل الله اجن ای آ فی قَال کان القِيغ بدا اَا٥نَوْتم‏ 


ے۲ 


بعَتَقیبۂ َال الهَمٌ عَل ع ل آلِفُلايِفَأَتاة اب بِحَتَةَتَِقَال الْهْمَ 
0ھ رج وَلكِن جَعَلَمَا الطَّلوةٌعَلَيْہِم تَبْکَايِلطّلوقِلی 
0ھ 
بقع هُتَا بث وَهُوإِنَ‌بَغضَ الْفْصَلَا یذ کر نی نکتة تَضَلِيَةِ ان الظَّلوۃ 
یر ھپرڈل یھو حهدا بنا 
لتعَال وَأورَدَعَلَيْهإِنالوسیْلَةينيین ان تلم وَأجيْبَياًا 
للع ناو ول تر فوف0 
ڑج :شیع کت ہیں رصلو تعلی| نیاوی کےموتجح رما کا کرک رنا اعت ہے ا 
لک ہنی صا لی سے ال موق پراسحا بکاذکر اب ت یں سے ان کےا ول کے دہ 
قانیاؤں۔ 
جواب:(۱) ارول می ےک ھا کر ا مچھ یل می دافل ہیں اورآل پردرودیجیناحد یٹ 
ےنات نے سای رسای ہ وگ کہ جب اصحا بآل میں داشل ہیں وص نفی نل کے 
بعداصحا کا ذکردوبار ہکیو ںکرتے ہہیں؟جواب ا لکابیر ےکرعم لوگوں بی او راک 
وین میں لی کیا ال جاودزا ےسا کنا مشمبورے اور بل رشب کی طرف سے 
ح تھا( راکہنا )کا ظبور ہواتواظہارشن کے لے تخصیص بعد التعدیجر کے ور 
پ(اہھل السزة وا مہا نےآ کل کے بعد اصسحاب کے ذک کی فص کی ے۔ 
(۴) شی کا کہ الو علی اصحابا یی ٹین نا ہت نیس خلطد سے تر آن‌اور 
احاد یٹ میں صلے ا یلی الاصحاب منقول ہے پا ہگیارہ( سور وتوہ )مق تعال یکاقول 


۲۸ 


ہکان کے مالوں سےصدق لیس کے ساتھ یں ر1کرواورایل پا کک واوران پھ 
و7 پڑھو۔ بین کآ پکی لو 3(دعا ان کے لے موجب سلون سے 

ای ط رع باریی سم میں عبدا اشن ای ادئی رشی اما سے ردایت ہے دوفرماتے 
ہی ںکرج بکو فقوم نی صلی کے پاس انی زکو ۃوصدقہ نےکرآلی ت وآ پ نیس دعا 
دتے ہو فرماتےاللیجر صى علی آل فلان تو ایک ہو پر یرےەالداپتا 
صدقآپ کے پا کےکرآئے تو آپ سای نے فرما ام صلی ع یآ لآن 
وق (اےاشالٰ ال ولا پردرودنازل فرا)۔ اس پرسوای ہے اک پچ تق صلو × 
٦ی‏ الاصحاب تم کیوں رو کت ہو۔ ا سکی وجہ پگ رچگی سے۔ 
ض ملا نے صلو علی لی اورصلے لی الال والاسحا بکا ای کت بیا نکیاے۔دہییکہ 
صلو علی لی اتال ی کےقر بکا وسیلہ سے او زرل علی الال وا لاصحاب نیک رم 
سن کےیقر بکاوسیلہ ہے۔ اس لل ےتسر کے بحدصل؛ ق کا ذک کیا جا تا ہے۔ اس پر 
اعترائ پیک یاگیا ےکہوسیایتومتقدم ہوتا ہے اور یہاں ال انیس ہے جی اردان ہے۔ اس 
کاجواب ہیرے کہ یہاں سیل الچ ذکر شی مقدع ہیں سے کیوک یتم صلہ تعلی انی سے 
مدرم مےاورصا ہعلی لی لو لی الال سے مقدم ےمان وسیلہ ذ ہن یس مقدم ہے۔ 
صحا کرام اورائل :یت عظام کے اممت پر بہت سے احسانات ڈیں ۔ ال لئ تا ان نی 
صلاۃوسلام پڑھنا چا بے۔ابلل بت جا تک شک یں ۔اورسھا فو رشبوت کے ستارے 
یں۔ 

الأةر صَلِ وع وبا رک عل حّيِ 


ای تنا تک شاو نار وت کے تارےمن 
علامہنظامالد ین ئن خیشا ری (مت فی 22۲۸ھ ) کھت یں‌قال بعض الہ لکرین 
مر کَمَقَلِ مَفْيتَةِ و مَن رَیِے فْیبَاتجا 
تن تَقَلَفَ عَتفَاعَریَ وعبه کہ اضتال کَالتجُومِ اہم إِقُکن یکم 
اِهْكَدَيْکُُم فنحن نر کب سفینة حب آل محں فو نضع ابصارناعلی 
۳ ۱ سا اف ااعا مت التکلیف 
وظلیة ا مجهألة ومن امواج الشبہ و الض لال (تخیخرابالقرآن ج٢‏ 
ے)۔علامفرماتے ڈی کہ ینک نی ماقم نے خر مایا مہ رے ائل ببی کی مال نضرت 
وج علیرالسلا مکی اگوی ہے۔جواس می سوارہوادوضجات 1 اگکیاادرجواس سے جک رہ 
گیادہڈو بگیا۔آ پ یلم نے فر مایا می رےعاہتارو لک رح ہیں ۔ان ٹس سے 
س کچھ تم پ رو یکر دہدایت پاجا گے ا ل محبت کے سوار؟ اپ ہگاہہو ںکونیوت کے 
تاروں پر رھت ہیں یچن یآ جارونشا نات پر اک یھ سحندرکی:نکلیف اور چہالل تک اندجی ری 
اورشبہات اورگرا یک موجوں (اہروں )ےےغجات پا گیں- 
رم اڑ ما صروروروصرسلام بررسول ول واصحاجنل تام 
صَلَاللة کل حبِییہ ثحبَيِ وع لآيہوَأحَايِۂوَسمَلَمَ 
یت 
امس لام عَلَيك ایا لقن (آپ پرسلام ہو اے نام ) خطاب کےصیغرے 
کے 


اس ک تق صاحب ا لبار کھت ہیں وبحتمل ان یقال على طریق اھل 
العرفان ان المصلین لہا استفتحوا باب البلکوت بالتحیات اذن 
لوج بالدخول فی حرم الحی الذی لا بموت فقرت اعیۂہم بألمناجاۃ 
فنہہوا علے ذلك ہو اسطة نی الر مة وبر کةمتابعةفالتفتوا فاًذا 

ا حہیب ث حرم ا حبیب حاضر فاقبلوا عليەقائلین السلام عليك 
ایا الدبی ورجمة اللہ وبر ات (الباری ٴ۲ ج۵۰٥‏ )ک ما زی جب التقیا تک 
وج ےگکوتکادروازوھلواتے بی ںتو ا نکواس پروردگا کی درگا بیس دائل ہو ن ےکی 
احجازتال جا ے جو زنددے بج بی مو ئن سآ تی ۔اس منا جات سےال نکیا 
ھی ں می ہوجائی ہیں اورانجی لآ گا وکیا جا کہ یج ملا سے بواسط ہنی ررمت اوران 
کی پر وٹ کی مرکت بی سےملاہے۔جب ای مظام پردہ پچ انہوں نے کرٹ کر جھ 
درک اک حجیب ٹیقی (اللدتعالیٰ کے در ہارشیس عبی ب۔کر یاصأا لی تش رین رما اورحاضر 
ژیں اورعجیی بکواس متقام پرعا ضر پاکرنما زی ہیی لک تے بی سک سام علیک ھا ال 
ورحۃ الٹرو رکا عھ- 

پش اس حعد بی کر ششفی می کیاکی ہے ان تحص الہ کیانآت تا( ملۃ)خ ال 
تال یکی عبادت ایی ےک روگو اکرش ا لکود پور ہے ہو( وا نلم ) 

علامہ بدداللد ددم فر مات ہیں 

فنہہوا علی ان ذلك بواسطة نبی ال ر مة وہر کةمتابعتەفاذا التفتوا 
فاذا اح4ہبیب ث حرم ا ح[بیب حاضر فاقبلوا عليهقائلین السلام 


اس 


علیك ایپاالٹبی ورحمة اللہ وبر کیاتہ(ض ۃالقاری٠ح‏ ٣ضے<۱)۔اورتردارکیا‏ 
ہےکہالن جیا کے وسیل ہاور برکت ےت ہار بیہا تک رسای ہوکی و انہوں نےکظ رھ 
اٹ ئی تعیب کو( تضو رسای ) ح رب رق میں جلو لکن پا یو السلام علیک ایہاالنی 
کت ہو بارگا و نیو یکی طرف مت جہہوئے۔ 

علام یا ب الد ہن اتدائ نج رتا کھت ایل وخوطبەمع ان سیاق 
التشهدیَقُتضن الَغیبة لان المصل یلما استفتح باب الملکوت 
بالتحیات اذن‌لەبالدخول فثی حرم الھی الذی لا بموت فقرت‌عیںه 
فتبهعلی ان ذلك بواسطةنبی ال رمة وہر کة متابعة فالتفت فاذا 
الحہیب حاضر ثم فاقبل عليهقائلا السلام عليك ا ی اخر5(الدر 
تضو دیس ے۷ ای شر مرہ)_ 

مدان عرتث دبلوی رح ادڈقشحدد می ںحکمت نخطا کھت ہیں وو جخلاب پافحضرت 
کرت ابقاتے ای نکلامرست ہراچ درائل بودکہ درشب مع راج از جانب ببردردگارتعا ید 
قش ب رآ تحضر تال خطاب ل ملا آم ریا سآ تحضرت د ری ن لی امت نی ہمان اخ ال 
گن اشت ماالشان رام ہکان حا لگ دد نان ھی فصب اشن مومنالن وق :لان عاہ ران 
ات ودری اجوال داوقا تتصوصادرحالت عبادت وخ رآ نک ہوجو دفو راخیت داککشاف ور 
نگل بشنروڈر بی تر مت لیے ازع رف اگفتہا نکہ این خلا بکہت میا ن خیخق تن یراست 
درذرائرمو جو دات واف راکنا ت می ںآ نحضرت درذات مع لیا لن مو جو دوحاضراست بل 
سکیا بابوکہاز ین مم آگاہ پاشدرداز بی ناکود ال بودماپان ارقرب دا ارمحرفتمورو 


۳۳۴۳ 


الف گردد(اشعۃ اللمعات فاری ءا ہش ۱٭ ۴ء سک الا شر بلوغامرام ا ص ۴۲۴)۔ 
آشحضرت الاب کو یہال فخاط بکر تن ےکی دج بی ےکا ںکلا مکوا تی اص ی حالت پر رکھا 
گیا ےک یکلام ونود صسل شب مرا کو پر وردگا رتا لی دنر لکی طرف ےآپ 
کےساتدک گی اورسلام کے سا تج پکویخاط بک کیا تو آتحضرت ڈیہ نے الیم سے 
وت وی اص لمات بای اورقائم ر کے تکاس تکودہحال یادلا ا جاے۔ نج زدوحالت 
پیش کے لے تام حالات دا وقات یں مومنو کا نصب امن اور عاہدو ںک یآگھمو کی 
ینرک سے ۔تصوص حا تعبادت میس اورماز کے1 خرمی سک ٹورانیت داکشا فکاوجود 
اس متقام یز یادہادرتو کی تر ہوا ہے۔اورینن عارش۲ن ن کہ اکہ بخطاب السلام 
علیك ایم الدبی اک نا پر ےک یقت می ہل ملہموجودات کے ذروں اورقام 
افراْکنات بی سرایت کے ہوۓ سے بی ںآحضرت پان نماز یو کی ذوات کے 
درمیائن حاضروموجودہوتے ہی ںآ نما ز یکو اہب ےک ال لعف وتقیقت ےآ گا در سے اور 
مشاحدہ ے نال نہ ہوت اک۔انو ارقرب اوراصرارمترفت سے متنوراورفیضیاب ہ9(اشند 
جات اردد تاب الصلو ٦ء‏ پاب اتور رج ٢‏ بک ۲۵۸)- 

روط ب ولعدغیست کی ہمت عیاں ددعائی فرسقت 
رای من ور یکم عائییں_ میں تھے پالصکل عیاں ادرظاہرد ھا ہوں اوردعا وں 
کے خن ےپبپاہوں رمک الا مشرب بورغ المرامء نال )٣۴۴‏ 
رت مس کھت ووجہ ا مخطاب لابقائەعلیٰ ما ورد حین التعلیم و 
اصلهیلیلة المعرا جخطاباله امن ربەتعالیٰ وتقدس بعد تحیته 


لەتعا یٰو بجوز ان‌یکون‌لکون ذاتەالشریفة الکریمة نصب عین 
البومدین و قرۃعین العابدین فی جمیع الاحوال و الاوقات خصوصاً 
حألةآخر الصلاة محصول النورانیة ی القلب۔ 

وقال بعض العارفین ان ذلك لسر یآن امحقیقة المحمدیة نی ذرائر 
البوجودات و افرادالکائنات کلھا فھو 28موجودحاضر ثی ذوات 
الیصلین و حاضر عندھم فینبغی للمؤُمن ان‌لا یغفل عن‌ھذا 
الشھودعسںھنذا ا خطاب لیبال من انوار القلب و یفوز باسر ار 
المعرفةصل الله علیك یارسول الله وسلح(لعات ہت ج۳ي۳۵)۔ 
لے سردآ لیر ال لاو واما الس لام الڈی یقص ںیه الزغ اما 
بالتسلیم من الله تعا یٰ علی الہں‌عو لەسواء کان بلفظ غیبة او حضور 
فھذا ھوالذی اختص بھ-28عن الامة فلا یسلم علی غیرہمۂہم الا 
تبعأً کہا اشار اليهالتقی السبی فی شفاء الغرام(ر‌العا ٠ئ٢‏ 
۳))( 

عبدان محرث دلو ال سام السلام علیکح و رمة اللہ وبرکیاتہ(سٴت 
*وآپ پراے نی اورائشکی رحمت اور برکت )کے ماج ت کھت ہیں اکینرک تطاب ماخر 
اودوآ کر ت کاٹ ریس مقام ند عاض راست می ںاوج ہدا۔رل خطاب پچہ اش جو اش ںآنس تل 
پوس ورودا یلگ دراص۷ل بی شب مع راج اصبدض خطاب بد ددد یگ رتشل نراونردہماں 
1 (لتو بات ححضرتحمخ حا شیا نبارالا نیا رش -)۳۱٣‏ 


۳۳ 


تج :اگرئی سک خطا یتو حا رک ہۃتاے اورپ سای اس متام پرحا ریس ہی تو 
ال خطا بک یتو جیکیاہوگی؟ جو اب ا لکابیر ےک پیل لود لشبمحراع ل بعیط 
نطاب داردہواے اورائ ںگو ایی پر برق اررکھامگیااوراس می لکوئ تیر ہکیاگیا- 
ھی کی وا لک ےےک اس میا بوحاضر کےصیینے سے او ری علیاللام 
حعاضر(جسمانی طور پر )نی تو بچل را کا مطل بکی ہوگا؟ جواب اعت راف کا ےک اصل 
یس درودائ سپ کا شب مرا میس ہواہے۔اوراس وقت نی علی السلام کے لئ خداوند 
کرییم نے صیفرحا رت نطاب فر مایا تھا۔ ایس الف وحن رکھایا ہے ۔اورم را دخطاب 
سے نی علیہالسلا مکا حاض ہو نی ہے۔ ای اکا لکی وجہےپجخ سا کرام نے بی علیہ 
السلا کی رعلت کے بحدران الا کور ککرد پا تار جب جح وج می ںآ کو یس لفاظط 
کومنا س ب کچھ امیا کتبا تچ عبداکن محرت دواوی کت ٹر ۳۸) 
اور ای طر۰ تن دنگ راعمال جو پ لاہن کےز مانریس کے گے ددامی حال پ باتی 
رت گے حا اکہرئی جمار ےکا سک علمت چھی اکہکغفار کےسانۓ ابق طاثت اور 
قو تکامظا ہر ہک رن تھا۔ و وضرورتتپخ ہوگئی ین ری ما رکنم باقی ہے۔ 
اورنماز ٹل بتطاب نی صلی کےتحصوصیات میں سے سے کی اورکٹما بیس اس 
مر خطا بی سکیا جاسکتا۔ 

یتو ای تقر ئگ 
7ف ذا(یأً)کااستعال 
السلام علیکم ایہا الٹبی مس ئا القینغ اص مل نایا القِيقُ ے۔- 


٥۵ 


یا 7ف ند اع فکاگیاے۔ ال کا عق ہے اے می ابی ۔ 

علامرمیرسیدنش لیف ٦یج‏ جاٹی رح الڈف مات ڈیں بدانمہاکی دنز برا ےےنڑد یک است 

دابیآادھیاماے ددردیاھاماست( نمی )کہم ہن دیک کے لے ے۔ایادھیا دوء 

کے کے ہیں۔اوریآعام ہے۔ 

تھی جرف ندکوطز فکرد ا جا تا ہے جیے ال لان عَلَييك ایا القِغ اصل متا 

انا لقن تھا. ول ناعبدایشسن جا می علیدال رف مات و وَتَأأَعَنّهَا إِسَتِعمَالا 

ِاتَبأَنُتَعمَليَنَاء الْقَِيب وَالیَعبی(ثب۵ؤ۳۲۶)۔ 

علا مہ شی الد نکھت ژں ومأذ کر الیصعف اول لاستعبمالھاثی القریب 

والبعیں‌علی السواء ودعوی الہجاز ثی احدھما اولتاویل خلاف 

الاصل(ئ رکفت ٣‏ ٴش ۴۵۲)- 

جس لوک کت ہیں حا ضر کے لے استا لکیا جا تا ہے۔البغرایا اڈ کنا چاہے اوریا 

رسول اللہ کہناجا نزیس ۔تو ان جوالوں سے ان لوگوں کے نیا لکی تر دیدہوجاٹی سے 

ایل ےکہ بیاترف ند اق جب تیراو رمتو سی میس استعال ہہوتا ہے۔اىی رب درایت 

اش ے ای یقع للقریب والبعیں( ۹۲" اويايسَتَعْمَللکُن مُتادی 

قر یبا تا ا تَعِنلا اؤممکی کا (اخواسیر شر اخومیری ۹۳)۔خلاص یہ ےکی 

7ف نداایما 7رف ےکہ اس سےقر یب اوردوردوفو لکوپکار کت ہو 

حطرت 2 عبدائن مورت دعلوکی رج اد درسول الل سی گی مارگاو شی عم کرت بین 
خرای د یربج ہمالت یارول اللہ جمال فو مارگ انز ارشی دای 


تر جمہ: یارہول الپ کے جمال کے پر ےکم میس بر باد موگیاہوں ۔اپنا ھا لککھاممیں 
اس جائن زارعاش پر ذ رارق فا مٌیں- 

>پرصور تکہ باشد ارسول الڈرک رم ف رما بلط ف خودسردسامان جع بے سرد مان 
ت جم : جیےجھی ہو ارول ادا نکمم سےٹواز بس ۔ ای عنایت سے ال بے ار ومددگار 
دا ل تن (اخبارالاخیارک )٢٣۲۳‏ 
معلوم ہواکہبیاہناملط ‏ ےکمبترف اصرف حاضر کے لے استعال ہوتا ہے 

خرت ما گی شحرامرادئل لہا ج گی رجم اتل ناخ الد بیا نکر تے ہو ئئے کلت ہیں 
ا رخاط بکااسماع وسنا نا قصود ےتاگ رتصفیہباطن سے منادک یکا مشابد کر ہا ےتوگھی 
چائز ے اوداگرمشا ہنی لکرتا لی ن تنا ےک فلا ذر لع سے ا لکوق رک چا ےگا اور 
دوڈر عنتابت پالشیل ہوت گی جا سے شا ملاک کا درودش رر تفورا نیس میں بیاٹچانا 
اعادیث ےثابت ہے۔ال اتاد ۓکول یت الصلوٰ8والسلام عليك یا 
رسبول ارہ کے ہد مضا یں (فیصل مخت مت كش١۱)‏ 

بی مین کی بارگاہ مس یں ند ارت ہیں 

اے سو لک یافریادے امھ شف فریادے 


آ پک الفت میس میرایا نی عال با رواٹ یادرے 
ست مکل میں پضاہو ںآ نج کل اے مرے شک لکشافریادرے 
چر٤‏ تا با ںکودکھاا دو نے تم سا ےاورخدافریادے 


گمردن و پا سے مرے زج روطوقی انی سے جدافریادے 


ے۳ 


تیم سےا ب پٹراد جج بے اش ہردورافریاد 
انی امرکودر پلوپلا اس لے ومسافریادرے 
(نال ا راظ ریبک )۲٢‏ 

این تب کھت ہی سک جب حخرتعبدالل رب نگھررشی ا رما مسی نی یش داخل 
ہوتے تد کتے اَلمَلان عَلَكَيَرَمُؤل اللہ لان عَلَيك 2ا بایگر۔ 
امام عَلَيكت یآ . بجرآپ پھرجاتے اودرای رت صا بآ پ سای پرسلام 
تیج تے وَيسلمُون عَلَيْه مستقی ام یجْرےمسشتذیری القْبلةِ( ءا 
داع یش ۴ھ)۔اورسلام کے اَلمَلائم عَلَيكَئَرسُوْل اللہ َاتِ ابلو۔ 
َاحَيرَةًَالومِن عَلَيه نآ کُرم اقَلَي عَلرَيٍو يَاِمَام المْتيْبِیَ کَهَنَا 
ون ما یآ مو وَأقی عَلٌ الةعَليهِوَسَلّم ‏ ء کَذَايِكَاذٌاصَل 
عَلَيمَع المَلایر عَلن( ماک ادا ہگ ۳ء)۔ 

الله صَلِوَصلّم وَإاِك علئحَيٍ 
خر تکبدانڈرای نس حودرشی اڈ رح کا ا جتادولَٹد 
خر تکپدارڈرار نس ہودرشی ای دع کو ریغ مات ہو ۓ سن اکہ مھ رحول اش ینم نے 
تچ کی لیم دی اراس وقت میریی دوفو ںتیایا ںآپ سی کی دنو ںاقمیلٰیوں کے 
درمیاننجیں جس طرح آپ یی نے ججھیق رآن بجیدکی می سور تکیاسحیم دکیاھی (اسی 
طر نٹ دکھایا)۔ 
لووَالطّلوَاثوَالشَيبَاث. اَلسَلامۂ عَلَيْك یا لئ وَرَخَةُ 


- 
الله 


ند۷ 
ص٭ سد 


. 
:۶ 


ٍ 


۸ 


لو وَبرَكَائَة. المَلَام عَلَيْنا وع جباد الہ الضا یئن اَهْمَلَاَنْ‌لَااِلة 
لا الله وَاَمْيَل اي تنَا عَبْلهُوَرَسُوْلَهُ وَهُوبَيِتَ هر انِیا فَلَقَا تق 
قُلَتَا المّلامر یی عَلی الگ (یخار تاب الاستیزالنءعد یٹ ۵١٦٢٦٢)۔‏ 
بہت مستئذ ای کے ےی فھںٴں 
ٹیں۔اے 0) پ پرسلام ہواورالشی رمت )ٴواورااں 7 تقہون ےم پ لام ہواور 
ال گے کے بننروں پرسلام ہو- من دای دیاہول کہ اید کے س اک وکیا د تکا می ین 
ہے اورمی سگوابی د بت ہو ںک مہم ای کے بنرے اراس کے رسول ہیں ۔ اس وقت 
آپ ایق ہمارےدرمیان تھے ج بآ پ ای کی دفات ہوک یو جم ےکہاالسلام 
یی پر۔ 
ابی ل “فی (غیرمقلدین )نود میس حاض رکےصلی فکوض دی ق ایل دے۔السلاھ 
علبیث کی بجاےالسلاہ علی الد یکہاجاے (عوان الباریائل اوت ا فا ر٠ ٣‏ 
ش۵۱ می رالاری شر کچ افاری ء نج ٹہ یش ۹۸٦)۔‏ ای اک نا درس ت یں سے اس ل ےکمہ می 
خر تع پدارڈ بن مسمودکاا پنااجنفادوف رد ہے۔اس کے علاووگھیپیتخش مسائ لپ کے 
تفردات ے ہیں سکیفصی ل نت الباری ء ٣ا‏ جس ۱٢‏ ہرے۔ 
یکرمم صلی کی مو جودگی می سسھا اکر ملف جنگوں او را روں کے لۓدوروراژ 
شہروں اورلگو ںکا سٹک کر تے حے او رف یکر مم صلی ان میس موجو یس ہو ت تو پچ ھی 
خماز مس لان عَليك ایا لقن پڑھا/رتے حاورا بجی پڑعاجادہاے۔- 
اورنہجی نی ٹفل نےف رما میرک دفات کے بعد الم لان عَلَيْك ایا التی 


کے جھائےالسلاہ علی الدبی پڑھنا تمہ با ئگ دا ےکترف یل فءماضر 
کے لیس بلہ غاب کے بھی ولا جا ے۔ 
عامج عابدسنیی (ے ۵ اھ ) گت ہیں لا شك ان الشارع صل الله تعا یٰ 
علیهوسلم علمھم لفظ التشھں,وقں اشتہل عل ا خطاب ولم یقل 
لھم اد ہم بخالفون ذلك اللفظ بعں وفاته مع ان البوجب ث الاثبأات 
بلفظ الغیبة کان موجودا نی زمانەصل اللەتعا یٰعليهوسلم 
لغیبتہم عن الببی صل الله تعا یٰ عليەوسلم ث الاسفار والیغازی 
والسر ایاوغیر ذلك ولم ینقل عن احدمۂہم انه کان‌یتشھں‌بلفظ 
الغیبة ئی تلك امحالات علی ان حمر رضی الله عنه علم الناس التشھں 
علی الہنبر فی ایام خلافته فعلبھم بلفظ امخطاب کہا اخرجەمالك 
یالیؤوطاعن عبدںالرحمن بن عبںالقاری, و کذلك ما روا القاسم بن 
ممہںعن‌تغھں‌عائشة النی کانت تشھں به وذلك لا شك فيەانەبعں 
وفاۃالبی صل الله تعا یٰ عليه وسلم .و کذلك ما رواەنافع ان ابن 
مر کان‌یتشھںوفیه السلام علیيك ایہا البی و رمة اللەوبر کاته و 
کل ذلك عیسں ماك ئ الموطاآً (ال وا حپ الکطل یدشر مندالا ماما ی عیزہ ل٠ )٣٣‏ 
یو مل ول وراتغر ئ 


باب ارم : دروداورسلام پڑ سح کے مفامات داوقات 
امام مافیڈٹس الد بین رسخاوئی (متو فی ۹۲ت پا رحمالڈرنے القول ال یرف مل صلاۃو 
سلام پڑ ھن کےاوقات ومقامات شر( ے) ان کے ہیں ۔۔اور بیفماز تشہد کے 
بعددرودشریف پڑ نے کےعلادہ ہیں ۔ان یش سخ کا یہاں ذک کیا جا تاے : 
)١(‏ وضو فا رخ ہونے کے پعدورووش را لف پڑعنا 
(۴) نم اویرسل کے پعددرودش ریف پڑھنا 
(۳) نما زی تشہد کے بحدرسھا ہرک رام کے در یاف تک نے پرعلا یڑ اعد یاتھا۔ اس 
لے ھماز یش درود پڑھنااتاف کے نیکست ے 
(٥)‏ ماز کے بعدورووشریف پڑعنا 
()ا قّامت کے وفت درووشریف پڑھنا 
(۹) او مضرب کےوقت درودش ریف پڑھنا 
(ے) نید سے بیدا رہوگ ررا تک نماز کے قیام کے وقت درودش ریف پڑھنا 
(ہ۸)( ما زنر کے بعردرودش رر لف پڑعنا 
(۹)ہفت‌اوراوا راورسول ال لیم پردروش ر۱ لف پڑعنا 
(١١)سوموارا‏ ورٹگل 7 راتر یل الیم پردروشر لف پڑعنا 
١)‏ ) خطبات میس رسول ال ]یم پردرودشریف پڑعنا 
)۱٣(‏ می ت لوق می داخ لکرتۓ وقت درود پڑھنا 
(۱۴)رجب میس رسول اللہ ٹلا پرددددشریف پڑھن 


)۱٣(‏ شعبان ٹیس رسول ال دس اہم پردرودشریف پڑھنا 

رھ )ا عمال رج اورقبرمنورکی ز یارت ادراس کے اعمال می ورووشریف پڑعنا 
(١١)کیھت‏ نت وفت رسول اش ساالی پردروش را لف پڑعنا 

رےا )لاج کے خطبہ کے وفت رسول الد صا ایم پردروشر لف پڑعنا 

)۸( 1ھ وش اور ون کے وقت رسول ال الیم پردروشر لف پڑعنا 

(۱۹) سفرکر نے اورسوارہہو نے کے وفت رسول اللہ اك پردرودش ریف پڑھنا 

(۴۹ )کی دگوت یا از ایی ارول الل سی پر درودش ریف پڑھنا 

٢٢(‏ )گھر یس دائل ہر وت ںول الیم پردروش را لف پڑعنا 

۲٢۲)‏ ر٣غ‏ و لم اورکرب وشرت کے وفت رسول ایام پردروش را لف پڑعنا 
۲٢(‏ )قر ورعا بت کےلانئن ہو نے اورٹری ہووۓے کے وفت درووش ریف پڑعنا 
(٢٣)ما۶ن‏ کے فوع کے وقت رسول اید ینہ پردروش را لف پڑعنا 
(۲۵)کاوں ے1 وازہۓ کے وفقت رسول الس الیم پردروشر لف پڑعنا 

زھ پاوں کےکن ہوجانے کے وفت رسول ال !اہم پر درودشرلیف پڑعنا 

(ے٢)‏ جک کے وفقترول الیم پردروش رر لف پڑعنا 

(ہ۲ )جن کوئی چ ول جا ےتو ا کا درووشرلیف پڑھنااورا ٹیس کے لج ورود 
پڑھنا ش کول کا خوف ہو 

)۲ آض تتبرکوحھد ہکن کے وقت رسول الس الیم پردروشر لگ پڑعنا 

) ۳) مو یکھا نے ۰ر ےکی اواز سنے کے وفت رسول لڈام پردروشریف پڑعنا 


(۱ )گناہ کے ا رواب کے بدرسول ال سأ اي پردرددشریف پڑھنا 

(٣٤)حاجت‏ کے وفت رسول الم پردرودش ریف پڑ ہنا 

(٣۳)نمازحاجت‏ کے وفت رسول اشد“أفكم پردرودش ریف پڑھنا 

)٣ (‏ خمام احوال میس رسول ال ایام پرددددش ریف پڑعنا 

(۵ ۳) جس ہت کاٹ یک عالاککہردہبری ہوا ںکا رسول اش ]ینم پرددو پڑعنا 
)۴٣(‏ بھاتوں کے ملا تجات کے وفت درودش ریف پڑھنا 

(ے ٣ض‏ قران کے وفت رسول اللہ پر درودشریف پڑھنا 

(۴۸)چہا ں بھی اللہ تی سے کر کے ل ےل منعتقرہووہاں درودشریف بڑھنا 
(۳۹) لا مکی ابنقراءیس رسول الس پردرددشریف پڑھنا 

(٣۳)تضو‏ رن یک ریم بای کے ذکر کے وفقت رسول الڈد سکم پر درد دش ریف پڑھنا 
( ۳ )پعلم کے پچھیلا ےہ ودعظا وش تک نے ءعد یف شرلیف پڑ ین کے وشت ورود پڑھنا 
)٣٣(‏ فز کی لع وق تضورہ یکر سی پردرو اکنا 

(٣۴)دماءقوت‏ ےآ غصَلاللهعَلَهْووَسَلَمٌ لی الکن پڑھنا( فور یناع) 
(۴)نماز جناز وی دوسریگی ر کے بح رتضمورن یک ریم صلی پردرودشرلیف بڑھنا 
(۴۵) بت عید بین مازاستتقاءوغیرہ کیعنبوں می ںتضو رن یکرمم صا پردرود پڑھنا 
(۴۷) آزان کے بح رتو رن یکریم ام پردرود پڑھنا۔ 

ع دارم نگمرد با نکر تے بی ںکہرحول ال صلی مکو ریف مات ہے سنا ا می شر 


- ےےۓِ 


ليذ فَُولو مد لمَابَکُولتُمَمَلوا علق منص مھا 


صلی الْهُعَلَيَوِعَهُرٌا تم مَلُوا اللة الو ِیْلَة قَاتہَا مَنوَلَی التَوِل 


بین لَالِعَنيِ من عِبَاد اللہ تال وَاَزجُوْآنآ لُؤ نأناهُوَفٌّن سَأَل اللة 
الله عَلَّث علَيو القَفَاعٌَ()۔ 
جب موذ نکیآذان سنوقو ای طر حکہوش سرد ہکنا ےپ رھ پردرودیہو۔ جھ 
ایک مت یجھ پردددد کی کات الل راس پر دس میں نانز ل ف رما ت گا ۔ بی راڈ دنتعالی سے وسیلہ 
کا سوا لکر وک روہ جنت ٹیس یک مقام ہے جوصرف الڈدتھالی کے بندروں بیس سے ایک 
بن ےگو گا میں امیکرتا ہو ںکہمشیس دہ ہوںگا۔ جومیہرے لئ اتکی سے وسیلکا 
سوا لک" ےگا اس کے لے می رک شفاعحت واجب سے 

صَلَاللة عل عبزیہ ئحمَيِوَگ لآيهِوَاَغتايِہ وَسَلَمْ 
دماءوسلہ 
جحخرت جابررشی اللعن سے ددایت ےک رسول اللدس لین نے فرمایاج نخش نے 
آذ ان ئ نک رآ ذ ان کے ہو نے اودراس کے جواب دہینے کے بد بی دھا ڑگ یآ قیا مت 
79001007 
هر کلت ال وق اتا قد وَالصٌلوۃ الْقََقَةِ آتِ حیَذَہ الَوَِِیْلَةَ 
وَالْمَضِيِلَةً وَابَعَنَهُمَفَاما تَؤْذَِالَزِی وَعَذلَهُ علَملَهمَفَاغَن توم 
اق (مف کو ۃ والہبخاربی ).تر جم : اے الید ا سکائل دعا2اذان )کے ما تک اور 
پروردگا را نم ز قائممہ کے( ہما رےسردارقا مم شھ سیا مکووسلہ او رفضیلت عطامف رما 
اوریادے ا نکومتا ممتسودم سکروعد کاو نے ال ںکا۔اس (دھاپڑ ھن وا نے ) کے 


۴۳ 


لے مر شفاععت واجب ہوگی قیامت کے ول- 
دعا ما گنے کے وفت درودپڑ ہنا چا بے ۔حخرت فضالہ ے روایت ےک رسول اللہ 
ےن کہ ےک کا 0ت اک نون لحخذفق 
سی پر درودیھھا۔ رسول ال سیل نے رما یا ا سآ دمی نے جللد کی ۔ رآ پ سل ہم 
نے اہ لکولاکراان سے بای ےفرما یتم میس سےکوگ یش دھاما گےتو ا سے پگ الل تال 
کیج دابیا نکرنا جا بے ء رن سی پردرددکھینا چا بے ۔اس کے بحدجودھا جات امور 
کی ماشنا چا ددما گے (ابودا دہ تر بی بمنکوج) 

صَلَ الله قل عہبہہ ئحمَيِةَ لالہ َآختاِهِوَمَلَمْ 
زان کے بت رص لو وسلام پڑھنا 
امس الد ین رسخاوئی بن عبدالی نکھت بی ںکہاذ ان دینے واللول نیع اور جم کی 
اذان کےعلادہ پا ف اکن کی اذان کے بدرسول الش سای پرصلا دسا ش رو کر 
دا اور جع کی اذاوں سے پیل صلا ۃوسلام پڑ ھت تھےگرمخر بکی اذ ان کے بعد یا 
پیک وفت کے کک ہو ےکی ودج سے صلا وسلام نہ پڑت تے۔ا لک ابتراءالسلطان 
الناصرصلا الد ین ابوامظفر لوسف بن الوب کے مانہ بیس ال کےعلم سے ہوگی۔ انس 
سے پپیلے جب الک بن الحزیز(فاٹھی نل ہو اتا سکی بن ست الک ن عم دیاکراں 
کے بے انطا ہرپسام پڑھاجاۓے نوا پرالسلا لی ال مام لنطا ہ رکےالفاظسلام پڑعا 
جات تھا۔ کچ رقمام خفاء پرسلام پنڑھاجا مار بات کی صلاح الد بین نکر نے ال سکو بن رک وایا 


اسے جزا ۓ تب رعطاہو_ 


۵ 


صلا :وسلام کے سب بامھردہ یا بدعت پامشرو ہونے میس اختلا فک یاگیا ہے ۔ اس 
تس مر ےی وَا وا اي (سو دہج :ےے)(ت جمہ :اود یکر ) کفر مان لی 
سے استقد لا لک ایا ہے۔ یہ بات معلوم ہےک صا وسلام ال الظر بات سے سے ۔حموصا 
اعادیث ال پر برامجزنرکر نے کے تحل قکحثزت سے واردہی ں نا زان کے بعددعاکی 
ل میں ءرات کےتیسرےحصہیش اوج رکےقرب میں صلات وسلام پڑت ےکا ذکر کید 
کےسا تملزراے۔ورست بات ہےکییہ بععت تہ ہے ۔صلا وسلام پڑ ھن وا ےو 

ا کی جن خی تکی وجرے اج لگا ۔ پچ میں ن ٹن سو ار یس دریکھا اون ل شان 
۱١ے‏ میں ا ہرد فص رکےموزنو کو نگم د اگ اک ہراذ اع کے بعر الصلو تچ و السا علیک 
یارسول اللچندمریتبہ پنڑھ اکر ی ںکیونلہای ککقیرت ہنفقیرنے برا تکوعشا ءکی اذان 
کے بح نی سیق پردرودوسلا مکی ادا زی ۔اسے یہ بات پپن رآ گئی اوراس نے اپنے 
ساتتیوں ےہ اکیاتم جات کہ ہراذاان شس الیماہ کیا جا ۔ ان ول لن ےکہاہا لی ۔دہ 
را تو گیا جج اک راس ن کہ اکمہا ںکورسول ا یلم کی ز ارت ہولی سےجنہوں 
نے ای ےن را ا مھ الطبر یسب سکم وذ نو پراذان کے بعدرسول الد 
پردرودوسلا مکی کا عم دے۔ ا کی طرف چلا۔ اس نےخوا بک نکراظہار 
مسر تکمااورا ںکا اعم دےد یا۔ااس دنع ےآ کک بسلسلہ لی چلاآہاے۔ 
امرب ای تج ےآوشا ید کارنے ببارشادال :نان کک تل وڑےرکھ یا مطل بھی 
پیا جا سکنا ےک( فقو پیلبھی بجی تھا ین ) سلطان لا الد بن نے اس سکی برا تکو 
کیرکردگی۔ وادڈ الم .(التقول ا نی الصلا وی لیب اض نین مم عوایصے ۳ء 


٦ 


مسا یک الحتفا کل ۲۳۹ءسعادت الدار گن ) 
ایر ےکہ ایگ تار ردایت ہے چ اعد یٹ سےا ہت نیس ہے بنا نآ ذان 
کے بحدردعاء وسیل .کنا اوردرودگھیچناعد یث سے ثابت ہے اورمسماجرائل السنیۃ ٹن 
آذان سے پیل یگھی ددودشریف پپڑھاجا ا ہے۔اورال سک یی ھی ممانحعتکڑیں ہے_ 
اللَهَمٌ صَلوَسَلِمْ وَزا رك غل نی 
مسرییں دائل ہو او ر کلت وشت دروروسلام پڑعنا 
مچرمیش داٹل ہوتے اوسر سے لکل وقت درودوسلام پڑ ھے۔حظضرت ااوھر یر نشی 
ال عنرےروابیت ہ ےک رسول ال سی نے ف رای اذا کل اك کم الْمَمْجیَ 
ََيْسلّمْ َل الکن بَا وليقُل الله افْكخ اواب رَختيِكَوَإِڈً عَرَعٌ 
لمع الکن وَليفلالیيق آچز دن الگا( قانی ادن 
خی )کہ ج بت مم سےکوئی ریس داشل ہوقددہ نی صلی پرسلام پڑ ھے۔اورجب 
مر سے کٹ جاہے کردہ ی لف پرسلام پڑھے۔اوربیدعا ارے اےالڈد گے 
آنگ سے ہیا۔ رام تکاعلیم دینے کے لے ے۔ 
حخرت فا علمہ بن ت مین با نکی بن الی طا اب رشی ال نما ہقی دادیی حضرت فا رت اکب ری 
شی ال عنہا تا لکرلی ہیں ناسل اللو 9لاذا مَتَل الْمَمجِتَضلی َل 
تَيِوَسَلَم وَقَال رب اغفزِهُتُوَِوَافْكَخ ناوات رَخَيِكوَإِڈًا 
کَرَجٌصلّ عل تتزيَِسَلّم وَقَالرَبِ اغفْزِ ذو وَافْكخ اواب 
ف>ضتَ (تر زی این ماجہہ کو ہاب السا حدومواشح ااصلا 3 )کرسول الہ جب سچر 


یں دائل ہہوت ےتوھ( ابی ذات ) پرددودپڑ ھت اورسلا مکیے اور بیدعاپڈ ھت اے 
رب ہیر ۓگناویش دے اورمیرے لئ ابقی رعمعت کے دروازےھولرے اور چپ 
مور سے لکل دروداورسلامتج پر پڑت ( ہنی فی ذات پرددود پڑ ھت اورفرماتۓے 
اےاللدمیری مخفر تفر مااورمیرے لئ اٹل کے درواز ےھولرے۔ 

مامت نی فرماتے ہیں اس عد ی کی سز ڑل ہیں (منفتع سے )۔حضرت فا مہ بحعت 
ین ری ارڈئن ہمان حضرت فا کہریی ری ال کہا کا مان نیل پایا۔ 

رسول الل ہی نےفرایا پشچ اىلووَالًلوة 270 7 
(ابوداة وع بیث۴۷۴)۔ الد کے نام کے سات( میں صا ہوں )ا ور لوت وسلام ہورسول اید 
صا پھ۔اے الڈرایش سوا لکرتاہوں تھے تی رٹ لکا۔ اے اڈ مھ بی کے رک 
شیطا نم دورے- 

ھی ردایت کے مطابق ا می اَسْتَلْكَمِنْفَضْلْكَ بڑے۔ 
موس مود محر 
علی تحتکي. ا مملنم عَلَيك یا الکن وَرَخة الہ َبۃَ کان (ااقرل ا رع)۔ 
ج بت مسر می داقل ہو وکہوانششھ یم پر درددجییئے ادراس شتے ۔علام ہوآپ 
پاے کیا اوداللرکی میں ادا کی برک تکد۔ 


_ 


یملس سم وَتَاِك عَلی کی 


کم نگل ہونے کے وقت درودوسلام پڑعنا 
ححخرت رون د ینا رق رآا نک رم مک ا لآ تا دحلم ليْوْتَاسلَمُواعی 
اَتفس کڈ( سح رؤا 1ے : ج بت مکھرمیش داخل وت وخ دوسا مکرو ‏ کیتش رح 
ق ‏ فرماتے ہی ںکہج بت اپنےگھروں یس دال ہو ئل ا کوسلا /کر یکن اک رکھر 
خالی ہواوراس می کوک یی نہ ہوا مر عکہوای امہ لی القن وَ رد الو 
بركَائَةُ المَلاۂ عَلَيْتَا وَعلی یدالو الما لیت المَلامۂ عَیآمل 
الَبَيْيِ وَرَعيَةالوَبَرَفَاتَة. 
ان عپاس رشی اڈکتہمانے ف رما اک ہآ یتکر بی بیس جیوت (گھمروں سے سد بس ھراد 
ہیںئیا انی نے فر ما یاکہجب چرم سکوئی نہ ہق ارح ە٭السلام علی رسول 
ہاو راگ رک می سکوکی نہ قد ا ط رت کے السلام علینا وعلی عبادالله 
الصآےحین۔ 

اه صَلِ سم ورك علئكيِ 
صفاومروہ کے درمیان درود پڑھھے 
خرتتگرشی ادرعصفا ‏ رکھڑے ہوک رت ن کب رکتے پچ رآیے ل2 ال ادلہ وَ ت٤‏ 
شر بت لالمْللث وه لح وم ع ہ کی قیفر پڑت ۔ می 
لی پردرودیتےیردعامگتے اورقیام دای د یرلگاتے بج رای طرح ھردہ پھ 
کرت (حخوق انی بوازفضل الصدو بعلی نی ) 

اه صَلِ سم ورك علئحيِ 


رگا 


شش کے اورروڑ بے رروںدعنا 
حخرت او :نع اول شی ال عنہ سے روابیت ےک رسول الڈ د سم نے فمرما ا تجہہارے 
فوں یش سےسب سےاضل دن جع کا ہے۔ اس دن مھ پر کیا جا ا ہے ۔بکشرت 
کے ساتمودرود ھڑوا .لے کیچ ہارادردد یھ ری کیا جا تا ہے ۔عرف کیا اے ار کے 
رسول لہ آپ پر ہارادرو دک می کیا جا ۓگا حا لائ ہآ پ بی بوسیدہ ہو گے 
ہوں گے۔آ پ ٹیل نےفرما با ان ال ة حرم علی الآزض اَجْسَادَالانْبيَاءِ 
(ر یئ الصاغین) کان ےتا مکرد یہ ز بین پک ردداخیا کرام کے اجسادکو بوسرہ 
'آررۓغ( کھاۓ )۔ جمعکیاون بڑ یٹول اور برکوں ولا ہے اس لے ا ولن ورود 
وسلام پڑ ھ کاعم د یا ہے۔ یزاس حد یث سے استد لا لک گیا ےکتمام انا کرام ایق 
قیروں بی زندہ ہیں ۔ححضرت موی علی السلا موق می ل ہماز پڑھحت ہہوئے د یک ھاگیااور 
مرا شریف کےموشح راتا رک را مختلف مقامات پر لانمات کے لے موجودتے اور 
یت النقدیس مین پا نماڑادال۔ 
نظرت الودرداءرٹی الٹرعث ے روا یت ےک رسول ال ]یٹ ایم نے فرمایا ا کرو 
الصَلوۃَعَليَوم الْمعَةِقَانَهيَْم مَفْهُوَذُتَفْهَنَهالْمَليِگذُوَاِنَاَعَنًا 
حت أَغ مت علق علوثةع َفْز نا قَال فُلْمُبَعْنَ 
ےِقَالاِنَاللة رمع الاز ضآن اَل اَجسَادَالْأبِيَاِقَتَِی 
سے کت 
اں و نکشرزت سے رش حاضرہوتے ہیں اورج بب یکو یٹ مھ پردرود ڑا چو 


ال کے ار ہوتے بی دہ درودھ پر لکیاجا اے۔ میں نے عم سکیا وفات کے بعد 
ھی ۔آ پ یلم نف مایا نفک الد تالی نے ز بین پبرانریاء کے سو ںکاکھا نا حرام 
کرد یاے۔ ال کا ھی زندہہہوتا ہے اسے رز د یاجا تاے۔ 

لعل وَمَلمَوَا ركشل میں 
لی رات اوردن ہُُل ورود پڑُعنا 
خر تع برا ین عپائس رشی اڈ تا یکنا سے ددایت ےک ہیی ن ےآ پ سکم سے 
نا ۔آپ سای فرہارہے ت ےآ فزوا الضَلَاة عل تَبِيِکُۂ ‏ اللَلَِالْفزاِ 
َالْویِ الازھَر :لَْلة اک وَیوھ اک اپنے نی پر جع خواصورت 
رات اور بجع کے وشن ون می سکثزت سے ورودکجیچو( تی )(اغی کر نی ااصلا؟ والسلا می 
مشیر الیز ) 
الم ے . وَسَلْم وك لی یں 
آپ لف م کا اعم یا کک نکردرود پڑھنا 
وَهِن‌مَوَاطِي الطَلوقعَلَيْه عِثَ ذ كروِوَمَا عإمِدِ او بِكَابَن رَهِم 
أنْغرَخْل ذيِِزث حِننتَهفَلم يضَی عَلع (خفء۷۷ءع ۲)۔آ پ لی پردرود 
کین کے مقامات مشش سے ہی ےک ہآپ کے ذکر کے وفت ہآ پ سای کا ا مگ رای سن 
کے وقت یا آ پ سی کا نام پا کککھت دفت ما آپ سی مکنا شریف پڑساتے 
وت درودوسلام پڑھنا چا بیے۔ا کی ناک نا کآلودہ(ذمیل وخوار )وٹ کے سا نے 
باذک رگ اگیااورا ان نے مھ پردرودٹہ پڑھا۔ 


اط 


کیا آپ لہ مکنا شریف ہر بار لت وفت درود پڑھناضروریی ہے ۔اس کے پارے 
امام اا ذف رٹھاو نکی اورامام ابو بدایینشھی فرماتے ہی ںکرج بچھ یآ پ سای مکانام 
یجان وپ نلم پر درود پڑعنا واجب ے۔انع کے علاوہدنگرعلا پوپ درا 
دن ہیں( حوق 1 ی) 
ليلد را لی حم 
اتارک لو کےتی بیس جودحیدمیں داردٹیں ا نکی روش می سکماجا تا ےک رج بکھی 
آپ اف کا کر ہودرودپڑعناواجب ے۔فتکون فرض ف العمر۔واجبا 
کلھاذ کر علی الصحیح(درتارع شائی ٠ء ٢‏ بص٭ ۲۳) تعرس ایک پاردرود پڑھنا 
فی ہے اورپ ای کا ذکرکیاجا ےتودرودپڑھناواجب ےئ قول کے مطا ای - 
الأ>قر صلِ سخ عل مامح وع ہآ غاب آتون. 
٦ت‏ 
ام ریف کے ا ت لوت وسلا ملک کا آ نا زکب ہوا 
آپ ٹین کےا شرریف کےسا لو والسلام پڑ ھنے او رھت کا روا کب ے 
ش روح ہوا تھا اس کے تحلق حا حح رس اہن می سکلیات ابوالبتقاء کے جو اللہ ےاکھا ےکہ 
ال ط رپ سن کا آنمازدورعپاسیی ہواہے۔اوردورعبا سیکا آنفازنشر یی ہواتھا 
ت کب ورسائل میں کھت کا آغاز 2م دوسرٹ یک نگج رکا ےرود ہواے۔ 
حرت امام قاضی عوائ رح الف رماتے ہیں ولم یکن ھا ئی الصدر اول 


واحدث عندولایة نہی(غناء)۔ 


علام شاب الد بن امہ حضائی مصربی ٦(‏ را ) لکھت ہی ںکہتخرت الوبکرص دب شی 
الد عضرنےطر ایض ہکن عامج کی رف ایک خولککھا ٹھج س کا آنمازائسں طر نک یمیا تھا 
سلام عليك فی اَنجَل الله الَدٰیل الفَالا ھی وََنَلَدَلھ لکن 
ا ئا بَعل ا ی اخر اهَنا ید لأَنَُّسنة الصدیق الاانەتر ك 
ی زمین نی امیہ (ل ال وائض مہ ٣۳ش‏ انا ۷ضش۷۸) 

٣٦‏ 3× وٹ 
کنب ورسائل میں صلو ت2 وسل کمن 
رت جن عمبدان مور بتحلوی فر مات ہیں وہ ج مم لیکن ال رم کے بح دکھا جا تا 
ہجو صدراول (دورسحا ہیس تہتھا۔ ہباشم (دورعباسیہ )کی حلوص تکی دورشیں 
ایبادہدا۔اس کے بحدغمام رو ز ین پیل گیااوری مض توم ہی درود ہارتین۔ 
گوپرسالہکی ابتراءاورغا تم دردد کے سا کر کے دعا کےعم می کر تے نہیں جس می سکہا 
گیا ےک ہاو لیخ می درودش را لیف ہو( مارح اوت )ت کاب کے تر رو میں جروصلوۃ 
پڑھنالکھنااورآخ ری لبھی دروداوردھا رت مکرناباسحعث برکت ہے یتخس ن لھا ےکہ 
درود اک لم الڈشریف کے بدرسائل میں ححضرت ابوبکرصد لچ شی ارڈ عنہ نے پل ھا 
تھا( شرف الفا و لاعی تار یم اکر یاض ) 

مل ول راتفر تس 
کپ ورسئل میس درو وکھ کا اب 


حخرت ابوھر یر شی الڈرعن سے ردایت ےک رسول اد ہكم نے فرایامن صلی 


یا بلخ توّلِ المَلانکة تَتَعِو لغ ما یی اشن (اانفاء)۔جں نے 
کاب یل مھ پردروولعاج بکک مبرانام ان سکاب میں ہے اس وق ت کک فرشتے ال 
کے لئ خفرتطل بکرتے رہیں گے (الذا فی تعقو قامصلئی بنبراں )۔ اس حد بیٹ 
کی سنداگر نیف ہکان فضاکل می ضیف عد یت بی لکیاجا نا ے(خراں ) 
الله عِلرَتل روَا اتل سر 
وو لرا نو ں کا ما قات کے وت ورور پڑعنا 
رت اس بن ما نک سے دواایت ہ ےک رسول اٹ نے فرباياما من مُسلمَنن 
يکلَاقَيان فَيْصَاخٌاَعَنْمُتا مَاحِجمَۂوَيُعَلما نل الین لالم يَبْرعا 
حَقی ثُغْقَرَذاوِْنمَا تَا تَقلَم مِنفَاؤَما 1ئ جم :جبگ دش سان 
طاقا تکرتے ہیں ءالن میس سے ایک اپنے انی سے مھا فیکراے اوردوٹوں نیک ریم 
صلی پر درو دیج یت ابھی د٤‏ بدرائمیں ہو ےکہان کےا گے اورہیل ہگناء ( یر ) 
شر نو 
ایک اورددایت ٹیل ےک الڈدتحاہی کے لے ایک دوسرے ےمحب تک نے وا نے دو 
بندوں سے جب ایک دوسر ےکا استتقبا لکرتا سے ہیں ود دوول ما فیکر تے ہیں او رنچی 
کیم ہل پردردد کے ہیدان کے داہونے سے پل ان کےا نے اوہ کا د 
محاف ک ےکر جات ہیں (ا شی ملکشیر ٹیالصلا ولس لام الشیر الیز یر) 
اي ول ول وارآدئن یر 


۵“ 


تاس میں ورود بڑھنا 
خرت اوھ یر و شی شعن سے روایت ےک ہرسول ال لی نے ف ایام اجس 
عَلَيہم یَرََُؤْم الَقِيَامَةِاِن مَاء عَفَا ون هَاء َعَتمُم (7 شک تاب 
الرما)۔ جوقوم(لوک )میکس می ٹیے اودرا ناس میس اول تھا یکا ذکراوراس ٹیل ورود 
نہپ ھا ہؤقد بیس الن پرقیاصت کے دن ایک دبال ہوگی ۔ الل تھا یکواختیار ےکا نکو 
ماق ےب ہے یں لن وی انا یکا ذکراوررسول الش للا پر 
درودپڑھناچااے۔ 
مح ام او رس نیدی می درود پٹ ےکا نو اب 
سح رترامماومسیدنوئی کےسوائسی متقام یش لیک مرردرودپڑ ھت وس رکتیں نازل ہوٹی 
ڈیں۔ سحیدنبوکی می درود پٹ نے والا پیائس بٹراررشتیں اورسحچدترامل( تم مہ ٹیل درود 
پڑ نے دالا ایک (اکوریتتیں ح اص لک ریتا ہے۔درودوسلام پڑ نے می ںآ پ کی محبت 
کازیادہہونااورراہیطرا بای کا کم ہوناے اورعلا قرددعا لی کاجھی زیادہ ہوناے نہ یک رگم 
لم اوردرود پڑ نے دالے کےورمیان 5 
جی اکہاکیاہے: 

اَل ذِكْرنْعْمَايِلَمَااِنذِقُرَهٔ خُوَالَہسَك‌مَا كَرَزتَیَكَوَعُ 
تو بکا کہ بار بارکہ جمارے لل ےکبونلہ پیار ےکا ذک رکسقور یکی ط رح ےکگرر 


رک 


استحال سےا سکی مک( خوشبد) یھت عاتی ے۔ 
ینوی میس جب درود یڑ نکی سعادت لصیب ہو وآ ہت آوازے پڑھے۔اللدتعا لی 
فرما جا پیا الَلْنَْ امو الَاتَزِفَعُوْا اَضْوَاتَكُمم قَوْقصَوْتِ التِی(۳ءہ 
تجرات:۴)۔تر جم اے ایمائن دالوقم اک یآوازو کون صلی ک یآواز سے بلندتہکرو۔ 
بی جو برا زا مآ پکی ذزندگی می قھاددی ل ریقہادب ا بکھی ے۔ 
جخرتسائب مجن بی یدرشھی ال عنفر مات ہی سکیل مس دتبو بیج ریف میں سو یا ہوا تھا ۔ تو 
جج اس ی1 دی ن ےکنکری ماری۔ ٹیس نے دبیکھاتودد تعفر تع ربن الفطا ب دش الرعنہ 
تے۔آپ نےفرمایا جا ان دوآ دیو کو بلک لا 5۔ یل ا کو بلک لا یا۔آ پ نے الن سے 
فرما ہت مک قوم علق رھت ہو با سمل ےآۓ ہو۔انہوں تن ےکہابم اب طا نف 
ہے ہیں۔آپ نے فرمایااگرقم ئل مد ین سے ہو تےتو می ہیں مزاد ینا تم لوک رسول 
ال سی مکی سج ریس اپ یآوازمی بلنرکر تے ہو( محکوۃ ہاب مسا دوالہبخاری) 

مؤلاق عَلِ وَسَيِّۂْ لٹا ابا حل عبت تر اي فُلْهمٍ 
قرشریف کے پا درودسلام پڑھنا 
حبرائشجند ینار سے مردگی ہے ۔فرماتے ہیں بیس نے این گھرشھی ان تہ ماود یک ھاککہدہ نی 
مم بای کی قب انور رکھنڑے تے او رن یکر مم صلاب ہل پردرددشی لکرر سے تے۔اور 
جفرت ابوکرمررشی ایڈنا کے لی دماکرر سے جھے۔ 
قاشی اسما ئل کے الف ظا ہی سک حضرت ام نھررشھی الڈرعن جب بھی سٹرسے وا ںآ ت تو 
مسپرمی داشل ہوتے اود یں سلا مم کر الم لاف عَلَيكَتَأرَشول اللہ 


اھ 


أَمُلائمھ عَل بک آلسلیائمہ تیآ (قول بجع )۔اے ال کے سو لآ پ پر 
سام ہم تر ت الویگر پ لام وہ میہرے والد( تحضر تپ پرسلام ہو- 
صَيّاللة کل نیہ تحميِءَک لہ وَآَغتَابِهِوَسَلَمْ 

در ےک ہنخر تعبدا اد نشی الد تالی عنرجبسفرےآتے پاسف کے ارادہ سے 
کئی جانے کگتتوقبشریف کے پاس حاض ہکم ول سلا مم کرت السلام علیيكت 
یارسول اللہ( آپ لام ہو اے الد کے ول )السلام عليك یا ابابکر 
پت پ پرسلام ہواے الو )ءالسلام عليكیأ ایت( آ آپ پرسلام ہو اے میرے 
اباجان(عمرفاروق ))( توق ایی امت نی ضوءالکتاب ومن بش ۵۸۹ء اورک )٥٠٦‏ 
شریف کے پا حاضرہوکرفرٹش جانے ےل اور نے کے بعد پ سی کی 
اویل سسلا معن کر نے کے جوا زکی دمیل ہے ۔ او تحضر تکہدا راہ نگم رکائل جا رے 
ےکا ے۔ 

مولَای صَلِوَسَلۂ داڑنا ابا حل عبت تیر الكلَي تُلْهمر 
دیدمورہگ ڈیا رت کےموشح ور ود ڑھنا 
حطرت تی عمبدالن میرتث (علوی فر مات ہیں درودش ریف کےکا شی مات وم کات 
ہو ےکی ایک ول بی ےکچ عبدا لوا بی رم انڈدعلید نے ا کین (عبدر 
یو کک بات سے لن زداگی ےش وذ کرت وو ےق را نایا بات 
زع یس وو اناد ولک ال رازنٹ ادا ال راغ غارعخظووفیر 
کا نات لی پرددودشریف پٹ نے کے برا بیس ت مکو چا ےکا پناسماراوفت اس یل 


ے۵ 


صرفکرو کسی اورکام یں مشفول ن ہو یت شک یامگمیااس کے لُ ےکوی ین تد ایی 
ہے ۔فرما یا یہاں عد وم نکر ن ےک یکوئی ضرور تی ۔ اس قدر پڑ کہ ہردقت ای بش 
رطب اللمان(ت ز پان رہننٹ یک ایل کے رک میں رنک جا اوراس میں رہو(اللمعات 
؛ مار لوت )_ ز یاد ہل جلا الا فمامءالقول الپ رٹ ؛ مسا کیک احنفا ء مطا لح 
سر ات اورسعادات الدار بین شی ہے۔ یبال چندمقاما تکادک کیا ے۔ 
ہرم زماصردرودوصرلام بررسول ول واضصھال تمام 

ملا صَلِ وَسلہ دانثا ابا حَل عبنیك تر الَلقي فُلْهمر 
چندوداواقات ما مات میں درود پڑ ھن اھروڑے 
امام مدکی فاری (متو فی ۱۱۰۹ھ ) لے ہیں نی اکر سلپ پرعبادت اورٹ ا بکی 
ران گار رف اج تج ای لن ھا نے مات امت 2ھ 
درووشریف پٹ نکوکر وو قراردیا ہے :(ا) ماع )٣(‏ تضاءعاجت )٣(‏ ساما ن فروخت 
کیاشی(م) لغش کے وقت(۵ )تچب کے وقت (٦)ذ‏ کے وفقت(ے) چجینک کے 
وت ۔آخریی تن میس اختلاف ہے( من کے زد یکم روویس )۔ تن پیسف م نگھرنے 
مر ٣‏ کی کھان ےکا ذککیا۔دصاغ نے ال پراضاقدکیاکشادی میا: کے د: مان جہاں 
حوام الناس درود یا اک کےذر بیج دکھادے کے لے اپنے افعا لکی شہیرکرتے ہیں۔ 
و ال ضرادب ہوتاے شا تام ء بلٹمی ھا ححھی لکودکا ماحول ہوتاہے۔ پل رانہوں نے 
فرمااککجاست اورغلانظت دا لے مقامات شش درودش ریف پنڑھناعمنوح ہے( مطائع 
بم اتشرم بد لال اشورات بے ۲)۔ اور ینک کے وقتء ذن کے وقت او نچب کے 


۸ 


وفت درودنہ پڑھاجاۓ (رداظارص٣۲۳)۔‏ 
عاا مرسیزجھ اشن شا ھی علییرال رحمنۃ نے ان اوقا تتٌصو صکا ذکرکیامےمجین میں درودشریف 
پنڑھنا جب ہے اوران سمات اوقا تکاچھیا ذکم ہے جن میس درود اک یڑ ھن روہ ے۔ 
ا سکی نیل ردال ریش نکی جا ستی ے(ردا ار ؾ ٣بض۳۰٣)‏ 
دورا نا وتثرآن پروروش ر۱ لف پڑعنا 
سیر ق ران پا کک قرادت کے درمیان میں اگ رتضورا قدرس صلافاہٹ کا اک نا مآ ئے 
تودرمیان میس درددش ریف شہ پڑ ھے(فضائل دروشریف ش۱۱۸)۔- 
متلہ:( وی ) قاشی خان میس ےک کو یف ق رگن بمید پڑ ھد باد۔ اس ٹس نی علیہ 
لصلو چوالسلا کا کر یآ جا ےتوپ نے ضنے وانے کے لی تضرورکی ےک اس وفنت 
درووشریف نہ ھی اس لی ےک حر ا نکوت ریب واراور پڑھنا ستناواجب ے۔- 
اس کےدرمیان می ںی رعبار تکوملا نا 7رام ہے۔اس لیے واجب پہوگاکردرمیان یل درود 
شریف نہ پڑھاجائے۔ ہال فرافخت کے بعددرودش ریف پڑ لیا جا ےت ؟ہتر سے ۔اگرتہ 
ھی پڑھج بب کوک ی حر یں (روںالبیان ئ‌دےبگ٢ء٢)‏ 

7ل وت لہ ارت ئن یڑ 

باب" م: دروون ہے کی مت 
سط رح ددودوسلام پڑ ھ ےکی بڑ کی فضیات بیا نک گی ہے اىی طرح درودوسلام نین 
وا لے کے تی بڑی زمت اورہکیدآلی ے- 


انل 


ینآ دمیوں کےاقن میں دعاۓےضرررکیکئی 

حخرت اوھ یر ورشھی شعن سے ردایت ےک رسول اللدصأ یکر نے ف رما اع اتف 
وھ صُحِنْنَهُفَلَۂْ يْصَلِعَل وَرَغِم اَنْفَرَجُلِكَكَل ‌عَلَيْهِ 
رَمَضَانْثُمِ انْمَلمقَبْل ان يْعُفْرَلَةُ وَرَهِم اَنْفْرَجُلِآَمْرَكَعِنْدَۂ 
دی دس مسج 
شف سکی ناک نا کآلودہو( یل وخوارہبلاک ہو )جس کےسانت نمی راذکرکیا جاے اور 
دہج برھْسنک اروا رض کی ناک نا کآ1لودہوش سکورمضا نکا ”ہی ْصیب ہو 
پل را سکی شش سے ےکن رجا اورال سکی ناک خا کآلود ہیاس کے سا سے اس کے 
ای ماپ یاان میں سے ایک بڑھا یا یا اوروداے جنت میں نہ یاہچا میں ۔ 

جحخرت عابربن مبدانڈرنشی ال عنہ سے روایٹأف لک ےکی یکر سای ض پر 
تریف نے گے ۔جب پیل ز نے پ قد رکھاتوفرمای آشن ۔بھردوسرےزر نے پر قد 
رکھاتوفر مایا آ ین ۔بچھ رت سرے ز بے پ رق دکھاتوفر مایا آین اہنع کی یارسول 
ا٢ی‏ بھم ن ےآ پکوشین مرح آ "ر٭“٭٭.".0._. 4 
تقرم رکم توحضرت جج ربیل ایا نتشریف لا ے فا يابَعُدَمَن اَخْرَككَرَمَضَاَفَلَمْ 
بقل دہبندہبدرکت ےجس نے رمضا ہن ریف کا ین یا ۔.۔ 
بنا تدگیا۔تومش ن ےآ می نکی ۔ پل رفرمایا تن أَخْرَك اَيَويْه الكَِرَاَو أَكَتَهُمَا 
قَغت بل ايك دہہندہبد نت ہے نے اپے دونوں والد بن بای ککو پیا 

والد بن نے اسے جنت بی دافل شدکیا۔ یش ن ‏ کہا آ ین ۔ بل رکہائھی تم ہکڑک 


عِنْنَۂ لم يصَلِ عَلَيك ووبندہبدکنت ےجس کے ہا ںآپ فی کاذکر+واگر 
اکس ن ےآ پ ٹب پر درودنہ پڑ ھا تو میس ن کہا آشین (ادب ا مفرر) 

جحفرت اھ ری شی شعن سے ردایٹأف لک ےک نیک ریم صا ای منب پر چٹ ھے اور 
فرما یآ نآ ینآ ین عون لکیکئی یارسول الل سی آپ ایی سکرتے حے۔ 
رما یاج کل این نے مہ بددھا کرد ہآدیی ڈلیل ورسواویشس نے دوڈوں واللد بن یا ایک 
کو ا یتو اس نے اسے جشت میس داش ہکیا۔ یش تن کہا آ ین ۔بھ جریل اشن لن ےکہادہ 
آدٹی اک الودہ ہویٹس پررمضان ش رن فکا مین دائل ہواتو ا سے جخشانہگیا تو بیس ن کہا 
آ ین ۔بچلربادہآدئی ذلیل ورسواوشمس کے ہاش مبرا کہ ہو اتوھ برا نے درودشہ پڑھا 
تو یں ن کہا آمین(اتخسی درم رع ۵) 

نین اشنا ےون میں حضرت جج ایل نے دعاض رف ماک اون یکرمم ساہنم نے 

آ ینف راک راس پر۳ لگادکی اب ان اشخفائ کی بش اور رومیت می لکوئی شک کی ںکیاجا 
ساس لے ان اعمال بدے پچناضروری ے_ 

برواد 2 2 والا لے 

رت لی رشی اللعن سے ددایت سے ۔فرماتے ہی ںکہرسول ال نے فرماياالیل 
لی من ذٔیِزث نم هك يُصلِ علع(انفء)۔ بڑاجویں دہ یٹس کے 
سام مب را کر ہوااورال نے مھ پرددودشہ پڑ ھال2ت بی ) تل صرف وج یی ہوتاجھ 
راو دای مال خ رج شکرے بلنردوسب سے بڑ ایل ہے جورسول الک نامىن لیے کے 


٦ 


باوج دآ پالم پردرودنہ پڑھے۔ 

ولا َلِوَسيۂ دا ابا مل عینبت تیر اَی كُلهمٍ 
درودنہ پڑ صیے والا جن تکا راستہھول جا ت ۓگا 
حطر تتتفرصادق منج بافر سے روابی کر تے بی ںسکرسول الڈص فا نف مایا 
من ذيِزث عِنتَهْفَلَمْ يصَل عَل أغْط بوطر زی ا نے (اضفاء)۔جں ے 
سان مبران کر ہکیاجاۓ اوردہ مھ پر درددن یتو ا ںکوجنت کا راستہبھلاد یا جا ۓگا_ 
ا کی شرع میں علامشہاب الد بن اتمتفاگ یھت ںای دخل الدار لانەاخطاً 
من طریق ا جنة فکانت طریقه ا الدار لانەقں اضلە الله عن طریقھا 
(م ال یا نی شر افغفاء جھ ج سے )۔ ]شی دوزغ ٹس دافل ہوگا اس ل ےکمہاس نے 
جنت کےراستہپپر لن یں خطا کی ۔تو ال کا راست دوز کی طرف ہموگیااس لن ےکہائ کو 
پیک اڈدتھالی یا نے جنت کےراتے سےگمراو(دور )کرد اے۔ 

ای صَلِ وَسَيِۂ دا ابا شل یزیت مر الكََي کُلهمٍ 
درود کے بی روما 292120" 
تک بن الفطا اب نشی اللحنہ سے دوابیت ہے ۔فرماتے ہیں اق الما مو شف 
بن السَمَاء وَالازضلَا يَضْعَمْمِنةُمَن٤‏ حَقی تُضَل عَلتَبِثٍكَ(ہء 
الترذی کہ ند ےکی دھا آسمان اورز ین کے درمیان رہتقی ہے۔اس سےکوگی چاو پر 
یں پچ تع یمکقم اپنے نی پرددودججو۔ یش دہ دع قبول ہوسبالنی ےجس کے او لآخ 
درددشریف پڑھاجاۓ گو یادعاکی قب لیت کے لے درودوسیل ے_ 


و٦‎ 


عو و جات جع رسد ٢‏ مت اے کبوتر زدنا گیا درسد 
میں چےن یکوکعب کی ک یآ رزڑگی۔ ا نے باتھ او ںکوت سے چمٹاے اورآنافانا کے 
درودنہ پڑھنا پاش اوراحمان فرا موی ے 
حضرت قد سے م رس روایت ےک رسول ال ہلیم نے فرم باصن ا فا ان اذ کر 
جک ال قليص وع ملع (رداظارج ۲ بش ۰ ۳۳ کالفا جا مہ القول البرع) 
نت مکی بات ہ ےکی را یآ دی کے پا ذکرکیا جا ےتددہ مھ پردرودنہ پڑھے۔ بی بڑکی 
بش اورا مان را مو یکی بات ےکیاس می سن انساشیت یکا ذک رک امیا ہواور 
نے الا آپ سأ ا پردرودنہ پڑ حے 

ہر وم ازماصردرودوصساعم برسول وآل واضصھال تمام 


ا 


مولای صَلِ وَسَيِّم اتا ابا خل عبت فبر القلَي کُهِ 
با ب سم :درودشرریف کےٹنضس الف کی شر 
ال (اےالش) 
ال میس را ال ہتھا۔آ خ رکف مشددلاباگیاجھ اک انم مقام ہآوالللسجر ہگیا۔اور 
الم از دای اکٹ اتال ہہوتا ہے۔ اس ک ےآ خ ٹیس ہ رر ف ند کے ام مقام 
ہے۔اورا کا ال دے۔ 


وھ١ص‎ 


٦ 7 1 7‏ 
الله عَفوْژ رجہ کہناجا نیس ہے بلہ الک اغفرلع ا زی کہاجا ےکا 


١۳ 


کراے ال بن دے او رھ پر فرما۔ اس پرز یادو تر مرف نداداخ لکئیں ہوتا۔ 
ضر تبسن بصربی رحمہالڈے مردیی ہ ےآلأکام ہے نےکی شا (اے 
اشددھاؤ لک کرنے وانے )۔حفرت ھی نیل سے مردیی ےک جس نے الگ 
کہابیقیۃ اس نے الڈدتھاٹی سے اس کےتمام اسا سخ کے واسط سےسوا لکیا۔ اور الو رجاء 
اعطاروئی سے مردکی ےکہ اَل کے مرمس الل تھا ی کےنخاندے اسا بویع ہیں یتو 
سے ےرادا کان ےرپ اد ا رما رے۔ 
ایک حدیٹ مش ے /رسل اشمتزہبرزِتا ایتاغ اللَذی' الْهَۃٌ ایتای 
ال ]ا ھی پڑت تے۔بژن دعاکآغاز الگ حفراتے تے۔ 

اسم 

بیامحاضر کاصیضرےاز با بأقعیل ۔ص لاق صدرںس بلرائم ےمان مصدری پل 
تال ہے تی صلاکاکیے ہیں کی تض انی کی حالاکہ باب انتیل 
حصَل تَضَِيِةٌاے۔ 

موم يومٌَمَوْضِخ المضِْرِيْقَال صَل صَلا٥َوَلَيِعَالصَل‏ تَصَإيَةً 
(وری قا ات كش٢۲)۔صَل‏ امر فی معنی الاستدعاء لانزال ال رمةعليه 
من السماء(ارزآشین ۸۷ء) 

صا کی ذسبت جب بند ہکی طرف ہہوتو اس وفت صلا ‏ نی دعاءعبادت اوردعا ۓے 
عاجت ہوتا ہے ینم زک یکرت ریہ سے ن ےک رسلا می رن کک سا رےف راگ ء 


۷ 


داجبات اورس٦ن‏ دعاۓ عبادت اوردعاۓ عاچت دولول تل ہوت ہیں۔ 

اع فی ٹیم 

علامدائن تم کہا اکب بی یم کےتمام ناموں میس سے شمہو رت بین نام ہے جچوتھ سے 
منقول ہے۔اورو بک یت ریف عحبت اورجلاات وکظمت شقل سے بجی ج کی مقیقت 
ہے۔ا لک ناء ہمقل کے دزن پر ےئ مُعلَم بب موَذَد مُبکَل 
وفیرہ۔ بوزن دراصل اظہارکثزت کے لئ مقررکی گیا ے۔اگراسل ےا عم فائل شتن 
رز اھ دیز ا ساوت 7س ار امرب 
مل( جمشرت دچرار پڑھانے دالا)۔ مق( کجھانے دا )۔ یبن( ان 
کرنے دا )۔ شش( چھشکارادینے والاممگھارنے والا )۔ مق خح( خوش کر نے والا) 
اوراگرایس ہے ح مفعو لت ہ یتوم ہوگاجس پربکشرت اود بار پاننل وت ہو یاوہ 
ذات ج کے بععددکھرےج شا کی ا فن و ۔کہاجا تاس محصددہذا تیگ بار باتحریف 
کیاگئی۔ دوہ می بار با ترنی فکا فک ہے(سعادت دارین ) 

صلوۃ وسلام میس لذ ناش اس لے (لا نا ) منا سب ہو اکیشھ یی ار بارتھ لی کیا ہوا ہے ۔ اس 
مع پرمقام مد وشایس بی اعم لا گیا( روں البیان ) 

لم شی سا ۃ 

درودشرریف یی سآ لکالفظا ارم رت آ یاے۔آ لکا ای لع یکھردانے ہے۔ 


لک 


آل سےمتعددمعالی ہیں ۔آل سے مراد ہی ہے۔ چنا ےط رای نے اوسط میس اوراین 
مردد بین ححضرت این عیاش سے روابی تکی ےسئل النبی قٹاڈمنآل مہں 
قالل کیل ننقی (شر) فا اع قاربیء ع ٣‏ ٦ے‏ ٣۱)۔‏ نی سنہ سے اگ اک ہآ لم 
کولن لوگ ہی ںتوآپ نے فرم یپ ہہ زگ رلوگ میر یآل ہے۔ جیکنیس وہل ئیں _ 
مطلب پہ جک ہی ہے وہل ہے ۔ ا لک تائی اس ارشاد بارگی ےہول ہے ان 
ول ال اون( سورہاننال:۳۳)۔ت جم : اشتما ی ےردوست پرہیزگاری 
لیگ ہیں۔اس اعتار سے بیہا ںآل سے مراد پر ہی گا لوک ہیں۔ 

علا یی تقاری علی ال رحت البار کت یں ال٦ل:مَن‏ عَز مَث عَلَيْوالٌكاہُ یی 
ماشث وین عَبرالکلب ول تک ال ول جونع أة لجا 
َال هٰنًا مَالَ مَايِكعَلی ما ذکردابن العرل,واختارہالازھریو 
المووی پی شر ح مسلح (ال زاشین صن ین ) ۔کہاگیا ےکہآال ےمرادوہ 
تحفرالت میں جن پر زکو مرا ہے جیسے ہنی ہاشم اور بی بداللطلب او رکہاگیاے ہز 
پر ہی زگا رآ پ فی مکل ہے۔او رگ ایا ہے سااری امت احجات ہل( متی لہ 

پڑ ھنے وا لے “مان )اورا کی رف امام مات کک میلان ہے۔ا کا کر این ھ بی نے 
کیا ہے اوران ہرکی نے اورامام فو وکی نے شر لم میں ا یکواختیاراورپندگیا ے- 

لف ال اورائل میں فر یک گیا ہے ۔ائل سے مرادخا ندالی رشنتردار ہیں اورآلی سے مراد 
سب متا من پر ہیزگا رہی ںکی مق رآ نگ۷ ریم ے ۱١‏ (چودہ) مقامات پآ ل فو نکالفظ 
استعال ہواہے۔او ری ۰یج یل سےفرکون کے نا نداٹی رشتددارم انیس ہیں 1 


1٦ 


لوک مرادہیں جونطرت می کے مزال ے۔ نا سور ہآ یما نآبیت ا ءسورہاعراف 
یت ۰ ۱۳ء سورد الم نآبیت ۴۹ ونی رہ معلوم ہو اک ہآ پ نے اپقی امصتہمسل کڑگھی اس 
تی دھائیں شیک ف مالیاے۔ 

علامہاج مخطا وک (ز ٣اد‏ ) کھت ڑل والہر ادبألآل ھنأساثر امةالاجأبة 
مُظلَقًا وَقَول ئا (آل میں کل تقی)حمل عل التقوی من الچ زكٍل٦َكَ‏ 
الْمَقَامَلِلتُعَاءٍ ونقل الالقانی فی ہر ح جوھرتەانهیطلق علی مؤمنی 
بی هاشم اَهرَاف وَالَوَاحِهَرِیف كَمَاهُیَمصطلح السلف وانما 
حدث تخصیص الشریف بولں ا حس وا حسین ذ مصر خاصة نی عھں 
الفَاضِيدْیَقال: وبجدا کرام الاشراف,ولو تحقق فسقھم لان فرع 
الشجرة یئا وآ مال (حاشیٹطا کک م۱ق افخداعض٢)‏ 

اور یپا لآللی سے مرادمطلۃ سا ری امت اجابت کل یگوں مسلمان ہے او ری ساہنم 
کاارشاد( رسای مکل ہرستی ہیں نشرک سے نے ول ےکیوکمہ بیمظام دعا 
کے ہے۔اودامام ای نے اتی چمرہکی شر مآ لکیا ےک یک فطل بی 

اٛحم کے ابھا نداروں اشراف پریمشلق بولا جا نا ہے۔اوراشرا فکاداحدشریف ہے جیما 
کل فک اصطلا میس پا باجا جا ہے۔اورتحضرت سن اورتحخر تس نکی اولا وکواشراف 
کے نام سے فاص کر نا اہ لکا احداث وآ نما زم میں ہوا سے نما سک رفا 020 
ٹس ۔اورکہاککہاشرا فک عز تک ناداجب ہے اگ چا نکانن بت ہوجا ۓےکیون وہ 
درض تک شا ای سے ےار جرد شاغ جک جاۓے۔ 


٦ے‎ 


حخرت سن لع ربی کے نز دی کآ ل لالم سے مادخ دنر تح ٹن ہی کیو ہنی 
سی خوددرودیں فرب پاکرتے تے ال ال صلوانِكک وت رایت عل 
یکس (اے اتی متس اوران منج ں مھ فی پرنازل فرا)۔آ پ ٹاہ اس 
آل سی سے مرادا تی ذاتل اکر تے ت ےکی ون ہآ پ سای فر ضکوکیھوڑ تے نہ 
ےا وأٹل اوافر ام خ ےا لے کرو وف لج سکاادڈدتھالی ن عم د با وولوخوو 
خر تح ]پیم پردرودپڑ نا ہے اور ہہ بات خودرسول الش نم سےکلام سے ات 
ےتارک نت پآ پ سلفم نے ححضرت م وی اشع کی رشھی اش عنہ کے بارے میس ان 
گی اوک نکرازٹاوظ مایا تھا ایی نل اود کے مم ممازون بی تھے نا2 گیا 
ہے۔بپہا ںآ ل داد ےم اوحخرت دا ودعلیرالسلا مکی ذاتل یگئی ے۔ 

ای طرح حضرت جن بصربی کے نز دی کآ لحھ سط سے مرا وآ پ ایز کی ذات 
ارت ہوٹی ہے۔ححفر تچ عبدالنن فرماتے خی کیعلا ریگ کت ہی کال بیت کے 
اون ےخودآ حضرت لی مکی ذات ا قر مرادے_ 

ال ببیت سےکون لوگ مراد ہیں ؟ اما م تر اللد بن را زی علیہالرحمتۃ نے ف مایا ےکہاوٹی اور 
مناسب بر ےکرائل بیت سے از واج مططہرات او رآنحضرت نم کے او لا دم راد ہیں 
اورتحضر تک یھی ان می دائل ہیں (اشعۃ )- 

اع ارک فرماتے ہیں ےیگ الال ممن عَزمّت عَلَنالاکوڈ کین هَاثم یق 
مقللب. ول کل تین الَُٰذَ کر الطیی وَفِیل الْمْرَاغآلالِ نع أمة 
اللاجَاَةِ وَقیل البْرَ اذباللِ الازوَا ومن عَزمَت عَليْوالعَنَفَةُ 


٦٢۸ 


وَيَلَحلفیہم ال يك تنم زی الا کادیبك(ہ8:+ت٣ش۷)‏ ہہ 
لی کے بارے می ناف قول ہیں ۔کہاگا ےک ہل سے مراد بی ھا شم اور تی مطلب 
ڈیں جن پپرزکوة تام ہے۔اور ہیا ے ہہک یآپ فی کیاکی ے۔اور ریگ گکہا 
گیا ےک ہآی سے ساریی امت احجابت(مسلمان کمراد ہے ۔اودکہاگیا ہے از وا ناک 
اوردوتضرات :جن پرصدقہ(زکوۃ) تام ہے اوران میس او دی داشل ہے۔ اور اس رح 
تام حدرشییں ںی ہوا یں ۔یجنی ان کے درمیا نیقی ہوثی ہے۔ 

شر دلائل ارات یل ےک تفر تابرای علیہ السلام پرسب سے پیل رعمت “گی اور 
فرشتوں نے ان کے پا حاضرہوک رح لکاژ خَة الو وَبركَاتهُعَلَيکُم اف 
اي ال عزں قئ. ا ےگھروالو !ال تھا کی رجمت اور رکف تم پرہوںء بے 
کیک ال تر اور ہر والا ے۔مطلب یہ ہوا ےکج سط ر کو نے اس سے پیل حضرت 
ابراشی علیہ السلام پررححت نازل فرمائی م دعاھرتے ہی ںک امیر ن یکر صلی پر 
رحعت نازل نر اکیومکہجھ جن فضیلت دانے کے لے ثابت ہوووز یادوفضیلت وا نل ےکسلئ 
بط لق ادف خابت ہوگی۔اسی لے اس درودش ریف کےآ خرس وہی الفاظ ہیں جوآیت 
کےآ خرس ہیں م]تی ات یئ( مطائع امس ات ارددہش ے۲۰) ین نےکھھا 
ےک ہی صلی کے ارشما وکا فظاء رر ےکپ سط رح ححضرت ابر میم علی السلا مکو ال تعالٰ 
نے تمام اخمیاء کے یرود کا مرچع :نایا ہے ای طر شھےبھی بنا اورکوئی اخ 7 
نبوتکامانے والا ہومیریی نبوت پرایمان لانے ٹج روم ضددہ جا (ش میم فان ) 


رھ 


وروڈ ر1 لیف مل لفنا سی رکا اضاثہ 

تن میں ال تھا لی حر تپ علیہ السلا مکی شان می فرما تا سن وَحُطُورا 
وَتیکا من الطَلحِژتَ( آ لمران )۔ ا لآ یت میس الڈدتعا لی نے حضرت کی یکوسیدفرمایا 
ہے۔اورلفظ سیکا اطلاقی نیک یم با پر بالا اق جات وخابت ہے۔آ پ یه نے 


ر- 


رما یا سَیْوَلَيِاكَمم می سآ د مکی اولا دکا سرداررہوں ۔حضرت نسسن جی ری الٹرعنہ 


٭ھ 
ے 


ے۔ سد۔9 


کیاشان مم ف بن ابی شا م. بیمیرابٹاسردارے۔حخرت سعرین معاز تی 
ا عنہکے بارے میں انارک فرما گیا ہن ال مگ جم اپنےسردارسعد 
بن مواذ کے ل اٹھو حر تعبدارڈداین سودرشی اڈ دتتعالی عنہگاو ول درود یڑ حت 
اللَهْمٌ صَلََِىسَیْں الوم (البرکات المکی)۔اے الشدرسولوں کے سردار پر 
یئ 

باٹی عما مک درودشریف میں لفظاسیدناکے بڑہانے میس اختلاف سے ۔صاحب امو ں کت 
ہی ںکہہماز کے اندردرودش ریف منقول الا ظطکااتبا حکرتے ہوےسیناکااضاڈٹش 
کرن چا ہے نف کے نز دریک سددد ا5ک رانضل ہے ترک کر سے۔امین جج رن بھی 
سینا کے ؤکرکویی الد نضو ویش اط لق اددیاے۔اورنالہااسی لے درودابرا نی یش 
سیدن کا ام مھ کےساتحداضامدہے۔ تن ان تی یکا نکی ىہ کہا لکا ترک لضل سے 
یتقو لصلوات میں ا سک ذکرکئیں ے۔ 

سیدنا کے ذک کر نے می لکوئی خر نی تو اس میں اختا فی سک نا چا ہے کنا 
ضروری ہے یا لک ھنالا زئی ہے(ال ہکات الکیشقرا) 


ذ وی شوقی ہحبتءاوب کے اختہار ویش منا سب الف کا اضا کر نے می کوک یح رح 

یں ےۓےگھررسول ال سپ کے بتاۓ ہو دروداوردعا ول ٹیش اضا کر ن ےکی ہرگز 

0" - ے ےھ ھ ی9 

0 ار تقاض یی ے 

کرشنقول مان ر با و وسلام اوردھا ول میس اضافہ کے ای پڑھاجاۓے ۔ مد ھت ہی کہ 

بہتکی دعائئیں جو ھی جالی ہیں ان میس ایق طرف سے الف و کا ا ضا فہک یاگییاے اور 

لے بڑہادۓ گے یں ۔ بیاحادبیث می جو مکورددعا نکی یں ان ٹل اضا فیا گیا ے_ 
صّاللة قل عبِییہ ثُحميِ و لآيیہ وأ تايِهِوَمَلَمْ 

ازواج مطہرات کےا ا شر ینہ 

وازواجہ .ادرآ پیل کےازواع پردرودنازل ۶۔ازوا جز و جل ؾٌٌّے۔ 

دوسرکی ردایت شش اعبات الم ین (ایماندارو ںکی مایں )ےچ بر ےک تضور 

سیل مکی ساری از داع اورا ول وپ “یلک یآال ہے(مرا ہج ٢ش‏ ۹۸)۔از واج 

مطبرات ہے بہت سے فضائ لق رآآن وحد یت میس مہیں ۔اوراز وا عم“شفی سای قام 

فافش ون زان ٣رر‏ کاظاڈ ‏ 

(ا )سیر ہخد پیرشھی الڈعنہا۔اجرت سےتین سال پپی مک میس وصال ہ9ا۔ 

(٣)سیدوسودوبنت‏ ز معدزشی الڈکنہا۔ ٣‏ ہیں وفات پالی- 

(۳)سیر:عا کیشررشی الڈرعتہا۔ ےا رمضماان ڈ۵ وش وصال نرایا- 


(۴) سیر حفصہ بخت طط بی علالرشی ال کنیا 


اےا 


)٦(‏ سیر وام شی ال کنہا ول وفات پالی 
(ے )سیر وز ینب بن ت ںشٹی شی یکنا ثول وفات ہو لی- 
(۸)سیرہ جو پبر بی بنت الھارثطلققہ رش الڈدیتہا۔ڑھ جوم وفات ہولی- 
(۹)سیدرور ینہ ین تم ان رٹشی الڈدکنہا ۔آ پ لف مکی حیات مل وفات بالی- 
)۱١(‏ سیردا معیرشی الڈکنہا۔ "ہو کے بحدوفات پالی- 
)۱١(‏ سیر وصضی: ری الک نہا۔ ۵ ٹل وصال وا- 
(۱۴)سیرہمیمونرشی ال نہا راشرس بمقامسرف وفات پاکی جک سے د نل دور 
ہے۔آ پ فطل کی رو یں پردرودنازل ہو۔ 

رای صلِ لم دا 1با مل عبنیت خر اي قُلْهِ 
وَذُريهِ 
اور پیل مکی ادلاد پردرودنازل ہو۔ دسر ردایت ٹل اھل بیته ہے( آ پک 
اع بیت )۔اورافظ ذر بی تق رآئن یی سآ یاے۔اللدتعا لی فرما تا ےآتا لیا 
کيي سم (سرہض:ا٣)۔‏ 
:ذ ریت ٹیس اولا در داشل سے پاجیں؟ 
:امام الد بن مخاوئیککھت ہیں جب پبام خابت ہگ اکہذر یت ےمراداولاداور 
اولادکی اداد وکیا اس یکیو ںکی اولا وی داخل ہوثی سے پانیں؟ امام شاضحقی امام 
ماک ادرامام ات کی ایک ددایت کے مطا اق رہب میم ےک حضرت فاعم شی الڈرختہاکی 
او وکا ضورعل صلی والسلا مکی ذر بیت میس داشل ہو نے پمسسلمانوں کا اجما ےشن 


ے٣۳‎ 


کے لئ صلا ون ارڈرمطلوب ہے۔ائن الھاحب نے ماکیوں سے میٹیو کی ولا کے 
داٹل ہونے پبراقفاقی نکی تکیا سے غرم ام صلی علیالسلام ابراشییمعلی السلا مکی ذر یت 
سے تے۔اففاق کےأق‌ کر نے میں شراں سےتماح ہواے۔ 
امام ابوتذیذہکا رہب اددامام اجکی ایک ددایت ےکیلڑکیو لک اولا دزر یت میں دال 
ھی گراصس لیم اوروال کر بای جس کے مرج کول یبھ یمیس سا ء اس کےشرف 
گی وجرےاوا دفا کی انشفاءفرماتے ہیس (انتول البرع) 
بیاعلیرالسلام نے فرما لان ایق ط ا مگ مرا ناس ہے۔ تی ینم نے اپنے 
نوا ےلوب ٹافرمایاے۔ 

مولَای صَلِوَسَلۂ داٹنا ابا حل عبت تیر الكلَي تُلْهمر 
ہل ابراشیم علیالسلام 
آل ابر انیم علی السا م سے مرا رحرت اس ایل علیہ السلام اورنقرت اسا علیہ السلام اور 
ان دیو لک اولادے۔ 
مس :حضرت ابر ایم علی السا ماک رتحموصییت کے سا تجح درودشریف می سک ایا ہے ۔ ال 
1 الیاوچ ے؟ 
رع :علام شس الد بن مخادکی علیرال حتف مات ہیں اکا جوا بکئی رر ے2 آیانےے۔ 
(ا) اتور حضرت ابر ڈیم علیلصل و السلام کے اک را مکی وج سے ہے۔(٣)‏ با ابر انیم 
علیہالسلام نے جو ام تم ای ممیت ا خفْزِ َو الِنَیٌ وَلِلْمِيْتیَ 
توم تقو2 الرت اب گوانا کس غرم ار الگ ان کر ےب اک را 


۱ےا 


صلو کیل ٹنوی سک کیا سے( )یا باقی انا مکرا مکی صللے ۃ یں شرکت نہ ہونے ‏ اور 
خرت ابرا ڈیم او رر ت سکم کے صا کےسا تج خمائص ہو ےکی وج سے۔ 
(۴) یاتواس ل شی می ٹس ہی ںک ابر ہی نیل ہیں اورحھد مہہ عیب ہیں۔ 
(۵) اس مل ےکابرائیم علی السلام ار تھای کے ارشاد ان نی ال ایس الج 
تاذ ر جا شی ش ایی حیشیت سے منا دی الشریعت ہیں اومد سی 
اشتعالی کےا شاد ربا اتا مِعماممَا ِا يْمَا دی انا نک دج ےمادی 
الد بین ہیں (القول الب )۔ اور جمارے رسول ای بھی ححضرت ابر ایم علی السا مکی 
آل ےہیں۔ 

صَّللة عل حیہہ ئُحمَيِوَع لالہ وَآعحَايِهوَسَلَمْ 
تیر تی عاتم 
كَمَاعَلَيْكَ عَلإِتزا یر ججیاک نے ددودییچا رت ابر ایم علیراللام پ- 
مل تس ھت 
سی وم ویوسپبسیت 
انەلم بجع لاحد‌غیرھم بین الرحمةوالبرکة قال تعا ی رَحتَثُ| 
وَبَرَكََتهُعَلَيِکُم یتس" 
فابراھیم افضل الانبیاء بعد ‌سیدنا یں فلذا اوثربالل کر او 
انه کوقی بل لك علی دعائەلھل×الامةبقوله: اغُفِر وَلِوالِدَئٌوَ 
لِلويِيتی (۷ ہت م:٢٥)کذاقیل۔‏ وانص منەدعاؤھم بقوله:رَبَنَا 


"ےا 


و 


َالِٰہمَة وَي بجر (+اتر::۲۹)۔ واجیب باجوبة اخری فیہا نظر: 
علی انپا تحتا جا یل صمة النقل ہما ادعأ×قائل و" آ(الدررضر۵ء)۔ 
خیالی ر ےکیبھ لی ز بان ماشو ھک مکی ہوئی ہے(ا)تشی ری :مینی یھ مرتبرہونا 
(۳) تش ینوی :ای رکا ہونا( ٣‏ )تشیینسی :اصلانسلا نیک یما ہونا( ۴ )نشی یف : 
عادات وصفات یل ایک جیا ہونا(۵)تشینٹی بخخصیت میں ہ انل ہونا(۹ )نت گی 
ینیل پور ایک یماہوناڑے )تشوی :لی :لپن چیزوں با صرف ایک چ رش 
مخابجدت ہوا(۸)تش ینعی : جنی فاع لکاکس یکا مو ہار بارک :گر چطر بتخلف ہو ورود 
ابرأئھی مر صلوج کیتشہصر ذنٹحی سے ن ہکرت وظیرہ(فادی مغ ل۰ ۳)۔ 
حفرت اب رای علی السلام نے ول ال ہی اوراس امت کے لے دھا کیٹھی ۔اس 
وٹ پردرددپڑ سن کیاعلیم دبی_ نیزنش کت قآل سے ہے اور ل ابر اشم 
می خو دش سای بھی شائل ہیں ج بک ہآ می سکوکی ا نک شا یا آپ ایك سے 
اض لہیں۔ ماتشویہ یہاںئیں ہے۔ بیاہیے ہی شے اا اعیْکا لَيْكَ کَمَا اوْعَيِتا 
لی تو ج (سر:ناء:۱۹۳)۔ تر جم بے نک کم نے تہارک طرف ایی وق یکی شیسحفوئ 
علیاسلا مکی طر فکی۔ خزاشفر ٤ے‏ قب عَلَکُم الطیَائم گا قُیب 
حتی ال صن قَبگ نہ (سودویقر: ۱۸۳)۔ت جم : تم پرا یر روزہےفرش سے 
کے سطرح مر سے پپوں پرفرش کے کے۔ 

علامہ بررالد بن ئفی رجم ال لے ہیں اگ بباعتز اخ لکیاجان ےک نشریرکا قاعدہبہ ےکہ 


۵ ےا 


مشبہ بر مشبیہ سے افو گیا ہہوتا سے اور سای انس کے سس ہے ینہ ہما رے رسول صب یم 

حفرت ابر ڈیم علی السلام سے ال ہی تو ا کا ایک جواب بی ہے یہ سای نے 

اں دنت ایا تاج بآ پ لام مو نیس ق اکپ ۰رت ابرا یم علی السلام ے 

ال ہیں۔ 

دوسراجواب بی ےکہ یہا نشی انس لیس ےک زان سکوکائل کے سا تھ لا یا جائے بللہ 

اس لیے ےکی مرو فکومروف کے سا تج ملا یا جا ۓ یچقی ہما رے نی سأ حضرت 

ابراڈی علیہالسلام سز یادہممروف ہیں ۔تحصسراجواب یر ےہ یہاں پ جو ںعکوجموں 

کے سا تح دی ای ہۓے فذان شی کو کین ےک ال ایا ڈیم سیدن شح سم 

آل سے ال ہی کین ںآ ابرائیم یس انیج السلام داٹل ہیں اورنمی سی کیل 

ول یں ہے( ع7ا ار :اعم ال بای ء ج۸ مکل ۵۰۲) 

مق اھ یارخمان رحم اف ماتے ہیں ہا لتوب یرت کی ہناء پر ے ور تضورسای ایہم 7 

صلی ابی علی السلاماورا نکی صلو ےل ہے۔ برای علیالسلام نے 

ثارےتضور کے لے دعا یں بای رما افخ و لگا سیر بش 

ملک ہرمز یس ابراحیم علیہالسلا مکودعا یں د نے ہیں ( مرا چ ٣بض‏ ۹۸) 

بیہاں عل نےگرام نے متحددجواب دۓ یگ اختارکی وج ذک یں کے گے۔ 
صَلَّاللة کل حبِییہ ثحمَيِ وع لآيہوَأحَايِہوَسَلَمم 

ام تقر ت اپ ایم علیالسلام 

علامدائن لمت ےکہا ےکس یلیذ ان یس اب رای مکامنی ہے اب یم (عبریان باپ )۔ 


اے٦‎ 


ہم 


ارجا نہ نے ححضرت اب رای علیرالسلا مکودتیاکا تس راباپ بنایا۔ جارے پیل با پآ دم 
علیہ السلامء دوس ےو علی الام ہیں تام ال ز مان ال نکی اولا د سے ہیں- 
اشتعالٰ( ٤ے‏ وَجَعَلَتَا كزیْکَُمُم البَاقتیَ(سر:اصافات:ےھے)۔ جم نم 
نے ا نکی ادلا وک اقی رکھا ے۔حقرت ابر شی علی السا مکا ذکرق ان یدک گی د مل ۲۵ 
سورتوں میس ٣٦آ‏ یات می لآ یاے۔ ذک کی ز یادقی فضیل تک دحل ے۔ 

آل ابر ٹیم علی الام سے مرا تحضر ت اب ایم علی السلا مکی اولا و ہے جواساشنل واساقی 
الام سے ہے جلی اک ایک جماععت نے اس پپراعتبارکیا ہے(سعادت دارمین )۔ رسول 
اٹ ینم ال ابر یم علی السلام سے ہیں مڑنی رسول اوث سی بھی ححضرت اب میم علیہ 
السلا مکی اولا دے ہیں 

ايل اری(متونی ۳٠٠۱ھ‏ )رح اش رنطرازژں لاشك انەعليه السلام داخل 
ٹیآل ابراھیم فلا اشکال ف التشبيه و تحصل لەالصلوۃمرتیں مرۃ 
بانفرادقاومرے تحت العدوھ (م 18ء۲ ش۲۰)۔ تر جممہ:اس می سکوی شبیی لکہ 
می سای حضرت ابر شی مکی اولا وس داخحل ہی ںتوتشیہ می کوئی اششکال (اعترئش )یں 
ہے۔او رآ پ ای مکودومرمردرددشی نکیا جا ا ہے۔ ایک بارانفرادکی و پپرہ دو ار دحموم 
کے مات گو یا آپ سیل پ الیک لس میس دومرتبردرددکیججاجا تا ہے ۔ ایک با رنخرت 
اریم علیالسلا مک یآل بی دائل ہہون ےکی وج سے ۔اوردوسریی مت تاج بک ۔آپ 
پچ[ 


ےےا 


برک تکاصعی 
ایق با ِ كت صلی موس اےالشدحضرت ہی پر برکت نازل فرماتودرود 
ریف کےصییقوں بی برک تکا سوا لک۷ر نے کاذک ربج یآ یا ستو برک تمعن ہز یادکی 
انار 812‪٭۵ء8ء,“ھ اکر کو ہ یلفن طول اس طر اتال ہہوننا سے جیے 
برک اد ال کت دے۔ بات اد فی ال داس میں کت دسے۔بآرک اللة 
يے ال اس پر کت دے۔ بآ رت اول ےل الداس کے لے برکت درے۔ 
رت سعیدرشی ارڈرعن سے نقول سے ۔روایت ٹیل سے بَآرت الهلَكَ ثی اَخْلكَ 
ات اللدتا یتہارےائل اور مال بی مرکت دے(جلاءالافمام) 

ق رن میرم اس کے استعا لکی متای ہیں : 

انشتعالی فا ہے آن نرک من القَار ومن حَ لجا( رگل:۸) یم: 
مارک سے و جوا ںآ تگ بی ہے اوراس کے ارد ۲ 

اٹ تا یف اتا سے وبا فا عَليْ دحل اق( سور:الصافات:۱۳)۔تر جم :ان پر 
اوعاقی پد اھ نے برکتیں ناز لیں۔ 

ا تھا انا سے لغ با کا کا (سورہاعاف:ے ۳٣)۔تز‏ جمہ: ہم نے اس میں 
ان رن 

ال تھا ف ما نا ے اَی مارکا عو لے(سدہصراءا)۔تجمہ:جرنے اس(مسر) 
کر رن ین 

یز التعالی نے نا نع کو مارک فر مایا رححفر نی علیہ السلا مکواورش ب قد رکومبارک 


ےا 


فرمایا۔اورنقن تتعا لی نے خوداپقی ذا تک ب کت دالافرمایا- 

اتال ف راتا ہے تب ارت ال رب العلِ ین (سورہاعراف: ۵۳)۔ت جم بابرکت 
ہے الٹدسمارے چاو ںکاما نک ۔ 

اشتعالۃ <١‏ ےتا رك الَيِی کزل الفَرَقَان عل عَبْيِدِلمکوَلِلعلہی 
تنا (سر:فرقان:ا ).جم نہایت بامکت ہے دہٛس نےفرقالن اپنے بندے پر 
ناز لکیاج کہ سمارے جیہاں والوں کے ےت ردارکر نے والا ہو۔ 

ال تھالی فرماتا ہے قتب ارت ال کن اعقاِقيثی(سورہ موم ن:٣)‏ جم : 
ہایت باہرکت ہے الڈدسب سے ہت رین پہراکمر نے والا۔ 

اشقالٰۃ +٢‏ ے تَمارَك الَزِیبِيَرِالمْنْك(-ر:ءگف۰)۔7 جم: ارت ے 
ووذات ٹیس کےقیض میں سلطنت ے_ 

انتا فرماجا ہے تَبارَک اش رت ذی ا لال وَالً کراور(سرہرن:۸ء)۔ 
تمہ باہرکت ےآپ کے ربکا نام جو بز گی اورگزت الا ے۔ 

صلو بیس برکت سے مرادی ےک جو ہیں رت ابرای علی السلام 99 
حنرت ھی برنازل ہوں ای لے لو کےسیفوں بیس بار بار برک تکی دع اک یگئی 
ے۔ جب ہم کے ہیں لے با صلی ہس تو کا مطلب ہوا ہے اےالڈراجر 
سی کا کر دکوت اورش بیع تکوداگ یکر دے اورتحضورسلل مکی ام تکوآ پ سلب یلم 
کی برکت وسعاد تک پا نکر اد ےکیٹو ان کے پارے میس س رکا سأ کی شفاععت 
ولغ 0 تن مس اک ور ت ےج ا ادا کا رشن می گر 


۹ےا 


تمہ را گا (سعادت دار بن ) 


آزئَّ 


8 


درو کےھیتوں ام الع یکھی مھکورہے۔اورا سکیاتشر آ یصو میں کی 
ہے۔ اس لے اس کےاعادوکی ضرورت کیل ے۔ 
لئ 
الای( نی سے )یڑ ھھ ہوئۓےہیں ۔حفرت اھر برک اشعنگ ایس آردہ 
صلا یل الائی زاورے_ 
حر تب عبدرائن میرت دلو یت یرف ماتے ہیں أُ شیع تضور ای م کا زاس لققب ےج 
تقوربیت وائیل اورشامآسالیکنابوں ٹس ڈکورے۔لشت مس اھی اس ےک ہیں ج 
پڑھنالکھنان جاناہ وک یککتب ومدرسٹل نہگیااورن کی سےسیکھا ہو برلقظاہم (مال ) 
لکیططرف وب ےشن ای حالت پبرہوٹس پردہماں کے مم سے پبیراہواتھا۔ 

گان تب رت وا داوشت ٦٭ا‏ فرصم لآموزصرریںشد 

کی ےکک رددقران درست پل ن-6سمتتبذانہجندات پشت 

ترجہ :می راحوب جوا یکتب(ودرسہ )یس بھیئی سکیالکھنا پڑھنانییس سکصادداٹے 
اشاروں ےجنگکٹڑوں پدرسو ںکامصعلم (استاد)ی نگیا۔ جو پیم اس نے پبڑھنابھی سیکا ہو 
اس نے کئے ہی بڈھبوں کےکتبِ خانے وڈ ا نے( مفسو کرو )۔ 
دو دن ٹیٹس ن ےکی ےق رآ نپھی درس تم لکیاتھااس نےکرسابق نول کےکنب 


مان دعموڈا لے( یں مفسوںحگردیا)۔ 

نیمآ داب اوراچرعاجت کہ اوخودزآغا زآ رموّدب 
ا ےعلیم اوراد بکھان ےک کیا حاجت وضردرت سے جوآ از سے ای باادب پیر ہواہو- 
تضورط ٹیا کے لئ اسم کی ححت کے پاوجود امم القری کیمتظحم مکی طرف 
بتک وج ےئش ی ککتے ہیں ۔ با‫ الکتاب(لو ںمفوظط )کی نسبت پرآشی 
سک ےکک بکگکوت بل ادبنی ربی(میرےرب نے مجوکواد بمکھا یا کے مطاِی رب 
تالی سے اد ب سکصا یلم (اشعۃ امعات )۔ یا اص کا نات ہو نکی وجر ےآ پکو 
اٹ ی کہاجاٴے۔ 

ال مل :ت1ج ورك من غژر 

زی ہی ( ہیک ونھری فک ماگیاءبزرک سے )۔صلو ہم نقولہ سے تح دیسیخوں کے 
آخریس میں گیل ہذکور ہے صل ۃ کا ان دوناموں پر مکھرن ےکی مناسبت مر ےکہ 
صاو بی مطلوب وراصسل رسول ایڈرک یگ رکم اورتابیا نگرنااے- 
حمید:فعیل کے دزن پر جم سے شعن ہے کلت مود( تر فکماگیا)ے۔ 
ید فعیل کے زان میں سے بناے(بذرگی والا)۔ 
تا نکمم میس اتی حضرت اب رای مع السلام کےگھ روالو کی شھان یں رما تا سے 
قَاَةِا اَتَعْجَبِذِیَ هن مر اللورَخَث ادلووَبر لُثُهُعَلَيكُمْاَغل الَبِيْيِ اِلَهُ 
ےئ یئ (سورعود:۲۳٣)۔تر‏ جم :فرش ہو نےکما ال کےکام پنج بک کی ہھ۔ انی 


۸ 


مت اورال لک برکیں ہو لت پرا ےگھروالو۔ ب ےئک دی ہے سب تو ہیوں والا ہز ت 
والا۔ 

ہیں خھودےز یاددٹغ ہے۔ ال سےمراددوذات سے جوقام صفا تک مالک ے۔ 
علامیی قاری فرباتے ہیں قب مکی 1 و ذاروم کا 
َافْعَالِدبِا مت عَلْقاَویتغتی قاع ل قَالهتَكہذا تہ وَآَؤَلِیائەوَی 
الَِيِكَتوَمُوَ الا وَمُوا التََوذ. 

لف جیں بروزاأشیل عذتمشکاصیذے اورمضول ک ھی یل ہے۔اباقی ذات اور 
اپ ھخنوں اوراہی ےکا موں اورا پت یو قکی ز بائوں ےل رلی فکیا ہوا۔ یا عیاراصل کے 
معخی میس ےک یوک ودای خودلریف فر ماما ہے۔اوراپنے دوستو لک یتر یف ف ماما ے اور 
درتقیقت بی حا مد( تھرلی کر نے والا )اور ود مود( تن کیا ہوا اور االك نت ریف 
سے )اوردجی تمام اك یتح ری کا موں والا ے- 

دردد یا ککاآخاز الج سے ہوتاسےادر انآ حمہیں مچبیدالل کے دوناموں پڑت 
ہے 


ٴ 


صلی اللة هی حبِیِیہ ثحمَيِوَق لالہ وََحََايِہَوَسمَلْمْ 


۸۳ 


نما مہ 
کیا غیرا نیا ورکل پرددودپڈ عنادرست ے 
یر خیا پر صلا ہ کتہنا جات ہے جی اک بعد یٹ شریف مںگزء پچاے الو صَل 
قی یں تحمَرِ وآ وَازوَاجمِوَذُزِليہ ان . اختلاف تو اس بات یس ےک اگرانیا 
در تحت 
د یاے اورق رآآن وسنت سے دلائل چڑی کے ہیں 
شیک نآ بیات سے انہوں نے استند لا کیا سے وہ یڈیل : 
اشتعالٰ ٣١‏ هو الَزِق يَصَل عَلَيکُم وَمَليگَنه (-.ۃل<اب:۴۳)۔ 
تھ جم :وی ہے جوم پررشستیں ناز لک رتاہے اوراس کےفرشتے۔ 
اشعالٰۂ ٢‏ ے وك عَلَیْہۂ صَلَرئٛئن ریہ ََمَ(سورۃالقر:ے٥١)‏ 
تر ججمہ :دای بپلوک ہیں جن سوک ےت رگ سے 
اشتالٰ ١٣ے‏ خْلمن امو الِهم صَنَقَةُتيِرْمُم وَثز لِم بَا وَصَل 
حََثر (سورۃ ا :)تر جم ا ےتوب ان کے مال سے کون وصو لک می یجس 
سے وو طہرے اور 21 3ہ جا میں اورآپ ان کے یوما توف ماتتیں۔ 
سو مہ ےی 
لٹا کے پا جب کیقو کاصد 3آ و1 آپ فی ان کے لے دعائمرتے 
اَم کک لا بناصمد تے کا مال لا ےت وآ پ ٹیہ نے 

لق صَل ع یآ لآ آؤٹ۔ 


حخرت جا برشھی اللرعنہ سے ددایت ‏ ےکہ ال نکی ہیوکی نے عرخ سکیا یارسول الد ا 
بھ پراورمیرے خاوند پر لو کیج ۔ت وآ پ سا نے فراياضَلی الله عَلَيك وَعَل 
رَوجكيٍ۔ 

ین جورعالما اس کےخلاف ہیں اوردوخیرانیاء رصلوۃ یت کو جا میں کت جب 
ایاء سے الگ ا نکا ذکرکیا جا ۓےکیونک لوق وسلام اخویاء کے لے شا رکی حیقیت اختیارکر 
گیاے اوران کے سا تم خویش ہ وکیا ہے۔ اس لے خی رانویاء کے لے یالفاط اسقعمال نہ 
گے جا میں (تقی رای نکش رج ۵ بے )٣٢‏ 

تمہ( مولی این عپااس )نے تضرت ان پعحپائس رشھی اڈکتہما سے روای تکی ے۔انہوں 
ۓۂْ ايلافصلَوا َلَة ‏ ل الا عل القٌٍیوَلِںيُنْ نمی 
َالضلسَاتِ پاش تغفمار (فضل اصلو وی فی ہے۷ حدیث ۵ھے)۔ می سی 
کےعلاو ہی یھی ( اص اورانْفرادیٰ) درودنہ بڑعوکان مسلران مہ دوں اورگورتوں ے 
لے استنففارکی دعا کی جالی ے۔ 

رت اور پر شی ال عضرسےدردایت ےک رسول اللد ہنم نف رما اص اعلی 
نیا اللوو زسم فیا اللکتَعَتَمْج کمبَاتَعقین (ااضفا )ال کےنیوں اوراں 
کے رسولوں پردرودٹھڑو۔ پیک الد نے ا نکوکجہا ہے حیہ اد نے ججھےبیہا ے۔ 

ضر کم رم نعبداللتز یز نے خوھا می۲ سککھا اما بد الوگوں میں سے پٹجولو کآخخرت کے 
اعمال سےدنیاجاج ہیں اورلوگوں میس ےنت قص ہک ونیبوں نے اپن انا ء واھراء کے 
لے سی پر درو دیسے درودکوا یپا دک رلاہے ۔گھذ اجب می رای خ ھا رے پال چو 


م۸۲ 


یں عم دوک وومیوں پردرودپڑعیس اورعاممسلمافوں کے لے د اکم یں اورائس کے 
عاوۃ دوس ری بای ںچھوڑ و میں (فضل الصلو بعلی انی بس ۹۸ء عد یٹ٤‏ )۔ ببروابتمصلف 
ای شیہی بھی ہے( حاشیہ مسا تک الحفاء)۔ 

قمام انریاءاو رف شتوں پر متتقاصلوق کین کے اس تباب پ خلا ءکااجماح سے۔او جو رعلماء 
کے ہاں یا خییاء رم تقاصلو کی ںکھھنا جا ہے چوک لنذظاصلو کا ا تال سلف کے باب 
ایا ہم السلام کےساتھ اضر ہا سے مج یزوج لی سکہاجا ا اگ چش رعلی الصلو ؟ 
الام یز پیل ہیں تا ضمنا خی رانا ہلل ءاصحاب از واج اورا جا پردرست دّ 
ہے(نعیۃ اتم) 

علامہ بدرالد بی نگم ودام میتی (متولی ۸۵۵ھ ) لت ہیں امام اج هد کے نز دی کی را خویاء یہ 
اتا لو ۃ بنا چان ہے اورامام اپ وحذیفہ ان کے اصححاب +٠‏ امام ما ک٠‏ امام شاضی اور 
ای نکش رکےز ویک انویا جم السلام کے یر پرانفراذ الو نشی جانے ین الن پہنتعا 
کی جاسلتقی ہے( ججیان القآنء ج ھب ۹ ۳۳ مر ةاقاری ٠‏ 8 بش ۹۵)۔ 

جخرت او یسا عدکی شی ال عضنرسے ددایت ہ ےک یححابہ نے عو کیا یا رسول الام 
آپ ای پر ددددکیسکتییں تو رسول اللہ لایخ نے فبایابی ںکہ الله صَل کی 
ط1 وع ل زوس وئزلمد لبَاغايے علواریر موب رِأكعَلی تمَرِو 
کل از وا ووفَزَي 2 ھا رت غل وا وت لک روة في لاف 
تاب الاخیاءہ مبارق الازدھارء رج بش ٭ ٢۲)۔اے‏ الد ار تر اٹ پیم اورا نکی 


بیو پوں اورا نکی ادا د پر رکستی گی رکتتیں ححفرت ابر یم علی السلام پر ناز لمیں 


۸۵ 


اورتخر تھسا ادرا نکی بیو یوں اورا نکی اولا پروی بریی از لکرگیی برنتیں 
نر ت ابر انی علیاللام پرناز لکیں۔ بینکآوصروبزرگ والاے۔ 
علامیمبدالاطیف(ٰشیر این الیک ) فرماتے ہیں اس حد یت میں پلتع غیرنی پرصلوۃ 
ییےکاجوازثابت ہے۔ ایج صل علی ابی بک خی ں کہا جا ۓگا۔ پچ ر اکر مکہوکہ 
لو ار کی رف ےلت ریت ے جو ہرسلمان کے لے از یآ پیل خی نی کے لے 
کیوں جا می تو ہم جواب می ںکہیں گےکہ شا لی تو قیقی ہیں اورسلف سے ا کا 
استعال غیری کےےتی می اف می سک یاگیا۔ ت تکہاجا تا ہے انڈرخزوٹل نے فرمایااور نیس 
کہاجا ےگا نی عزدنل نے فر ماک چ نیسای ال کے نز دی ک زی بھی ہیں اوری یل 
ھی_ 

اکم ہدک رعول ال بل نے فرما بے جوائس بات مل ےک نی برصلوۃ 
کیھنا جا نز یتوہ ہیں ےک چوصلو تی میم وکریم ہے وہ یی کے لےمی سکہا 
جاےگ_۔لیان جب سلوۃ سی دعا و ربا جا ےگا حاالل>قَر صَل ک لآلآن 
آٹی (اےالدریحت نا زل رم آل ال ادف پر)۔ در ۓیل ے(دھا کی 

یش )یو نہیں گےکہ پان چیزوں سے ہے جو نی سی کے ساتھخائ کیاکی 

ق ا ال عھغضی اساف الد بسہارفالطاتا امم 
کالصلاۃفلا یقال ابوبکر عليه السلام(مبارل الانعارشرں خارقالاذاءح 
۳صشص۱٣٣)کحلف‏ نے اط رع ا سکواستعا ہی سکیا ورسلا چھی در ددکی ط رح ہے اس 
لئ او رعلی السلاع می کہا جا ےگا۔ 


۸ 
حضرت اما قاضی عیاض رح اود( منونی ۵۰۳۴ )فرماتے ہیں وَالزِی كَحَبِليْة 
البُعَقْقُوْنَ وَاَِيْل١ِلَيومَا‏ قَالَهُمَايِكَوَسُفيَان رَحَهُبَا اللهُوَرُوِیعَن 
انی عَبٌاس وَاخْمَارَههَيْز وا جبِدن الْفقَقَاءِ الْكَطَِہذْیَأَنَهلَايْعَی 
عَل عَْر الَأنْبیاء عِننَ ذِ کر مم بَلهُوَگیء يَكْكَضبِوالاَنْبیا يَاء تَوْقِیزًا 
وتَعْرِیزا کَمَا ثتَضش اللهُتَعا ی ین ذِگٌرِيِبِالتَتزَيْهِوَالتَقُيِیسںةَ 
7 ولا یما لدفِْ يہ کلک تب تفصیص الکن سا 
نَا با لطٌلوَۃِوَالتَسلِيْم وَلَا يفَا رك يوَاهُم كَمَا َمَرَاللڈبہ 

وَیل کرمن سَو امم ون الائَةِوَحَئرهم گا قال تال يَقُوْلَوْنَرَبِنا 
اعفْرلَمَاوَلِاخُوایکا الَلَِ 7 سمَقُوتایالانمان بقل ترتع تم مُْ 
اللاِخسَايِرَضِیَاللهُعَثهُم وَرَمُوا عَنْهُبالعَفْرَان وَالڑِطی اَيْصَافَهْوَآمز 
لم يَگُن مَغْروْقًا ی الصًنر الال گمَا قال آبؤ عَِرَانَ اتا أَخدَنَةُ 
الو فِتَة وَالْمْتَميَعَةیبَعُضِں الَكَةِفَمَا رَلَؤْهُم عِنن ال نکر لَهُمْ 
پألضّلَاقوَءَ مہ مم کو یرت 
مَذِيلَعَنةَ عَنْهُفْيَجب ثُےَالِفَع>فمْ ٤3‏ الْکَزَمُوَامِن ذٰلتکَ(ااءءت۲)۔ 
بو شسسشس سے 
قال امام لک اور سفیان ٹھ کی یں اورای ن عباس سےمنقول ہے اور سے فقبااو نشین 
نےبجھی پہندکیاے مید ےکی را تبیاء ران کے کر کے وقت در ددتہکجمجچاجاے بللہ یہ بات 
صرف انا مہم السلام کے سا تم خصوس ہے ہما نکی عزت ود قی رکےلحاظ سے سے جیما 


ے۸ 


کراللرتعا لی کے ذکر کے وقت پاکی کی ( سان ) نزیس یمک ذک ہوتا ہے ۔ اس میں اس 
کا خی شش یک یں ہوتا۔ یبای نی سی اور در ا نوا ءکی توق وسلام کے ات یتس 
ضروربی ہے۔اس می ان کے سواکوکی دوس اا نک ش یک نیس ۔ اڈ تی نے اییاجیافرمایا 
ےکتم ان پردروداو رسلا کھگو۔ا ٹا کہم السلام کے علاہ دوسرے اما موں کےسا تر 
مخفرت اوررضوا نکا ک رکیاجا ا ہے۔جلی اک ادن فرمااکردہ کے ہی کے 
ہعارے رب ہیں یس دے اور ہمارے انا بھا یو ںکویشل دے جو عم سے پل ایمان 
کےساتحددٹیاے رخصت ہو یگ ہیں ۔اورائلتعا لی نے فر ما یااورجولوک می کے ساتحدان 
کی یرد یک نے دالے ہیں ال تال ان سے راشھی ہے۔اور یہ با تھی ےک رام شی 
خیوں کےسوادوسروں پردرودگھنا یہ لب کے لکول می درا یل تھا جیما ران 

ن ےکا ےکا سک فصرف رافضو ں اوشھوں نے پنخ اماموں کے پارو یل ایچادکیا_ 
یس اتم(ائل بیت )کواتییا ہم السلام کےساتح دور یں شر یکگیا۔اوران(وروو) 
مس امامو لکونی اکر سابل کے سا تھ برابرکرد یا۔ اود یہ بات گیا ےکہ بدنیوں کے 
اق منشا ہت نوع ہے۔ اب ا نک مخالنشت ضردرگی ہے اس می نی نکاانہوں نے اس 
یکا اتا مم رلڑے۔ 

صاحب درت رف مات ہیں اورتردرود پڑھاجاۓنریوں کےسواپپبگربطورپردگی_اورگیا 
ذفان رم کا اولٹا بی ا6لئ یس دوٹول ہیں جوازاورعدم جواز کے چیا زی ین 
ہے۔اوریی سکبتاہول اور ذ خجرو شی ےک ہترقمکالفظا نی پر بولناھھروہ ہے( ککیونک لو کی 
طر و پرداال تی ںکرتا ۲۔اودامام سییڑگی نے تبھاج مز قراردیاے نہ تقاتووونوں 


۸۸ 

قولو ںکاا ختلاف رخ ہوکیا۔ ہم الد تق مات ہیں۔ 
سحا نشی شرع ہکنامس تخب ے اوران لوگو ںکوش نکی خبوت می اختلاف سے جیے ذو 
ات نین بلقسائن رشی ال یتجھا۔ او رک ایا ےک و لکہا جانا درونیوں پبراورائس پرتگاسلام 
ہو یی اک ما ی یمر رح مقدمہمیش پذکور ہے اورت رتمک لفظتا ان اوران کے إحروالوں 
پر ولا جا اورعلماءاورقمام نیک لوگوں پر۔اورائی ظر١‏ ربا ں کا س بھی رت ےک اہ 
کے لئ اوررشی ادڈعنہت مین اور بحعروالوں کے لئے ۔ ا سک اکم ماپی نے ڈک کیا ے۔ 
(اپذ اکب فقریی امام کے نام پرنشھی شرع اوررجمتت انڈرعلیردونول لفظ مرکو ر ہیں )(خای* 
الاوطارتر جم درا اد "ص۵۱۹ سک لتق ) 

صَّں الله عل عیب تحميِءَ لم وَآَضحَايِهِوَمَلَمْ 
کیا علییرالسلا حم راخیاء پر اولناجانز ے؟ 
ران می ریس الٹ تال ف رانا ے رضی الله عنہم ورضو اعنہ-7 جم۔:الشان 
رے ,رض سا وا تا لے رظہرے۔ 
سروبینہ ٹل ایا رَضی الله عَنُّْم وَرَضُوا عَنْهُذٰلِكَلِمَن خَوْیَرَبَهُ۔ 
تج : اللم تھا لی ان سے راشی ہوااورد ہاش تا ی سے راشھی ہہوئے۔ بیع رتتہراس کے لے 
ےا رپ سوارےہ 
قرآن میدیٹش ہو الا لی من اَم ال ی(سدەطدے ۴")۔ت جم :ا پ 
لام ہیس نے راد راست اختتیارگی- 
ال تھا ف اتا وص لائمرعل تاد اللْن اضلفی (د رم ل:۵۹)۔تر جم :الد 


۸ 


کی رف سے سلامت اس کے برک یدوبندوں پر( مراداخمیامکرام ہے )۔ 

اتا ی فر اتا لاک علی نوج العالرین(سرہسافات:۹عء) 7 جم: 
جخرت لو پررححمت ہو چہاں دالوں مل - 

علامشہاب الد بین اح رفاک فرماتے ٹل وقں قیل عليهالسلام مثل الصلوة 
خصوص بالانبیاءایضا فلا یقال ثی غیرھم عليهالسلام کماصر ح 
بەالفقھاءفٹو مکرواتنزیڈ-ا اح مل ریا خ۵ ۶ص۹۷)۔ اود بلا شک مایا ےہ 
علیالسلامافناصلو کی ئل ےن نویوں کے سا ت نویس ہو نویوں کےسواسی اور پرعلیہ 
السلا من سکہاجا گا فقتسانے ا لکی تصر ا فر مکی ےکی راندیاء پر یہ اولناکھردہ سے۔ 
امام ال وزکر یامگی بن شرف النودی المشقی (ز ےھ ) کت ہیں انا الملائم فَقَال 
الْعَائِب فَلَايْفرَذيِهِفَز اللہمَاءِ فَلَايَقَال عَإَِ عَلَيْوالمَلاهھ ٤‏ 
سَوَآء فهنَا الخیَایِوَالامْوَا تب وَآما الكَاحِز فَيْعَائبِِمِقَیقَال 
سَلَاۂ عَلَيك َو سَلَام عَلَيْکُم أَؤاَلمَلَام عَلَييكَاَوَعَلَيْكُم وَهٰدًا 
ےئم لے (تتابالا ذکا رہش۰۸ ہارےعلاءیس سے تن اش الجھ نیف رماتے ہیں 
کسام لو :کے شی میس ہے اس لئ اسے نا میس کے لیس ہوا حاسکت( انان 
کا حاضرہونا ضرورکی سے )اورراخبیاء کے علادودوسرول پر بولا جا سنا ےب یکہناہرگز 

جا نیس شا لے الک انم پھرد:فائ ٹک خواوزندہ ہو بامردہ۔ اورحا رش کو 
خاط بکیاجا ےگااورکہاجا ۓگَاسَلَائ عَلَيْكسَلَائہ عَلَيْکم المُلاٹھ 


“۰ 


عَلَنيک کان عَلَکنم۔ اس ام پرسبکاقاتی ے۔ 

امام اص تسطلا ی کت ٹں وفر قآخرون بینەوبین الصلاۃ بان السلام 
یشرع ئ ی حق کل مؤمن ىی ومیت, غائب وحاضی وھو ‏ حیةاھل 
الاسلامبخلاف الصلاۃفا دہ من حقوق البی قَوآله ولھذا یقول 
الیصی: السلام علینا وعلی عبادالله الصا حین,ولایقول: الصلاة 
علیںا. فظھر الضررق( مسا لک اععفاالی مشار ااصاا چعلی المصفی ‏ ک ۵۱۳)- 

یبا تجوظا غاط رر ےک !کرلک صرف حضرت لی رشی ایند عنہ کے نام کےسا تج علیہ 
السلام اکم الڈدو جم کے با لیے ہیں ۔ باقی صحا ہہ کے تل ایی کر تے می کےلیاظ 
سے اگ چیدرست ےکن تا مس )ابی مساحیت ضمرددی ہے ۔ان کیاعطا نلم پکریم 
کا بی تاضر ےرحضرت الوکرہعمرءاورعنان رشی النتھم ان الفاطا کےز یادہ شی ہیں۔ 
(لف راہ نکش سورہا۶زاب) 

علامیمبدالعزیز پرھاروئ یلت ژل لا بجوز التصلیةوالتسلیم علی غیر 
الانبیاءاستقلالاعیں‌البحققین‌من اھل السنةخلافاللروافض 
فا دھحج یصلون ویسلون علی اھل الببیت (راس بش ۱۰) تین ائلسنت 
کےنز یصو وسلا خی راتیاء پرا تال جا نی سے مخلاف روافأش کے ۔تو کک 
رو اف اک امت پردرودسلام ایج رٹ یں ال برض کے اس ارشادسے ججت 
پڑت ہدے أولیيك علیہ صلواث شن ربخ وَرَخمَڈ(- رہل تر:ے٥ا)۔‏ 
ا یلوگ ہیں جن پپراانع کے رب کے درودہیں اوررمت ۔اورسلام زترول اورمردول 


۹ 


پیا جات ہے(لپذااسسائل یت پریھیتنا جانڑے )۔ 

اور ہماراپہلا جواب پیر ےکیٹنف شیع نے ابل ببیت می نبوتکادگو کیا ہے اورانہوں 
نے درودوسلاام ان پر پڑ ھناورلکھناشرو عکردیا۔ان سے پیلےلف میس ہیر ہیں تھا۔ 
توہمارے لئ ا نکی مخاللض تک نالا زی ہے۔ دوس راجواب بی ےک ری لوق وسلا مکرنا 
عرفعلف میں نیو ںکاشعار ہے ۔تو ا سکوائییں کے سا تھ خا لکن چا ہے جی اکم یں 
کہنا زا سک ہی عز ول ہیں اکم جآ پ ای عزبذاوریل ہیں (م راس ش١۱)۔‏ 
امام اح بن تسطاا بی رج ار تھا لی (متوئی ۹۲۳م ) فر مات ہی ںکربجض :افکمی نکی 
عادت ےک و دنر ستپکی الرنشی او رححضرت فا الز برا شی انتا کے لے سا کا لنٹ 
استعا لکرتۓ ہہیں شا مھا السلا ‏ سک ہیں اور باقی صحا کرام رشی اٹم کے لے بافظ 
استعالیفیسکرتے یو1گ ینوی طور پر سیت ہے( یوک اوسلام انیم ے )لین یہ 
روہ ہے با خلاف اوٹی ہے۔ا سںسللے بیس ز یاددمنا سب ےک تھا سھا برک رام کے 
ران ساوت اف جا ےکک نتم کے کے اپ نے اون 
(حضرتصد بی کبراودرتضر تع رفار وق ء نی زحخرتعثا نشی شی الڈنہم ان دونوںل 
ترستپلی اورتشرت اع شی اڈ نما سے اس بات کے یادہ لاک ہیں (مواسب للدم 
شرں الزقا ٰی. ن٤ل )٣۳٣۶۰‏ 

علامہا ام ل فی فرماتے ہیں بش کی الرضی و لکشم کی الطَ کا 
لقَارِيِی فنْبَعْتَھُۂ من الْعلمَاووَالَعتَادِوَمَاىر الَْخْیَارِفَقَال ابو 


سے حم َ1 و کو ہے سے ما صو 2 کیدے 28۱2۶ 1د ؟ٗ 1 سک ا ھے حصاےے ۵ 
گر وَاَبوحَيِیَفة رَضِیاللهُعَن ہاو رَمَهاللۂآوؤ تو ذٰلِاكَفَلَيْرَضِیَاللة 


٣۴ 
َن ضا بلاق بل بقل فوخ رَحمَة الہ (روسامیان)۔ شی اع‎ 
اوررحت اعل کنا لکنا صحا تا ین اوران کے بعد کےعلا ہلا اورقمام یک لوگوں کے‎ 
لے جات ہے۔مظ کہا جاۓ ابویکررشی ارڈرعنہ یاابوحتیف رشھی ا رعنہ یا مت ایند ال‎ 
یی اورالفا ظا ۔ شی الع ہکہناصحا ہہ کے سات وی یس بللہائجیں رت الڈرعل جج گکہہ‎ 
کلت ہیں۔‎ 
نس ال ین شھہ ساوک فر مات میں علاء اسلام نے سلام عو کر نے کے تلق اختلاف‎ 
ف مایا ے ںین یک یاصلوۃ کے جن میس ہے ن “لی علیرالسلام با اس کے جومششا الا ظط ہی یکنا‎ 
روہ سے ایس ؟ علماء کےای کرد نے سلا مکڑچھی غی نی کے لن ےکر وق ارد یا ےکن‎ 
ایک ابیشھ اج بنی ہیں۔انہوں ن ےگ نی علی السلام میں فر کیا ےک لام ہرمون‎ 
زندومردوخاتب وحاض ر کے لے جائے ہے۔ ال اسسلا مکی دعا ہے ۔ تخلاف صلا کے‎ 
وت زغاا؟ نھیکری صلفل ادرآ پک یآل اطمار کے توق میں سے ہے۔ اس لئے‎ 
از لکتاے اَلمَلام عَلَينَا وَهَلی حِبَاد ال الضَایثِی- اَلكَلوْهُعَلَيِتَا‎ 
نی سکنتا۔ بی فرقی وا ہوکیا۔ دائمداللد(قول بد اردہ)‎ 
مفتق اص بارخان رح دیع ہیں بھمتضورافورسلاا ہم بادوم ے امیا کرام پا فرشتوںکو‎ 
ذحاعلی لصا والسلام با صن کے الفاط سے دعا میں د میں کے اور عم مسلما فو ںکومرہوم‎ 
مفقورنحفرلہ کے الغاظ سے دعا یں وم گے ۔مقبول ا متیو سکورحمتۃ الیڈرعلیہ بارش الشرعنہ‎ 
کےالفاظ سے دعا یں دمیں گے نی اورفرشتتوں کےسوا سی اورکوعلی السلام یا اٹم‎ 
تی ںکہہ سک ۔ ہبی علیہ السلام یا ما سان علیہ السلا مکی لکہنا چا بیے۔‎ 


۹۳ 


ای ط رح حرت یل با حطرت مورحم علیہ بارش الڈریاھ جو مففو ری کہ 
سن ۔ ا سکیفیل روں المعانی می ای مقام پرویھو۔ ای طرح حضورس ای مکوخز ول 
تی کہ گے ۔ یرب تھالی کے لیے ے اکر وا ور ٹا ای کےکرم ےزت 
وا ھی ہیں اورشی لی (زروں العانٰ )۔ 

اس متا کا ماغذ دہآ ی تک بیس ہے با ایا لن ات اَلَو عَلَيْدَوَم لیڑا 
تَسَع ۔عل یک یمم نی ای مکی طرف ےکس سے اشا رہ معلوم ہوا لو وسلام نی 
کے یی ہے دوسرےانسان کے لیس یف س لو ھی علی الام :ین علیہ السلام 
کت ہیں۔دوجائل ہیں۔ ای رواخ کی علامت ہے(ازروں امعانی)۔ انل انی 
رع یادرکھنا جا ہے( تق ری ءا اجش ۲۳)۔ بیہاں تق صاحب رتحما شر نے ببہت 


ہ۔؟ھ 


تھی وضاحتفرمالی ۓےگمرشان عیب الین ۳۰۱۳ رما سان علی السلام اورل ۳۱۳ 
پرضرت اما مین علیالسلا ھا ہوا سے کن ہ ےکہ یکاہ کی شی ہو۔ 

علامرفلام رسول مسعری لیت ہیں تا ہم ہمارے نز دکیک ان ل(ائل سنتحضرات )کے 
ناموں کےسا ری الڈ ٹہ مککھتے ہیں ۔ ا نکی ز یاد ہن میم ہ ےکیونکہ شی اع کا لفغظ 
عرف ادرشرغ شی “ھا برک رام کےسات نو ہے اورعلی السلا مکا فا عام منج۲ نکیل گی 
اتال ہوا ہے( نمی الباریء ع۸ كضص۹٢٦٦)-‏ 

تی یی صابد فرمات ہی ںین علا ءکاخیال ‏ ےک فیراخیاءپردرودپڑھناجانڑے 
کیونکہ(ہیع ]مآ الںص]) صلوق کا می دعاے اوردعااخبیاءاو ری راخیا سب کے لے 


جات ہے۔اودان ول نے اعد یث سے امن لا لکیا چو رسول ال دیقم سے مم وی سے 


۹۳ 


کک آ پ لین نے فرمایا لق صلی ع لآ لآ آوٹی. اےالابواونی (عاتمین 
خاللدبن عارث ) کےآل داولاد پررحمح تفر ما( سکیونگجھ لی ز پان میس اذ ناصلو تر ءاورححمت 
کے لیے )۔ 

خلا ءا طرف گے ہی ںکرصلو,(درود )شعار(علامت ہے۔اور ضر فنھیوں کے 
ات خاش تو غیرانویاء کے لے جائڑکڑیں سے .تو بک ہنا بھی درس تگیں ےک و سے 

أل>قر صَلِ عل الْاین اد علی ابی ححفیعادصرف ان پرترمم ہے۔او را 
کرام تا مین عظام کے نام کےساتج ترضی (رشی ند عنہ ہنا ان ہے۔ اورصل وت بنا 
درس ت یں ےکیونک درد پڑھنااخجیاء وم رین کےشعار سے ے۔ 

عا مہاب وسودفر مات ہی ںصلوۃ تما خی رانریاء پر جا نے اورم تم اکھردد ےک یو حرف میں 
رسولوں کے کی علاممت ہے ۔اوراکی لے بیکہناجا تی دہ زوپل اس کے پاوجو دک 
آپ سو ای ۶ز یۃ ہیں ۔ادرتمادرودکینے سے مرادی کت مو ںکہ الم صلی گی 


روالد وَذُزِيَعِِوَآَتَب اج الَبومِبزی_ قآمادا ینام 7ل ٭َااَللَهُمٌ 


ہیی 
2 


پ3 اب 


صَلِعَی ذزِيَة ولا لی اڑا ج شک (تقرآیاتالاخام۰ع۳۲ض۲۷۷)۔ 
اورشا و پرالحزپزمرث وعلو یکیعت ہی سک اعل سن تک رسب بی ےک لوت پاااستقلال 
خی را نیا ہک شان می لکہس کت ہیں ۔اا لک سند یر ےکہائل سن تک یکن ب قد بعد ہٹ 
یش پلفصویش ابودا کوچ ایی یس تضربت لی بضع رات ین ونفرت فا وضرتے 
خد پیر وتخرتعپاس کے کر کےسا تح لفظاعلی السلام کور ے۔ الین علاء ماوراء 


اھر نے شیعکی مشا بجعت کےلیاط سے ا کو ھا ےمان کی الواقع مشا ہمت بدو کی 


امرنرمیںں کییں (مادی عزیزی ض۵ ۲۳)۔ 

یز آن یرم۲ بھی وا لاہ علی من اتيع اتی (سودہط بے ۳)۔تز جم :اس 
پرعلام ہیس نے راو راست انختتیارگی ال قور پپلامالسلام علیکم یأاھل 
النقبور پڑھاجا تاے۔ نیزسمان ایک دصرے٤‏ السلام علیکم وعلیکم 
السلاہم کتے ہیںممتی دھا۔ 

امام را زی یتخیی رکب میں حر تی شی ارڈ رعنہ کے نام کے سا تح علیہ السلا مت یرف ماتے ہیں 
کن تی کییریں زا کی 

علا شس الد بین این تیم جوز یی رحم اود( متوٹی ۱ ۵ے تھ )نے سلا یی کے مل یں 
علامراایشھ جو نی (منو نی ۸٣۴ھ‏ )سے اخخلا فکیاے۔۔ و یھت ہیں دوس رےعلاء نے 
لات وسلام میں فر کیا ےوہ کت ہی سک سلا مکافظ من کے میں ش روح ےخواہ 
دوزندہ ہو یامرددءعاض ہو اذا بکیوکہ یکپنا مروف او سعمول ےک فلا لنٹ شکوم را 
علام پور اٹل اسلا مکی تی ٹیم ) ے تفلا ف صلو ‏ ک کیو وو رسول سی کا 
ہے ۔ اس مل نماز کےکشہدرمیس پڑت ہیں آ لک لام ئ عَليْنَا وَعَلىی عِبَاداللہ 
سس رت جمطشسحشس 
۹ ال ہلا الاٹھا مب )۴٦٢٢‏ 

علامنظام الد بن خمیشا ری (متونی ۵ھ ) کھت ٹل واما السلام فلا کلام 
عليەلانەجآئزثی حق جھور الیسلمین فکیف لا بجوز ثآل الرسول: 
فی خراض الق رنج مو سے ۵۲)۔- 


8ٔ 


علامہ گی کت ہیں خلاصہ یی ےک انا کہم السلام کےغی رتا صل و سا مکھینا جک 
ہے اور اٰف راو اور ا صفلا لصاو مین کرو تن کچی ہے ۔صرف سا مکھینابلاکرابہت جا 
سے کی ہو رکا ماک ہے اور می ہما را( علا مہ رسعی دک یکا ) موقف ہے( جیان التقرآنءح 
۲۵۱۵)- 

ححخرت علا م یسعیدر اج ای علیہ ال رح فر مات ہیں جال تاقی ادزیلی الا طلا خی راتا دو ماگل 
ہم السلام کے لے بالاس تا لت سلا مکو نج کی نے نیمنو عکہااو راگ یا نے ایا 
نو یکا ۓآ ا کا تتا بک اھاے- 

یل التق رعاا ۓ منفن مین ومتناخ من او راکا ہرائلسنت وفتتہاۓ احزاف میں ال ےخنقین 
کرت ہو جن کے نز دیک ائل میبت اطہاردائ کہار کے لئے م نت علیالسلام پولنا 

بلاکگراہت جائے سے( سیف التقادری ین الناصصی بس ۹۳ کوالہ پندرد روز والسعید رصن الھا لین 
بر متان) 

مھت یکموڈینسن صاحب او را ری شرطیب صاحب ھا نر ےی ایا کے 
اسلا مکادھا تی ہملہ ہو ل ےکک کو حا ئزقر ارد یاے۔ا سکیخصیل( کاب )شماد ت مین 
شی ارشع دہ کے ٥ف‏ ۲۹۳ پر ہے( مو ادار ہتالیف اتشرفیہ چوک فو ارہملتان پاکتان )- 
درودوساا تی رماوانغفارک جواز 

دروداورسلا ”انی ونک رم خی پیل پڑ نا چاہیے اوردروداورسلا “عق دعارصت 
اوراستغفارخی نی ائل ایماان سب کے لے ان سے۔ 


اشقاٰۂ ٢ے‏ مو الَزِ یع عَلَيْکُم وَء ايک( ر7۷7اب:۳٣)-‏ 
تر جمہ :دای ہے جواننےفرشنوں کےسا تح ھآپ پردرودگیتاے- 
اشتعالٰ' <١‏ ےِخُلْمن أموالِهم صَتَقَةُتُيْرْمُمْ وَثز يَزہم بَا وَصَل 
عَلْہم (سورۃالتبہ: ۱۰۳)۔ تر جم : اۓےجوب الع کے مال سے کول وصو لک می جس 
سے دوطہرے اود اکجزہ ہوجا میں اورآپ الن کے یل دعائۓ تفر مائھیں۔ 
اتال ا سے أولييك عَلَيۂ صَلو اٹ شن ریخ وَر خ2( س رہ ااتر:د۵ا) 
7و یلوگ بیجن ران کے پردردگا رکی درودے اوررمت ے۔ انا بات ہل درود 
ےھراددعامیں اودرحمت ہیں- 
مضتی تی راح نی کی ہیں صا سام بط رنہ خی راتا ء پردرست یل ۔ ہاں بطوردعا 
صلو تو سام ورست ہے جی ے عم ایک دوسرےکوسلا مک رت ہیں _ اوراسی طرح صلو ‏ بطور 
دعالکمنااور بولنا جات ہے(التطا الام برفی فأوی نب۵ ص۸۰)- 
رائم ال روف نے علاء کے ارشادات داقوا لکی رڈشنی یش خی رایاءاوررکل پردروداورسلام 
یکا مستلہ ہیا نکیا ہے ۔ک کی تا یوق دیدکرنا مقصرنئیں ۔ 
ياالل !ایق ذات اورصفات کے کم ا کک برکت سے س بگناہمحا ففر ما یا اڈ اھ 
مصطنی ءحتتب ین یکریم ءرووف و ریم ءرسو ل گرم شف مه سای کے ذک تی رکی وج سے 
میرے ظاہرد ہام نکوگناہہوں سے پا ک فرا۔ یااللہااپنن متبول بندوں میں ذکر برکتء جھلہ 
امو ری لکا میا ی اورکامراٹی عطاغ رما با ال سی ا پقی ذات وصفات کےخل اورنی چک 
کے وسیل یل سے مب رید ماوآخ تگھودبنا۔ 


با للا می رےتمام اثل نا شکوا یمان ء ان ء مال داولا دکی سلامقی عطافرما۔ با ایاج ھرے 
احباب وفات پاتگ ہیں ان س بکوجنت بی اعلی جک عطافرما۔ یااللہ اس بکی شش فرما۔ 
الد ادرود کے تےلکما تجح یر کے گے ا نکی برکت سے روعاٹی وجسانی یی دورفرا 
اورایمان ء ان ء مال ۶ اوڑا دکی امت عطاءفرما۔ اورک کشر فقو لیت عطافرماۓ _ 


ارب کن صلی جم انا ہم اولیا گردالنع چناان ا تفہ رامتبو لگرددجرویر 

بادآ ححضرت ایام کے 09019 کےا کا رر حکرورۓے/سمیررآور 
ہیں یں ول ہو 

عاش بروجتملہ جہاں ازاندرون جان خود بلند با کان چان ورددارن پاانئم وم 
چہاں کےتمام لوک دل وججان سے اس پر خاش ہو پا ک لوگ اس ےعحب تک یں الکو 
آکھھاور پرریمیں 

لت چنان وت را جزا ینٹنوا ہکس ہ راک بینرمرد ےلوب اوا نشم 

کو قکوا سکی اسر مت دےکمہاس کےعلادہاورسب تہ ہر1 دی ا شش کاو یز 
7 

ربا تَقَبَل مِنَّا إِنّكَ انت المِیغ الَلِيْمْ ونب عَلَيْمَاإِنّكَ انت الكَوَابِ 
الیم ۔(صئی اتل حیزیہ مکی وع ل آیہ وَتايِم ََرَك وَمَلَمٌ) 
اے ہمارے پردددگار ہما ری بیخدعم تو ل فرما تو یقناہر بات نے اورجا ۓ والا ے۔ 


اےہہا رے پروردگا ربھم پرلظرکرمفر ما تو بقہنا تو قجو لہ نے والا او رکف رمانے ولا ے۔ 


۹ 
آن ار باعلمین_ ۹ھ بطا لٰ ۲۰۱۸ 
مول فک فی مطبو کپ ورسائل 
یرت رسولی شس اردواوجزالسی الیم 


شرب فقہ اکر شر بد۶الاما ی اردو 
سعفنا مین مرا نج نی یم 
عق دامام ال نشور مات یری فضائل گرم 


فضائل مم یممورہ ربق ظرہ 
پر کےاظام ٹرح عدیشتدی 
صر3 جار رر ظگرعبر ( 
تر ج من ما رالاوار تر جمتقرالنار 


لصف ارد فیر شر مان عائل(چدیر) 
پیل ٹواردیر سیلصرف ارد و جم زنجان 


( ضر ارد فصو ل )ری ) غلاصۃ ااصرف 
مولفکی معلبو کت ورسئل 

٣ی‏ شر اسم ما صلی ایز 

شرف لصف یسور اش ناقری تی آیدگری 


فضائ لماہوائل یت ا را سا مبیشرں عقیدناظحاوی 
تکروامام ابونصور ما تر یری املائی عقا دشر اردوعد الا کر 


جال صن یز را 


کر وحقرت امب رمواوریرشی الٹعنہ 
شر اساء انی 

مو کی یاد 

اد مات ید بی‌شر) عق ئدکسفیہ 


فضا لق رآن مر 
کرو ائم دی 
شر تصیق بات سعاد 


الناشر مکتۃ الرنضی نی منزرل ۸۵ بی بلک شی رکون لم ء پاکستان 


غ وعرائحخ 


کغز الاچمان ن7 ممۃالتقران 

چمال التران 

جاویلات القران 

تفیرروں البیان 

روں‌ الع یٰ 

تفی موا ھب الکن 

مالعا 

مر اذا جع شر امنو ج 
اشعةاللبعات 

لمعات التتقیح شر حمشکوۃالمصابیح 
یز بالقلوب (فاری) 

7۰ القاری شر اج الغاری 

نت البارییشرں بناری 

لواہب الملطریۂ نی شر مندالی یف 


امام امم رضاغان یی 
شک شاداھری 

امام ال ڈور مات یری 
علامراس صلی 
علاگورالوی 
علامہسیدامیرّل 

امام وکی اللہ ین ری یی 
علامگٹاری 

برای مرت دعاوی 
ع برای مر وعاوی 
برای سرت دعلوی 
علامہ بددالد بن ضقیء 
لام فلام رسول سعیری 


علامےعا پرسٹری 


ففل لصل و بعلی نی 


جلاءالاٹھام 


امائیل بین اسحاق ال کی مو نی ٢۲۸۳ھ‏ 


شس الین بنا جور ۵۱ےھ 


الضیلاث المکر فی الات علی خیر الک ا ا رین تقوب فیروزآبادی ۶ ند۸۱ 
را ضو وی ااصلا والسلا می صاحب التقام ائموو ااوالل تاس شاب الد ین ام اب ن تر لی ۷ے۹ھ 


مطالع اسر ات شر دلال اشتورات 
نول ال برع نی ااصاا ۃ لی الھبیب 
سعادت الدار بن ثی الصلا می سی رالکوشن 
2 زی صن حسین 

تزۃ الک بن بعد ائعن فصین 

نل (لصلا تی سیر الماوات 

شراب اعل الفا فی لی انی صلی 

ر بات الجنت: ی اذکاراکتاب والٹت< 

یف صلی رسول الد 

البرکات ا کی کی صلو ت الو ے 


مسألك ا قفا لی مشار اصلز و عل ا صطفیٰ 


تاب الا عل تفضل الصلا ہعلی لی والسلام 
تاب اڑا رشن نی ااصلؤ والسلام 
اورارأتے 

کاب الصلو عکی ای بح انو را شا راآ٢تص-‏ 
بفضل لصل بعلی نی انار 

شر دائل ارات وشوارق الانوار 


مھ دی نی 

ا امس الد بر السنا وی متولی ۹۰۲ھ 
قاضی یف بن اس مل مو ی۵۰ ٣ھ‏ 
محر ٹشجھحیرعلا می ڈارا 

ھی نی شون 

علامہ اوس فٹبعالٰی 


ام عارف بش .تام القری ۶ن ۸٢۱ھ‏ 


علامہ لوسف:ہیالٰ 
شمعبددیھائی 
جی ھی وی روعانی الباز ٣وی‏ ۱۳۱۹ھ 


ابوالتہاس ام رم مر اقسطا نی وی ۹۲۳ھ 


ری نعپدالکن خی ر یمن ۵۷۳۴ھ 
ااشخرعپدلن ا اتی مونی ٣۳۷٥ھ‏ 
خواجنل سیدبر ان 

ابوبکرا مم ایل الضخییا ٰے۲۸ھ 

حافظ لی التباس ام لٰ۵۵۰ھ 

علا بدا لی شش الا ھی